1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تقلید آخری سانسوں میں

'توحید وشرک' میں موضوعات آغاز کردہ از عائشہ پروین, ‏مئی 27، 2011۔

موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
  1. ‏مئی 27، 2011 #1
    عائشہ پروین

    عائشہ پروین مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 03، 2011
    پیغامات:
    101
    موصول شکریہ جات:
    660
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    تقلید آخری سانسوں میں

    بسم اللہ الرحمن الرحیم​

    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
    ایک جگہ پہ میں نے پڑھا تھا کہ
    اس وقت تو مجھے شاید اسکا اتنا احساس نہ ہوسکا مگر اب لگتا ہے وہ بات بالکل ٹھیک ہی تھی اسکی مثال آپ اس بات سے لیجئے کہ آج سے 2 سال پہلے ہمارے چھوٹے سے شہر دادو میں اھلحدیث جماعت کا شاید ہی کسی نے نام سنا ہو مگر ان دو سالوں میں شہر میں ایک مسجد بھی بن گئی اور جماعت کے نام سے بھی لوگ روشناس ہو گئے مگر پھر بھی یہ جماعت اتنی ہے کہ اسکو انگلیوں پہ گنا جاسکتا ہے مگر اس کی ہیبت سے مقلد اتنے سہمے ہوئے ہیں کہ طرح طرح سے کوشش کی گئی جماعت کو ختم کرنے اور توڑنے کی مگر
    جب ساری کوششیں ناکام ہو گئیں تو بلاآخر دیوبندی مقلدوں نے پنجاب سے اپنے ایک بہت بڑے مناظر الیاس گھمن کو دادو بلانے کا اعلان کیا ہے جو 10 جون 2011 بروز جمعہ کو دادو شہر میں آ رہے ہیں ہر طرح سے اھلحدیث خواتین وحضرات کو دعوت دی گئی ہے اور سوال و جواب کا الگ سیکشن رکھا جارہا ہے مجھے حیرت صرف اس بات سے ہے کہ آخر کیا ضرورت آگئی کہ ایک دور دراز چھوٹے شہر میں چھوٹی جماعت کے مقابلے میں اتنے بڑے تیس مار خان مناظر کو بلانے کی؟
     
    • شکریہ شکریہ x 12
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏مئی 27، 2011 #2
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,178
    موصول شکریہ جات:
    15,224
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    • شکریہ شکریہ x 8
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  3. ‏مئی 28، 2011 #3
    محمد فہد

    محمد فہد مبتدی
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    31
    موصول شکریہ جات:
    172
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    "گرتی ہوئی دیوار کو ایک دھکا اور دو" پر عمل کرتے ہوئے مقلدین کی سانسیں اکھاڑ پھینکیں ۔انشاءاللہ مسلک حق اہلحدیث پاک و ہند میں چھا کر رہے گا ۔
     
  4. ‏مئی 28، 2011 #5
    اہل الحدیث

    اہل الحدیث مبتدی
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    90
    موصول شکریہ جات:
    547
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    بالکل تقلید کی دیواریں گرنے کے قریب ہیں۔ مسلک اہلحدیث کسی ٹھپے کا نام نہیں ہے بلکہ خالصتا" کتاب و سنت کی پیروی کرنے کا نام ہے اور الحمد للہ یہ شعور اب لوگوں میں بیدار ہو رہا ہے کہ حجروں میں بیٹھ کر لکھے گئے لغو مسائل کی دین میں کوئی گنجائش نہیں۔ اور جہاں تک گھمن کا تعلق ہے تو دیکھتے ہیں کہ وہ کیا تیر مارتا ہے۔ ہم اس سے ہر طرح کی گفتگو کرنے کو تیار بیٹھے ہیں۔ وہ بے چارہ تو ابھی مبشر سلفی کا قرض نہیں اتار سکا چہ جائے کہ کسی عالم سے بات کرے۔
    بہر حال اسے اتنی اہمیت دینے کی ضرورت نہیں ہے۔ آپ کتاب و سنت کی دعوت پر فوکس کریں اور یہ لوگ اپنے ہی تضادات کی رو میں خود ہی بہہ جائیں گے۔
     
  5. ‏مئی 28، 2011 #6
    Aamir

    Aamir خاص رکن
    جگہ:
    احمدآباد، انڈیا
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2011
    پیغامات:
    13,383
    موصول شکریہ جات:
    16,864
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,033

    جناب اہل حدیث صاحب ذرا اس بارے میں تفصیل سے بتاے کے الیاس گھمن کس طرح سے مبشر سلفی سے سامنا ہوا اور کیا ہوا تھا؟ میرے کئی دیوبندی دوست کہتے ہے کی الیاس گھمن کا کوئی مقابلہ نہیں ہے. کیا واقعی ایسا ہے؟ کیا کوئی بندہ الیاس گھمن کی حقیقت جانتا ہے تو شیئر کریں . یا کوئی مناظرہ کی ویڈیو ہو تو بتا دیں.
     
  6. ‏مئی 28، 2011 #7
    Aamir

    Aamir خاص رکن
    جگہ:
    احمدآباد، انڈیا
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2011
    پیغامات:
    13,383
    موصول شکریہ جات:
    16,864
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,033

    ابن آدم صاحب اسکا کیا مطلب ہوا؟ آپ نے یہ جملہ کس کے لئے کہا؟
     
  7. ‏مئی 28، 2011 #8
    کلیم حیدر

    کلیم حیدر رکن
    جگہ:
    لیہ
    شمولیت:
    ‏فروری 14، 2011
    پیغامات:
    9,403
    موصول شکریہ جات:
    25,976
    تمغے کے پوائنٹ:
    995

    ابن آدم بھائی کی پوسٹ پر چندگزارشات پیش خدمت ہیں۔اگر کسی بھائی کو میری کوئی بات بری لگے تو پیشگی معذرت
    نمبرا
    ابن آدم بھائی آپ کا یہ جملہ کہ ابھی تو فیس بکس پر بھی نہیں چھا سکا۔۔اگر فہد بھائی نے کچھ کلمات کہہ بھی دیئے تو اس کا جواب ان الفاظ سے دینامناسب نہیں تھا۔
    نمبر٢
    مسلک حق ہونے کےلیے فیس پر چھانا ضروری ہے کیا ؟ اہل حدیث کے علاوہ اور کون سے مسالک ہیں کہ فیس بک کی لگام ان کےہاتھ میں ہے۔؟
    نمبر٣
    مسلک حق کی نشانی بیان کریں،کہ مسلک حق کس کو کہتے ہیں ؟ کہ جس میں لوگ داخل ہورہے ہوں یا جس سے لوگ نکل رہے ہوں۔اس میں یقیناً آپ کا جواب یہ ہوگأ کہ جس میں لوگ داخل ہورہے ہوں اور وہ مسلک الحمدللہ اہل حدیث کا ہی مسلک ہے جس میں لوگ داخل ہورہے ہیں۔(جن میں دیوبندیوں ،بریلویوں اور شیعوں کے علماء کرام بھی شامل ہیں۔)جنہوں نےاپنے مسلک کو خیرباد کہہ کہ اہل حدیث کا مسلک اختیار کیا ہے۔الحمدللہ اور ان شاءاللہ ایک دن ایسا آئے گا کہ اہل حدیث کانام بچے بچے کی زبان پر ہوگا۔
    نمبر٤
    دنیا کی تاریخ میں جماعت حقہ کی تعداد کم رہی ہے یا غیر جماعت حقہ کی ۔؟۔اس میں سوفیصد یقین سے کہتا ہوں کہ آپ کا جواب یہ ہوگا۔کہ جماعت حقہ کی تعداد ہمیشہ کم رہی ہے تو بھائی آج اہل حدیث کی تعداد بھی کم ہے۔آگے آپ خود سوچ لیں ۔
    نمبر٥
    تاریخ میں وہ کون سا مذہب ہے کہ جس کو دبانے او ر مٹانے کی سرتوڑ کوششیں کی گئی ہیں۔اور لوگوں کو اس سے نفرت دلائی گئی ہے؟ جواب میں اسلام کانام ملے گا۔(جی بھائی اسلام ہے یا کوئی اور مذہب؟)
    اب آپ یہ بتائیں کہ وہ کون سا فرقہ ہے کہ جس کو آج بہت زیادہ بری نگاہ سے دیکھا جارہا ہے ۔تو آپ کا جواب شاید الٹ ہو لیکن صحیح جواب یہ ہے کہ وہ فرقہ اہل حدیث ہے۔اور یہ حقیقت ہے۔حالات آپ کے سامنے ہیں۔
    اب آپ خود سوچ لیں کہ ایک طرف اسلام کومٹانےکی سرتوڑ کوششیں حالانکہ اسلام سچا مذہب ہے اور ادھر سے فرقہ اہل حدیث کو مٹانے کی سرتوڑ کوششیں تو مطلب واضح ہے ۔کہ یہ بھی فرقہ اللہ کےفضل سے وہ فرقہ ہے جو ان تعلیمات پر عمل پیرا ہے جس کو نبی آخرالزماں ﷺ لے کرآئے تھے۔
     
  8. ‏مئی 28، 2011 #9
    Aamir

    Aamir خاص رکن
    جگہ:
    احمدآباد، انڈیا
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2011
    پیغامات:
    13,383
    موصول شکریہ جات:
    16,864
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,033

    جزاک اللہ خیراً کلیم حیدر بھائ۔
     
  9. ‏مئی 28، 2011 #10
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,178
    موصول شکریہ جات:
    15,224
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    ولی اللّٰہی خاندان - اللہ تعالیٰ ان کی قبروں کو منور کریں اور انہیں خاص جزا عطا فرمائیں - کی قرآن کریم اور حدیث مبارکہ کو پھیلانے، ان کی تبلیغ کرنے، دلیل میں انہیں بنیاد بنانے اور عوام کی توجہ قرآن وحدیث کی طرف مائل کرنے کیلئے ان کے تراجم وغیرہ کی کامیاب تحریک ہی در اصل تقلید کی بنیاد منہدم کرنے کیلئے کافی تھی، جس کے بعد کٹر سے کٹر مقلد بھی مجبور ہوا کہ اپنے مسلک کو صحیح ثابت کرنے کیلئے کوئی نہ کوئی دلیل - خواہ منکر اور ضعیف روایات کی صورت میں ہی - پیش کرے۔ اور الحمد للہ یہی اہل حدیث کا بنیادی اصول بھی ہے، گویا آج مقلدین کا الٹے سیدھے دلائل پیش کرنے کی کوشش ہی در اصل اہل حدیث کی بڑی کامیابی ہے، اگر کوئی دلائل کی طرف آنا ہی نہیں چاہے گا تو اسے منوانا بہت مشکل ہوگا، لیکن اگر فریق مخالف دلائل پیش کرنے پر آجاتا ہے، تو الحمد للہ اہل حدیث کا مسلک ہی دلیل ہے۔ جس کی دلیل بھی اعلیٰ، صحیح اور قوی ثابت ہوجائے وہی مسلک حق ہے اور وہی اہل حدیث کا مسلک ہے۔
    واللہ تعالیٰ اعلم
     
لوڈ کرتے ہوئے...
موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔

اس صفحے کو مشتہر کریں