1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

تعارف: ظفر اقبال ظفر

'تعارف اراکین' میں موضوعات آغاز کردہ از ظفر اقبال, ‏دسمبر 18، 2016۔

  1. ‏دسمبر 18، 2016 #1
    ظفر اقبال

    ظفر اقبال رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 22، 2015
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    16
    تمغے کے پوائنٹ:
    60

     
    Last edited: ‏جنوری 24، 2017
  2. ‏دسمبر 18، 2016 #2
    عبدہ

    عبدہ سینئر رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏نومبر 01، 2013
    پیغامات:
    2,022
    موصول شکریہ جات:
    1,152
    تمغے کے پوائنٹ:
    425

    تعارف : ظفر اقبا ل بن محمد یوسف وہابی قوم آرائیں ‘عمر 26 سال۔ . تاریخ پیدائش 10-11-1990 مقام پیدائش :حاجی والی موٹرسلیم کے کوٹ نزد آلہ آباد( ٹھینگ موڑ)۔ ہم اللہ کی توفیق سے 16 بہن بھائی تھے جن کی تفصیل مندرجہ ذیل ہے۔ 9 بھائی 7 بہنیں 5‘ بہنیں 2 بھائی بچپن میں فوت ہو گئے 7‘ بھائی 2 بہن حیات ہیں 3 شادی شدہ ہیں‘ 6 بھائی غیر شادی شدہ ہیں اور اللہ کا فضل ہے والدین بھی ماشا اللہ حیات ہیں ۔ 4. ابتدائی تعلیم5. 1999میں گورنمنٹ پرائمری اسکول بستی فتح والی ضلع قصور نزد منڈی عثمان والا میں داخل ہوا اور وہاں پہلی چار کلاسز کاامتحان پاس کیا مندرجہ ذیل میرے اساتذہ تھے . عبد الستار صاحب ‘ اسحاق صاحب ‘محمد حنیف صاحب ‘طفیل صاحب ۔قرآن مجید ناظرہ مولانا ادریس اربانی صاحب خطیب جامعہ مسجد بستی فتح والی سے مکمل کیا اس کے بعد تقریباً 2005میں کھڈیاں خاص میں ماموں کے پاس چلا گیا جہاں میں نے گورنمنٹ پرائمری اسکول قبر کوٹ میں (پانچویں کلاس میں )داخلہ لیا بورڈ کے امتحان میں سکول ٹاپ کیا اس کے بعد میں نے گورنمنٹ ھائی سکول منڈی عثمانوالہ میں چھٹی کلاس میں داخلہ لے لیا جہاں تقریباً 6 ماہ تک میں پڑھتا رہا داخلے کے تقریبا 6 ماہ بعد 150 کے قریب میری کلاس میں لڑکے تھے ہاکی ٹیم کے لیے سلیکشن میں ہماری کلاس میں سے 2 لڑکوں کو سلیکٹ کیا صبح وردی اور ہاکی ملنی تھی کہ گھر آیا اور گھر میں خالہ اور خالوں آئے ہوئے تھے جن کے کہنے پر والدین نے خالہ زاد بھائی نصیر الرحمنٰ ساجد صاحب( جو اب ائر فورس میں بطور خطیب خدمات سر انجام دے رہے ہیں) کے ہمراہ جامعہ رحمانیہ لاہور میں بتاریخ 1۔12۔2006 بروز جمعہ کو بھیج دیا۔ جہاں میں کلیۃ الشرعیہ اولیٰ ثانوی الف: میں داخل ہوا ( کلاس 16 لڑکوں پر مشتمل تھی جن میں منور شہزاد‘ عمر فاروق ‘ سلمان (شہری تھا)‘ عبد الشکور ‘ نعیم ‘ اشفاق ‘ عبد القدوس ‘ عبد القیوم ‘ عبد الوحید ‘ مدثر محمدی ‘ امین ‘صھیب ‘ آصف ‘ خالد‘ عثمان صدیقی قابل ذکر ہیں ) اس کلاس میں میں نے درس نظامی کی ابتدائی کتب مندرجہ ذیل اساتذہ سے پڑھیں ۔قاری خالد فاروق صاحب(نخبۃ الحدیث) ‘اختر صدیق صاحب ( اسلامی عقیدہ)‘ احسان اللہ فاروقی صاحب سے( علم النحو+ابواب الصرف+ترجمۃ القرآن سورہ یونس ‘یوسف ‘ ھود پڑھیں) ‘قاری عارف بشیر صاحب سے ( 30 پارہ حفظ کیا) ‘قاری عبد السلام عزیزی صاحب سے ( تحفۃ القاری ) ‘شفع طاہر صاحب(علم الصرف ) وغیرہ ۔ ثانیہ ثانوی الف: میں ہم 31 ساتھی تھے جن میں (ندیم بھائی ‘ نعیم بھائی ‘ ثقلین ‘ فاروق ‘ ابو بکر ‘اویس ‘ عثمان ‘ آصف ‘داؤد‘ وقاص ‘ خالد‘ سعید پٹھان‘عفان‘ ضیاء الرحم
    تعارف : ظفر اقبا ل بن محمد یوسف وہابی قوم آرائیں ‘عمر 26 سال۔ . تاریخ پیدائش 10-11-1990 مقام پیدائش :حاجی والی موٹرسلیم کے کوٹ نزد آلہ آباد( ٹھینگ موڑ)۔ ہم اللہ کی توفیق سے 16 بہن بھائی تھے جن کی تفصیل مندرجہ ذیل ہے۔ 9 بھائی 7 بہنیں 5‘ بہنیں 2 بھائی بچپن میں فوت ہو گئے 7‘ بھائی 2 بہن حیات ہیں 3 شادی شدہ ہیں‘ 6 بھائی غیر شادی شدہ ہیں اور اللہ کا فضل ہے والدین بھی ماشا اللہ حیات ہیں ۔ 4. ابتدائی تعلیم5. 1999میں گورنمنٹ پرائمری اسکول بستی فتح والی ضلع قصور نزد منڈی عثمان والا میں داخل ہوا اور وہاں پہلی چار کلاسز کاامتحان پاس کیا مندرجہ ذیل میرے اساتذہ تھے . عبد الستار صاحب ‘ اسحاق صاحب ‘محمد حنیف صاحب ‘طفیل صاحب ۔قرآن مجید ناظرہ مولانا ادریس اربانی صاحب خطیب جامعہ مسجد بستی فتح والی سے مکمل کیا اس کے بعد تقریباً 2005میں کھڈیاں خاص میں ماموں کے پاس چلا گیا جہاں میں نے گورنمنٹ پرائمری اسکول قبر کوٹ میں (پانچویں کلاس میں )داخلہ لیا بورڈ کے امتحان میں سکول ٹاپ کیا اس کے بعد میں نے گورنمنٹ ھائی سکول منڈی عثمانوالہ میں چھٹی کلاس میں داخلہ لے لیا جہاں تقریباً 6 ماہ تک میں پڑھتا رہا داخلے کے تقریبا 6 ماہ بعد 150 کے قریب میری کلاس میں لڑکے تھے ہاکی ٹیم کے لیے سلیکشن میں ہماری کلاس میں سے 2 لڑکوں کو سلیکٹ کیا صبح وردی اور ہاکی ملنی تھی کہ گھر آیا اور گھر میں خالہ اور خالوں آئے ہوئے تھے جن کے کہنے پر والدین نے خالہ زاد بھائی نصیر الرحمنٰ ساجد صاحب( جو اب ائر فورس میں بطور خطیب خدمات سر انجام دے رہے ہیں) کے ہمراہ جامعہ رحمانیہ لاہور میں بتاریخ 1۔12۔2006 بروز جمعہ کو بھیج دیا۔ جہاں میں کلیۃ الشرعیہ اولیٰ ثانوی الف: میں داخل ہوا ( کلاس 16 لڑکوں پر مشتمل تھی جن میں منور شہزاد‘ عمر فاروق ‘ سلمان (شہری تھا)‘ عبد الشکور ‘ نعیم ‘ اشفاق ‘ عبد القدوس ‘ عبد القیوم ‘ عبد الوحید ‘ مدثر محمدی ‘ امین ‘صھیب ‘ آصف ‘ خالد‘ عثمان صدیقی قابل ذکر ہیں ) اس کلاس میں میں نے درس نظامی کی ابتدائی کتب مندرجہ ذیل اساتذہ سے پڑھیں ۔قاری خالد فاروق صاحب(نخبۃ الحدیث) ‘اختر صدیق صاحب ( اسلامی عقیدہ)‘ احسان اللہ فاروقی صاحب سے( علم النحو+ابواب الصرف+ترجمۃ القرآن سورہ یونس ‘یوسف ‘ ھود پڑھیں) ‘قاری عارف بشیر صاحب سے ( 30 پارہ حفظ کیا) ‘قاری عبد السلام عزیزی صاحب سے ( تحفۃ القاری ) ‘شفع طاہر صاحب(علم الصرف ) وغیرہ ۔ ثانیہ ثانوی الف: میں ہم 31 ساتھی تھے جن میں (ندیم بھائی ‘ نعیم بھائی ‘ ثقلین ‘ فاروق ‘ ابو بکر ‘اویس ‘ عثمان ‘ آصف ‘داؤد‘ وقاص ‘ خالد‘ سعید پٹھان‘عفان‘ ضیاء الرحمان ربانی صاحب وغیرہ قابل ذکر ہیں ) ہم نے سید قاری علی ہاشمی صاحب سے (تحبیر التجوید) ‘قاری شفیق صاحب سے( ترجمۃ القرآن)‘ قاری بابر بھٹی صاحب سے( اصطلاحات المحدثین) ‘احسان اللہ فاروقی صاحب ( علم النحو‘ علم الصرف‘ابواب صرف ‘ بلوغ المرام) وغیرہ سے پڑھیں۔ میٹرک کی تعلیم ( یٰسین صاحب ‘راناابو بکر صاحب ‘ سہیل ثاقب صاحب سے حاصل کرتا رہا ۔ ثالثہ ثانوی الف: ( تیسری کلاس) ہم 14 ساتھی تھےجن میں (نعیم عبد الماجد سلفی صاحب کے بھائی ‘ عبد الرحمان‘ نعیم کنگن پوری‘قاری رضوان‘ضیاء الرحمان ربانی صاحب‘ حافظ عبد القدیر ‘ عبد القیوم‘ آصف ‘ فاروق‘ ثقلین‘ شفقت محمود‘ اشفاق‘ ندیم‘قابل ذکر ہیں )ہم 6 ماہ تک الگ ہی پڑھتے رہے مندرجہ ذیل اساتذہ پڑھانے والے تھے اس کلاس میں استاد محترم رحمت اللہ صاحب سے (علم صیغہ) رمضان سلفی صاحب + احسان اللہ فاروقی صاحب سے (ھدایۃ النجو ) قاری شفیق صاحب سے ( اصطلاحات المحدثین+ترجمۃ القرآن) اسحاق طاہر صاحب سے( مشکوٰۃ شریف) مولانا فواد صاحب جوکہ ڈاکٹر اسرار صاحب کے عزیز تھے اور قاری حسین صاحب سے ( سید سابق کی فقہ الطہارۃ‘معاشیات‘شہریت) پڑھی۔ اس کے بعد رمضان سلفی صاحب حج پر چلے گئے جن کی وجہ ےسے ھدایۃ النحو ثالثہ ثانوی (ب) جا کر پڑھنے کی غرض سے دونوں کلاسوں کو ایک کر دیا گیا ۔ثالثہ ثانوی (ب) میں 28 کے قریب تقریبا ساتھی تھے جن میں (عبد الرحمان محمدی‘عبد المجید‘ عبد القدیر ‘یونس عزیزی‘ زاھد جمیل‘ محمد خاں ‘محبت علی مرحوم‘ اکرام ‘ خرم ‘ احسا ن اللہ قمر ‘ عثمان عسکری‘ حافظ ظہیر صاحب ‘ رفیق الرحمان ‘ خبیب احمد‘ محمد فریاد‘ عرفان انور ‘ عبد المالک‘ طیب ‘ خالد عزیز‘شکیل‘ راشد شوکت‘ ضیاء الرحمن ربانی ‘ عثمان امریکی‘وغیرہ قابل ذکر ہیں ) اس میں (ھدایۃ النحو) فاروقی صاحب سے‘(مشکوٰۃ المصابیح) شاکر محمود صاحب سے (ترجمۃ القرآن ) قاری شفیق صاحب سے سے پڑھنے کا موقع ملا ۔ رابعہ ثانوی الف :میں ہم 25کے قریب ساتھی تھے جن میں (ناصر ‘ اعجاز الحق‘ اعجاز شفیق نئے داخل ہوئے اور یونس عزیزی ‘ زاہد جمیل ‘ عبد المالک‘محمد خاں وغیرہ چھوڑ گئے) کوئی 4 ماہ تک ہم نے استاد محترم شیخ عبد الرشید خلق صاحب سے (مقامات حریری) پڑھی‘ شیخ الحدیث والتفسیر مولانا عبد السلام فتح پوری صاحب سے ترجمۃ القرآن مع تفسیر پڑھا‘ مولانا شاکر محمود صاحب سے(مشکوٰۃ شریف )پڑھی‘پھر جامعہ لاہور الاسلامیہ البیت العتیق میں چلے گئےجہاں تقریباً 6 ماہ تک تعلیم حاصل کرتے رہے اس دوران قاری حمزہ مدنی صاحب سے (عقیدہ واسطیہ) شفیع طاہر صاحب سے ( مشکوۃ شریف) حمزہ مدنی صاحب سے (اصول فقہ پر ایک نظر )قاری فیاض صاحب سے (سید سابق کی فقہ الصلاۃ) رمضان سلفی صاحب + شاکر محمود صاحب سےعربی گرائمر کی متوسط طبقہ کی کتب پڑھتے رہے ‘احسان اللہ فاروقی صاحب سے(نحو)‘ قاری ظہیر صاحب (اصول تخریج) سید علی ہاشمی صاحب ( ترجمۃ القرآن+ اسلامی تجارت کے حوالے سے ) پڑھاتے رہے ۔ اسی دوران رد قادیانیت پہ مولانا اللہ وسایا صاحب دیوبندی ‘متین خالد صاحب دیوبندی سے ماڈل ٹاؤن جے بلاک میں آ کرکورس کیا اور سند حاصل کی۔اس کے بعد ہم جا کر رد قادیانیت پہ دورہ کیا اور جامعہ لاہورالاسلامیہ (رحمانیہ )میں آ کر پانچوی کلاس (اولیٰ کلیہ الف) میں داخل ہوئے ہم تقریبا 25 کے قریب ساتھی اس کلاس میں پڑھتے تھے جن میں (عبد الرحمان محمدی ‘ عرفان ‘ عبد المجید ‘حافظ ظہیر ادریس ‘ عبد القدیر ‘ خرم ‘ اکرام‘ناصر ‘ شکیل‘ اعجاوزالحق‘ ضیاء الرحمان ربانی ‘ شعیب کیلانی ‘عدنان اسحاق‘لبید غزنوی ‘فریاد تبسم ‘ عرفان ‘ خالد بھٹی ‘وغیرہ قابل ذکر ہیں ‘) اس کلاس میں ہم نے استاد محترم رمضان سلفی صاحب سے (نیل المرام )استاد محترم شفیق مدنی صاحب سے (ترمزی شریف) استاذ الاساتذہ محترم شیخ عبد الرشید خلیق صاحب سے ( ‘البلاغۃ الواضح‘منطق‘شرح ابن عقیل) کا پہلا حصہ پڑھا‘ اسحاق طاہر صاحب سے (بدایۃ المجتہد) پروفیسر ذکاء اللہ‘ پروفیسر عبد الرحمان صاحب سے بی‘ایس اسلامک کورس کی انگلش پاس کی ‘کامران طاہر صاحب سے ( اصول تحقیق) پڑھی ‘عبد السلام عزیزی صاحب سے تجوید‘استاد محترم مدیر التعلیم حسن مدنی صاحب سے ابو داؤد‘ نسائی کی تعلیم حاصل کی۔ ‘ چھٹی کلاس ( ثانیہ کلیہ الف) میں ہم تقریبا 26 ساتھی تھے جن میں ( سابقہ ساتھی ہی تھے اور ان میں سلمان زاہد ‘راشد پیر ‘احسا ن الہی یونس نئے داخل ہوئے اور عبید الرحمان سلیم صاحب بھی )اور خبیب احمد چھوڑ گئے ۔اس کلاس میں ہم نے استاد محترم حافظ شاکر محمود صاحب سے(ابو داؤد کتاب الزکاۃ+ صحیح فقہ السنۃ کی کتاب الزکاۃ) شفیق مدنی صاحب سے ( ترمزی شریف) شیخ عبد الرشید خلیق صاحب سے (حماسہ+ متنبی )اسحاق طاہر صاحب سے ( مباحث فی علوم القرآن+ اصطلاحات المحدثین )پڑھی‘ حسن مدنی صاحب سے (الوجیز فی اصول الفقہ) پڑھی ‘حافظ انس نضر مدنی صاحب سے وراثت‘ ظہر کے بعد عیسائیت کا کورس مندرجہ ذیل اساتذہ سے کیا جن میں استاد محترم عبد اللہ طارق صاحب ‘ عبد الوارث گل (سابق نو مسلم عیسائی ‘خاور رشید بٹ صاحب)سے تعلیم حاصل کی اور سند وصول کی ۔ ثالثہ کلیہ الف ( ساتویں کلاس میں ) :اس کلاس میں بھی ہم 24 کے قریب ساتھی تھے راشد پیر عبد الرزاق ظہیر وغیرہ نئے تھے اور باقی مذکورہ ساتھی ہی تھے۔ اس کلاس میں ہم نے مندرجہ ذیل اساتذہ سے علم حاصل کیا۔استاد محترم عزیریونس صاحب سے ( اصول تخریج) حافظ انس نضر مدنی صاحب سے ( قواعد التفسیر) شفیق مدنی صاحب‘ اسحاق طاہر صاحب سے(مسلم شریف ) رمضان سلفی صاحب سے فقہ النوازل (عصر حاضر کے جدید مسائل کا اسلامی حل +عقیدہ الطحاویہ) غالباً پروفیسر مختیار صاحب سے انگلش ( بی ایس اسلامک) کی تعلیم حاصل کی۔ رابعہ کلیہ ( آٹھویں کلاس ) : میں بھی ہم 25 کے قریب مذکورہ ساتھی ہی تھے جن میں عبد الرحمان بلتستانی کا اضافہ ہوا ہم نے مندرجہ ذیل اساتذہ سے شرف تلمذ حاصل کیا ۔ جن میں رمضان سلفی صاحب)سے‘بخاری شریف‘فقہ النوازل عبد اللہ طارق صاحب ‘عبد الولی خان صاحب سے( عقیدہ الطحاویہ)شفیق مدنی صاحب سے( بخاری شریف کتاب الصلاۃ‘ قواعد فقہیہ) شاکر محمود صاحب سے( شرح نخبۃ الفکر) ابو عبد اللہ طارق صاحب سے( تقابل ادیان) کی تعلیم حاصل کی‘رمضان سلفی صاحب سے سند الاجازہ حاصل کیا اور اس طرح مسلسل آٹھ سال کے دورانیہ میں درس نظامی ‘وفاق المدارس کی تعلیم جامعہ لاہور الاسلامیہ میں ہی رہ کر حاصل کی اور 2014 میں تعلیمی دورانیہ مکمل کیا اور جامعہ چھوڑنے کا سرٹیفکیٹ حاصل کیا ۔ نوٹ: اسی دوران راقم نے پہلی کلاس کا امتحان دینے کے بعد آپنے خالہ زاد بھائی نصیر الرحمان ساجد صاحب کے ساتھ دیپالپور ضلع اوکاڑہ مہنتانوالہ میں جا کر رمضان المبار ک میں دورہ نحو ( مولانا ادریس اثری صاحب )اور صرف ( استاد محترم مختیار سلفی صاحب ) سے مکمل کیا ۔اس کے ساتھ دورہ نحوو صرف دیوبندی عالم استاد محترم مفتی حسن صاحب سے رمضان المبارک میں چوبرجی جا کر کرتا رہا ۔2013 میں جامعہ لاہور الاسلامیہ میں دورہ نحوو صرف( حافظ شاکر محمود صاحب رمضان سلفی صاحب‘ مختیار سلفی صاحب) سے کیا اس کے ساتھ ہی کورس ردقادیانیت ( عرفان محمود برق صاحب سابق قادیانی ‘طاہر عبد الرزاق صاحب ‘خاور رشید بٹ صاحب ‘ ابو عبد اللہ طارق صاحب‘ عتیق الرحمان علوی ‘عطاء الرحمان علوی صاحب ‘متین خالد صاحب وغیرھم سےمکمل کیا اس کے علاوہ عیسائیت پہ کورس خاور رشید بٹ صاحب ئ ابو عبد اللہ طارق صاحب ‘ عبد الوارث گل صاحب سے مکمل کرتے کے بعد سند حاصل کی۔اور راقم الحروف نے (قادیانیت کا مختصر تعارف )کےعنوان سے اس کورس کا خلاصہ تقریباً 12سے 13صفحات پر لکھا۔ اس کے علاوہ تقریباً سات سے آٹھ مضمون لکھے۔اس کے علاوہ راقم نے دوران تعلیم جماعۃ الدعوۃٰ کی طرف سے دورہ صفہ‘ دورہ عامہ ‘دورہ خاصہ تک کی تربیت حاصل اس 2015میں راقم الحروف نے مجلس التحقیق الاسلامی میں سرپرست عالیٰ حافظ عبد الرحمان مدنی صاحب اور ان کے صاحبزادےاستاد محترم حافظ انس نضر مدنی صاحب کی سرپرستی میں اور قاری مصطفیٰ راسخ صاحب ‘ قاری اختر صاحب چئیرمین آف ویب سائیٹ کی نگرانی میں حدیث پراجیکٹ پہ کام کا آغاز کیا جو کہ ابھی تک جاری ہے جس میں سے بخاری شریف ‘مسلم شریف‘ابو داؤد‘ترمزی شریف‘نسائی شریف‘ابن ماجہ ‘پر کام ان شاءاللہ تکمیل کےمراحل میں ہے۔ اللہ تعالیٰ ہم سب کا حامی و ناصر ہو ...آمین رابطہ: (ظفر اقبال ظفر) فون نمبر :03074274135
    ان ربانی صاحب وغیرہ قابل ذکر ہیں ) ہم نے سید قاری علی ہاشمی صاحب سے (تحبیر التجوید) ‘قاری شفیق صاحب سے( ترجمۃ القرآن)‘ قاری بابر بھٹی صاحب سے( اصطلاحات المحدثین) ‘احسان اللہ فاروقی صاحب ( علم النحو‘ علم الصرف‘ابواب صرف ‘ بلوغ المرام) وغیرہ سے پڑھیں۔ میٹرک کی تعلیم ( یٰسین صاحب ‘راناابو بکر صاحب ‘ سہیل ثاقب صاحب سے حاصل کرتا رہا ۔ ثالثہ ثانوی الف: ( تیسری کلاس) ہم 14 ساتھی تھےجن میں (نعیم عبد الماجد سلفی صاحب کے بھائی ‘ عبد الرحمان‘ نعیم کنگن پوری‘قاری رضوان‘ضیاء الرحمان ربانی صاحب‘ حافظ عبد القدیر ‘ عبد القیوم‘ آصف ‘ فاروق‘ ثقلین‘ شفقت محمود‘ اشفاق‘ ندیم‘قابل ذکر ہیں )ہم 6 ماہ تک الگ ہی پڑھتے رہے مندرجہ ذیل اساتذہ پڑھانے والے تھے اس کلاس میں استاد محترم رحمت اللہ صاحب سے (علم صیغہ) رمضان سلفی صاحب + احسان اللہ فاروقی صاحب سے (ھدایۃ النجو ) قاری شفیق صاحب سے ( اصطلاحات المحدثین+ترجمۃ القرآن) اسحاق طاہر صاحب سے( مشکوٰۃ شریف) مولانا فواد صاحب جوکہ ڈاکٹر اسرار صاحب کے عزیز تھے اور قاری حسین صاحب سے ( سید سابق کی فقہ الطہارۃ‘معاشیات‘شہریت) پڑھی۔ اس کے بعد رمضان سلفی صاحب حج پر چلے گئے جن کی وجہ ےسے ھدایۃ النحو ثالثہ ثانوی (ب) جا کر پڑھنے کی غرض سے دونوں کلاسوں کو ایک کر دیا گیا ۔ثالثہ ثانوی (ب) میں 28 کے قریب تقریبا ساتھی تھے جن میں (عبد الرحمان محمدی‘عبد المجید‘ عبد القدیر ‘یونس عزیزی‘ زاھد جمیل‘ محمد خاں ‘محبت علی مرحوم‘ اکرام ‘ خرم ‘ احسا ن اللہ قمر ‘ عثمان عسکری‘ حافظ ظہیر صاحب ‘ رفیق الرحمان ‘ خبیب احمد‘ محمد فریاد‘ عرفان انور ‘ عبد المالک‘ طیب ‘ خالد عزیز‘شکیل‘ راشد شوکت‘ ضیاء الرحمن ربانی ‘ عثمان امریکی‘وغیرہ قابل ذکر ہیں ) اس میں (ھدایۃ النحو) فاروقی صاحب سے‘(مشکوٰۃ المصابیح) شاکر محمود صاحب سے (ترجمۃ القرآن ) قاری شفیق صاحب سے سے پڑھنے کا موقع ملا ۔ رابعہ ثانوی الف :میں ہم 25کے قریب ساتھی تھے جن میں (ناصر ‘ اعجاز الحق‘ اعجاز شفیق نئے داخل ہوئے اور یونس عزیزی ‘ زاہد جمیل ‘ عبد المالک‘محمد خاں وغیرہ چھوڑ گئے) کوئی 4 ماہ تک ہم نے استاد محترم شیخ عبد الرشید خلق صاحب سے (مقامات حریری) پڑھی‘ شیخ الحدیث والتفسیر مولانا عبد السلام فتح پوری صاحب سے ترجمۃ القرآن مع تفسیر پڑھا‘ مولانا شاکر محمود صاحب سے(مشکوٰۃ شریف )پڑھی‘پھر جامعہ لاہور الاسلامیہ البیت العتیق میں چلے گئےجہاں تقریباً 6 ماہ تک تعلیم حاصل کرتے رہے اس دوران قاری حمزہ مدنی صاحب سے (عقیدہ واسطیہ) شفیع طاہر صاحب سے ( مشکوۃ شریف) حمزہ مدنی صاحب سے (اصول فقہ پر ایک نظر )قاری فیاض صاحب سے (سید سابق کی فقہ الصلاۃ) رمضان سلفی صاحب + شاکر محمود صاحب سےعربی گرائمر کی متوسط طبقہ کی کتب پڑھتے رہے ‘احسان اللہ فاروقی صاحب سے(نحو)‘ قاری ظہیر صاحب (اصول تخریج) سید علی ہاشمی صاحب ( ترجمۃ القرآن+ اسلامی تجارت کے حوالے سے ) پڑھاتے رہے ۔ اسی دوران رد قادیانیت پہ مولانا اللہ وسایا صاحب دیوبندی ‘متین خالد صاحب دیوبندی سے ماڈل ٹاؤن جے بلاک میں آ کرکورس کیا اور سند حاصل کی۔اس کے بعد ہم جا کر رد قادیانیت پہ دورہ کیا اور جامعہ لاہورالاسلامیہ (رحمانیہ )میں آ کر پانچوی کلاس (اولیٰ کلیہ الف) میں داخل ہوئے ہم تقریبا 25 کے قریب ساتھی اس کلاس میں پڑھتے تھے جن میں (عبد الرحمان محمدی ‘ عرفان ‘ عبد المجید ‘حافظ ظہیر ادریس ‘ عبد القدیر ‘ خرم ‘ اکرام‘ناصر ‘ شکیل‘ اعجاوزالحق‘ ضیاء الرحمان ربانی ‘ شعیب کیلانی ‘عدنان اسحاق‘لبید غزنوی ‘فریاد تبسم ‘ عرفان ‘ خالد بھٹی ‘وغیرہ قابل ذکر ہیں ‘) اس کلاس میں ہم نے استاد محترم رمضان سلفی صاحب سے (نیل المرام )استاد محترم شفیق مدنی صاحب سے (ترمزی شریف) استاذ الاساتذہ محترم شیخ عبد الرشید خلیق صاحب سے ( ‘البلاغۃ الواضح‘منطق‘شرح ابن عقیل) کا پہلا حصہ پڑھا‘ اسحاق طاہر صاحب سے (بدایۃ المجتہد) پروفیسر ذکاء اللہ‘ پروفیسر عبد الرحمان صاحب سے بی‘ایس اسلامک کورس کی انگلش پاس کی ‘کامران طاہر صاحب سے ( اصول تحقیق) پڑھی ‘عبد السلام عزیزی صاحب سے تجوید‘استاد محترم مدیر التعلیم حسن مدنی صاحب سے ابو داؤد‘ نسائی کی تعلیم حاصل کی۔ ‘ چھٹی کلاس ( ثانیہ کلیہ الف) میں ہم تقریبا 26 ساتھی تھے جن میں ( سابقہ ساتھی ہی تھے اور ان میں سلمان زاہد ‘راشد پیر ‘احسا ن الہی یونس نئے داخل ہوئے اور عبید الرحمان سلیم صاحب بھی )اور خبیب احمد چھوڑ گئے ۔اس کلاس میں ہم نے استاد محترم حافظ شاکر محمود صاحب سے(ابو داؤد کتاب الزکاۃ+ صحیح فقہ السنۃ کی کتاب الزکاۃ) شفیق مدنی صاحب سے ( ترمزی شریف) شیخ عبد الرشید خلیق صاحب سے (حماسہ+ متنبی )اسحاق طاہر صاحب سے ( مباحث فی علوم القرآن+ اصطلاحات المحدثین )پڑھی‘ حسن مدنی صاحب سے (الوجیز فی اصول الفقہ) پڑھی ‘حافظ انس نضر مدنی صاحب سے وراثت‘ ظہر کے بعد عیسائیت کا کورس مندرجہ ذیل اساتذہ سے کیا جن میں استاد محترم عبد اللہ طارق صاحب ‘ عبد الوارث گل (سابق نو مسلم عیسائی ‘خاور رشید بٹ صاحب)سے تعلیم حاصل کی اور سند وصول کی ۔ ثالثہ کلیہ الف ( ساتویں کلاس میں ) :اس کلاس میں بھی ہم 24 کے قریب ساتھی تھے راشد پیر عبد الرزاق ظہیر وغیرہ نئے تھے اور باقی مذکورہ ساتھی ہی تھے۔ اس کلاس میں ہم نے مندرجہ ذیل اساتذہ سے علم حاصل کیا۔استاد محترم عزیریونس صاحب سے ( اصول تخریج) حافظ انس نضر مدنی صاحب سے ( قواعد التفسیر) شفیق مدنی صاحب‘ اسحاق طاہر صاحب سے(مسلم شریف ) رمضان سلفی صاحب سے فقہ النوازل (عصر حاضر کے جدید مسائل کا اسلامی حل +عقیدہ الطحاویہ) غالباً پروفیسر مختیار صاحب سے انگلش ( بی ایس اسلامک) کی تعلیم حاصل کی۔ رابعہ کلیہ ( آٹھویں کلاس ) : میں بھی ہم 25 کے قریب مذکورہ ساتھی ہی تھے جن میں عبد الرحمان بلتستانی کا اضافہ ہوا ہم نے مندرجہ ذیل اساتذہ سے شرف تلمذ حاصل کیا ۔ جن میں رمضان سلفی صاحب)سے‘بخاری شریف‘فقہ النوازل عبد اللہ طارق صاحب ‘عبد الولی خان صاحب سے( عقیدہ الطحاویہ)شفیق مدنی صاحب سے( بخاری شریف کتاب الصلاۃ‘ قواعد فقہیہ) شاکر محمود صاحب سے( شرح نخبۃ الفکر) ابو عبد اللہ طارق صاحب سے( تقابل ادیان) کی تعلیم حاصل کی‘رمضان سلفی صاحب سے سند الاجازہ حاصل کیا اور اس طرح مسلسل آٹھ سال کے دورانیہ میں درس نظامی ‘وفاق المدارس کی تعلیم جامعہ لاہور الاسلامیہ میں ہی رہ کر حاصل کی اور 2014 میں تعلیمی دورانیہ مکمل کیا اور جامعہ چھوڑنے کا سرٹیفکیٹ حاصل کیا ۔ نوٹ: اسی دوران راقم نے پہلی کلاس کا امتحان دینے کے بعد آپنے خالہ زاد بھائی نصیر الرحمان ساجد صاحب کے ساتھ دیپالپور ضلع اوکاڑہ مہنتانوالہ میں جا کر رمضان المبار ک میں دورہ نحو ( مولانا ادریس اثری صاحب )اور صرف ( استاد محترم مختیار سلفی صاحب ) سے مکمل کیا ۔اس کے ساتھ دورہ نحوو صرف دیوبندی عالم استاد محترم مفتی حسن صاحب سے رمضان المبارک میں چوبرجی جا کر کرتا رہا ۔2013 میں جامعہ لاہور الاسلامیہ میں دورہ نحوو صرف( حافظ شاکر محمود صاحب رمضان سلفی صاحب‘ مختیار سلفی صاحب) سے کیا اس کے ساتھ ہی کورس ردقادیانیت ( عرفان محمود برق صاحب سابق قادیانی ‘طاہر عبد الرزاق صاحب ‘خاور رشید بٹ صاحب ‘ ابو عبد اللہ طارق صاحب‘ عتیق الرحمان علوی ‘عطاء الرحمان علوی صاحب ‘متین خالد صاحب وغیرھم سےمکمل کیا اس کے علاوہ عیسائیت پہ کورس خاور رشید بٹ صاحب ئ ابو عبد اللہ طارق صاحب ‘ عبد الوارث گل صاحب سے مکمل کرتے کے بعد سند حاصل کی۔اور راقم الحروف نے (قادیانیت کا مختصر تعارف )کےعنوان سے اس کورس کا خلاصہ تقریباً 12سے 13صفحات پر لکھا۔ اس کے علاوہ تقریباً سات سے آٹھ مضمون لکھے۔اس کے علاوہ راقم نے دوران تعلیم جماعۃ الدعوۃٰ کی طرف سے دورہ صفہ‘ دورہ عامہ ‘دورہ خاصہ تک کی تربیت حاصل اس 2015میں راقم الحروف نے مجلس التحقیق الاسلامی میں سرپرست عالیٰ حافظ عبد الرحمان مدنی صاحب اور ان کے صاحبزادےاستاد محترم حافظ انس نضر مدنی صاحب کی سرپرستی میں اور قاری مصطفیٰ راسخ صاحب ‘ قاری اختر صاحب چئیرمین آف ویب سائیٹ کی نگرانی میں حدیث پراجیکٹ پہ کام کا آغاز کیا جو کہ ابھی تک جاری ہے جس میں سے بخاری شریف ‘مسلم شریف‘ابو داؤد‘ترمزی شریف‘نسائی شریف‘ابن ماجہ ‘پر کام ان شاءاللہ تکمیل کےمراحل میں ہے۔ اللہ تعالیٰ ہم سب کا حامی و ناصر ہو ...آمین رابطہ: (ظفر اقبال ظفر) فون نمبر :03074274135​
     
    • پسند پسند x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  3. ‏دسمبر 18، 2016 #3
    عبدہ

    عبدہ سینئر رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏نومبر 01، 2013
    پیغامات:
    2,022
    موصول شکریہ جات:
    1,152
    تمغے کے پوائنٹ:
    425

    السلام علیکم پیارے بھائی اھلا و سھلا مرحبا
    آپکی پوسٹ کی فارمیٹینگ درست نہیں تھی پڑھی نہیں جا رہی تھی اسکو صحیح کر کے میں نے پوسٹ کیا ہے
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  4. ‏دسمبر 18، 2016 #4
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    4,892
    موصول شکریہ جات:
    2,067
    تمغے کے پوائنٹ:
    650

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    محترم بھائی ظفر اقبال صاحب فورم پر دل کی گہرائیوں سے خوش آمدید
    آپ کے تعلیمی سفر کی تفصیل پڑھ کر بے حد خوشی ہوئی ،
    بارك الله فيك ونفع بك وحفظك ورعاك
    اللہ تعالی آپ کی صلاحیتوں میں برکت عطا فرمائے ، اور آپ سے دین کا وسیع کام لے ؛
    اور آپ کے فاضل اساتذہ کرام کو اجر عظیم سے نوازے۔۔ آمین
     
  5. ‏دسمبر 18، 2016 #5
    عبدہ

    عبدہ سینئر رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏نومبر 01، 2013
    پیغامات:
    2,022
    موصول شکریہ جات:
    1,152
    تمغے کے پوائنٹ:
    425

    جہاں تک مجھے یاد ہے یہ شعیب کیلانی جو آپکے ہم کلاس تھے یہ منصورہ کے شاید تھے میں بھی منصورہ کا ہوں تو انکو جانتا تھا اور ان دنوں میں رحمانیہ میں شام کو اجراء کروایا تھا جس میں ساری کلاسوں کے لڑکے ہوتے تھے ان میں یہ شعیب کیلانی بھی تھا غالبا ۲۰۱۳ یا ۲۰۱۴ کی ہی بات تھی آپ بھی شاید ہوں
     
    Last edited: ‏دسمبر 18، 2016
  6. ‏دسمبر 19، 2016 #6
    محمد نعیم یونس

    محمد نعیم یونس خاص رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 27، 2013
    پیغامات:
    25,642
    موصول شکریہ جات:
    6,529
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,143

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    محترم شیخ صاحب!
    اور میں نے اُنہی کے مراسلے کو درست کر دیا ہے۔۔ابتسامہ
     
  7. ‏دسمبر 19، 2016 #7
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,470
    موصول شکریہ جات:
    4,362
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    میں نے اسے مزید درست اور خوبصورت بنا دیا ہے تاکہ پڑھنے میں مزید آسانی ہو، سمائل!
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    تعارف

    ظفر اقبال بن محمد یوسف وہابی

    قوم آرائیں ‘عمر 26 سال۔ . تاریخ پیدائش 10-11-1990
    مقام پیدائش :حاجی والی موٹر سلیم کے کوٹ نزد آلہ آباد ( ٹھینگ موڑ)۔

    ہم اللہ کی توفیق سے 16 بہن بھائی تھے جن کی تفصیل مندرجہ ذیل ہے۔
    9 بھائی 7 بہنیں
    5‘ بہنیں 2 بھائی بچپن میں فوت ہو گئے
    7‘ بھائی 2 بہن حیات ہیں 3 شادی شدہ ہیں‘ 6 بھائی غیر شادی شدہ ہیں اور اللہ کا فضل ہے والدین بھی ماشا اللہ حیات ہیں ۔
    4. ابتدائی تعلیم
    5. 1999 میں گورنمنٹ پرائمری اسکول بستی فتح والی ضلع قصور نزد منڈی عثمان والا میں داخل ہوا اور وہاں پہلی چار کلاسز کا امتحان پاس کیا مندرجہ ذیل میرے اساتذہ تھے .
    عبد الستار صاحب ‘ اسحاق صاحب ‘محمد حنیف صاحب ‘طفیل صاحب۔

    قرآن مجید ناظرہ مولانا ادریس اربانی صاحب خطیب جامعہ مسجد بستی فتح والی سے مکمل کیا اس کے بعد تقریباً 2005 میں کھڈیاں خاص میں ماموں کے پاس چلا گیا جہاں میں نے گورنمنٹ پرائمری اسکول قبر کوٹ میں (پانچویں کلاس میں) داخلہ لیا بورڈ کے امتحان میں سکول ٹاپ کیا

    اس کے بعد میں نے گورنمنٹ ھائی سکول منڈی عثمانوالہ میں چھٹی کلاس میں داخلہ لے لیا جہاں تقریباً 6 ماہ تک میں پڑھتا رہا داخلے کے تقریبا 6 ماہ بعد 150 کے قریب میری کلاس میں لڑکے تھے ہاکی ٹیم کے لیے سلیکشن میں ہماری کلاس میں سے 2 لڑکوں کو سلیکٹ کیا صبح وردی اور ہاکی ملنی تھی کہ گھر آیا اور گھر میں خالہ اور خالوں آئے ہوئے تھے جن کے کہنے پر والدین نے خالہ زاد بھائی نصیر الرحمنٰ ساجد صاحب (جو اب ائر فورس میں بطور خطیب خدمات سر انجام دے رہے ہیں) کے ہمراہ جامعہ رحمانیہ لاہور میں بتاریخ 1۔12۔2006 بروز جمعہ کو بھیج دیا۔ جہاں میں کلیۃ الشرعیہ اولیٰ ثانوی الف: میں داخل ہوا ( کلاس 16 لڑکوں پر مشتمل تھی جن میں منور شہزاد‘ عمر فاروق ‘ سلمان (شہری تھا)‘ عبد الشکور ‘ نعیم ‘ اشفاق ‘ عبد القدوس ‘ عبد القیوم ‘ عبد الوحید ‘ مدثر محمدی ‘ امین ‘صھیب ‘ آصف ‘ خالد‘ عثمان صدیقی قابل ذکر ہیں) اس کلاس میں میں نے درس نظامی کی ابتدائی کتب مندرجہ ذیل اساتذہ سے پڑھیں ۔

    قاری خالد فاروق صاحب (نخبۃ الحدیث) ‘اختر صدیق صاحب ( اسلامی عقیدہ)‘ احسان اللہ فاروقی صاحب سے (علم النحو+ ابواب الصرف+ ترجمۃ القرآن سورہ یونس ‘یوسف ‘ ھود پڑھیں)

    ‘قاری عارف بشیر صاحب سے ( 30 پارہ حفظ کیا) ‘قاری عبد السلام عزیزی صاحب سے ( تحفۃ القاری ) ‘شفع طاہر صاحب (علم الصرف ) وغیرہ ۔

    ثانیہ ثانوی الف: میں ہم 31 ساتھی تھے جن میں (ندیم بھائی ‘ نعیم بھائی ‘ ثقلین ‘ فاروق ‘ ابو بکر ‘اویس ‘ عثمان ‘ آصف ‘داؤد‘ وقاص ‘ خالد‘ سعید پٹھان‘عفان‘ ضیاء الرحمان ربانی صاحب وغیرہ قابل ذکر ہیں)

    ہم نے سید قاری علی ہاشمی صاحب سے (تحبیر التجوید)
    ‘قاری شفیق صاحب سے ( ترجمۃ القرآن)‘
    قاری بابر بھٹی صاحب سے ( اصطلاحات المحدثین)
    ‘احسان اللہ فاروقی صاحب ( علم النحو‘ علم الصرف‘ابواب صرف ‘ بلوغ المرام) وغیرہ سے پڑھیں۔

    میٹرک کی تعلیم ( یٰسین صاحب ‘رانا ابو بکر صاحب ‘ سہیل ثاقب صاحب سے حاصل کرتا رہا ۔

    ثالثہ ثانوی الف: ( تیسری کلاس) ہم 14 ساتھی تھے جن میں (نعیم عبد الماجد سلفی صاحب کے بھائی ‘ عبد الرحمان‘ نعیم کنگن پوری‘قاری رضوان‘ ضیاء الرحمان ربانی صاحب‘ حافظ عبد القدیر ‘ عبد القیوم‘ آصف ‘ فاروق‘ ثقلین‘ شفقت محمود‘ اشفاق‘ ندیم‘قابل ذکر ہیں )

    ہم 6 ماہ تک الگ ہی پڑھتے رہے مندرجہ ذیل اساتذہ پڑھانے والے تھے
    اس کلاس میں استاد محترم رحمت اللہ صاحب سے (علم صیغہ)
    رمضان سلفی صاحب + احسان اللہ فاروقی صاحب سے (ھدایۃ النجو )
    قاری شفیق صاحب سے ( اصطلاحات المحدثین+ترجمۃ القرآن)
    اسحاق طاہر صاحب سے (مشکوٰۃ شریف)
    مولانا فواد صاحب جو کہ ڈاکٹر اسرار صاحب کے عزیز تھے اور قاری حسین صاحب سے (سید سابق کی فقہ الطہارۃ‘معاشیات‘شہریت) پڑھی۔
    اس کے بعد رمضان سلفی صاحب حج پر چلے گئے جن کی وجہ سے ھدایۃ النحو ثالثہ ثانوی (ب) جا کر پڑھنے کی غرض سے دونوں کلاسوں کو ایک کر دیا گیا ۔

    ثالثہ ثانوی (ب) میں 28 کے قریب تقریبا ساتھی تھے جن میں (عبد الرحمان محمدی‘عبد المجید‘ عبد القدیر ‘یونس عزیزی‘ زاھد جمیل‘ محمد خاں ‘محبت علی مرحوم‘ اکرام ‘ خرم ‘ احسا ن اللہ قمر ‘ عثمان عسکری‘ حافظ ظہیر صاحب ‘ رفیق الرحمان ‘ خبیب احمد‘ محمد فریاد‘ عرفان انور ‘ عبد المالک‘ طیب ‘ خالد عزیز‘شکیل‘ راشد شوکت‘ ضیاء الرحمن ربانی ‘ عثمان امریکی‘ وغیرہ قابل ذکر ہیں )

    اس میں (ھدایۃ النحو) فاروقی صاحب سے‘
    (مشکوٰۃ المصابیح) شاکر محمود صاحب سے
    (ترجمۃ القرآن ) قاری شفیق صاحب سے سے پڑھنے کا موقع ملا ۔

    رابعہ ثانوی الف :میں ہم 25 کے قریب ساتھی تھے جن میں (ناصر ‘ اعجاز الحق‘ اعجاز شفیق نئے داخل ہوئے اور یونس عزیزی ‘ زاہد جمیل ‘ عبد المالک‘ محمد خاں وغیرہ چھوڑ گئے)
    کوئی 4 ماہ تک ہم نے استاد محترم شیخ عبد الرشید خلق صاحب سے (مقامات حریری) پڑھی‘
    شیخ الحدیث والتفسیر مولانا عبد السلام فتح پوری صاحب سے
    ترجمۃ القرآن مع تفسیر پڑھا‘ مولانا شاکر محمود صاحب سے (مشکوٰۃ شریف) پڑھی‘

    پھر جامعہ لاہور الاسلامیہ البیت العتیق میں چلے گئےجہاں تقریباً 6 ماہ تک تعلیم حاصل کرتے رہے
    اس دوران قاری حمزہ مدنی صاحب سے (عقیدہ واسطیہ)
    شفیع طاہر صاحب سے ( مشکوۃ شریف)
    حمزہ مدنی صاحب سے (اصول فقہ پر ایک نظر)
    قاری فیاض صاحب سے (سید سابق کی فقہ الصلاۃ)
    رمضان سلفی صاحب + شاکر محمود صاحب سے عربی گرائمر کی متوسط طبقہ کی کتب پڑھتے رہے
    ‘احسان اللہ فاروقی صاحب سے (نحو)‘
    قاری ظہیر صاحب (اصول تخریج)
    سید علی ہاشمی صاحب (ترجمۃ القرآن+ اسلامی تجارت کے حوالے سے) پڑھاتے رہے ۔
    اسی دوران رد قادیانیت پہ مولانا اللہ وسایا صاحب دیوبندی ‘متین خالد صاحب دیوبندی سے ماڈل ٹاؤن جے بلاک میں آ کر کورس کیا اور سند حاصل کی۔

    اس کے بعد ہم جا کر رد قادیانیت پہ دورہ کیا اور جامعہ لاہور الاسلامیہ (رحمانیہ) میں آ کر پانچوی کلاس (اولیٰ کلیہ الف) میں داخل ہوئے ہم تقریبا 25 کے قریب ساتھی اس کلاس میں پڑھتے تھے جن میں (عبد الرحمان محمدی ‘ عرفان ‘ عبد المجید ‘حافظ ظہیر ادریس ‘ عبد القدیر ‘ خرم ‘ اکرام‘ناصر ‘ شکیل‘ اعجاوزالحق‘ ضیاء الرحمان ربانی ‘ شعیب کیلانی ‘عدنان اسحاق‘ لبید غزنوی ‘فریاد تبسم ‘ عرفان ‘ خالد بھٹی ‘وغیرہ قابل ذکر ہیں ‘)
    اس کلاس میں ہم نے استاد محترم رمضان سلفی صاحب سے (نیل المرام )
    استاد محترم شفیق مدنی صاحب سے (ترمزی شریف)
    استاذ الاساتذہ محترم شیخ عبد الرشید خلیق صاحب سے ( ‘البلاغۃ الواضح‘منطق‘شرح ابن عقیل) کا پہلا حصہ پڑھا‘
    اسحاق طاہر صاحب سے (بدایۃ المجتہد)
    پروفیسر ذکاء اللہ‘ پروفیسر عبد الرحمان صاحب سے بی‘ایس اسلامک کورس کی انگلش پاس کی
    ‘کامران طاہر صاحب سے ( اصول تحقیق) پڑھی
    عبد السلام عزیزی صاحب سے تجوید
    استاد محترم مدیر التعلیم حسن مدنی صاحب سے ابو داؤد‘ نسائی کی تعلیم حاصل کی۔

    چھٹی کلاس (ثانیہ کلیہ الف) میں ہم تقریبا 26 ساتھی تھے جن میں ( سابقہ ساتھی ہی تھے اور ان میں سلمان زاہد ‘راشد پیر ‘احسا ن الہی یونس نئے داخل ہوئے اور عبید الرحمان سلیم صاحب بھی ) اور خبیب احمد چھوڑ گئے۔
    اس کلاس میں ہم نے استاد محترم حافظ شاکر محمود صاحب سے (ابو داؤد کتاب الزکاۃ+ صحیح فقہ السنۃ کی کتاب الزکاۃ)
    شفیق مدنی صاحب سے ( ترمزی شریف)
    شیخ عبد الرشید خلیق صاحب سے (حماسہ+ متنبی )
    اسحاق طاہر صاحب سے (مباحث فی علوم القرآن+ اصطلاحات المحدثین) پڑھی‘
    حسن مدنی صاحب سے (الوجیز فی اصول الفقہ) پڑھی
    حافظ انس نضر مدنی صاحب سے وراثت‘

    ظہر کے بعد عیسائیت کا کورس مندرجہ ذیل اساتذہ سے کیا جن میں استاد محترم عبد اللہ طارق صاحب ‘ عبد الوارث گل (سابق نو مسلم عیسائی ‘خاور رشید بٹ صاحب) سے تعلیم حاصل کی اور سند وصول کی ۔

    ثالثہ کلیہ الف (ساتویں کلاس میں): اس کلاس میں بھی ہم 24 کے قریب ساتھی تھے راشد پیر عبد الرزاق ظہیر وغیرہ نئے تھے اور باقی مذکورہ ساتھی ہی تھے۔ اس کلاس میں ہم نے مندرجہ ذیل اساتذہ سے علم حاصل کیا۔
    استاد محترم عزیر یونس صاحب سے ( اصول تخریج)
    حافظ انس نضر مدنی صاحب سے ( قواعد التفسیر)
    شفیق مدنی صاحب‘ اسحاق طاہر صاحب سے (مسلم شریف )
    رمضان سلفی صاحب سے فقہ النوازل (عصر حاضر کے جدید مسائل کا اسلامی حل +عقیدہ الطحاویہ)
    غالباً پروفیسر مختیار صاحب سے انگلش ( بی ایس اسلامک) کی تعلیم حاصل کی۔

    رابعہ کلیہ ( آٹھویں کلاس ) : میں بھی ہم 25 کے قریب مذکورہ ساتھی ہی تھے جن میں عبد الرحمان بلتستانی کا اضافہ ہوا ہم نے مندرجہ ذیل اساتذہ سے شرف تلمذ حاصل کیا ۔
    جن میں رمضان سلفی صاحب) سے‘بخاری شریف‘ فقہ النوازل
    عبد اللہ طارق صاحب ‘عبد الولی خان صاحب سے ( عقیدہ الطحاویہ)
    مدنی صاحب سے (بخاری شریف کتاب الصلاۃ‘ قواعد فقہیہ)
    شاکر محمود صاحب سے (شرح نخبۃ الفکر)
    ابو عبد اللہ طارق صاحب سے (تقابل ادیان) کی تعلیم حاصل کی‘
    رمضان سلفی صاحب سے سند الاجازہ حاصل کیا
    اور اس طرح مسلسل آٹھ سال کے دورانیہ میں درس نظامی ‘وفاق المدارس کی تعلیم جامعہ لاہور الاسلامیہ میں ہی رہ کر حاصل کی اور 2014 میں تعلیمی دورانیہ مکمل کیا اور جامعہ چھوڑنے کا سرٹیفکیٹ حاصل کیا ۔

    نوٹ: اسی دوران راقم نے پہلی کلاس کا امتحان دینے کے بعد آپنے خالہ زاد بھائی نصیر الرحمان ساجد صاحب کے ساتھ دیپالپور ضلع اوکاڑہ مہنتانوالہ میں جا کر رمضان المبار ک میں دورہ نحو ( مولانا ادریس اثری صاحب ) اور صرف (استاد محترم مختیار سلفی صاحب) سے مکمل کیا۔
    اس کے ساتھ دورہ نحوو صرف دیوبندی عالم استاد محترم مفتی حسن صاحب سے رمضان المبارک میں چوبرجی جا کر کرتا رہا۔
    2013 میں جامعہ لاہور الاسلامیہ میں دورہ نحو و صرف ( حافظ شاکر محمود صاحب رمضان سلفی صاحب‘ مختیار سلفی صاحب) سے کیا
    اس کے ساتھ ہی کورس ردقادیانیت ( عرفان محمود برق صاحب سابق قادیانی ‘طاہر عبد الرزاق صاحب ‘خاور رشید بٹ صاحب ‘ ابو عبد اللہ طارق صاحب‘ عتیق الرحمان علوی ‘عطاء الرحمان علوی صاحب ‘متین خالد صاحب وغیرھم سے مکمل کیا
    اس کے علاوہ عیسائیت پہ کورس خاور رشید بٹ صاحب' ابو عبد اللہ طارق صاحب ‘ عبد الوارث گل صاحب سے مکمل کرتے کے بعد سند حاصل کی۔
    اور راقم الحروف نے (قادیانیت کا مختصر تعارف) کے عنوان سے اس کورس کا خلاصہ تقریباً 12 سے 13 صفحات پر لکھا۔ اس کے علاوہ تقریباً سات سے آٹھ مضمون لکھے۔

    اس کے علاوہ راقم نے دوران تعلیم جماعۃ الدعوۃٰ کی طرف سے دورہ صفہ‘ دورہ عامہ ‘دورہ خاصہ تک کی تربیت حاصل کی۔

    اس 2015 میں راقم الحروف نے مجلس التحقیق الاسلامی میں سرپرست عالیٰ حافظ عبد الرحمان مدنی صاحب اور ان کے صاحبزادے استاد محترم حافظ انس نضر مدنی صاحب کی سرپرستی میں اور قاری مصطفیٰ راسخ صاحب ‘ قاری اختر صاحب چئیرمین آف ویب سائیٹ کی نگرانی میں حدیث پراجیکٹ پہ کام کا آغاز کیا جو کہ ابھی تک جاری ہے جس میں سے بخاری شریف ‘مسلم شریف ‘ابو داؤد ‘ترمزی شریف ‘نسائی شریف ‘ابن ماجہ پر کام ان شاءاللہ تکمیل کے مراحل میں ہے۔ اللہ تعالیٰ ہم سب کا حامی و ناصر ہو ... آمین
    رابطہ: (ظفر اقبال ظفر) فون نمبر: 03074274135
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    ان بھائی صاحب کے تعارف میں مذھبی تعلیم جو انہوں نے حاصل کی ہے اسے پڑھ کر آج مجھے اس بات کا اندازہ ہوا جو اس سے پہلے کبھی نہیں تھا کہ جو لوگ فورمز یا دنیاوی زندگی میں چند کتابوں کے مطالعہ سے بحثوں میں الجھے رہتے ہیں وہ کتنی بڑی غلطی پر ہیں بہتر ہے کہ اسے کسی صاحب علم سے جان لیں۔

    والسلام

     
    • زبردست زبردست x 5
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
  8. ‏جنوری 24، 2017 #8
    ظفر اقبال

    ظفر اقبال رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 22، 2015
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    16
    تمغے کے پوائنٹ:
    60

    آمین تمام احباب کا شکریہ جنہوں نے حوصلہ افزائی کی اللہ آپ سب کا حامیوں ناصر ہو ۔۔۔۔آمین
     
  9. ‏اگست 09، 2017 #9
    محمد المالكي

    محمد المالكي رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 01، 2017
    پیغامات:
    401
    موصول شکریہ جات:
    152
    تمغے کے پوائنٹ:
    47

    السلام عليكم ورحمه الله وبركاته
    • آپ کا تعلیمی سفر پڑھ کر بہت خوشی ہوئی. آپ کو دل کی گہرائیوں سے خوش آمدید.
     
  10. ‏اگست 09، 2017 #10
    ظفر اقبال

    ظفر اقبال رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 22، 2015
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    16
    تمغے کے پوائنٹ:
    60

    آمین بہت شکریہ بھائی جی
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں