1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ثقہ راوی تدلیس کیوں کرتا ہے؟

'منہج' میں موضوعات آغاز کردہ از جی مرشد جی, ‏اکتوبر 04، 2017۔

  1. ‏اکتوبر 15، 2017 #41
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    465
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    مدلس راوی کے تدلیس کی جتنی وجوہات بیان کی جاتی ہیں ان کے باوجود وہ راوی ’’ثقہ‘‘ کیونکر رہتا ہے؟
     
  2. ‏نومبر 11، 2017 #42
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    465
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    حدیث متن کا نام ہے نہ کہ روات۔ روات کی پہچان صرف اس لئے ہے کہ متن محفوظ ہے کہ نہیں۔
    احادیث دو طرح سے بیان ہوئی ہیں۔ ایک بلفظہ یعنی جو الفاظ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ادا فرمائے بعین انہی الفاظ کے ساتھ راویوں نے اسے بیان کیا۔ یہ اعلیٰ و ارفع احادیث ہیں۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فرامیں فقاہت میں وسعت کے حامل ہیں۔
    جب حدیث بالمعنیٰ روایت ہوگی تو وہ ممکن ہے اپنی اصل سے ہٹ جائے یا معنیٰ کو محدود کردے۔
    لہٰذا مدلس راوی اگر ثقہ ہے تو یہ امکان نہیں کہ وہ حدیث میں گڑ بڑ کرے گا۔ اگر ایسا ہے تو اس کا ثقہ ہونا ہی مخدوش ہے۔
     
  3. ‏نومبر 11، 2017 #43
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,281
    موصول شکریہ جات:
    1,067
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    تدریب الراوی کا مطالعہ کریں. اس میں اس تعلق سے بحث ہے
     
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  4. ‏نومبر 12، 2017 #44
    نسیم احمد

    نسیم احمد رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2016
    پیغامات:
    633
    موصول شکریہ جات:
    106
    تمغے کے پوائنٹ:
    79

    السلام علیکم
    انتہائی معذرت کے ساتھ یہ سوال ہے کہ کیا تدلیس کرنا جھوٹ بولنے کے زمرے میں نہیں آتا۔
    میرا اتنا علم نہیں کہ میں اس موضوع کی گہرائی میں جاسکوں لیکن ذہن میں ایک سوال آیا تھا اس لئے پوچھ لیا۔
     
  5. ‏نومبر 12، 2017 #45
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,080
    موصول شکریہ جات:
    2,578
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    جی! علم الحدیث میں تدلیس سے جھوٹ بولنا ثابت نہیں ہوتا!
    کیوں کہ وہ جوبات کہہ رہا ہے وہ درست ہے کہ ''عن فلان ''کہنا درست ہے، جھوٹ نہیں، اگر درمیان میں کوئی راوی ہو تب بھی !
    یہ اسی طرح ہے کہ کسی کو اس کی بیوی بتلائے کہ فلان کے گھر لڑکا پیدا ہوا ہے اور اسی بیوی کہے کہ آپ کی والدہ نے بتلایا ہے کہ فلان کے گھر بیٹا پیدا ہوا ہے!
    اور وہ شخص آگے کسی کو کہے کہ مجھے میری والدہ کے واسطے سے معلوم ہو ا ہے کہ فلان کے گھر بیٹا پیدا ہوا ہے!
    اب یہاں اس شخص نے اپنی والدہ کے واسطے سے کہا ہے، جو کہ درست ہے، لیکن اس نے درمیان سے ایک واسطہ کا ذکر نہیں کیا!
    لیکن جو اس نے کہا ہے کہ مجھے میری والدہ کے واسطے سے معلوم ہو اہے، درست ہے، کہ والدہ کا واسطہ تو ہے!
    اور نہ اس نے اپنی بیوی کے درمیان میں واسطہ کی نفی کی ہے!
    لہٰذا یہ نہیں کہا جا سکتا کہ اس شخص نے جھوٹ بولا ہے!
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  6. ‏نومبر 12، 2017 #46
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    5,760
    موصول شکریہ جات:
    2,265
    تمغے کے پوائنٹ:
    737

    روایت حدیث میں تدلیس کا تعلق فن " مصطلح الحدیث " سے ہے ، یعنی یہ اس علم کے ائمہ کی خاص اصطلاح ہے
    اس کو صرف اصول حدیث کے قواعد و قوانین کی روشنی میں سمجھا اور تسلیم کیا جائے گا ،
    صرف لغت یا عرف عام کی بنیاد پر اسے جھوٹ کی ٹوکری میں نہیں ڈالا جاسکتا ،
     
    • متفق متفق x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  7. ‏نومبر 13، 2017 #47
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    465
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    کیا اس کا لنک مل سکتا ہے؟
     
  8. ‏نومبر 13، 2017 #48
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    465
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    وضاحت طلب بات یہ ہے کہ وہ بیچ میں سے ضعیف راوی کو چھوڑ رہا ہے یا راوی کے نام میں گڑ بڑ کرتا ہے وغیرہ وغیرہ۔ جو بھی وجوہات ہیں اس بھی اس پر دھوکہ دہی یا جھوٹ کا الزام کیوں نہیں آئے گا؟ صرف اس لئے کہ محدثین نے اس کو ثقہ کہا ہے؟
     
  9. ‏نومبر 13، 2017 #49
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    465
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    وہ اصول اور قواعد و قوانین بتا دیں مختصراً جن سے پتہ چلے کہ دھوکہ فریب کے باوجود کوئی راوی ثقاہت پر ہی معمور رہتا ہے؟
     
  10. ‏نومبر 13، 2017 #50
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    5,760
    موصول شکریہ جات:
    2,265
    تمغے کے پوائنٹ:
    737

    اس کیلئے آپ آسان سی اصول حدیث پر کتاب (تیسیر مصطلح الحدیث )یہاں سے ڈاؤن لوڈ کرکے پڑھیں ،جسے حنفی ناشر ہی نے شائع کیا ہے ، اور درس نظامی کا حصہ ہے
     
    Last edited: ‏نومبر 13، 2017
    • پسند پسند x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں