1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

جدید تحقیق کے مطابق زمین چپٹی ہے ۔قران سے یہ ثابت کیا جاتا ہے کہ کروی ہے

'تفسیر قرآن' میں موضوعات آغاز کردہ از ابن قدامہ, ‏اگست 14، 2016۔

  1. ‏اگست 15، 2016 #11
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    287
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    قرآنِ پاک علام الغیوب اللہ جل شانہٗ کی طرف سے نازل کردہ ہے اور اس کی ایک ایک آیت حق اور سچ ہے۔ یہ تو ہوسکتا ہے کہ آیت کی تفسیر کرنے والے نے تفسیر غلط کردی مگر آیت اپنی جگہ صحیح اور اٹل ہے۔
    دوسری طرف سائنس ایک ترقی پذیر اور مشاہدات و تجربات پر مبنی ہے۔ مشاہدہ کرنے والے کو دھوکہ لگ سکتا ہے اور تجربہ کے نتائج حالات کی تبدیلی سے بدل جاتے ہیں۔
    پانی کے ابال کا درجہ حرارت 100 ڈگری سنٹی گریڈ کہا جاتا ہے۔ جب کہ اس میں تبدیلی آجاتی ہے جب زمیں کی سطح سے بلندی پر جایا جائے یا پستی میں۔ بلندی پر جانے سے یہ کم ہوجاتا ہے اور پستی میں بڑھ جاتا ہے۔
    اس کی عام فہم مثال پریشر کُکر ہے۔ اس میں پانی کا درجہ ابال 100 ڈگری سنٹی گریڈ سے کہیں زیادہ ہوجاتا ہے یہاں تک کہ200 ڈگری سنٹی گریڈ پر بھی پانی نہیں ابلے گا اگر پریشر کُکر اعلیٰ کوالٹی کا ہو۔
     
  2. ‏اگست 15، 2016 #12
    ادب دوست

    ادب دوست مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 23، 2015
    پیغامات:
    30
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    22

    میرا خیال ہے ایسا نہ ہو کیونکہ بہت سے لوگوں نے ماضی میں قران کی ایسی تاویل کی جو ان کی اپنی رائے محض تھی، جو غلط ثابت ہوئی، اور امت نے جان لیا کہ رائے دینے والی کی رائے میں نقص تھا، قران کی افضلیت اپنی جگہ قائم ہے،
    ہاں وہ لوگ جو تاریخ انسانی کا ایک ٹھکرایا ہوا گروہ ہیں، جنہیں انسانوں کی اکثریت نے کبھی قابلِ غور نہیں سمجھا وہ عموماً اپنی اس طرح کی باتیں کرتے ہیں مگر ان کی حقیقت ہی کیا ہے؟ اور ویسے بھی دلوں کے ٹیڑھا ہونے کیلئے دلیل کی ضرورت نہیں ہوتی۔ قران کا ایک اعجاز یوں بھی ہے کہ جو اس سے گمراہی ڈھونڈے گا تو قران اسے گمراہ بھی کردے گا۔ لہذا انہیں کسی ایک مخصوص آیات کی ضرورت نہیں کہ یہاں تاویل کی غلطی ہو اور وہاں انہیں اعتراض کا جواز ملے، ان کے پچانوے فیصد اعتراضات بے جواز بے دلیل ہوتے ہیں، باقی پانچ فیصد ایسے ہوتے ہیں کہ آپ کہہ سکیں کہ چلیں انسان نے سمجھنے میں غلطی کی۔
     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  3. ‏اگست 25، 2016 #13
    ابن قدامہ

    ابن قدامہ مشہور رکن
    جگہ:
    درب التبانة
    شمولیت:
    ‏جنوری 25، 2014
    پیغامات:
    1,772
    موصول شکریہ جات:
    421
    تمغے کے پوائنٹ:
    198

  4. ‏دسمبر 17، 2016 #14
    amateen777

    amateen777 رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 02، 2015
    پیغامات:
    65
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

    یہ رابط مفید ہے
    http://www.eltwhed.com/vb/showthrea...%ED%C9-%C7%E1%C3%D1%D6-%E6-%C7%E1%D3%E3%C7%C1
     
  5. ‏دسمبر 17، 2016 #15
    amateen777

    amateen777 رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 02، 2015
    پیغامات:
    65
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

  6. ‏دسمبر 17، 2016 #16
    amateen777

    amateen777 رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 02، 2015
    پیغامات:
    65
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    43

  7. ‏دسمبر 17، 2016 #17
    طالب علم

    طالب علم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 15، 2011
    پیغامات:
    226
    موصول شکریہ جات:
    570
    تمغے کے پوائنٹ:
    104

    السلام علیکم !

    مجھے بھی یہ موضوع نہایت دلچسپ لگتا ہے، دراصل نیٹ پر ایسی سوسائٹیز کی ویب سائٹس ہیں جو اس نظرئیے کے قائل ہیں کہ جو کہ سازشی تھیوری پر ایمان رکھنے والے ہیں اور بائبل سے متاثر ہیں،
    • خلائی تحقیق کا ادارہ ناسا اپنی بنیاد کے دن سے ہی ہم سے جھوٹ بول رہا ہے
    • زمین اپنے محور کے گرد حرکت نہیں کرتی
    • زمین سورج کے گرد بھی حرکت نہیں کرتی بلکہ سورج زمین کے گرد حرکت کرتا ہے
    • زمین ساکن ہے
    • زمین سورج سے چھوٹی نہیں بلکہ سورج سے بڑی ہے
    • سورج اور چاند ایک جیسے حجم کے ہیں
    • سورج اور چاند دونوں زمین کے گرد گردش کرتے ہیں
    • سورج زمین سے اتنا دور نہیں جتنا کہ بتایا جاتا ہے
    • چاند کرہ نہیں بلکہ ایک پلیٹ کی مانند ہے اور اس پر اترنا ممکن نہیں
    • زمین چپٹی ہے
    • زمین کا اصل نقشہ دنیا سے چھپایا جاتا ہے
    • زمین کے گرد برف کی میلوں لمبی اونچی دیوار ہے انٹارکٹکا اور اس کی طرف کسی عام آدمی کو جانے کی اجازت نہیں
    -----------------------------------------

    اور بھی کئی باتیں ہیں مگر مسئلہ یہ ہے کہ سب سائنسی اصولوں یا نظریات سے میل نہیں کھاتے۔
     
  8. ‏اپریل 20، 2017 #18
    طارق اقبال

    طارق اقبال رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 28، 2011
    پیغامات:
    44
    موصول شکریہ جات:
    79
    تمغے کے پوائنٹ:
    58

    محترم اب ایسی کوئی فکر کی بات نہیں‌ہے ، آپ کو معلوم ہونا چاہیے کہ اب مسلمان سائنسدانوں‌کی بھی ایک بڑی تعداد مختلف ممالک میں‌موجود ہے جو ان تمام چیزوں‌کو اپنی آنکھوں‌سے دیکھ رہے ہیں اور تجربات میں مشغول ہیں‌۔ یو ٹیوب پر کئی ایسی ویڈیوز موجود ہیں اور اب تو کئی دفعہ ناسا اور دوسرے ممالک کے خلائی ادارے اپنے سائنسدانوں‌کو خلائی اسٹیشن میں‌ کام کرتے ہوئے براہ راست دکھاتے ہیں‌ جن سے آپ بخوبی زمین کے گول ہونے بکہ گھومنے کے مناظر کو بھی صاف دیکھ سکتے ہیں‌ ۔ اس لیے اب جبکہ یہ بات مکمل طور پر ثابت ہو چکی ہے کہ زمین گول ہے تو اس کو قرآن مجید کی آیات سے منطبق کرنا کوئی فکر و پریشانی کی بات نہیں‌ہے اب ا سکے اُلٹ‌ثابت نہیں‌ ہو سکتا ۔
    ڈاکٹر ذاکر نائیک صاحب اسی بات کے قائل ہیں‌ کہ ہم انہی سائنسی حقائق کا قرآن مجید کی معلومات کے حوالے سے جائزہ لیں‌ گے جو ٹھوس معلومات پر مشتمل ہوں اور جس پر سائنسدانوں‌کی اکثریت متفق ہو، گو کہ یہ بھی حقیقت ہے کہ کچھ لوگ ایسے موجود ہیں‌ جو ہر سائنسی بات کو قرآن مجید سے ثابت کرنے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہے ہیں اور یہ بات درست نہیں‌ ہے، ہمیں‌اس سلسلسے میں‌ بہت احتیاط کی ضرورت ہے ۔میں‌خود اسی بات کا سختی سے قائل ہوں اور کوشش یہی کی ہے کہ انہی باتوں کا ذکر اپنی کتاب اور ویب سائٹ‌پر ہو جو ثابت شدہ ہیں‌
     
  9. ‏فروری 27، 2018 #19
    Tahir baig

    Tahir baig مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 27، 2018
    پیغامات:
    19
    موصول شکریہ جات:
    5
    تمغے کے پوائنٹ:
    6

    اس میں کوئی شک نہیں کہ بہت سے علماء زمین کو فلیٹ اور ساکن مانتے ہیں ۔ سوال یہ ہے کہ جو دعوے سائنس کے نام پر کیئے جاتے ہیں ان میں کتنی صدقات ہے سائنس کا علم عقلی دلائل اور مشاہدات پر مبنی ہے اور جو حقائق ناسا یا دوسری اسپیس ایجنسی کی جانب سے فراہم کیئے گئے ہیں کیا کبھی ان کی تصدیق کرنے کی کوشش کی گئی ؟ ہمیں تو خبر کی تصدیق کرنے کا حکم دیا گیا ہے ۔ کیا ہم نے زمین کی شکل پر فراہم کردہ معلومات کی کبھی تصدیق بھی کی ؟ کہ ان میں کتنی صداقت ہے
     
  10. ‏فروری 27، 2018 #20
    Tahir baig

    Tahir baig مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 27، 2018
    پیغامات:
    19
    موصول شکریہ جات:
    5
    تمغے کے پوائنٹ:
    6

    5C47B1F7-30BA-4555-9A5D-380AED9C1436.jpeg اسلام علیکم
    ابو قدامہ صاحب نے “ دحھا” کو شتر مرغ کے انڈے سے تشبیہ دی ۔ کیا تمام مفسرین اور مترجم نے “دحھا” سے مراد زمین کا انڈے جیسا گول ہونا لیا ؟ یا سب نے لکھا کہ زمین کو بچھایا گیا ۔ کیا ہم جدید سائنس پر تحقیق کی جرأت کریں گے کبھی یا قرآن مجید کی آیات کا ہی خود ساختہ مطلب نکالتے رہیں گے
    اس پوسٹ پر شروعات کرتے ہیں سائنسی دلائل کی کہ کیا واقعی زمین گول ہے ؟ یا چپٹی
    اگر زمین گول ہے تو اس کا کرویچر ٹیبل پھر ہمیں ضرور معلوم ہونا چاہیئے ارتھ کرویچر ٹیبل کی رو سے زمین آٹھ انچ فی مربع میل کے حساب سے کروو ہو جاتی ہے یعنی ایک سو میل کی دوری پر تقریبا سات ہزار فٹ کا کروو ہو جاتا ہے لیکن جدید ٹیلی اسکوپ سے سو میل کی دوری پر بھی دیکھا جاسکتا ہے اگر زمین گول ہے تو ایسا نظر ناممکن ہے بہت سی تصاویر ایسی موجود ہیں جو سو میل کی دوری سے لی گئی ہیں اگر زمین گلوب ہے تو سات ہزار فٹ کے کروو پر کسی آبجیکٹ کا نظر آجانا بالکل ناممکن ہے
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں