1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تصوف کیا ہے ؟ اور اس کی حقیقی تعریف اور مقصود کیا ہے؟

'پیری مریدی' میں موضوعات آغاز کردہ از ریحان احمد, ‏اگست 24، 2013۔

  1. ‏اگست 24، 2013 #1
    ریحان احمد

    ریحان احمد مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2011
    پیغامات:
    267
    موصول شکریہ جات:
    709
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ!
    قائلین تصوف سےچند سوالات
    1. تصوف کیا ہے۔ اسلامی تصوف اور غیر اسلامی تصوف میں کیا فرق ہے اور اس کو کیسے پہچانا جائے گا؟
    2. تصوف کا اصل مقصود کیا ہے؟
    3. تصوف میں موجود سلاسل کی کیا اہمیت ہو حیثیت ہے؟
    4. تصوف کیا مشہور کتابوں جیسے عوارف المعارف وغیرہ کی کیا حیثیت ہے؟
    5. کچھ صوفیاء سے منسوب عجیب و غریب عبادات "جیسے ایک ٹانگ پر کھڑے ہو کر ذکر کرنا" کی کیا حیثیت ہے؟
    براہ مہربانی سوالات کے مطابق جواب دیں۔ غیر متعلق گفتگو سے اجتناب کریں۔

    جزاک اللہ خیرا
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • زبردست زبردست x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏اگست 28، 2013 #2
    عزمی

    عزمی رکن
    شمولیت:
    ‏جون 30، 2013
    پیغامات:
    190
    موصول شکریہ جات:
    292
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

    1. تصوف کیا ہے۔ اسلامی تصوف اور غیر اسلامی تصوف میں کیا فرق ہے اور اس کو کیسے پہچانا جائے گا؟​
    2. تصوف کا اصل مقصود کیا ہے؟​


    • جواب​
     
  3. ‏اگست 29، 2013 #3
    ریحان احمد

    ریحان احمد مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2011
    پیغامات:
    267
    موصول شکریہ جات:
    709
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    محترم آپ نے تو چند سطور کی بحث سے ہی صحیح اور غلط کا فیصلہ کرنا شروع کر دیا۔ ایسا طرز عمل صحیح نہیں ہے۔
     
  4. ‏اگست 29، 2013 #4
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    کیا اکابرین اہلحدیث نے یہ الزام لگایا ہے کے وہابی احسان الٰہی ظہیر شہید شیعت کی آڑ لیکر اکابرین اہلحدیث کو بُرا کہہ رہے ہیں؟؟؟۔۔۔
    یا یہ آپ کی ذہنی خرمستیاں ہیں۔۔۔
    یا آڑ کا جملہ استعمال کر کے آپ شیعوں کو دودھ کا دُھلا ثابت کرنا چاہتے ہیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
  5. ‏اگست 29، 2013 #5
    سیماب

    سیماب مبتدی
    شمولیت:
    ‏اگست 06، 2013
    پیغامات:
    33
    موصول شکریہ جات:
    69
    تمغے کے پوائنٹ:
    17

    یعنی چند سطور سے جو بات سمجھائی جائے آپ اسکو نہیں مانتے ،یعنہ آپکو منوانے کے لئے پوری کتاب لکھنا پڑے گی ،تسی وہابی تے نو۔
     
  6. ‏اگست 29، 2013 #6
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    اگر ہم شہید احسان الٰہی ظہیر سے پہلے کے لوگوں کے تبصرے یہاں پیش کردیں۔۔۔
    تو تم اپنے لہبی ہونے کو تسلیم کروگے؟؟؟۔۔۔
     
    • پسند پسند x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  7. ‏اگست 30، 2013 #7
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    [عزمی, post: 117999, member: 3430"]میری حرب بھائی اور سیماب سے درخواست کہ فضول بحث کو چھوڑ کر کوئی مفید بات کریں [/quote]
    اپنا اپنا خیال ہے۔۔۔
    لکھنے کے لئے ہمارے پاس بھی بہت مواد موجود ہے۔۔۔
    جس سے تصوف کی آڑ لے کر پھیلائی گئی گمراہیاں ثابت کی جاسکتی ہیں۔۔۔
    میں کیوں اجتناب برتتا ہوں ان جھمیلوں میں پڑنے سے وجہ یہ ہے کہ۔۔۔
    لمبی لمبی بحثوں سے حاصل کچھ نہیں ہوتا۔۔۔ فریق نے تسلیم کرنا ہوتا نہیں ۔۔۔
    اس کے بعد جس فضول لفظ کا استعمال آپ اپنی چار لائنوں کی تحقیق جو خود ۔۔۔
    ادھر اُدھر سے اٹھائی گئی ہے سے تصوف کو صحیح ثابت کرنے چاہ رہے ہیں۔۔۔
    بعد میں آپ کی جانب سے وہی فضول کی باتیں شروع ہوجائیں گی۔۔۔
    یعنی پرانی کہاوت مثل کی شکل میں سامنے آئے گی کے آسمان کا تھوکا منہ پر ہی آتا ہے۔۔۔
    اس لئے ٹو دی پوائنٹ بات کرتا ہوں۔۔۔
    جیسے پہلا سوال آپ کی خدمت میں کہ تصوف کی ابتداء کہاں سے ہوئی؟؟؟۔۔۔
    چھوٹے چھوٹے جوابات سے فائدہ یہ ہوتا ہے پڑھنے والے دلچسپی لیتے ہیں۔۔۔
    لمبی لمبی تحریریں اور ہی بات کو دوسرے ڈھنگ سے پیش کرنے کا حربہ پرانا ہوگیا ہے۔۔۔
    تو اس کا حل میں نے یہ ہی نکالا کہ ٹو دی پوائنٹ بات کریں۔۔۔
    تاکہ فریقین اپنی توانائیں کسی مثبت کامیں صرف کریں اور پڑھنے والا قاری محذوز ہو۔۔۔
    مجھے اُمید ہے کہ آپ میرے سوال کا جواب ضرور دیں گے۔۔۔
    تاکہ اب فضول باتوں میں سے کام کی باتوں کو نچوڑا جائے۔۔۔
     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  8. ‏اگست 30، 2013 #8
    عزمی

    عزمی رکن
    شمولیت:
    ‏جون 30، 2013
    پیغامات:
    190
    موصول شکریہ جات:
    292
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

    محترم آپ ناراض نہ ہوں ۔آپ اگر سمجھنے کے لئے سوال کرنا چاہتے تو "ست بسمہ اللہ"اب آپ ابتداء پوچھ رہے ہیں کہ ابتدا کب ہوئی تو جہاں میں نے بتایا ہے تصوف کیا ہے وہی اسکا جواب بھی موجود ہے۔ویسے سوال کرنا سب سے آسان کام ہے۔مولانا غزنوی ؒ کا یہ قول نقل کیا ہے کہ
    تو اسی کے اندر آپکے سوال جواب موجود ہے ،غور فرمائیں۔
     
  9. ‏اگست 30، 2013 #9
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    عزمی بھائی مجھے یہ بتائیں کے ناراض ہوکر میں آپ کا کیا بگاڑ سکتا ہوں اس لئے اس گمان کو اپنے ذہن سے نکال دیجئے لہذا آگے بڑھتے ہیں اور ہم بات کرتے ہیں آپ کے اس نئے جواب پر۔۔۔

    شاید آپ میرے کئے گئے سوال کو سمجھے نہیں یا پھر جو سوال میں نے آپ سے کیا تھا اس کا جواب آپ کے پاس نہیں تھا جس کی وجہ سے آپ نے کہہ دیا کہ سوال کرنا آسان ہوتا ہے پھر آپ نے مولانا غزنوی رحمہ اللہ کا قول نقل کردیا۔۔۔

    میرے کئے جانے والے سوال کا تعلق اسی لحاظ سے تھا تاکہ تاریخ کا اندازہ ہو کے تصوف نے لوگوں کے عقائد میں جگہ کس سن ہجری میں بنائی اور اُس کے اسباب کیا تھے اور مولانا غزنوی رحمہ اللہ علیہ کس سن ھجری کے اہلحدیث عالم گذرے ہیں؟۔۔۔ ماشاء اللہ سمجھدار شخصیت کے مالک ہونے کے ساتھ ساتھ آپ اللہ کے فضل سے پنجابی ایسے بولتے ہیں جیسے دریا بہہ رہا ہے لیکن ایک کہاوت ہے کہ ایک جملے نے دریا کو کوزے میں بند کردیا۔۔۔میں نہیں چاہتا ایسا کوئی جملہ ابھی سے ہی استعمال کردوں۔۔۔

    سوال کا مقصد یہ تھا کے قول سلیم اھدنا صراط المستقیم بات کو الجھانے سے بہتر کیا یہ نہیں ہوگا کے ہم مل کر اس اختلافی مسئلے پر اُن وجوہات کی نشاندہی کریں جس وجہ سے دوریاں کم اور سیکھنے اور سمجھنے کے مواقعے زیادہ میسر آئیں؟؟؟۔۔۔

    میں اور آپ کیوں ایک دوسرے کے لئے اپنے دلوں میں نفرت اور بغض رکھیں یہ تو شیعہ رافضیوں اور قادیانیوں کا کام ہے یا اُن کے جدامجد یہود ونصارٰی کا ہم کیوں بھول جاتے ہیں کہ ہم آگ کے دھانے پر کھڑے تھے کہ اللہ نے ہمارے دلوں میں الفت ڈال کر ہمیں ایک دوسرے کا بھائی بنادیا۔۔۔یہ اللہ رب وحدہ لاشریک کا احسان عظیم ہے۔۔۔بس!۔

    مجھے صرف یہ بتادیں کے تصوف کی ابتداء کہاں سے ہوئی اور اس کا مرکز کہاں تھا اور کن وجوہات کی بناء پر اس کی داغ بیل ڈالی گئی؟؟؟۔۔۔
     
  10. ‏اگست 30، 2013 #10
    عزمی

    عزمی رکن
    شمولیت:
    ‏جون 30، 2013
    پیغامات:
    190
    موصول شکریہ جات:
    292
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

    حرب بھائی آپکا یہ سوال کوئی نیا نہیں ہے۔

    تصوف میں کوئی علحیدہ عقائد نہیں ہیں۔اس بات کو کوآپ اچھی طرح جان لے۔ آپ سچ سچ بتائیں کہ مولنا غزنوی ؒ 1963 ء میں دارفانی پردہ فرمایا ،کیا ایک صوفی ہونے ناطے انکا حضرات اہلحدیث میں کوئی نیا عقیدہ تھا؟۔علم سلوک کے لئے کوئی کسی نئے عقیدے کی ضرورت نہیں۔آپ کسی بھی اہلحدیث صوفی کی سوانح ،تصنیفات اٹھا لے ،اگر وہ صوفی ہونے کیساتھ کیساتھ کسی نئے عقیدے کے مالک تھے ،تو مجھے ضرور بتانا،دوسرا اس بات پر بھی غور کرنا کہ آیا اس طرح کی بات کہنا کہیں بہتان نہ بن جائے اور کل اسکی بارگاہ میں جواب بھی دینا ہے۔آپ میری کسی بات سے ناراض ہیں تو کھلے لفظوں میں کہہ دے ،اگر آپ کہتے تو پنجابی نہیں بولوں گا۔

    س
    ماشاء اللہ بہت خوبصورت بات ہے ،میرے دل میں کسی کے خلاف کوئی نفرت نہیں۔

    آپکے اس سوال کے جواب میں میں نے جو قول رکھا تھا اس میں علم باطن کا اظہار تھا ، (اور میں تصوف پر لفظی بحث کے بجائے سیدھی مقاصد پر بات کر کے علماء اہلحدیث کے دلائل وبرہان سے بات سمجھا دی ۔یہ علحیدہ بات کہ آپ سمجھ نہیں سکے۔)تزکیہ نفس کا ذکر تھا۔اور مشکوۃ شریف سے اوپر میری دلیل بھی گزر چکی ہے۔دوبارہ دہرا دیتا ہوں مشکوۃ المصابیح میں ہے،اور صیح سند کیساتھ۔

    ابھی آپکے سوال کا دوٹوک جواب اس میں یہی ہے کہ تزکیہ باطن کب شروع ہوا، ظاہر ہے نبی کریم ﷺ کے فرائض نبوت میں شامل تھا ۔لقد من اللہ علی المومنین اذ بعث فیھم رسولا من انفسھم یتلواعلیھم آیاتہ و یزکیھم و یعلمھم الکتاب و الحکمۃ و ان کانوا من قبل لفی ضلال مبین ۔ آل عمران 164تو تصوف بھی اس وقت شروع ہو گیا تھا۔
    اب رہا کہ اسکو تصوف کیو ں کہتے ہیں۔تو میں اس پر کوئی باضد نہیں کہ اسکو تصوف ہی کہا جائے، اور یہ تزکیہ کیسے ہوتا تھا ،اس پر بھی میں شروع میں مختصراً لکھ چکا ہوں۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں