1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

انبیاء اپنی قبروں میں زندہ ہیں اور نماز پڑھتے ہیں روایت کی تحقیق

'مسائل قبور' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد ارسلان, ‏اپریل 11، 2014۔

  1. ‏مئی 10، 2014 #111
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    کیا آپ کی اس بات میں تضاد نہیں ایک طرف آپ کہہ رھے ہیں کہ ​


    اور دوسری طرف آپ نے کہا کہ ​
     
  2. ‏مئی 10، 2014 #112
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    مولانا سرفراز صفدر صاحب کا نظریہ بھی دیکھ لیں
    safdar aukarvi ka nazriya.jpg
    حیاتیوں کا "عقیدہِ خروجِ روح" ، "کیفیتِ موت" اور اکاڑوی کی پریشانی!!!
    عبدالشکور ترمذی نے لکھا: ہدیۃ الحیران صفحہ 329 پر

    آبِ حیات کے اس نظریہ پر تمام علمائے دیوبند کا اجماع ہے
    انبیاء کی ارواح کا اخراج جسم سے نہیں ہوتا ۔۔ارواح سمٹ جاتی ہیں اور دل کے اندر بند کر دیا جاتا ہے روح کو اور حواس معطل ہو جاتے ہیں،بعد از موت زائل ِحیات نہیں ہے۔ انبیاء کی حیات ، دنیوی حیات ہے برزخی نہیں اور ہے بھی برابر کہ موت آنے پر حیات میں کوئی تبدیلی نہیں


    مولانا سرفراز صفدر لکھتے ہیں:

    "موت کا مفہوم عرفِ عام میں جان نکل جانے کا نام ہے یعنی جب روح جسم سے نکل جاتی ہے تو اس کو موت کہتے ہیں، علماء کا معنٰی کا کیا ہے کہ روح کا تعلق جسم سے منقطع ہو جائے۔قرآن و حدیث کے نصوص و ارشادات سے معلوم ہوتا ہے کہ روح وقت سے نکالی جاتی ہے آسمانوں کی طرف لے جائی جاتی ہے اور اپنی مقررہ جگہ پر رکھی جاتی ہے"

    (تسکین الصدور صفحہ 212)

    جمہور علماء اسلام موت کا معنٰی انقطاع الروح عن البدن ہی کرتے ہیں (تسکین الصدور صفحہ 216)

    دلائلِ صریحہ سے ثابت ہے کہ موت کے وقت روح جسم سے نکلای جاتی ہے ( تسکین الصدور صفحہ 102)


    اب یا تو مفتی شکور ترمذی کی بات مانو یا مولانا صفدر صاحب کی ! ایک کی مانو تو اجماع کا منکر ہو کے اہلِ سنت سے خارج ہونا پڑے گا ، دوسرے کی مانو تو قرآن و حدیث ،دلائلِ صریحہ کا منکر ہونا پڑے گا۔


    عجب مشکل میں پھنسا ہوں – جو یہ ٹانکا تو وہ اجڑا۔۔ جو وہ ٹانکا تو یہ اجڑا


    اب اوکاڑوی صاحب اگر روح کا نکلنا مانے تو شکوری فتوے سے اہلِ سنت دیوبند سے خارج۔۔ اگر قلب میں حیات مانتے ، روح کا نکلنا نہ مانے تو صفدری فتوے سے قرآن و سنت کا انکار !! اب اس نے دو کشتیوں پر پاؤں رکھا ہے ! دیکھتے ہیں کدھر تک پہنچ پاتے ہیں یہ !!
    تسکین الصدور کتاب یہاں سے ڈونلوڈ کر لیں
    ۔ ​
     
  3. ‏مئی 10، 2014 #113
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    یہ آپ کے علماء دیوبند ہی ہیں - کیا آپ ان سے متفق ہیں​
    maul;ana shafi-2.jpg maul;ana shafi -3.jpg maulana shafih-1.jpg asharf ali thanvi ki tafseer.jpg asharf ali thanvi sahib ki tafseer-2.jpg qasin nanotvi aur aab hayat.jpg



    جاری ہے
     
  4. ‏مئی 11، 2014 #114
    محمود

    محمود رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 19، 2013
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    13
    تمغے کے پوائنٹ:
    41

    یہ بات میری نہیں علامہ زرقانی کی ہے ۔
    دوسرا اس میں تضاد کیا ہے ؟
    زندہ ہوتا ہی وہی ہے جس کی روح لوٹا دی جائے ۔
     
  5. ‏مئی 11، 2014 #115
    محمود

    محمود رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 19، 2013
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    13
    تمغے کے پوائنٹ:
    41

    میں دیوبندی علما، کی عبارتوں کا ذمہ دار نہیں ہوں ان کا جواب تو کوئی دیوبندی ہی دے سکتا ہے ۔
    قرآن کی جو آیات آپ بیان فرما رہے ہیں ان کا مفہوم و مقصد اس کھلی حیات کا بیان ہے جو بعد از وقوع قیامت ہو گی جس میں سب ایک دوسرے کو دیکھ سکیں گے اور ایک ہی عالم میں ہوں گے ۔
    اس وقت ہمارے اور انبیا، کی حیات دو مختلف عالموں میں ہے ۔
     
  6. ‏مئی 11، 2014 #116
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436



    محمود بھائی ذرا اس کی وضاحت کر دیں
     
  7. ‏مئی 11، 2014 #117
    محمود

    محمود رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 19، 2013
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    13
    تمغے کے پوائنٹ:
    41

    پوسٹ 109
    پہلی بات تو یہ کہ قرآن کی قطعی الثبوت و قطعی الدلاتہ بات کے مقابلے میں اخبار احاد کی کوئی حیثیت نہیں جبکہ وہ بظاہر قرآن کی مخالف بھی ہوں ۔
    قرآن نے صاف صاف شہدا کے بارے میں کہہ دیا ہے کہ ان کو میت ، مردہ گمان بھی نہ کرو وہ احیا، ہیں ، زندہ ہیں ۔
    اور میں پہلے عرض چکا ہوں کہ میت اور حی کا اطلاق جسم پر ہوتا ہے روح پر نہیں ۔
    آپ کی پیش کردہ روایات کا یہی مفہوم ممکن ہے کہ شہدا، یہاں ایسی حیات کا مطالبہ کر رہے ہیں جس سے وہ دوبارہ اس دنیا میں آ کر لوگوں کو نظر آئیں کافر ان کو دیکھیں اور وہ کافروں کو اور وہ ان سے لڑتے ہوئے دوبارہ شہید ہو جائیں ۔ ان روایات میں اس طرح کی حیات کی نفی ہے ۔
     
  8. ‏مئی 11، 2014 #118
    محمود

    محمود رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 19، 2013
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    13
    تمغے کے پوائنٹ:
    41

    پوسٹ 110
    علامہ زرقانی حیات انبیا، کے حوالے سے اکیلے نہیں ہیں بہت سے علما، اور بھی ہیں جو حیات الانبیا، کے قائل ہیں ۔
    ازواج کی شب باشی کے حوالے سے گو مجھے نہیں معلوم کہ ان کی دلیل کیا ہے لیکن اگر ایسا ہو بھی تو اس پر اعتراض کیا ہے ؟
     
  9. ‏مئی 11، 2014 #119
    محمود

    محمود رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 19، 2013
    پیغامات:
    60
    موصول شکریہ جات:
    13
    تمغے کے پوائنٹ:
    41

    ہم عالم دنیا میں ہیں اور وہ عالم قبر میں یا اسے عالم برزخ کہہ لیں میں زندہ ہیں ۔
    بلاتشبیہ و مثال آپ سعودی عرب میں زندہ ہیں اور میں پاکستان میں ، ہیں دونوں زندہ مگر مقام مختلف ہے ۔
     
  10. ‏مئی 11، 2014 #120
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    کیا علامہ زرقانی کی بات آپ کے نزدیک حجت ہے یا نہیں ​
    اور پلیز آپ پورا حوالہ یہاں پر سکین پیج کی صورت میں لگا دیں کہ علامہ زرقانی نے یہ بات کی ہے کیوں کہ احمد رضا بریلوی صاحب نے بھی اپنی ملفوظات میں علامہ زرقانی کی بات کا حوالہ دیا ہے -​
    اب آپ کی ذمہ داری ہے کہ آپ علامہ زرقانی کا پورا حوالہ سکین پیج پیش کریں تا کہ یہاں سب کو پتا چلے کی کس کا کس کا حوالہ ٹھیک ہے آپ کا یا احمد رضا کہاں بریلوی کا ​
    اور یہ بھی پتا چلے کہ علامہ زرقاوی نے اصل بات کہی کیا ہے
    احمد رضا خان بریلوی کا حوالہ خود پڑھ لیں سکین پیج یہ ہے ​
    ahmed raza-1.jpg ahmed raza-2.jpg
    علامہ زرقاوی کا صحیح قول کیا ہے - جو آپ نے پیش کیا وہ یا احمد رضا بریلوی نے جو لکھا -​
    جواب آپ پر قرض رہا ​
     
لوڈ کرتے ہوئے...
متعلقہ مضامین
  1. مصبور صدیقی
    جوابات:
    13
    مناظر:
    1,584
  2. lovelyalltime
    جوابات:
    5
    مناظر:
    1,212
  3. lovelyalltime
    جوابات:
    0
    مناظر:
    691
  4. lovelyalltime
    جوابات:
    0
    مناظر:
    531
  5. lovelyalltime
    جوابات:
    0
    مناظر:
    578

اس صفحے کو مشتہر کریں