1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اسامہ بن لادن کے متعلق سلفی علماء کے اقوال

'خوارج' میں موضوعات آغاز کردہ از عبدالمنان, ‏دسمبر 24، 2018۔

  1. ‏دسمبر 30، 2018 #11
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    735
    موصول شکریہ جات:
    164
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    العلامة النجمي ـ رحمه الله: ابن لادن خارجي خبيث
    قال السائل: يدعي بعض الناس أن ابن لادن هو المهدي المنتظر، ويلقبونه بأمير المؤمنين فما توجيهكم لذلك ؟
    فأجاب رحمه الله : هذوله هم الشياطين، هذوله هم الشياطين، ابن لادن شيطان خبيث خارجي، لا يجوز لأحد أن يَثْني عليه، ومن أثنى عليه فهذا دليل على أنه خارجي مثله، من أثنى عليه فهذا دليل على أنه خارجيٌ مثله، ويجب أن يعاقب ويؤخذ.

    علامہ احمد بن یحیی نجمی رحمہ: ابن لادن خارجی خبیث ہے۔
    سوال: بعض لوگ دعویٰ کرتے ہیں کہ ابن لادن مہدی منتَظَر ہے، اور اسے امیر المومنین کا لقب دیتے ہیں؟ آپ کی اس بارے میں کیا رائے ہے؟
    شیخ نجمی: ایسا کہنے والے شیاطین ہیں، یہ لوگ شیاطین ہیں، ابن لادن خارجی خبیث شیطان ہے، کسی کے لئے جائز نہیں ہے کہ اس کی تعریف کرے، جو اس کی تعریف کرتا ہے اس بات کی دلیل ہے کہ وہ بھی اسی کی طرح خارجی ہے، اور واجب ہے کہ ایسے شخص کا تعقب کیا جائے اور اس کا مأخذہ کیا جائے۔
     
  2. ‏دسمبر 30، 2018 #12
    بنتِ تسنيم

    بنتِ تسنيم رکن
    جگہ:
    کوہ قاف
    شمولیت:
    ‏مئی 20، 2017
    پیغامات:
    269
    موصول شکریہ جات:
    33
    تمغے کے پوائنٹ:
    55

    طائفة المخذله و مخالفة
     
  3. ‏دسمبر 30، 2018 #13
    بنتِ تسنيم

    بنتِ تسنيم رکن
    جگہ:
    کوہ قاف
    شمولیت:
    ‏مئی 20، 2017
    پیغامات:
    269
    موصول شکریہ جات:
    33
    تمغے کے پوائنٹ:
    55

    _20181230_171755.JPG

    _20181230_171821.JPG







    _20181230_171847.JPG _20181230_171914.JPG
     
  4. ‏دسمبر 31، 2018 #14
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,756
    موصول شکریہ جات:
    8,332
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    بنت تسنیم صاحبہ فورم پر جاندار کی تصاویر لگانا منع ہے۔
     
  5. ‏جنوری 01، 2019 #15
    zahra

    zahra مبتدی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 04، 2018
    پیغامات:
    144
    موصول شکریہ جات:
    6
    تمغے کے پوائنٹ:
    25

    the disputes and without any issue murder someone else is the biggest sin and these people murdered poor needy people
     
  6. ‏جنوری 01، 2019 #16
    بنتِ تسنيم

    بنتِ تسنيم رکن
    جگہ:
    کوہ قاف
    شمولیت:
    ‏مئی 20، 2017
    پیغامات:
    269
    موصول شکریہ جات:
    33
    تمغے کے پوائنٹ:
    55

    جی بہتر
     
  7. ‏جنوری 22، 2019 #17
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    735
    موصول شکریہ جات:
    164
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    فضيلة الشيخ العلامة / صالح بن فوزان الفوزان عضو هيئة كبار العلماء، عضو اللجنة الدائمة للإفتاء بالمملكة العربية السعودية
    السائل : لا يخفى عليكم تأثير أسامة بن لادن على الشباب في العالم، فالسؤال هل يسوغ لنا أن نصفه أنه من الخوارج لا سيما أن يؤيد التفجيرات في بلادنا و غيرها ؟

    الجواب : ( كل من اعتنق هذا الفكر، ودعا إليه و حرض عليه فهو من الخوارج بقطع النظر عن اسمه و عن مكانه، فهذه قاعدة أن كل من دعا إلى هذه الفكر و هو الخروج على ولاة الأمور و تكفير و استباحة دماء المسلمين فهو من الخوارج

    [من محاضرة الفئة الضالة و منهجها، عن طريق كتاب الاجابات المهمة في المشاكل الملمة الجزء الثاني الطبعة الأولى 2007.]


    فضیلت الشیخ علامہ/ صالح بن فوزان الفوزان حفظہ اللہ سے سوال کیا گیا

    سوال: آپ پر دنیا بھر کے نوجوانوں پر اسامہ بن لادن کا اثر مخفی نہیں ہے، ہمارا سوال یہ ہے کہ کیا ہم اسے خوارج میں شمار کر سکتے ہیں؟ بے شک اس نے ہمارے شہروں اور دوسرے شہروں میں فسادات کی مدد اور تائید کی ہے۔

    جواب: جو بھی اس فکر کا حامل ہو اور اس کی طرف بلائے اور لوگوں کو ابھارے تو وہ خوارج میں سے ہے چاہے اس کا نام کچھ بھی ہو اور وہ کہیں کا بھی رہنے والا ہو۔ یہ اصول ہے کہ جو بھی اس فکر یعنی ولاۃ الامور (حکمرانوں) کے خلاف خروج، تکفیر اور مسلمانوں کے خون کو حلال کرنے کی دعوت دے گا وہ خوارج میں سے ہے۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں