1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اونٹ کا گوشت اور وضو

'وضو' میں موضوعات آغاز کردہ از ابوحنظلہ, ‏مئی 06، 2018۔

  1. ‏مئی 06، 2018 #1
    ابوحنظلہ

    ابوحنظلہ مبتدی
    شمولیت:
    ‏مارچ 20، 2018
    پیغامات:
    163
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    25

    اونٹ کا گوشت اور وضو

    ابوحنظلہ ، استاذ جامعة الحائل، المملکة السعودیہ، سلسلہ دعوت و اصلاح، الحمد للہ رب العالمین والصلواة والسلام علی رسولہ الکریم اما بعد فاعوذ باللہ من الشیطان الرجیم ﷽۔ رَبِّ اشْرَحْ لِي صَدْرِي وَيَسِّرْ لِي أَمْرِي وَاحْلُلْ عُقْدَةً مِّن لِّسَانِي يَفْقَهُوا قَوْلِي

    “اونٹ کا گوشت کا اعصاب پر بہت زیادہ اثر مرتب ہوتا ہے اور یہ انہیں مشتعل کرتا ہے۔ اسی بنا پر جدید میڈیکل سائنس گرم مزاج رکھنے والے افراد کو اونٹ کا گوشت زیادہ مقدار میں کھانے سے منع کرتی ہے۔ وضو کر لینے سے اعصاب کو سکون اور راحت ملتی ہے۔ یہ ایسا ہی ہے جیسے نبی پاک ﷺ نے غصے کے وقت میں وضو کرنے کا حکم دیا ہے تاکہ ہمارے اعصاب پرسکون ہو جائیں۔” الممتع ج۱ ص۳۰۸۔ تالیف۔ محمد بن صالح العثیمین

    (اس سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ یہ قول وجوب کا نہیں استحباب کا ہے۔ فرض نہیں حکیمانہ ہے۔ جیسے اگر کسی نے غصہ آنے کے بعد وضو نہیں کیا اور نماز پڑھ لی تو نماز ہو جائیگی۔ غصہ اور اونٹ کا گوشت تاثیر کے اعتبار سے گرم ہیں نا کہ ناقض وضو۔ اور ان پر وضو کا حکم بوجہ نقض وضو نہیں بوجہ گرم تاثیر ہے۔ جس کو ختم کرنا مقصود ہے۔ تین آئمہ امام ابوحنیفہ، امام مالک اور امام شافعی کے نزدیک اس کا درجہ استحباب کا ہی ہے۔اسی طرح ہر نماز کے لئے نیا وضو کرنے کا امر استحباب کا درجہ رکھتا ہے اگرچہ پچھلا وضو موجود ہو۔ تاکہ اعصاب کو تسکین حاصل ہو۔ اور نماز میں دل جمے۔

    وما علینا الالبلاغ
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں