1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

زیورات کی زکوٰۃ کے بارے سوال کا جواب مطلوب ہے۔

'زکوۃ' میں موضوعات آغاز کردہ از وہم, ‏مئی 15، 2019۔

  1. ‏مئی 15، 2019 #1
    وہم

    وہم رکن
    شمولیت:
    ‏فروری 22، 2014
    پیغامات:
    127
    موصول شکریہ جات:
    38
    تمغے کے پوائنٹ:
    75

    السلام علیکم و رحمۃ اللہ ، علماء کرام سے گزارش ہے کہ اس سوال کا جواب عنایت فرمائیں
    جزاکم اللہ خیرا کثیراً​
    آپ سے زکوۃ کے متعلق ایک سوال ہے :
    لڑکی کو شادی پہ ملنے والے زیورات کا بالکل صحیح وزن معلوم نہیں ہوتا اور جو اس کی فیملی اندازاً بتاتی ہے کیا اس حساب سے اونچ نیچ کے ساتھ زکوۃ صحیح ہے یا نہیں؟
    دوسرا سوال :
    اور اگر کوئی ایک ساتھ زکوۃ نہیں دے سکتا اور ارادہ رکھتا ہے حساب بھی رکھتا ہے اور ساتھ ساتھ تھوڑا تھوڑا دیتا ہے کیا یہ جائز ہے؟ مطلب ۲۰۱۹ کے اپریل تک مال کا سال پورا ہوگیا اور ابھی تک اس مال کی زکوٰۃ کچھ دینا باقی ہے اس کی گنجائش نکلتی ہے؟
     

    منسلک کردہ فائلیں:

    Last edited by a moderator: ‏مئی 15، 2019
  2. ‏مئی 15، 2019 #2
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,564
    موصول شکریہ جات:
    412
    تمغے کے پوائنٹ:
    197

    السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

    کوشش کیا کریں اردو میں ہی لکھا کریں سوال!

    ایک سوال ہے آپ سے، زکوۃ کے متعلق، لڑکی کو شادی پہ ملنے والے زیورات کا بالکل صحیح وزن معلوم نہیں ہوتا اور جو اس کی فیملی اندازاً بتاتی ہے کیا اس حساب سے اونچ نیچ کے ساتھ زکوۃ صحیح ہے یا نہیں؟ اور اگر کوئی ایک ساتھ زکوۃ نہیں دے سکتا اور ارادہ رکھتا ہے حساب بھی رکھتا ہے اور ساتھ ساتھ تھوڑا تھوڑا دیتا ہے کیا یہ جائز ہے؟ مطلب ۲۰۱۹ کے اپریل تک مال کا سال پورا ہوگیا اور ابھی تک کچھ دینا باقی ہے اس کی گنجائش نکلتی ہے؟
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  3. ‏مئی 16، 2019 #3
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,769
    موصول شکریہ جات:
    8,335
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    جس سونا یا چاندی کا زیور بن جائے، اس میں زکوۃ ہے کہ نہیں؟ اس میں علما کا اختلاف ہے، جمہور علما کے نزدیک استعمال ہونے والے زیور میں زکاۃ نہیں ہے، کیونکہ اس طرح کی چیزوں سے مراد نفع نہیں ہوتا، بلکہ استعمال مراد ہوتا ہے۔
    ہاں البتہ اگر سونے چاندی کی زکاۃ سے بچنے کےلیے اس کا زیور بنوایا جائے، یا پھر زیور اس قسم کے ہو کہ اس کا استعمال حرام میں ہوتا ہو، تو ایسے زیور پر تمام علما کے نزدیک زکاۃ ہے۔
    یہ بھی اہم بات ہے کہ اگر زکاۃ زیورات پر بھی ہو، تو ان کا اتنی مقدار میں ہونے پر ہوتی ہے، جتنا سونا یا چاندی کا نصاب بنتا ہے۔ اور یہ نصاب عموما سونے کا ساڑھے سات تولے اور چاندی کا باون تولے بتایا جاتا ہے۔
    (تفصیل یہاں دیکھیں لیں)
    کسی چیز کی مقدار کتنی ہے؟ اس میں زکاۃ ہوتی ہے کہ نہیں؟ تو اس میں پتہ لگانا کوئی بہت مشکل کام تو نہیں کہ اس میں تکے پر اعتماد کیا جائے، کسی بھی جوہری کے پاس یا متعلقہ بندے کے پاس جاکر اس کی مقدار کا تعین کروالیں۔
    جیسا کہ عرض کیا جو استعمال شدہ زیور ہے، کئی علما کے نزدیک اس میں زکاۃ ہے ہی نہیں، لہذا اس زحمت کی ضرورت نہیں۔ رہی بات وہ سونا یا زیور جو بطور تجارت وغیرہ یا رقم سیو کرنے کے لیے رکھا ہوا ہے، تو اس کی ایک ساتھ زکاۃ دینے میں کوئی پس وپیش نہیں کرنا چاہیے، کیونکہ وہ ایک اضافی رقم اور اللہ کی طرف سے نعمت ہے، لہذا اس سے اس کا حق ادا کرنا چا ہیے۔
    بطور مسئلہ بھی زکاۃ دینے والے کی طرف سے اس کے وجوب کے بعد اس میں تاخیر کرنا درست نہیں۔ الاکہ زکاۃ کے مستحق لوگوں کی تھوڑا تھوڑا دینے میں کوئی مصلحت پوشیدہ ہو، تو زکاۃ کی تقسیم میں اس کی وجہ سے تاخیر کی جاسکتی ہے۔ البتہ زکاۃ وغیرہ دیگر جتنے بھی شرعی احکامات ہیں، ان میں اصل یہی ہے کہ جب واجب ہوں، ان کی فوری ادائیگی کی جائے۔
    (تفصیل یہاں دیکھیں)
     
    Last edited: ‏مئی 16، 2019
  4. ‏مئی 18، 2019 #4
    وہم

    وہم رکن
    شمولیت:
    ‏فروری 22، 2014
    پیغامات:
    127
    موصول شکریہ جات:
    38
    تمغے کے پوائنٹ:
    75

    جزاکم اللہ خیرا کثیرا ، محترم بھائیوں کا تہہ دل سے شکر گزار ہوں ، اللہ آپ سب کو خوش رکھے
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں