1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بڑے غصے سے میں گھر سے چلا آیا ..

'والدین کے حقوق' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏اگست 21، 2015۔

  1. ‏اگست 21، 2015 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,967
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    بڑے غصے سے میں گھر سے چلا آیا ..
    اتنا غصہ تھا غلطی سے بابا کے جوتے پہن کے نکل گیا
    میں آج بس گھر چھوڑ دوں گا، اور تبھی لوٹوگا جب بہت بڑا آدمی بن جاؤں گا ...
    جب موٹر سائیکل نہیں دلوا سکتے تھے، تو کیوں انجینئر بنانے کے خواب دیکھتے ہیں .....
    آج میں پاپا کا پرس بھی اٹھا لایا تھا .... جسے کسی کو ہاتھ تک نہ لگانے دیتے تھے ...
    مجھے پتہ ہے اس پرس میں ضرور پیسوں کے حساب کی ڈائری ہوگی ....
    پتہ تو چلے کتنا مال چھپا رکھاہے .....
    ماں سے بھی ...
    اسے ہاتھ نہیں لگانے دیتے کسی کو ..
    جیسے ہی میں عام راستے سے سڑک پر آیا، مجھے لگا جوتوں میں کچھ چبھ رہا ہے ....
    میں نے جوتا نکال کر دیکھا .....
    میری ایڑی سے تھوڑا سا خون رس آیا تھا ...
    جوتے کی کوئی کیل نکلی ہوئی تھی، درد تو ہوا پر غصہ بہت تھا ..
    اور مجھے جانا ہی تھا گھر چھوڑ کر ...
    جیسے ہی کچھ دور چلا ....
    مجھے پاوں میں گیلا سا محسوس ہوا، سڑک پر پانی پھیلا ہوا تھا ....
    پاؤں اٹھا کے دیکھا تو جوتے کے تلوےپھٹے ہوئے تھے .....
    جیسے تیسے لنگڑا لنگڑاكر بس سٹاپ پہنچا تو پتہ چلا بس ایک گھنٹہ لیٹ ہے۔۔۔
    میں نے سوچا کیوں نہ پرس کی تلاشی لی جائے ....
    پرس کھولا، ایک پرچی دکھائی دی، لکھا تھا ..
    لیپ ٹاپ کے لئے 40 ہزار قرضے لئے
    پر لیپ ٹاپ تو گھر میں صرف میرے پاس ہے؟
    دوسری ایک چٹ مڑی تڑی دیکھی، اس میں ان کے آفس کی کسی شوق ڈے کا لکھا تھا
    انہوں نے شوق لکھا "اچھا جوتے پہننا" ......
    اوہ .... اچھے جوتے پہننا ؟؟؟
    پر انکے جوتے تو ........... !!!!
    ماں گزشتہ چار ماہ سے ہر پہلی کو کہتی کہ نئے جوتے لے لیجئے ...
    اور وہ ہر بار کہتے "ابھی تو 6 ماہ جوتے اور چل چاینگے .."
    میری سمجھ میں آب آیا کہ کیسے چل جایئینگے
    ...... تیسری پرچی ..........
    پرانا سکوٹر دیجئے ایکسچینج میں نئی موٹر سائیکل لے جائیں ...
    پڑھتے ہی دماغ گھوم گیا .....
    بابا کا سکوٹر .............
    اوه خدایا
    میں گھر کی طرف بگٹٹ بھاگا ........
    اب پاوں میں وہ کیل نہیں چبھ رہی تھی ....
    گھر پہنچا .....
    نہ بابا تھے نہ سکوٹر ..............
    اوه نو
    میں سمجھ گیا کہاں گئے ....
    میں بھاگا .....
    اور
    ایجنسی پر پہنچا ......
    بابا وہیں تھے ...............
    میں نے ان کو گلے سے لگا لیا، اور آنسووں سے ان کا کندھا بھیگ گیا ..
    ..... نہیں ... بابا نہیں ........ مجھے نہیں چاہئے موٹر سائیکل ...
    بس آپ نئے جوتے لے لو اور مجھے اب بڑا آدمی بننا ہے ..
    وہ بھی آپ کے طریقے سے .....
    ۔
    "ماں" ایک ایسی بینک ہے جہاں آپ ہر احساس اور دکھ جمع کر سکتے ہیں ...
    اور
    "بابا" ایک ایسا کریڈٹ کارڈ ہے جو بیلنس نہ ہوتے ہوئے بھی ہمارے خواب
    پورے کرنے کی کوشش کرتا ہے.
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں