1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

روزے کی فضیلت

'رویت ہلال' میں موضوعات آغاز کردہ از Aamir, ‏اگست 06، 2011۔

  1. ‏اگست 06، 2011 #1
    Aamir

    Aamir خاص رکن
    جگہ:
    احمدآباد، انڈیا
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2011
    پیغامات:
    13,024
    موصول شکریہ جات:
    16,727
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,033

    بسم اللہ الرحمن الرحیم​
    روزے کی فضیلت


    1 رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’جو شخص رمضان کے روزے ایمان و احتساب کے ساتھ رکھے تو اللہ تعالیٰ اس کے گذشتہ گناہوں کو بخش دیتا ہے‘‘۔ (صحیح بخاری:)۔

    2 پیارے نبی صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’فرمانِ الٰہی ہے کہ ابن آدم کا ہر عمل اس کے لئے ہوتا ہے سوائے روزوں کے، بے شک روزے میرے لئے اور میں ہی اس کی جزا دوں گا۔ اور روزہ ڈھال ہے۔ سو جس دن کوئی روزہ رکھتا ہے تو وہ نہ گالی دے اور نہ ہی شور و شغف کرے۔ اگر کوئی گالی دے یا جھگڑا کرے تو کہہ دے کہ بے شک میں روزے دار ہوں۔ قسم اُس ذات کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے! بے شک روزے دار کے منہ کی بو اللہ تعالیٰ کے نزدیک کستوری سے زیادہ بہتر ہے۔ روزے دار کے لئے دو خوشیاں ہیں۔ ایک جب وہ روزہ افطار کرتا ہے اور جب وہ اپنے رب سے ملے گا تو وہ بہت خوش ہو گا‘‘۔ (صحیح بخاری:)۔

    3 رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’جنت میں ایک دروازہ ہے جس کا نام ’’رَیَّان‘‘ ہے۔ اس میں سے صرف روزے دار داخل ہوں گے۔ پوچھا جائے گا: روزے دار کہاں ہیں؟ تو جواباً روزے دارکھڑے ہو جائیں گے۔ اور جب داخل ہوں گے تو دروازہ بند ہو جائے گا۔ اور اس میں کوئی اور داخل نہ ہو سکے گا‘‘۔ (صحیح بخاری:)۔

    4 سیدنا ابوقتادہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم سے یومِ عرفہ کے روزے کے متعلق پوچھا گیا آپ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’یہ روزہ گذشتہ سال اور آئندہ سال کے گناہوں کا کفارہ ہے‘‘ (صحیح مسلم:)

    5 رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم سے یومِ عاشور کے روزے کے متعلق پوچھا گیا تو آپ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’یہ گذشتہ سال کے گناہوں کا کفارہ ہے‘‘۔ (صحیح مسلم:)۔

    6 رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’ہر مہینے تین روزے رکھنا، ہمیشہ ساری زندگی روزے رکھنے کے مترادف ہے‘‘۔ (صحیح بخاری:)۔

    7 رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’جو بندہ ایک روزہ اللہ کے لئے رکھتا ہے تو اللہ تعالیٰ اس کے چہرے کو جہنم سے ستر سال کی مسافت کے برابر دُور کر دیتا ہے‘‘ـ (صحیح بخاری:)۔

    اصل مضمون نگار : [LINK=http://www.islamqaonline.com/index.php?option=com_content&view=article&id=74:jannat-ka-rasta&catid=45:book-unicode&Itemid=18#_Toc252308138]روزے کی فضیلت[/LINK]
    • شکریہ شکریہ x 5

اس صفحے کو مشتہر کریں