1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

جب کسی جگہ پر کئی مفتی ہوں تو مقلد آدمی کس سے فتوی طلب کرے؟: اصول الفقہ

'اصول حدیث' میں موضوعات آغاز کردہ از ناصر رانا, ‏ستمبر 27، 2011۔

  1. ‏ستمبر 27، 2011 #1
    ناصر رانا

    ناصر رانا رکن مکتبہ محدث
    جگہ:
    Cape Town, Western Cape, South Africa
    شمولیت:
    ‏مئی 09، 2011
    پیغامات:
    1,171
    موصول شکریہ جات:
    5,448
    تمغے کے پوائنٹ:
    306

    جب کسی جگہ پر کئی مفتی ہوں تو مقلد آدمی کس سے فتوی طلب کرے؟:

    جب کسی علاقے میں کئی ایک مجتہد ہوں تو مقلد کی مرضی ہے کہ جس سے چاہے فتوی طلب کرلے، اس پر سب سے زیادہ علم والے کے پاس جانا ضروری نہیں ہے ۔ اور ایک قول یہ ہے کہ افضل سے سوال کرناضروری ہے۔ پہلے قول والوں کی دلیل یہ ہے کہ صحابہ اور تابعین میں سے مفضول ، فاضل کی موجودگی میں ان کے مشہور ہونے کے باوجود فتوی دیتے تھے اور ایسا کئی بار ہوا ہے اور کسی نے بھی اس پر اعتراض نہیں کیا تو گویا کہ فاضل سے فتوی طلب کرنے پر قدرت رکھنے کے باوجود مفضول سے فتوی طلب کرنے کے جواز پر اجماع ہے۔اور دوسرے قول والے اس بات سےدلیل پکڑی ہے کہ جو افضل ہوتا ہے وہ شریعت کی پوشیدہ باتوں کودوسروں کی نسبت زیادہ اچھے طریقے سے جانتا ہے۔

    ترجمہ کتاب تسہیل الوصول از محمد رفیق طاہر
     
  2. ‏ستمبر 27، 2011 #2
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,798
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    جزاک اللہ خیرا
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں