1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اصل اہلِ بیت کون ہیں؟ ضرور دیکھیں ۔!

'اہل تشیع' میں موضوعات آغاز کردہ از طاہر رمضان, ‏مئی 19، 2014۔

  1. ‏مئی 19، 2014 #1
    طاہر رمضان

    طاہر رمضان رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 25، 2012
    پیغامات:
    77
    موصول شکریہ جات:
    167
    تمغے کے پوائنٹ:
    55

    اصل اہلِ بیت کون ہیں ۔! ردِ شیعت و رافضیت پر زبردست بیان


    اُستاد المناظرین، فاتحِ ادیانِ باطلہ،داعی توحید و سنت،قاطع شرک و بدعت،فخرِ اہلسنت دیوبند، اُستادُ المحترم علّامہ خضر حیات صاحب حفظہ اللہُ

     
  2. ‏مئی 20، 2014 #2
    طاہر اسلام

    طاہر اسلام سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 07، 2011
    پیغامات:
    843
    موصول شکریہ جات:
    725
    تمغے کے پوائنٹ:
    256

    ان مولوی صاحب کی یہ بات درست نہیں کہ حدیث کساء کی سند ہی نہیں یا وہ درست نہیں؛علماے اہل سنت کے نزدیک وہ روایات درست ہیں جن میں سیدنا علی،سیدہ فاطمہ اور سیدنا حسن و حسین رضی اللہ عنہم کو اہل بیت میں داخل فرمایا گیا ہے؛ازواج مطہرات رضی اللہ عنہن بھی یقیناً اہل بیت کا اولین مصداق ہیں لیکن دیگر کی نفی بھی درست نہیں۔
    مزید برآں میری ارباب فورم سے گزارش ہے کہ اس ویڈیو کو فورم سے ہٹا دیا جائے اور محض اہل سنت علما کی اصلاحی اور دعوتی ویڈیوز ہی کو نشر کرنے کی اجازت دی جائے؛مذکورہ مولوی صاحب بدعتی گروہ سے تعلق رکھتے ہیں اور اس ویڈیو میں انکار حدیث کا ارتکاب کیا گیا ہے۔
     
  3. ‏مئی 20، 2014 #3
    طاہر اسلام

    طاہر اسلام سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 07، 2011
    پیغامات:
    843
    موصول شکریہ جات:
    725
    تمغے کے پوائنٹ:
    256

    حیاتی اور مماتی گروہ اپنے جھگڑے چکانے کے لیے یہاں تشریف نہ ہی لائیں تو بہتر ہے؛ہماری نگاہ میں دونوں ہی جادہ سنت سے ہٹے ہوئے ہیں اور یہ دونوں اہل حدیث کے منہج و عقیدہ کو نادرست سمجھتے ہیں۔
     
    • متفق متفق x 3
    • غیرمتفق غیرمتفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  4. ‏مئی 20، 2014 #4
    طاہر اسلام

    طاہر اسلام سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 07، 2011
    پیغامات:
    843
    موصول شکریہ جات:
    725
    تمغے کے پوائنٹ:
    256

  5. ‏مئی 20، 2014 #5
    طاہر اسلام

    طاہر اسلام سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 07، 2011
    پیغامات:
    843
    موصول شکریہ جات:
    725
    تمغے کے پوائنٹ:
    256


    عن أم سلمة قالت : في بيتي أنزلت { إنما يريد الله ليذهب عنكم الرجس أهل البيت } قالت : فأرسل رسول الله صلى الله عليه وسلم إلى فاطمة وعلي والحسن والحسين ، فقال : هؤلاء أهل بيتي . قالت : فقلت :
    يا رسول الله أما أنا من أهل البيت ؟ قال : بلى إن شاء الله
    الراوي: أم سلمة هند بنت أبي أمية المحدث: البغوي - المصدر: شرح السنة - الصفحة أو الرقم: 7/204
    خلاصة الدرجة: إسناده صحيح

     
    • پسند پسند x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  6. ‏مئی 20، 2014 #6
    طاہر اسلام

    طاہر اسلام سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 07، 2011
    پیغامات:
    843
    موصول شکریہ جات:
    725
    تمغے کے پوائنٹ:
    256

    انھی مماتیوں کی ویب سائٹ پر طلاق ثلاثہ کے مسئلے میں اہل حدیث کو شیعہ سے ملایا گیا ہے۔حوالہ
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
  7. ‏مئی 20، 2014 #7
    طاہر رمضان

    طاہر رمضان رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 25، 2012
    پیغامات:
    77
    موصول شکریہ جات:
    167
    تمغے کے پوائنٹ:
    55


    کمال ہے کہ آپ کو اس ویڈیو میں کہاں سے حیاتی مماتی اک جھگڑا نظر آ گیا ؟؟ تو اِس سے کس کو اعتراض ہے کہ ان مسلک میں اختلاف ہے ؟ اگر میں نے حیات ممات کا کوئی ذکر کرنا تھا تو وہ کسی اور کیٹگری میں کرتا ۔ اور یہ پوسٹ میں نے ردِ شیعت پر کی ہے!
     
  8. ‏مئی 20، 2014 #8
    طاہر رمضان

    طاہر رمضان رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 25، 2012
    پیغامات:
    77
    موصول شکریہ جات:
    167
    تمغے کے پوائنٹ:
    55


    اگر بیان کو غور سے سُنا جاتا تو مؤقف سمجھ آجاتا کہ قرآن و سنت سے یہ ثابت ہے کہ اہلِ بیت سب سے پہلے ازواجِ مطہرات کا کہا گیا ہے ۔
     
  9. ‏مئی 20، 2014 #9
    عبدہ

    عبدہ سینئر رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏نومبر 01، 2013
    پیغامات:
    2,038
    موصول شکریہ جات:
    1,160
    تمغے کے پوائنٹ:
    425

    استادِ محترم اللہ تعالی آپ سے راضی ہو مجھے آپ کی بات کی سمجھ نہیں آئی
     
  10. ‏مئی 20، 2014 #10
    علی بہرام

    علی بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 18، 2013
    پیغامات:
    1,216
    موصول شکریہ جات:
    161
    تمغے کے پوائنٹ:
    105

    ایسے سوائے ناصبیت کے اور کیا کہا جاسکتا ہے ؟
    کہ اہل سنت کی معتبر ترین کتب احادیث کی روایت کو نہیں مانا جارہا
    خرج النبيُّ صلَّى اللهُ عليهِ وسلَّمَ غداةً وعليه مِرْطٌ مُرحَّلٌ ، من شعرٍ أسودٍ . فجاء الحسنُ بنُ عليٍّ فأدخلَه . ثم جاء الحسينُ فدخل معه . ثم جاءت فاطمةُ فأدخلها . ثم جاء عليٌّ فأدخلَه . ثم قال " إِنَّمَا يُرِيدُ اللهُ لِيُذْهِبَ عَنْكُمُ الرِّجْسَ أَهْلَ الْبَيْتِ وَيُطَهِّرَكُمْ تَطْهِيرًا " [ 33 / الأحزاب / 33 ] .
    الراوي: عائشة أم المؤمنين المحدث: مسلم - المصدر: صحيح مسلم - الصفحة أو الرقم: 2424
    خلاصة حكم المحدث: صحيح

    ترجمہ شیخ السلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری
    ''حضرت عائشہ صدیقہ رضی اﷲ عنہا بیان کرتی ہیں کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم صبح کے وقت ایک اونی منقش چادر اوڑھے ہوئے باہر تشریف لائے تو آپ کے پاس حضرت حسن بن علی رضی اﷲ عنہما آئے تو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اُنہیں اُس چادر میں داخل کر لیا، پھر حضرت حسین رضی اللہ عنہ آئے اور وہ بھی ان کے ہمراہ چادر میں داخل ہو گئے، پھر سیدہ فاطمہ رضی اﷲ عنہا آئیں اور آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے انھیں بھی اس چادر میں داخل کر لیا، پھر حضرت علی کرم اﷲ وجہہ آئے تو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اُنہیں بھی چادر میں لے لیا۔ پھر آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے یہ آیت مبارکہ پڑھی : ''اہلِ بیت! تم سے ہر قسم کے گناہ کا مَیل (اور شک و نقص کی گرد تک) دُور کر دے اور تمہیں (کامل) طہارت سے نواز کر بالکل پاک صاف کر دے۔''

    ولما نزلت هذه الآيةُ : فَقُلْ تَعَالَوْا نَدْعُ أَبْنَاءَنَا وَأَبْنَاءَكُمْ [ 3 / آل عمران / 61 ] دعا رسولُ اللهِ صلَّى اللهُ عليه وسلَّمَ عليًّا وفاطمةَ وحسنًا وحُسَينًا فقال " اللهمَّ ! هؤلاءِ أهلي " .
    الراوي: سعد بن أبي وقاص المحدث: مسلم - المصدر: صحيح مسلم - الصفحة أو الرقم: 2404
    خلاصة حكم المحدث: صحيح

    صحيح الترمذي - الصفحة أو الرقم: 2999
    سنن الترمذي - الصفحة أو الرقم: 3724

    ترجمہ شیخ السلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری
    'حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ جب آیتِ مباہلہ نازل ہوئی : ''آپ فرما دیں کہ آ جاؤ ہم (مل کر) اپنے بیٹوں کو اور تمہارے بیٹوں کو اور اپنی عورتوں کو اور تمہاری عورتوں کو اور اپنے آپ کو بھی اور تمہیں بھی (ایک جگہ پر) بلا لیتے ہیں۔'' تو حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے حضرت علی، حضرت فاطمہ، حضرت حسن اور حسین علیہم السلام کو بلایا، پھر فرمایا : یا اﷲ! یہ میرے اہلِ بیت ہیں۔''
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں