1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اصلی اہل حدیث کون

'امر بالمعروف و نھی عن المنکر' میں موضوعات آغاز کردہ از عبدہ, ‏نومبر 08، 2013۔

  1. ‏نومبر 16، 2013 #11
    عبدہ

    عبدہ سینئر رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏نومبر 01، 2013
    پیغامات:
    2,038
    موصول شکریہ جات:
    1,160
    تمغے کے پوائنٹ:
    425

    محترم بھائی اگرآپ شیعہ کی غیر معین تکفیر کی بات کر رہے ہیں تو میرے علم کے مطابق شاید انکی تکفیر پر کچھ عرصہ پہلے اللجنۃ الدائمۃ کا فتوی آیا تھا کوئی بھائی تصحیح کر دے مگر پھر بھی یہاں ہر کسی کو پابند نہیں کیا جا سکتا

    معین یا غیر معین تکفیر میں میں کچھ اصول غالبا دہشت گرد خارجیوں کی علامات میں بیان کی ہیں کہ جو متفق علیہ کافر ہیں ان پر تو آپ زبردستی کر سکتے ہیں مگر دوسرے پر زبردستی نہ کرنے کے لئے ہی تو یہ شروع کیا ہے ابھی کہیں جا رہا ہوں بعد میں تفصیل لکھ دوں گا معذرت
    ہاں جہاں تک تیروں کو سکیل بنانے کی بات ہے تو وہ کچھ حدود و شرائط کے کی جائے تو ٹھیک ہو سکتی ہو مطلقا نہیں ہو سکتی- کیونکہ ذرا انصاف سے سوچیں پھر سلالہ والوں پر تو تیروں کی بجائے میزائل گرے تھے وہ میزائل کن کے تھے کیا امریکہ باطل ہے کہ نہیں
     
  2. ‏نومبر 16، 2013 #12
    ضدی

    ضدی رکن
    جگہ:
    برطانیہ
    شمولیت:
    ‏اگست 23، 2013
    پیغامات:
    291
    موصول شکریہ جات:
    234
    تمغے کے پوائنٹ:
    76

    چلیں آپ اپنا کام نپٹا آئیں اس کے بعد دو لفظوں کی تشریح کی ضرورت پڑے گی تکفیر معین اور غیرتکفیر معین تاکہ بات جو جتنا آسان بنایا جائے تو اتنا ہی سمجھنے میں آسانی رہتی ہے ہم جیسے طالبعلموں کے لئے
     
  3. ‏نومبر 30، 2013 #13
    عبدہ

    عبدہ سینئر رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏نومبر 01، 2013
    پیغامات:
    2,038
    موصول شکریہ جات:
    1,160
    تمغے کے پوائنٹ:
    425

    محترم بھائی آپکی بات سو فیصد درست ہے کہ بات کو جتنا واضح کر دیا جائے باطل اتنا ہی نقصان اٹھاتا ہے چنانچہ اہل سنت کے ایک طرف خارجی تھے تو دوسری طرف مرجیئہ دونوں کا فائدہ اسی میں ہے کہ کچھ بنیادی اصلاحات گڈمڈ رہیں تاکہ ہم اپنی راہ نکالتے رہیں پس جو معتدل اہل سنت ہیں ان کا فائدہ اور اسلام کا فائدہ اسی میں ہوتا ہے کہ ان اصطلاحات کو کھول کر بیان کر دیا جائے اس سے اہل سنت کے آپس کے اختلاف کو آسانی سے ختم کیا جا سکتا ہے
    پس اسکے لئے ایک علیحدہ تھریڈ شروع کرنے کا پروگرام ہے آپ سب بھائیوں کو ان شاء اللہ اطلاع دوں گا
    میرے متعلق کوئی بھی بات مجھے ٹیگ لازمی کیا کریں میں نے یہ کافی دنوں بعد دیکھی ہیں
    ضدی
     
  4. ‏اپریل 29، 2014 #14
    123456789

    123456789 رکن
    جگہ:
    زمین
    شمولیت:
    ‏اپریل 17، 2014
    پیغامات:
    215
    موصول شکریہ جات:
    87
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

    ٹیگ کا طریقہ فیس بک کیطرھ ہے
     
  5. ‏مئی 25، 2014 #15
    naveed

    naveed رکن
    جگہ:
    Lahore, Pakistan
    شمولیت:
    ‏مارچ 08، 2014
    پیغامات:
    7
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    اسلام علیکم ب
     
  6. ‏جون 15، 2014 #16
    عبداللہ عزام

    عبداللہ عزام مبتدی
    شمولیت:
    ‏مئی 01، 2014
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    36
    تمغے کے پوائنٹ:
    22

    محترم عبدہ پہلی بات تو یہ ہے کہ یہاں تیر بطور مثال استعمال ہوا ہے ۔ اس لئے میزائل اور تیر کا تقابل درست معلوم نہیں ہوتا۔
    باقی آپ کی یہ بات درست ہے کہ تیروں کو سکیل بناتے وقت شرائط کا لحاظ رکھا جائے گا۔
    مثلاََ سلالہ صرف ایک واقعہ ہے اس کو مجموعی صورتحال سے علیحٰدہ کر کے نہیں دیکھا جائے گا۔ مجموعی طور پر صورت حال کچھ یوں ہے۔

    ۱۔ہر خاص و عام کو معلوم ہے کہ سلالہ والے باطل کے فرنٹ لائن اتحادی تھے۔
    ۲۔ایک تو یہ کہ امریکیوں نے اس حملے کو غلطی سے ہونے والے حملہ قرار دیا۔
    ۳۔ پھر حملے کے بعد پہلے افسوس کا اظہار کیا اور پھر معافی مانگی۔
    ۴۔اور پاکستان کی فرنٹ لائن اتحادی والی حیثیت بھی برقرار رکھی۔
    اب اگر کوئی سلالہ واقعے کی بنیاد پر کہے کہ باطل کے تیروں کا رخ پاکستانی فوج کی جانب ہے تو پھر اس کے جاہل ہونے میں کیا شک ہو سکتا ہے۔
     
  7. ‏جون 16، 2014 #17
    عبداللہ عزام

    عبداللہ عزام مبتدی
    شمولیت:
    ‏مئی 01، 2014
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    36
    تمغے کے پوائنٹ:
    22

    اصلی اہل حدیث یا سلفی تو وہی کہلائے گا:
    ۱۔ جو قرآن وسنت سے دلائل لے۔ اور اس ضمن میں من پسند تشریحات کے بجائے سلف صالحین کی تشریحات پر اعتماد کرے۔
    ۲۔ جو بات قرآن و سنت سے نہ ملے اس پر سلف صالحین کے راستے پر رہے اور اس سے ہٹ کر نئی ڈگر پر نہ ہو۔
    ۳۔ بلا دلیل کسی قول کی تقلید نہ کرے۔
    ۴۔بلا دلیل کسی قول کو رد نہ کرے۔
    ۵۔اگر دوسرے مسلک سے اختلاف واقع ہو اور طرفین کا پاس قرآن و حدیث سے دلائل ہوں۔ (تو اپنے دلائل کو قوی سمجھتے ہوئے دوسرے کا باطل نہ قرار دے۔
    ( جیسا کہ عموماََ ہمارے یہاں فاتح خلف الام، آمین بالجہر رفع بالیدین وغیرہ کے معاملے پر کیا جاتا ہے۔ )
    ۶۔ کسی قول کو محض اس لیے رد نہ کرے کہ یہ دوسرے مسلک کے شیخ کا ہے یا اس سےدوسرے مسلک کی تائید ہوتی ہے۔
    ۷۔ کسی قول محض اس لیے تسلیم نہ کرے کہ یہ میرے مسلک کی شیخ کا ہے۔

    درج بالا باتوں میں موخر الذکر کی ایک مثال اسی تھریڈ میں موجود ہے۔ ملاحظہ فرمائیں۔
    کیا درج ذیل سوال کے جواب میں مذکورہ شیخ نے کہیں قرآن و حدیث سے دلیل دی ہے ؟ یا ان کا موقف قرآن و حدیث سے یا سلف صالحین کے موقف سے ہم آہنگ ہے؟ یہ بات جاننے کی کسی نے شاید کوئی کوشش نہیں کی۔ دوسرے مسالک کی طرح بس یہ جاننا کافی سمجھا کہ مذکورہ شیخ سلفی ہیں۔ لہٰذا بلا چوں چراں کے بات مان لی ۔ کوئی دلیل بھی نہ طلب کی نہ ہی یہ دیکھا کہ:
    کیا مذکورہ شیخ کا موقف قرآن و سنت سے ہم آہنگ ہے کہ نہیں۔
    کیا یہ موقف قرآن و سنت کے خلاف تو نہیں؟
    نوٹ:
    بہت ممکن ہے کہ میں شیخ موصوف کی مراد مکمل طور پر نہ سمجھا ہوں اس لیئے میں ان کی بات کی کلی طور پر نفی نہیں کرتا۔ یہاں صرف نقطہ نمبر ۷ کی طرف توجہ دلانا مقصود ہے کہ بلا دلیلِ قرآن و سنت ایک شیخ کی بات تسلیم کی گئی ہے جبکہ دوسروں کو اسی بات پر مطعون کیا جاتا ہے۔
    يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا إِنَّمَا الْمُشْرِكُونَ نَجَسٌ فَلا يَقْرَبُوا الْمَسْجِدَ الْحَرَامَ بَعْدَ عَامِهِمْ هَذَا وَإِنْ خِفْتُمْ عَيْلَةً فَسَوْفَ يُغْنِيكُمُ اللَّهُ مِنْ فَضْلِهِ إِنْ شَاءَ إِنَّ اللَّهَ عَلِيمٌ حَكِيمٌ. [التوبة:28]
    مومنو! مشرک تو نجس ہیں تو اس برس کے بعد وہ خانہ کعبہ کے پاس نہ جانے پائیں اور اگر تم کو مفلسی کا خوف ہو تو خدا چاہے گا تو تم کو اپنے فضل سے غنی کردے گا۔ بیشک خدا سب کچھ جانتا (اور) حکمت والا ہے۔
    تفیسر احسن البیان میں اس آیت کے ذیل میں لکھا ہے کہ:۔
    ممانعت بعض کے نزدیک صرف مسجد حرام کے لئے ہے۔ ورنہ حسب ضرورت مشرکین دیگر مساجد میں داخل ہو سکتے ہیں جس طرح نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ثمامہ بن اثال کو مسجد نبوی کے ستون سے باندھے رکھا تھا۔۔
    تفسیر ابن کثیر میں لکھا ہے :۔
    خلیفتہ المسلمین حضرت عمر بن عبدالعزیز رحمتہ اللہ علیہ نے فرمان جاری کر دیا تھا کہ یہود و نصرانی کو مسلمانوں کی مسجدوں میں نہ آنے دو ان کا یہ امتناعی حکم اسی آیت کے تحت تھا۔

    مَا كَانَ لِلْمُشْرِكِيْنَ اَنْ يَّعْمُرُوْا مَسٰجِدَ اللّٰهِ شٰهِدِيْنَ عَلٰٓي اَنْفُسِهِمْ بِالْكُفْرِ ۭاُولٰۗىِٕكَ حَبِطَتْ اَعْمَالُهُمْ ښ وَفِي النَّارِ هُمْ خٰلِدُوْنَ التوبۃ17؀

    مشرکوں کو زیبا نہیں کہ خدا کی مسجدوں کو آباد کریں (جبکہ) وہ اپنے آپ پر کفر کی گواہی دے رہے ہوں ۔ ان لوگوں کے سب اعمال بیکار ہیں اور یہ ہمیشہ دوزخ میں رہیں گے۔

    جہاں تک سلام کا تعلق ہے تو اس بارے میں فرمانِ رسول ہے:
    صحیح مسلم میں ہے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں یہود و نصاریٰ سے سلام کی ابتداء نہ کرو اور جب ان سے کوئی راستے میں مل جائے تو اسے تنگی سے مجبور کرو ۔ ( صحیح مسلم بحوالہ تفسیر ابن کثیر)

    یہاں یہ بات ذہن نشین رہے یہود و نصاریٰ کی نسبت دیگر کفار کا کفر زیادہ سخت ہے۔ جہاں تک بات شیعہ روافض کی ہے (بالخصوص آج کے اثنا عشری) تو ان کے کفر میں اہل علم کو کوئی شبہ نہیں۔


    قَدۡ کَانَتۡ لَکُمۡ اُسۡوَۃٌ حَسَنَۃٌ فِیۡۤ اِبۡرٰہِیۡمَ وَ الَّذِیۡنَ مَعَہٗ ۚ اِذۡ قَالُوۡا لِقَوۡمِہِمۡ اِنَّا بُرَءٰٓؤُا مِنۡکُمۡ وَ مِمَّا تَعۡبُدُوۡنَ مِنۡ دُوۡنِ اللّٰہِ ۫ کَفَرۡنَا بِکُمۡ وَ بَدَا بَیۡنَنَا وَ بَیۡنَکُمُ الۡعَدَاوَۃُ وَ الۡبَغۡضَآءُ اَبَدًا حَتّٰی تُؤۡمِنُوۡا بِاللّٰہِ وَحۡدَہٗۤ
    الممتحنہ ۔ ۴
    مسلمانو تمہیں ابراہیم اور انکے رفقاء کی نیک سیرت کو اپنانا ضروری ہے۔ جب انہوں نے اپنی قوم کے لوگوں سے کہا کہ ہم تم سے اور ان بتوں سے جنکو تم اللہ کے سوا پوجتے ہو بے تعلق ہیں ہم تمہارے معبودوں کے کبھی قائل نہیں ہو سکتے اور جب تک تم ایک اللہ پر ایمان نہ لاؤ ہم میں تم میں ہمیشہ کھلم کھلا عداوت اور دشمنی رہے گی۔

    یہاں شیخ نے یہ وضاحت نہیں کی کہ مسجد سے نکالنے کا حق کس کو حاصل ہے ؟
     
  8. ‏مئی 10، 2016 #18
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    287
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    وجا دلھم بالتی ھی احسن
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں