1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تصوف کیا ہے

'صوفی' میں موضوعات آغاز کردہ از Aqeel Qureshi, ‏اکتوبر 29، 2011۔

  1. ‏مئی 16، 2013 #41
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    مجھے بھائی آپکے اعتراضات کی کوئی فکر نہیں ،ان مناصب کے متعلق دلائل السلوک میں ہے۔
    غوث قطب ابدال اولیا اللہ کے مناصب ہیں،انکے متعلق بزرگان دین اور صوفیا اکرام کا ہر گز یہ عقیدہ نہیں کہ یہ کوئی ما فوق الفطرت متصرف،خود مختار ،نافع و ضار ،عالم الغیب،ھاضر ناطر یا مسجود خلائق ہستیاں ہیں،جن کو غائبانہ فریاد رسی کےلئے پکارنا جائز ہو۔(دلائل سلوک)
    الغرض اس موضوع پر بہت ساری احادیث موجود ہیں ،جن سے آپ استفادہ حاصل کر سکتے ہیں۔
     
  2. ‏مئی 16، 2013 #42
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    یار عجیب آدمی ہیں آپ۔
    ارے بھائی ہم نے آپ سے ان کے وجود کے دلائل مانگے ہی کب ہیں۔ وہ بعد کا مرحلہ ہے۔
    میں مزید بات کھول کر رکھ دیتا ہوں۔
    غوث، قطب، ابدال وغیرہ آپ کے نزدیک مناصب یعنی عہدے ہیں۔
    ہر عہدہ کسی ذمہ داری کا تقاضا کرتا ہے۔
    آپ علیحدہ علیحدہ ان چاروں مناصب کے بارے میں وضاحت کیجئے کہ :

    غوث کسے کہا جاتا ہے۔ اس کی کیا ذمہ داریاں ہوتی ہیں، یا اس کے کیا فضائل وغیرہ ہوتے ہیں۔
    قطب کسے کہا جاتا ہے۔ اس کی کیا ذمہ داریاں ہوتی ہیں، یا اس کے کیا فضائل وغیرہ ہوتے ہیں۔
    ابدال کسے کہا جاتا ہے۔ اس کی کیا ذمہ داریاں ہوتی ہیں، یا اس کے کیا فضائل وغیرہ ہوتے ہیں۔

    آپ نے اب تک جو کچھ بھی پیش کیا ہے۔ اس سے یہی معلوم نہیں ہوتا کہ غوث اور قطب میں فرق کیا ہے؟ یا قطب اور ابدال ایک ہی عہدہ ہے یا الگ۔
    دلائل السلوک کی بالا عبارت سے یہ تو معلوم ہو جاتا ہے کہ غوث، قطب، ابدال کی نسبت کون سے عقائد رکھنا غلط ہیں۔ لیکن درست عقیدہ کیا ہے یہ اب بھی معلوم نہیں ہوا۔
    آپ کسی اسلامی تصوف کے حامی سے ان مناصب کی باحوالہ تفصیل پیش کیجئے۔
     
  3. ‏مئی 16، 2013 #43
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    میں نے جو ا حادیث پیش کی ہیں انھیں کے اندر آپکے سوال کا جواب موجود ہے۔بس ذرا مقابلہ بازی سے ہٹ کر باغور مطالعہ فرمائیں۔دوسرا جتنا اللہ کے نبی ﷺ نے بتایا ہے اتنا ماننا اور جاننا ضروری ہے۔
     
  4. ‏جون 03، 2013 #44
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    آپ کو احادیث میں سے جو جوابات ملتے ہیں، وہ واضح کر کے لکھ دیں۔ کیا حرج ہے۔ غوث، قطب، ابدال تینوں عہدوں تک پہنچنے کا طریقہ، یا ان کے فضائل و کمالات الگ الگ بتا دیجئے۔ جتنا اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے بتایا ہے، اتنا ماننے اور جاننے لگ جائیں تو سب اختلافات ہی ختم ہو جائیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  5. ‏جون 04، 2013 #45
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    آپکے تمام سوالوںکا مختصر اور ایک ہی جواب ہے کہ آپ عملی طور پر تصوف میں داخل ہوں۔
     
  6. ‏جون 04، 2013 #46
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    گویا آپ کے پاس علمی جواب کوئی نہیں ہے۔
    لہٰذا اب آپ یوں کریں کہ کسی بھی دھاگے میں تصوف کی بحث نہ کریں۔ فقط یہ کہہ دیا کریں کہ تصوف سمجھنا ہے تو عملاً صوفی ہو جاؤ۔ کیونکہ قرآن و حدیث سے ثابت کرنے کے لئے آپ کے پاس کچھ نہیں ہے۔
     
    • متفق متفق x 3
    • زبردست زبردست x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  7. ‏جون 04، 2013 #47
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    شاکر صاحب بعض کام عمل سے ہی صیح سمجھ آتے ہیں،اور قرآن وحدیث بھی عمل کا تقاضا کرتے ہیں،جب عملی طور پر اس میں داخل ہونگے تو تمام سوال کے جواب اآپکو مل جائیں گے ،لیکن پھر بھی میں دیکھتا ہوں ، ذرا فرصت ہو تو تفصیل سے آپ کی طرف لکھتا ہوں۔
     
  8. ‏جون 04، 2013 #48
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    مسئلہ یہ ہے کہ غوث، قطب، ابدال وغیرہ کا عمل سے کوئی تعلق نہیں۔ یہ عہدے ہیں جن کی وضاحت صوفیاء نے کر رکھی ہے۔ آپ سے فقط اتنی گزارش کی گئی تھی کہ کسی "اسلامی صوفی" سے ان کے عہدوں کی نسبت درست مؤقف بیان کر دیں۔ آپ کو "فرصت" ملے تو تفصیل سے میری طرف لکھنے کے بجائے مختصراً کسی بھی اسلامی صوفی سے ان عہدوں کی وضاحت پیش کر دیجئے فقط۔
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  9. ‏جون 04، 2013 #49
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    شاکر بھائی ،اگر آپ مجھ سے پوچھ سے رہے ہیں ،اور خود بتا رہے ہیں کہ انکا عمل سے کوئی تعلق نہیں ،تو کیا کوئی عہدہ ،امارت بغیر محنت کے ملتی ہے،دوسرا جب میں علما اہلحدیث اور تصوف پر لکھ رہا تھا ،تو اس میں یہ سب باتیں ڈسکس ہو جاتی ،اور بالخصوص علما اہلحدیث کا موفف ان باتوں پر موقف واضح ہوتا۔مگر آپ نے مجھ کو لکھنے سے روک دیا،دسخط تک ڈیلیٹ کر دیئے،اب میں ’’ تصوف اکابرین اہلحدیث کی نظر میں‘‘ لکھنا چاہتا ہوں جہاں یہ تمام چیزیں دسکس ہونگی۔اگر آپ کی اجازت ہو تو لکھنا شروع کرتا ہوں ،اور علما اہلحدیث کے دلائل تصوف پر پیش کرونگا۔
     
  10. ‏جون 05، 2013 #50
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,360
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    آپ کو سمجھانا بھی بہت مشکل ہے۔ ارے بھائی، عہدے یا امارت کی تعریف یا اس عہدے کی ذمہ داریاں بتانی یا سمجھنی ہوں، تو اس کے لئے ضروری نہیں کہ پہلے وہ عہدہ حاصل ہو تو ہی سمجھ آئے۔ گویا صدر پاکستان کی ذمہ داریاں سمجھنی ہوں یا کسی کو بتانی ہوں تو وہ تب ہی ممکن ہے جب آپ خود صدر بن جائیں یا جمہوریت کا حصہ بنیں۔
    آپ کا پسندیدہ موضوع یہ ہے کہ انتظامیہ پر بلاوجہ تنقید کرنا، جن باتوں کی بارہا وضاحت پیش کی جا چکی، انہی کو بہانے بہانے سے دوبارہ زیر بحث لانا۔ تاکہ معلوم ہو کہ ہم سب تو آپ سے شدید خوفزدہ ہیں کہ گویا آپ نے ایسے موضوع پر کچھ لکھ دیا تو ہماری تو مسلکی بنیادیں ہل جائیں گی۔ بڑی شدید غلط فہمی ہے آپ کو۔
    آپ نے تصوف پر لکھنا ہے، بصد شوق لکھئے۔ علمائے اہلحدیث کے اقوال پیش کر کے ہم پر حجت قائم نہ کریں۔ کیونکہ یہی علماء ہیں جو ہمیں یہ اصول دے کر گئے ہیں کہ ہماری بات قرآن و سنت پر پرکھ کر قبول کرنا، ورنہ بلاجھجک رد کر دینا۔ اگر بعض علماء تصوف کی حمایت کرتے تھے تو بعض مخالفت بھی کرتے تھے۔ لہٰذا ہم علماء کے اقوال کی اندھی پیروی نہیں کرتے۔ اور آپ ہم سے یہی کچھ کروانا چاہتے ہیں۔ یہ ہے آپ کا پسندیدہ موضوع۔ کہ تصوف کو علماء سے ثابت کرنا۔ ہم کہتے ہیں کتاب و سنت سے ثابت کیجئے اور اسی سلسلے کی کڑی کے طور پر آپ سے تصوف کی کچھ اصطلاحات کی وضاحت مانگی اور آپ بیک آؤٹ کر رہے ہیں۔

    لہٰذا محترم، آپ اسی موضوع تک محدود رہیں۔ اور ہمیں ابدال و اقطاب کے بارے میں وضاحت پیش کریں۔ پہلے کسی اسلامی صوفی کی زبانی کہ یہ عہدے ہیں کیا چیز۔ اور پھر ہم آگے بات چلائیں گے۔ اس موضوع سے ہٹ کر ادھر ادھر کی گزارشات پیش کرنی ہوں تو ان فورمز پر ہی تشریف لے جائیں جہاں لوگ علماء کی باتوں کو قرآن و سنت کا درجہ دیتے ہوں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • متفق متفق x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں