1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بابری مسجد کی شہادت کے بائیس سال(22)

'متفرقات' میں موضوعات آغاز کردہ از عبدالقیوم, ‏دسمبر 06، 2014۔

  1. ‏دسمبر 06، 2014 #1
    عبدالقیوم

    عبدالقیوم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2013
    پیغامات:
    825
    موصول شکریہ جات:
    408
    تمغے کے پوائنٹ:
    142

    تر پردیش: بھارت میں ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں مسلمانوں کی تاریخی بابری مسجد کی شہادت کو 22 برس بیت چکے ہیں لیکن مسلمان آج بھی انصاف کے طلب گار ہیں۔

    ہندو انتہا پسند جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی نے آر ایس ایس اور شیوسینا جیسی ہندو انتہا پسند تنظیموں کے ساتھ مل کر 16ویں صدی عیسوی سے قائم مسلمانوں کی تاریخی بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی تعمیر کی ایک تحریک چلائی اور پھر 6 دسمبر 1992 کو ہندو انتہاپسند تنظیموں نے نیم فوجی دستوں کی مدد سے بابری مسجد کو شہید کر دیا۔ بابری مسجد کی شہادت کے نتیجے میں گجرات میں ہندو مسلم فسادات پھوٹ پڑے جس میں حکومت کی سرپرستی میں ہزاروں کی تعداد میں مسلمانوں کو شہید کیاگیا۔

    بابری مسجد کی شہادت کے خلاف اس وقت کے وزیراعلیٰ کلیان سنگھ اور شیو سینا کے سربراہ بال ٹھاکرے اور ایل کے ایڈوانی سمیت 49 افراد کے خلاف مقدمات درج کیے گئے جو 2 دہائیوں سے زیادہ عرصہ گزر جانے کے باوجود قانونی دائو پیچ اور عدالتوں کی پیچیدگیوں میں الجھے ہوئے ہیں، اس دوران 10 ملزمان اور 50 گواہ مر چکے ہیں لیکن مقدمے کا فیصلہ آج تک نہیں آ سکا ہے۔

    واضح رہے کہ بابری مسجد مغل بادشاہ ظہیر الدین محمد بابر نے 16 صدی عیسوی میں تعمیر کروائی تھی جو اسلامی اور مغل فن تعمیر کا ایک شاہکار تھی جب کہ ہندو انتہاپسندوں کا دعویٰ تھا کہ ظہیر الدین بابر نے ہندو دیواتا رام کی جائے پیدائش پر بنے رام مندر کو مسمار کر کے بابری مسجد تعمیر کی تاہم ہندو اس حوالے سے مستند تاریخی ثبوت دینے میں ناکام رہے ہیں۔
    Chat
    بشکریہ ایکسپریس​
     
    Last edited by a moderator: ‏دسمبر 08، 2014
  2. ‏دسمبر 06، 2014 #2
    فہد ظفر

    فہد ظفر رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 15، 2011
    پیغامات:
    193
    موصول شکریہ جات:
    240
    تمغے کے پوائنٹ:
    95

    بابر ایک ملحد شخص تھا اسکے شعر ملاحظہ کریں -

    نو روز و نو بہار و مے و دلبرے خوش است
    بابر بہ عیش کوش کہ عالم دوبارہ نیست​
     
  3. ‏دسمبر 07، 2014 #3
    عبدالقیوم

    عبدالقیوم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2013
    پیغامات:
    825
    موصول شکریہ جات:
    408
    تمغے کے پوائنٹ:
    142

    بھائی مسجد بنانا تواچھاکام تھا
     
    • متفق متفق x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  4. ‏دسمبر 07، 2014 #4
    حیدرآبادی

    حیدرآبادی مشہور رکن
    جگہ:
    حیدرآباد دکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2012
    پیغامات:
    285
    موصول شکریہ جات:
    493
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    بابری مسجد سانحہ سے متعلق یہ چند مضامین مطالعہ کے لئے مفید ثابت ہو سکتے ہیں :

     
    • زبردست زبردست x 2
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • لسٹ
  5. ‏نومبر 09، 2019 #5
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,777
    موصول شکریہ جات:
    8,340
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    اسلامیان ہند نے بابری مسجد کی سوداگری کی قانونی کاروائی بھی مکمل کرلی۔
    یوٹیوب پر بابری مسجد کے حوالے سے موجود کچھ نظموں سے منتخب اشعار:
    اے میری مسجد بابری
    پرسوز ہے تیرا بیان
    دل کے افق پر چھا رہا ہے
    تیری آھوں کا دھواں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    تمہاری بے بسی سے قصہ غم عام ہے میرا
    میں ہوں بابر کی مسجد، بابری نام ہے میرا
    مینارہ ہے نہ گنبد ہے نہ کوئی بام ہے میرا
    میں ہوں بابر کی مسجد، بابری نام ہے میرا
    میری عصمت کی خاطر اٹھو اب شمشیر اٹھالو تم
    مسلمانو ! تمہارے نام یہ پیغام ہے میرا
    میں ہوں بابر کی مسجد، بابری نام ہے میرا
    بہت مظلوم ہوں اور فسانہ عام ہے میرا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    مسجد بابری ہم خطا کار ہیں
    تیری بے حرمتی پر شرمسار ہیں
    پہلے غیرت کو تیری ابھارا گیا
    پھر نشاں بابری کا مٹایا گیا
    مسجد بابری بت کدہ بن گئی
    تیری غیرت مسلمان کہاں کھو گئی
    اے مساجد ہم ہی دغا باز ہیں
    مسجد بابری ہم خطا کار ہیں
    کون کہتا ہے مسلمان بیدار ہے
    مسجد بابری ہم خطا کار ہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    تم کو کرنی تھی حفاظت لیکن میں نے
    کرلیا فیصلہ خود مٹ کے بچاؤں تم کو
    ہائے افسوس مگر اب بھی نہیں جاگے تم
    میں نے چاہا تھا کہ میں گر کے اٹھاؤں تم کو
    (بابری مسجد)
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں