1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

خاموش آواز : اسلام وہ جو من چاہے من بھائے

'بلاغت' میں موضوعات آغاز کردہ از باذوق, ‏دسمبر 05، 2011۔

  1. ‏دسمبر 05، 2011 #1
    باذوق

    باذوق رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏فروری 16، 2011
    پیغامات:
    888
    موصول شکریہ جات:
    3,984
    تمغے کے پوائنٹ:
    289

    فورم کی طرح بلاگ بھی سوشل نیٹ ورکنگ کا ایک مفید ذریعہ ہے۔ اور جس طرح اردو رسم الخط میں فورمز کی شروعات ہو چکی ہے بلکہ اردو فورمز کی تعداد میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اسی طرح اردو قلمکاروں (قلمکار کو آجکل کچھ لوگ "لکھاری" بھی کہنے لگے ہیں) نے بھی اپنے اپنے ذاتی بلاگز قائم کر لیے ہیں اور اردو بلاگنگ ماشاءاللہ مستقلاً آگے بڑھ رہی ہے۔ کافی سارے بلاگرز منفرد و متنوع موضوعات پر اپنے خیالات کا اظہار کر رہے ہیں۔
    فورم پر لکھنے میں اور بلاگ پر تحریر کرنے میں کچھ فرق تو ضرور ہے۔ ان میں اہم اور بنیادی فرق تو یہی ہے کہ ایک بلاگر کو اپنے بلاگ پر مکمل کنٹرول حاصل ہوتا ہے ، وہ اپنی مرضی کی تحریر شائع کر سکتا ہے اور مبصرین کے تبصروں کو شائع کرنے یا رد کرنے کا حق بھی اسے دستیاب ہوتا ہے۔

    قطع نظر اس کے کہ فورم یا بلاگ پر لکھنے میں کسے ترجیح دی جانی چاہیے ۔۔۔ ایک مشورہ یہ ہے کہ جہاں بھی لکھیں اور کچھ بھی لکھیں ۔۔۔ مگر ایک تحریر لکھنے سے قبل کم از کم پانچ مختلف افراد کی تحریر کو پڑھیں ضرور۔ اس سے لکھنے والے کی سوچ کو ایک نیا زاویہ ملے گا اور اگر قلمکار تنگ نظر نہ ہو تو وہ کسی موضوع پر مختلف الخیال اشخاص کے افکار و نظریات سے مستفید ہو کر درست طرز فکر کے زیادہ قریب پہنچنے کا اہل ہو سکے گا۔
    یہاں میری کوشش ہوگی کہ اردو بلاگرز کی مفید تحریروں کے منفرد اقتباسات کے ذریعے آپ احباب کو زیادہ سے زیادہ مطالعے کی ترغیب دلائی جائے۔

    "انکل ٹام" کے منفرد نام سے ایک اردو بلاگر بہت خوبصورت باتیں لکھتے ہیں ۔۔۔ آج انہی کے بلاگ سے ایک اقتباس ملاحظہ فرمائیں۔
    لکھتے ہیں ۔۔۔۔
    مزید دلچسپ انداز میں آگے لکھتے ہیں :
    بشکریہ : انکل ٹام بلاگ - خاموش آواز : "اسلام وہ جو من چاہے من بھائے" (24/جون 2011ء)

    پڑھا آپ نے؟
    کتنی اہم بات کو کتنے عام فہم اور دلچسپ انداز میں ہمارے فاضل بلاگر دوست نے سمجھایا ہے؟
    "حدیث کی صحت" کے معاملے میں کچھ ایسی ہی ملتی جلتی بات شیخ زبیر علی زئی حفظہ اللہ نے نہایت علمی انداز میں بیان فرمائی ہے۔ آپ بھی ملاحظہ فرمائیں ۔۔۔۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں