1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بیع کی شرائط اور بیع ممنوعہ کی اقسام

'خریدوفروخت' میں موضوعات آغاز کردہ از عبد الرشید, ‏اپریل 10، 2011۔

  1. ‏اپریل 10، 2011 #1
    عبد الرشید

    عبد الرشید رکن ادارہ محدث
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    5,178
    موصول شکریہ جات:
    9,941
    تمغے کے پوائنٹ:
    667

    عن رفاعة بن رافع رضی اللہ تعالى عنه، أن النبیﷺ سئل أي الکسب أطیب؟ قال : «عمل الرجل بیدہ ، وکل بیع مبرور ».رواه البزار وصححه الحاكم.
    حضرت رفاعہ بن رافع﷜ سے مروی ہے کہ نبی ﷺ سے پوچھا گیا کہ کونسی کمائی پاکیزہ ترہے؟آپ ﷺ نے فرمایا’’آدمی کی اپنے ہاتھ کی کمائی اور ہر قسم کی تجارت جو دھوکہ اور فریب سے پاک ہو۔‘‘(اسے بزار نے روایت کیا ہے اور حاکم نے اسے صحیح قراردیا ہے۔)
     
    • شکریہ شکریہ x 5
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏اپریل 10، 2011 #2
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,177
    موصول شکریہ جات:
    15,224
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    جزاکم اللہ خیرا!
    بہت ہی اچھی پوسٹ ہے۔
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  3. ‏اپریل 15، 2011 #3
    راجا

    راجا سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 19، 2011
    پیغامات:
    734
    موصول شکریہ جات:
    2,555
    تمغے کے پوائنٹ:
    211

    جزاک اللہ
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  4. ‏اپریل 17، 2011 #4
    ساجد

    ساجد رکن ادارہ محدث
    جگہ:
    قصور(بھاگیوال)
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    6,602
    موصول شکریہ جات:
    9,357
    تمغے کے پوائنٹ:
    635

    جزاک اللہ بھائی بہت عمدہ پوسٹ ہے۔لیکن عربی عبارت کوذرا ٹھیک کرلیتے تو اچھا تھا۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  5. ‏اپریل 18، 2011 #5
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    عبدالرشید بھائی، آپ کی عربی عبارت کو درست کر دیا ہے۔ ازراہ کرم احادیث کو کوٹ کرنے کےلئے اس طرح کی بریکٹس ( ) استعمال نہ کریں اور اگر کریں تو ان سے پہلے کوئی اور انگریزی کولن، سیمی کولن وغیرہ استعمال نہ کریں کیونکہ وہ عموماً کسی نہ کسی اسمائیلی کی شارٹ فارم بن جاتی ہے اور عین عربی عبارات کے بیچ میں اسمائیلی نظر آنا شروع ہو جاتے ہیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏مارچ 14، 2016 #6
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    1935944_947678211967115_8660201152585403205_n (1).jpg

    بسم اللہ الرحمن الرحیم

    صاف صاف بتا دو

    کسی کے لئے کسی ایسی چیز کا بیچنا جائز نہیں ہے ، جس کے اندر کوئی نقص خرابی عیب موجود ہو جب تک کہ خریدنے والے کو وضاحت سے صاف صاف بتا نہ دیا جائے یا بیان نہ کر دیا جائے ( کہ میں جو چیز بیچ رہا ہوں اس میں فلاں فلاں نقص خرابی یا عیب موجود ہے) اور (خریدار کو) صاف صاف بتانا بیان کرنا ، بیچنے والے پر لازم ہے

    (مفہوم فرمان رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم)

    ---------------------------------------------------------------------
    (الترغيب والترهيب : 3/33 ، ، صحيح الترغيب : 1774 (حسن لغيره) ، ،
    غاية المرام : 339)
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں