1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تدریس کے لیے روزانہ ندی پار کرتے ہیں استاد عبد المالک

'رفاہ عامہ' میں موضوعات آغاز کردہ از حیدرآبادی, ‏ستمبر 07، 2013۔

  1. ‏ستمبر 07، 2013 #1
    حیدرآبادی

    حیدرآبادی مشہور رکن
    جگہ:
    حیدرآباد دکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2012
    پیغامات:
    285
    موصول شکریہ جات:
    493
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    تعمیر نیوز : تدریس کے لیے روزانہ ندی پار کرتے ہیں استاد عبد المالک
    A teacher who swims through a river everyday to get to his students

    جنوبی ہندوستان کی ریاست کیرالا کے ملاپورم ضلع کے ایک گاؤں کے ابتدائی اسکول میں پڑھانے والے استاد عبدالمالک کا یہ معمول ہے کہ وہ روزآنہ اسکول کو وقت پر پہنچے کے لیے پچھلے 20 سالوں سے اپنے کمر میں ربڑ کی ٹیوب باندھ کر ندی میں تیرتے ہوئے اسکول پہنچتے آ رہے ہیں۔ ندی پار کرتے وقت وہ اپنی شرٹ اور جوتے نکال کر ہاتھ میں تھام لیتے ہیں۔ اور شام کوبھی اسی طرح واپس اپنے گھر جاتے ہیں۔
    اس سلسلے میں جب لوگ ان سے پوچھتے ہیں کہ وہ ایسا کیوں کرتے ہیں تو عبد المالک کہتے ہیں کہ اگر وہ بس سے اسکول آئیں گے تو گھوم پھر کر انہیں تقریباً 12 کیلو میٹر کا سفر کرنا ہوتا ہے۔ جس کی وجہ سے وہ اسکول وقت پر نہیں پہنچ پاتے ہیں۔ ان کے مطابق ندی پار کر نے سے وہ جلد اور وقت پر اسکول پہنچ جاتے ہیں۔ عبدالمالک نہ صرف تیر کر ندی پار کرتے ہیں، بلکہ وہ ندی پار کرنے کے بعد تقریباً 15 منٹ تک پہاڑیوں پر پیدل چلتے ہیں، تب جا کر ہی وہ اسکول پہنچتے ہیں۔
    واضح رہے کہ عبد المالک ملاپورم گاؤں کے ایک ابتدائی سرکاری اسکول کے استاد ہیں۔ اور ان کی تنخواہ 25 ہزار روپئے ہے۔ لیکن وقت پر اسکول پہنچنے کے جنون اور جذبہ کے سامنے یہ تنخواہ کچھ حیثیت نہیں رکھتی ہے۔
    کل "یوم اساتذہ" کے موقع پر جس اسکول میں عبد المالک پڑھاتے ہیں، وہاں کے بچوں نے انہیں ان کے اس جذبہ کی قدرکرتے ہوئے ، پھولوں اور مٹھائیوں سے ان کا استقبال کیا ۔ ندی پار کرکے اسکول پہنچے عبد المالک کا چہرہ پانی سے تر ہونے کے باوجود ،اپنے طلباء کی حوصلہ افزائی سے مزید چمک رہا تھا۔
    وقت کی پابندی اور اپنے اسکول سے لگاؤ کے ذریعے عبدالمالک نے دوسروں کے لیے ایک بہترین پیغام دیا ہے کہ ایک استاد ہو کر اور مناسب و معیاری تنخواہ لینے کے باوجود وہ اسکول وقت پر پہنچنے کے لیے اپنی عزت اور وقار کی فکر نہیں کرتے ہیں۔ اور وقت کی پابندی کا یہ درس ایک استاد ہی ایک طالب علم کو بہتر طریقے سے سکھا سکتا ہے۔ اور وہی کام عبد المالک پچھلے 20 سالوں سے بلا ناغہ کرتے آ رہے ہیں۔
     
    • پسند پسند x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  2. ‏ستمبر 07، 2013 #2
    Urdu

    Urdu رکن
    جگہ:
    انڈیا
    شمولیت:
    ‏مئی 14، 2011
    پیغامات:
    199
    موصول شکریہ جات:
    341
    تمغے کے پوائنٹ:
    76

    بہت اچھی شیئرنگ ہے حیدرآبادی بھائی۔
    شکریہ
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں