1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بیس(٢٠) رکعات تراویح سے متعلق تمام روایات کا جائزہ۔

'موضوع ومنکر روایات' میں موضوعات آغاز کردہ از کفایت اللہ, ‏جولائی 29، 2012۔

موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
  1. ‏اگست 16، 2012 #11
    کفایت اللہ

    کفایت اللہ عام رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 14، 2011
    پیغامات:
    4,770
    موصول شکریہ جات:
    9,776
    تمغے کے پوائنٹ:
    722

    بیس رکعات سے متعلق جس قدر بھی مرفوع یا موقوف روایات ملتی ہیں سب کی حقیقت اس تھریڈ میں واضح کردی گئی ہے ، اس سلسلے کی کوئی روایت اگرچھوٹ گئی ہو تو قارئین مطلع فرمائیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 9
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
  2. ‏اگست 16، 2012 #12
    کلیم حیدر

    کلیم حیدر رکن
    جگہ:
    لیہ
    شمولیت:
    ‏فروری 14، 2011
    پیغامات:
    9,403
    موصول شکریہ جات:
    25,973
    تمغے کے پوائنٹ:
    995

    جزاکم اللہ خیرا واحسن الجزاء فی الدارین
     
    • شکریہ شکریہ x 7
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  3. ‏اگست 16، 2012 #13
    Aamir

    Aamir خاص رکن
    جگہ:
    احمدآباد، انڈیا
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2011
    پیغامات:
    13,384
    موصول شکریہ جات:
    16,871
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,033

    جزاکم اللہ خیرا واحسن الجزاء فی الدارین
     
  4. ‏اگست 16، 2012 #14
    ناظم شهزاد٢٠١٢

    ناظم شهزاد٢٠١٢ مشہور رکن
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏جولائی 07، 2012
    پیغامات:
    258
    موصول شکریہ جات:
    1,524
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    لاجواب!
     
  5. ‏اگست 16، 2012 #15
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,177
    موصول شکریہ جات:
    15,224
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    جزاکم اللہ خیرا
     
    • شکریہ شکریہ x 6
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏اگست 16، 2012 #16
    جنید علی

    جنید علی مبتدی
    جگہ:
    ارض اللہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 23، 2012
    پیغامات:
    5
    موصول شکریہ جات:
    17
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    بارك الله في علمك وعمرك يا اخي كفايت الله.
     
    • شکریہ شکریہ x 7
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  7. ‏اگست 16، 2012 #17
    طالب نور

    طالب نور رکن مجلس شوریٰ
    جگہ:
    سیالکوٹ، پاکستان۔
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2011
    پیغامات:
    361
    موصول شکریہ جات:
    2,303
    تمغے کے پوائنٹ:
    220

    کفایت اللہ بھائی، انتہائی شاندار اور زبردست مضمون ہے۔ اللہ آپ کے علم و عمل میں مزید برکت دے، آمین یا رب العالمین۔
     
    • شکریہ شکریہ x 8
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  8. ‏اگست 16، 2012 #18
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    جزاک اللہ خیرا کفایت اللہ بھائی۔ ہمیشہ کی طرح نہایت آسان فہم اور خوب مدلل انداز تحریر ہے۔ اللہ تعالیٰ آپ کو دین و دنیا کی برکتیں عطا فرمائیں۔ آمین۔
     
    • شکریہ شکریہ x 6
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  9. ‏اگست 17، 2012 #19
    ابن قاسم

    ابن قاسم مشہور رکن
    جگہ:
    الہند
    شمولیت:
    ‏اگست 07، 2011
    پیغامات:
    253
    موصول شکریہ جات:
    1,073
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    بیس رکعات تراویح کے متعلق آپ نے تمام آثار یہاں جمع کر دئیے ہیں جن سے لوگوں میں تذبذب ہوتا ہے
    جب کبھی ہمیں ان ضعیف روایات کے متعلق جاننا ہو تو اس دھاگے سے براہ راست استفادہ کر سکتے ہیں
    جزاکم اللہ خیرا
     
    • شکریہ شکریہ x 7
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  10. ‏اگست 17، 2012 #20
    کفایت اللہ

    کفایت اللہ عام رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 14، 2011
    پیغامات:
    4,770
    موصول شکریہ جات:
    9,776
    تمغے کے پوائنٹ:
    722

    ابن قاسم بھائی میں نے وہ تمام روایات جمع کی ہیں جو اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم یا کسی صحابی سے متعلق ہیں ۔
    لیکن یاد رہے کہ کچھ لوگ تابعین یعنی صحابہ کے بعد کے دور والے اور پھران کے بعد کے اہل علم کے اعمال ، روایات کے نام سے پیش کرتے ہیں ، اور عوام کو دھوکہ دیتے ہیں کہ یہ بھی دلائل ہیں حالانکہ تابعین اوران کے بعد کےا ہل علم کے اقوال وافعال بالاتفاق حجت نہیں ہیں اس پر سب کا اتفاق ہے۔
    اس لئے اگر آپ کے سامنے اس طرح کی روایات پیش کی جائیں تو آپ کا صڑف یہ کہہ دینا کافی ہے کہ یہ کوئی حدیث یا صحابی کا قول نہیں اس لئے یہ دلیل نہیں ۔
    ہاں اگرمرفوع حدیث یا صحابی سے متعلق کوئی روایت پیش کی جائے تو ان شاء اللہ ایسی ہر روایت کی تحقیق آپ اس تھریڈ میں پاسکتے ہیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 6
    • زبردست زبردست x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...
موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔

اس صفحے کو مشتہر کریں