1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

امیر جماعت پروفیسر حافظ محمد سعید نے آپریشن ضرب عضب کی مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے

'جماعۃ الدعوۃ' میں موضوعات آغاز کردہ از باطل شکن, ‏جون 16، 2014۔

  1. ‏جون 16، 2014 #1
    باطل شکن

    باطل شکن رکن
    جگہ:
    فی الحال اللہ کی زمین کے اوپر
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    122
    موصول شکریہ جات:
    418
    تمغے کے پوائنٹ:
    76

    امیر جماعت الدعوہ پروفیسر حافظ محمد سعید نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی حملہ کے بعد حکومتی اداروں کے پاس صرف یہی راستہ باقی بچتا تھا یہ بروقت اور اچھا فیصلہ ہے ہم حکومت اور فوج کے اس فیصلے کی مکمل حمایت کرتے ہیں تاہم ہم فوج اور دیگر اداروں سے اپیل کرتے ہیں اس آپریشن میں انتہائی احتیاط برتی جائے تاکہ بے گناہ شہری متاثر نہ ہوں۔
     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • ناپسند ناپسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏جون 16، 2014 #2
    باطل شکن

    باطل شکن رکن
    جگہ:
    فی الحال اللہ کی زمین کے اوپر
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    122
    موصول شکریہ جات:
    418
    تمغے کے پوائنٹ:
    76

    انہوں نے مزید کہا ہے کہ وزیر اعظم کو چاہئے کہ وہ قوم کو بتائیں کہ یہ آپریشن کیوں شروع کیا گیا ہے۔
     
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  3. ‏جون 16، 2014 #3
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    وزیرستان آپریشن کے متاثرین بے سروسامان


    پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں فوج کی طرف سے باقاعدہ آپریشن کے آغاز کے بعد علاقے میں بدستور لاکھوں لوگ محصور ہیں جبکہ بے گھر افراد کے لیے تاحال کوئی باقاعدہ کیمپ بھی قائم نہیں کیا جا سکا ہے۔

    شمالی وزیرستان سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق جمعہ کی شام سے علاقے میں کرفیو نافذ ہے جسکی وجہ سے لاکھوں افراد گھروں کے اندر محصور ہیں ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے آپریشن کے اعلان کے ساتھ ہی مقامی باشندوں میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی۔

    شمالی وزیرستان میں گزشتہ ماہ ہونے والی فضائی کاروائیوں کے بعد مقامی لوگوں نے علاقے سے نقل مکانی کا سلسلہ شروع کیا تھا۔

    بیشتر بے گھر افراد قبائلی علاقے سے متصل خیبر پختون خوا کے ضلع بنوں اور آس پاس کے شہروں کی طرف منتقل ہورہے ہیں۔

    بنوں میں حکام کا کہنا ہے کہ اب تک کوئی ساٹھ ہزار کے لگ بھگ افراد گھر بار چھوڑ کر خواتین اور بچوں سمیت محفوظ مقامات پر پناہ لے چکے ہیں۔

    اس کے ساتھ ساتھ کشیدگی کے باعث کوئی چھ ہزار کے قریب افراد نے سرحد پار کر کے افغانستان کے صوبے خوست میں اپنے عزیزوں اور رشتہ داروں کے ہاں پناہ لی ہے تاہم لاکھوں افراد اب بھی علاقے میں پھنسے ہوئے ہیں۔

    دوسری جانب حکومت کی طرف سے شمالی وزیرستان میں باقاعدہ فوجی کاروائی کا آغاز تو کر دیا گیا لیکن ابھی تک بے گھر ہونے والے افراد کے لیے کوئی باقاعدہ متاثرین کیمپ قائم نہیں کیا گیا ہے۔


    علاقے کے مکینوں نے گذشتہ مہینے شروع ہونے والی بمباری کے بعد سے انخلا شروع کیا تھا۔

    مقامی انتظامیہ کے مطابق ایف آر بکاخیل کے علاقے میں پناہ گزین کیمپ بنایا گیا ہے لیکن مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ وہاں بنیادی ضروریات کا شدید فقدان پایا جاتا ہے جسکی وجہ سے اس علاقے کی طرف ابھی تک ایک متاثرہ خاندان بھی نہیں جاسکا ہے۔

    چند دن پہلے بنوں میں ایک اعلی سرکاری اہلکار نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ فنڈر کی عدم دستیابی اور سہولیات کی کمی کے باعث متاثرین کیمپ میں کوئی نہیں جا رہا۔

    اتوار کو فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں بھی دعویٰ کیا گیا کہ ایجنسی بھر سے لوگوں کی انخلاء کے لیے تمام تر انتظامات کر لیے گئے ہیں اور متاثرین کےلیے ایک کیمپ بھی بنایا گیا ہے۔ تاہم بیان میں یہ واضح نہیں کیا گیا ہے کہ کیمپ کس علاقے میں قائم کیا گیا ہے۔

    اسی بھی اطلاعات ہیں کہ شمالی وزیرستان سے زیادہ تر غیر ملکی اور تحریک طالبان پاکستان کے جنگجو علاقہ چھوڑ کر پاک افغان سرحدی مقامات کی طرف منتقل ہو گئے ہیں۔

    میرعلی سے بنوں پہنچنے والے متاثرین نے بی بی سی کو بتایا کہ بیشتر ازبک، چیچن، ترکمان اور اویغیر جنگجو ممکنہ آپریشن کے خوف سے علاقے سے نکل گئے ہیں۔


    ان پناہ گزینوں کے لیے کسی قسم کے مناسب کیمپ کا انتظام ابھی تک نہیں کیا گیا ہے

    انہوں نے بتایا کہ غیر ملکی شدت پسندوں گھروں کا تمام سامان مقامی لوگوں کو سستے داموں فروخت کر کے وہاں سے بیوی بچوں سمیت سرحدی علاقوں کی جانب منتقل ہو گئے ہیں۔

    یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ حکومت کی طرف سے مقامی قبائل پر بھی دباؤ بڑھا جا رہا تھا کہ وہ غیر ملکی جنگجوؤں کو علاقے سے نکالنے کے لیے اپنا بھر پور کردار ادا کریں۔

    تین سب ڈویژنوں اور نو چھوٹی چھوٹی تحصیلوں پر مشتمل شمالی وزیرستان کی کل آبادی پانچ سے سات لاکھ کے درمیان بتائی جاتی ہے۔

    یہ علاقہ گزشتہ ایک دہائی سے زیادہ عرصہ سے ملکی اور غیر ملکی جنگجوؤں کا گڑھ رہا ہے اور شمالی وزیرستان میں 2000 سے غیر ملکی عسکریت پسندوں کا اثر رسوخ بڑھتا جا رہا ہے۔

    اس ایجنسی میں اکثریتی عسکری تنطیمیں حکومت کی حامی رہی ہیں جنہیں عرفِ عام میں ’ اچھے’ طالبان کے نام سے جانا جاتا ہے۔

    تاہم جنوبی وزیرستان میں چند سال پہلے ہونے والے فوجی آپریشن کے باعث زیادہ تر حکومت مخالف عسکریت پسند شمالی وزیرستان منتقل ہو گئے تھے جس کے بعد سے یہ گروپ مسلسل حکومت اور فوج کے لیے درد سر بنا رہا ہے۔


    رفعت اللہ اورکزئی: پير 16 جون 2014
     
  4. ‏جون 17، 2014 #4
    عکرمہ

    عکرمہ مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 27، 2012
    پیغامات:
    658
    موصول شکریہ جات:
    1,835
    تمغے کے پوائنٹ:
    157

    جی حافظ سعید کا’’اپریشن‘‘کی تائید وحمایت کرنا ہی،جماعتی ذمہ داران کے لیے ’’دلیل قطعی‘‘ہے۔۔۔تو بھائی میرے !آپ کی جماعت’’افرادی قوت‘‘کے ساتھ اس جنگ میں شمولیت کیوں اختیار نہیں کرتی۔۔زبانی دعووں کو حقیقت سے سنواریں۔۔۔اٹھیے کہیں یہ قافلہ چھوٹ نہ جائے۔
     
  5. ‏جون 17، 2014 #5
    محمد فیض الابرار

    محمد فیض الابرار سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جنوری 25، 2012
    پیغامات:
    3,032
    موصول شکریہ جات:
    1,194
    تمغے کے پوائنٹ:
    402

    جماعت الدعوۃ کا موقف تو ایسا ہے کہ ماروں گھٹنا اور پھوٹے آنکھ
    کراچی کے حالات پر تو انہیں کبھی توفیق نہیں ہوئی کہ کچھ بولیں لیکن شمالی وزیرستان پر فوری حمایت والا بیان ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
     
    • متفق متفق x 2
    • پسند پسند x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  6. ‏جون 17، 2014 #6
    محمد فیض الابرار

    محمد فیض الابرار سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جنوری 25، 2012
    پیغامات:
    3,032
    موصول شکریہ جات:
    1,194
    تمغے کے پوائنٹ:
    402

    حملہ کراچی ائیرپورٹ پر اور آپریشن وزیر ستان کی حمایت ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • متفق متفق x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  7. ‏جون 17، 2014 #7
    متلاشی

    متلاشی رکن
    شمولیت:
    ‏جون 22، 2012
    پیغامات:
    336
    موصول شکریہ جات:
    373
    تمغے کے پوائنٹ:
    92

    اللہ اللہ کر کے آپریشن شروع ہو ہی گیا اب سب خوارجیوں کو چاہئیے کہ وہ اپنی انٹرنیٹ کی آوارہ گردی کو چھوڑ کر شمالی وزیرستان جائیں اِدھر بیٹھ کر دوسروں کو مشورہ نہ دیں۔
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  8. ‏جون 17، 2014 #8
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,957
    موصول شکریہ جات:
    6,505
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    • شکریہ شکریہ x 1
    • ناپسند ناپسند x 1
    • لسٹ
  9. ‏جون 18، 2014 #9
    محمد فیض الابرار

    محمد فیض الابرار سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جنوری 25، 2012
    پیغامات:
    3,032
    موصول شکریہ جات:
    1,194
    تمغے کے پوائنٹ:
    402

    اور
    آپ کو چاہیے کہ آپ بھی انٹر نیٹ کو چھوڑ کر شمالی وزیر ستان کے مہاجرین کی آبادکاری کے لیے کام کریں
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  10. ‏جون 18، 2014 #10
    محمد فیض الابرار

    محمد فیض الابرار سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جنوری 25، 2012
    پیغامات:
    3,032
    موصول شکریہ جات:
    1,194
    تمغے کے پوائنٹ:
    402

    جماعت الدعوۃ کی طرف سے یہ پہلی مرتبہ نہیں ہو رہا بلکہ اس سے قبل عملی طور پر ان کے مزعومہ مجاہدین طالبان نے پکڑ لیے تھے جنہیں ہمارے ذرائع ابلاغ نے پاکستان آرمی سے ظاہر کیا تھا
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں