1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اہل حرمین کا عمل حجت ہے ؟

'اصول فقہ' میں موضوعات آغاز کردہ از خضر حیات, ‏اکتوبر 20، 2016۔

  1. ‏اکتوبر 20، 2016 #1
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,167
    موصول شکریہ جات:
    8,192
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    میں اکثر یہ گزارش کرتا ہوں کہ : حرمین کا عمل حجت نہیں ... حرمین کو بطور حجت پیش کرنا ’ دلیل ’ نہیں بلکہ ’ ڈھکوسلہ ’ ہے ، دلیل ’ سدا بہار ’ ہوتی ہے ، جبکہ ’ ڈہکوسلہ ’ موسمی اور وقتی ہوتا ہے .
    سید نذیر حسین محدث دہلوی کا زمانہ وہ ہے ، جب حرمین میں سعودی حکومت نہیں تھی ، آپ کی تصنیفات میں باقاعدہ ایک رسالہ بعنوان ’ عمل حرمین حجت شرعیہ نہیں ’ ملتا ہے ۔
    سید صاحب کی سوانح میں کئی ایک مثالیں پیش کی گئی ہیں ، جن میں حرمین میں ہونے والے اعمال و افعال کا غلط ہونا ظاہر و باہر ہے .
    وہی ٹولہ جو آج اپنی مظلومیت کے رونے روتا ہے ، انہیں کے آباء و اجداد نے سید نذیر حسین محدث دہلوی بر غلط سلط الزام لگوا کر قتل کرنے اور کروانے کی بھر پور کوشش کی ۔... امیر مکہ کو چغلیاں کرکے پہکایا .... جس کی تفصیل کے لیے الحیاۃ بعد المماۃ ملاحظہ کی جاسکتی ہے ۔
    حق بات یہ ہے کہ حرمین میں حکومت جس کی بھی ہو ، ہر حال میں پراپیگنڈہ سے باز رہنا چاہیے ، اگر آچ بھی ارض حرمین میں کوئی اس طرح کی حرکتیں کرنے میں مصروف ہے تو قابل مذمت ہے . اور اسے اللہ کی پکڑ سے ڈرنا چاہیے ۔
     
    • پسند پسند x 2
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں