1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

رمضان المبارک اور ترویح کے رکعات

'مسائل رمضان' میں موضوعات آغاز کردہ از فرحان محمد خان, ‏مئی 28، 2017۔

  1. ‏جون 07، 2017 #61
    عبدالرحمن حنفی

    عبدالرحمن حنفی مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 15، 2017
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    23

    ذخیرہ احادیث سے کوئی ’’ضعیف‘‘ یا ’’منقطع‘‘ یا ’’موضوع‘‘ہی روایت پیش کریں جس میں صراحت ہو کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے یا کسی صحابی نےیا کسی تابعی نے ’’آٹھ‘‘ رکعات تراویح مسجد نبوی یا مسجدِ حرام یا مسجدِ قبا یا مسجدِ قبلتین (یعنی اُس وقت موجود کسی مسجد )میں پڑھائی ہو؟
     
  2. ‏جون 07، 2017 #62
    MD. Muqimkhan

    MD. Muqimkhan رکن
    جگہ:
    نئی دہلی
    شمولیت:
    ‏اگست 04، 2015
    پیغامات:
    245
    موصول شکریہ جات:
    46
    تمغے کے پوائنٹ:
    56

    فی الحال تو آپ کی ممکنات میں سقم نظر آرہا ہے.
     
  3. ‏جون 07، 2017 #63
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,552
    موصول شکریہ جات:
    410
    تمغے کے پوائنٹ:
    197

    اسی فورم ایک موصوف ہیں سلفی حنفی حنیف ان سے جب میں نے کہا کہ
    تو سلفی حنفی حنیف نے آگے سے جواب یہ دیا
    :) وہ کونسے دو راوی ہیں ذرا نشاندہی کریں اور جرح بھی لگائیں
    اس کا نتیجہ تو یہ نکلا کہ بیس رکعات تراویح کی عمارت کی بنیادیں کمزور ہیں اور روایت پوری لگائیں عربی متن کے ساتھ :)

    بیس رکعات تراویح میں مکہ کو دلیل بنانے والے کیا مکہ کو حجت سمجھتے ہیں؟؟؟
    ۱) مکہ میں رکوع سے پہلے اور بعد میں رفع الیدین کیا جاتا ہے۔ ْ
    ۲)۔ مکہ میں اذان سے قبل و بعد مروجّہ درود نہیں پڑھا جاتا
    ۳۔ مکہ میں تکبیرا کہری کہی جاتی ہے ۔
    ۴۔ مکہ میں ہر نماز کے بعد اجتماعی دعا نہیں کی جاتی۔
    ۵۔مکہ میں نمازیں اوّل وقت میں ادا کی جاتی ہیں لیکن احناف اس کی مخالفت کرتے ہیں۔
    ۶۔ مکہ میں خانہ کعبہ میں نمازِ جنازہ پڑھے جاتے ہیں جبکہ ۲۰ پڑھنے والے اس کے منکر ہیں۔
    ۷۔ مکہ میں نمازِ جنازہ میں ثناء نہیں پڑھی جاتی لیکن احناف نمازِ جنازہ میں ثناء پڑھتے ہیں۔
    ۸۔ مکہ میں نمازِ جنازہ میں ایک طرف سلام پھیرا جاتا ہے لیکن احناف ا س کے منکر ہیں۔
    ۹ ۔ مکہ میں جو نمازِ جنازہ پڑھی جاتی اس میں سورۃ فاتحہ پڑھی جاتی ہے لیکن احناف نمازِ جنازہ میں اس کی مخالفت کرتے ہوئے سورۃ فاتحہ نہیں پڑھتے۔
    ۱۰۔ مکہ میں نمازِ فجر سے قبل بھی ایک اذان کہی جاتی ہے بیس پڑھنے والے یہ اذان کیوں نہیں دیتے؟ ۱۱۔مکہ میں نمازِ فجر اندھیرے میں ادا کی جاتی ہے جبکہ احناف اجالے میں فجر پڑھتے ہیں۔
    ۱۲۔ مکہ والے ایک رکعت وتر کے قائل ہیں جبکہ احناف اس کے منکر ہیں۔
    ۱۳ ۔مکہ میں عورتوں کو مساجد میں آنے کی اجازت ہے جبکہ احناف اپنی عورتوں کو اس سے منع کرتے ہیں۔
    ۱۴۔ مکہ میں نمازِ عید کےخطبہ سے قبل کوئی وعظ و نصیحت نہیں کی جاتی لیکن احناف اس کی مخالفت کرتے ہوئے خطبہ عید سے قبل وعظ و نصیحت کرتے ہیں۔
    ۱۵۔ مکہ میں نماز عید میں کل بارہ تکبیرات کہی جاتی ہیں لیکن مکہ کی بیس رکعت کو دلیل بنانے والے نماز عید میں صرف چھ تکبیرات پڑھتے ہیں۔
    ۱۶۔ مکہ میں عیدین میں مرد و عورت جماعت کے ساتھ عیدین پڑھتے ہیں لیکن احناف عورتوں کو جماعت میں حاضر آنے کی جازت نہیں دیتے۔
    ۱۷۔ مکہ میں روزہ کی نیّت زبان سے نہیں کی جاتی جبکہ احناف جو مکہ کو بیس رکعت میں دلیل بناتے ہیں وہ وبصوم غد نويت من شهر رمضان کی خود ساختہ نیّت کرتے ہیں۔
    ۱۸۔ مکہ میں افطار صحیح وقت پر کیا جاتا ہے لیکن احناف اس کی مخالفت کرتے ہوئے احتیاطً کچھ منٹ دیر سے افطار کرتے ہیں۔
    تراویح میں مخالفت:
    ۱۹۔ مکہ مین تراویح کے ساتھ تہجد الگ سے نہیں پڑھی جاتی جبکہ احناف کے نزدیک تراویح اور تہجد الگ الگ پڑھنی چاہیئے۔
    ۲۰۔ مکہ کی بیس تراویح میں پاوؤں سے پاؤں اور کندھے سے جندھا ملا کر ممقتدی کھڑے ہوتے ہیں۔ ۲۱۔ مکہ کی بیس تراویح میں امام ہاتھ سینے پر یا کم از کم ناف سے اوپر بانھتے ہیں ناف کے نیچھ نہیں۔ ۲۲۔ مکہ کی بیس تراویح میں امام کے پیھے فاتحہ پڑھی جاتی ہے احناف اس کے منکر ہیں۔
    ۲۳۔مکہ کی بیس رکعت تراویح میں امام اور مقتدی دونوں بلند آواز سے آمین کہتے ہیں۔
    ۲۴۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں رفع الیدین کیا جاتا ہے۔
    ۲۵۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں وتر فصل کر کے پڑھا جاتا ہے یعنی دو رکعت پڑھ کر امام سلام پھیر دیتا ہے اس کے بعد ایک وتر الگ سے پڑھا جاتا ہے احناف اس کے منکر ہیں۔
    ۲۶۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں وترمیں قنوت سے قبل رفع الیدین نہیں کیا جاتا جبکہ احناف کا اس پر عمل ہے۔
    ۲۷۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں قنوت رکوع کے بعد پڑھی جاتی ہے جبکہ احناف رکوع سے پہلے پڑھتے ہیں۔
    ۲۸۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں قنوت میں ہاتھ اٹھا کر دعا کی جاتی ہے جبکہ احناف کا اس پر عمل نہیں۔
    ۲۹۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں قنوتِ نازلہ پڑھی جاتی ہے جبکہ احناف کا اس پر عمل نہیں۔
    ۳۰۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح میں ایک رات میں قرآن ختم نہیں کیا جاتا جبکہ احناف شبینہ میں ایک رات میں قرآن ختم کرتے ہیں۔ مکہ کی بیس رکعت تراویح کو حجت سمجھنے والے ان ۳۰ مسائل میں بھی مکہ کی پیروی کیوں نہیں کرتے ؟؟ یاد رہے ہم نے یہاں صرف ۳۰ مسائل نماز سے متعلق نقل کیئے ہیں جن میں احناف اہل مکہ کی مخالفت کرتے ہیں ۔ اس کے علاوہ سینکڑوں مسائل موجود ہیں جن میں احناف کا اہل مکہ سے اختلاف ہے ،ہم نے اختصار کے پیشِ نظر ان کا تذکرہ نہیں کیا۔
     
    Last edited: ‏جون 07، 2017
    • پسند پسند x 2
    • زبردست زبردست x 2
    • لسٹ
  4. ‏جون 07، 2017 #64
    عبدالرحمن حنفی

    عبدالرحمن حنفی مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 15، 2017
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    23

    روات کی بحث کی ضرورت نہیں کہ میں نے صحیح کی قید لگائی ہی نہیں بلکہ خود ہی لکھا کہ کیسی بھی سند والی ہو۔ صرف آپ کی معصومیت کو آشکار کرنے کے لئے؛
    عيسى بن جارية
    يعقوب القمى
     
  5. ‏جون 07، 2017 #65
    عبدالرحمن حنفی

    عبدالرحمن حنفی مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 15، 2017
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    23

    جس بات میں مکہ کو دلیل بنایا جارہا ہے اس میں تبدیلی نہیں آئی اور وہ ہے بیس رکعات تراویح جو خیر القرون کے خلفاء راشدین سے اب تک بیس ہی ہے۔
     
  6. ‏جون 07، 2017 #66
    عبدالرحمن حنفی

    عبدالرحمن حنفی مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 15، 2017
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    23

    اگر تو ان کی تراویح صبح صادق تک چلی جاتی ہے تو اختلاف نہ رہا۔
    تراویح اور تہجد الگ الگ نمازیں ہیں یہ خلیفہ راشد عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے ہمیں بتایا ہے۔
     
  7. ‏جون 07، 2017 #67
    نسیم احمد

    نسیم احمد رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2016
    پیغامات:
    726
    موصول شکریہ جات:
    115
    تمغے کے پوائنٹ:
    90

    السلام علیکم
    محترم عدیل بھائی
    آپ سارے دلائل دے رہے ہیں لیکن یہ کیوں نہیں کہہ رہے کہ خانہ کعبہ اور مسجد نبوی میں بھی ایک بدعت رائج ہوچکی ہے۔ وہ عمل ہورہا ہے جو نہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے کیا اور نہ آپ کے صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین نے کیا ۔
    @عدیل سلفی
    شاید اگر وہاں بریلوی مکتبہ فکر ہوتا تو بدعت کا فتوی آجاتا۔
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  8. ‏جون 07، 2017 #68
    MD. Muqimkhan

    MD. Muqimkhan رکن
    جگہ:
    نئی دہلی
    شمولیت:
    ‏اگست 04، 2015
    پیغامات:
    245
    موصول شکریہ جات:
    46
    تمغے کے پوائنٹ:
    56

    بریلوی مکتب فکر اور شرک و بدعت تو لازم و ملزوم ہیں
     
    • متفق متفق x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  9. ‏جون 07، 2017 #69
    نسیم احمد

    نسیم احمد رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2016
    پیغامات:
    726
    موصول شکریہ جات:
    115
    تمغے کے پوائنٹ:
    90

    محترم بھائی
    یہی تو بات ہے ہمیں صرف اپنے مخالف فرقے کے اعمال ہی شرک و بدعت لگتے ہیں۔اگر کسوٹی ایک ہی ہے تو جو بھی اس کے تحت آئے گا ان سب پر یکساں قانون لاگو ہونا چاہیے۔
     
  10. ‏جون 08، 2017 #70
    نسیم احمد

    نسیم احمد رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2016
    پیغامات:
    726
    موصول شکریہ جات:
    115
    تمغے کے پوائنٹ:
    90

    محترم اسحاق صاحب
    آپ نے متعدد مرتبہ یہ اصول پیش کیا ہے کسی عمل میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے بڑھنا جائز نہیں ہے ۔ تو آپ بیس تروایح کو بدعت کیوں نہیں کہتے ہیں۔
    اب تو تروایح کے درمیان ترجمہ وتفسیر (تنظیم اسلامی) پیش کرتی ہے جو تقریبا سحری کے قریب ختم ہوتا ہے ۔ تو کیا یہ عمل بدعت نہیں ہے۔ 6 روزہ تراویح 10 روزہ تراویح یہ سب کیا ہیں ۔ کہاں سے ان کا ثبوت ہے ۔
    @اسحاق سلفی
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں