1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بے عمل۔ بے عقل

'تفسیر قرآن' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد آصف مغل, ‏مئی 31، 2013۔

  1. ‏مئی 31، 2013 #1
    محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل سینئر رکن
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏اپریل 29، 2013
    پیغامات:
    2,677
    موصول شکریہ جات:
    3,881
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    اَتَاْمُرُوْنَ النَّاسَ بِالْبِرِّ وَتَنْسَوْنَ اَنْفُسَكُمْ وَاَنْتُمْ تَتْلُوْنَ الْكِتٰبَ۝۰ۭ اَفَلَا تَعْقِلُوْنَ۝۴۴ وَاسْتَعِيْنُوْا بِالصَّبْرِ وَالصَّلٰوۃِ۝۰ۭ وَاِنَّہَا لَكَبِيْرَۃٌ اِلَّا عَلَي الْخٰشِعِيْنَ۝۴۵ۙ الَّذِيْنَ يَظُنُّوْنَ اَنَّھُمْ مُّلٰقُوْا رَبِّہِمْ وَاَنَّھُمْ اِلَيْہِ رٰجِعُوْنَ۝۴۶ۧ
    ۱؎ قرآن حکیم بار بار جس غلط فہمی کو دور کردینا چاہتا ہے وہ قول وعمل میں عدم توافق ہے ۔ قرآن کہتا ہے کہ تبلیغ واشاعت کا آغاز، رہنمائی اور قیادت کا شروع اپنے نفس سے ہو۔ اپنے قریبی ماحول سے ہو ورنہ محض شعلہ مقال کوئی چیز نہیں۔

    لِمَ تَقُوْلُوْنَ مَالاَ تَفْعَلُوْنَ۔ یہودیوں اور عیسائیوں میں بے عملی کا مرض عام ہوچکاتھا۔ ان کے علماء و اولیاء محض باتوں کے علماء تھے۔ عمل سے معرا، اخلاق سے کورے اور زبان کے رسیلے لوگ خدا کو پسند نہیں۔ وہ تو عمل چاہتا ہے ۔ جدوجہد کا طالب ہے ۔ اس کے حضور میں کم گو لیکن ہمہ کاہش لوگ زیادہ مقرب ہیں۔

    ۲؎ ان آیات میں کشاکشہائے دنیا کا علاج بیان فرمایا ہے ۔ یعنی جب تم گھبراجاؤ یا کسی مصیبت میں مبتلا ہوجاؤ توپھر صبر کے فلسفے پر عمل کرو۔وبشر الصابرین۔اور عقل وتوازن کو نہ کھو بیٹھو۔ تاکہ مشکلات کا صحیح حل تلاش کیا جاسکے۔ وہ جومصیبت کے وقت اپنے آپے میں نہیں رہتے، کبھی کامیاب انسان کی زندگی نہیں بسر کرسکتے۔ قرآن حکیم چونکہ ہمارے ہرنوع کے اضطراب کا علاج ہے، اس لیے وہ ہمیں نہایت حکیمانہ مشورہ دیتا ہے جس سے یقینا ہمارے مصائب کا بوجھ ہلکا ہوجاتا ہے ۔

    پھردوسری چیز جو ضروری ہے وہ نماز ودعاء ہے۔ اَلاَبِذِکْرِ اللّٰہِ تَطْمَئِنُّ الْقُلُوْب۔ اس وقت جب دنیا کے امانت کے سب دروازے بند ہوجائیں۔ جب لوگ سب کے سب ہمیں بالکل مایوس کردیں۔ اللہ کی بارگاہِ رحمت میں آجانے سے دل کو تسکین ہوجاتی ہے۔

    حدیث میں آتا ہے۔حضور علیہ الصلوٰۃ والسلام کو جب کوئی مشکل پیش آجاتی تو آپ نماز کے لیے کھڑے ہو جاتے۔ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ کا واقعہ ہے۔ وہ سفر میں تھے کہ کسی نے آکر آپ کو آپ کے لخت جگر کے انتقال کی خبر سنائی۔ وہ سواری سے اترے اور جناب باری کے عتبۂ جلال وجبروت پر جھک گیے۔
    {البر} نیکی۔ حسن سلوک۔ شریعت کی اطاعت۔ {تَنْسَوْنَ} مادہ نسیان۔ بھول جانا۔( تَتْلُوْنَ) پڑھتے ہو۔ مادہ ۔تلاوۃ۔ {اَلْخٰشِعِیْنَ} خدا سے ڈرنے والے۔ عاجز ومنکسر بندے۔
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  2. ‏مئی 31، 2013 #2
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    جزاک اللہ خیرا۔
     
  3. ‏مئی 31، 2013 #3
    محمد شاہد

    محمد شاہد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 18، 2011
    پیغامات:
    2,510
    موصول شکریہ جات:
    6,014
    تمغے کے پوائنٹ:
    447

    جزاک اللہ خیرا
     
  4. ‏جون 01، 2013 #4
    کلیم حیدر

    کلیم حیدر رکن
    جگہ:
    لیہ
    شمولیت:
    ‏فروری 14، 2011
    پیغامات:
    9,403
    موصول شکریہ جات:
    25,976
    تمغے کے پوائنٹ:
    995

    جزاکم اللہ خیرا مغل بھائی
     
  5. ‏جون 01، 2013 #5
    محمد نعیم یونس

    محمد نعیم یونس خاص رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 27، 2013
    پیغامات:
    26,529
    موصول شکریہ جات:
    6,615
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,207

    جزاک اللہ خیرا آصف بھائی۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں