1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

احادیث اور اہل حدیث کا عمل بالرفع الیدین

'نماز کا طریقہ کار' میں موضوعات آغاز کردہ از جی مرشد جی, ‏دسمبر 21، 2017۔

  1. ‏جنوری 07، 2019 #171
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    ان کے جوابات سے کیوں پہلو تہی سے کام لیا جا رہا ہے؟
     
  2. ‏جنوری 12، 2019 #172
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    جواب ندارد؟؟؟
     
  3. ‏جنوری 25، 2019 #173
    فقير إلى الله

    فقير إلى الله رکن
    شمولیت:
    ‏فروری 01، 2012
    پیغامات:
    34
    موصول شکریہ جات:
    85
    تمغے کے پوائنٹ:
    54


    کیا آپ کے نزدیک امام بیھقی پوری اہلسنت امت مسلمہ کی مخالفت کر رہے ھیں


    ورفع اليدين عند القيام من الركعتين سنة وإن لم يذكره الشافعي، ------- سمعت الربيع بن سليمان المرادي يقول: سمعت الشافعي رحمه الله يقول: إذا وجدتم في كتابي خلاف سنة رسول الله - صلى الله عليه وسلم - فقولوا بسنة رسول الله - صلى الله عليه وسلم - ودعوا ما قلت (الخلافيات)
     
  4. ‏جنوری 27، 2019 #174
    baig

    baig رکن
    جگہ:
    hyderabad india
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2017
    پیغامات:
    101
    موصول شکریہ جات:
    45
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

    قال: الإمام أبو بكر أحمد بن الحسين البيهقي (م٤٥٨ھ):
    أخبرنا أبو عبد الله الحافظ، ثنا أبو بكر محمد بن داود بن سليمان الزاهد الثقة المأمون، ثنا محمد بن أحمد بن المؤمل الضرير، حدثني إبراهيم بن راشد الأدمي، ثنا محمد بن يحيى الواسطي خادم أبي منصور الشنابذي، قال: قال لي أبو منصور: قم حتى أريك صلاة سفيان الثوري، فإن سفيان الثوري قال لي: قم حتى أريك صلاة منصور، فإن منصورا قال لي: قم حتى أريك صلاة إبراهيم، فإن إبراهيم قال لي: قم حتى أريك صلاة علقمة، فإن علقمة قال لي: قم حتى أريك صلاة عبد الله بن مسعود، فإن عبد الله بن مسعود قال لي: قم حتى أريك صلاة رسول الله صلى الله عليه وسلم، فإن رسول الله قال لي: "قم حتى أريك صلاة جبريل عليه السلامفصلى فافتتح الصلاة فرفع يديه، فلما أراد أن يركع رفع يديه، فلما رفع رأسه من الركوع رفع يديه".

    {أخرجه: في الكتاب: الخلافيات بين الإمامين الشافعي وأبي حنيفة وأصحابه: مسألة (٧٩): ورفع اليدين سنة عند الركوع والارتفاع منه: ج٢ ص٣٦٢-٣٦٣ ح١٧٠٤}.
     
  5. ‏جنوری 27، 2019 #175
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    جو پوچھا گیا اس کا جواب تاحال ندارد۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں