1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سلسلہ صحیحہ سے چند احادیث مبارکہ

'کتب احادیث' میں موضوعات آغاز کردہ از ابوطلحہ بابر, ‏فروری 22، 2017۔

  1. ‏اپریل 13، 2017 #61
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۲۱۷۸ سیدنا فضالہ بن عبید رضی اللہ عنہ کہتے ہیں : جو آدمی ، برے شگون کی وجہ سے (کسی کام سے ) رک جاتا ہے ، وہ شرک سے آلودہ ہو جاتا ہے ۔ سلسلہ احادیث صحیحہ ۱۰۶۵
     
  2. ‏اپریل 13، 2017 #62
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۲۱۸۷ سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ”جب تک میں تمہیں چھوڑے رکھوں (یعنی کوئی جدید حکم نہ دوں) تم بھی مجھے چھوڑے رکھو (یعنی نئے نئے امور کے بارے میں دریافت نہ کرو) ۔ ہاں جب میں تمہیں کوئی حکم دے دوں تو اسے اپنا لو ، (یاد رکھو کہ) تم سے پہلے والی امتیں انبیا سے زیادہ سوال کرنے اور ان پر اختلاف کرنے کی وجہ سے ہلاک ہو گئیں ۔“ سلسلہ احادیث صحیحہ ۸۵۰
     
  3. ‏اپریل 13، 2017 #63
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۲۱۸۸ سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ بیان کر تے ہی کہ رسول اللہ صلی اللہ علیلہ وسلم نے فرمایا : ”قیامت کے دن پرہیزگار لوگ میرے دوست ہوں گے ، اگرچہ وہ نسب میں قریب تر ہوں (یا نہ ہوں) ۔ (خیال رکھنا) کہیں ایسا نہ ہو کہ لوگ تو میرے پاس (نیک) اعمال لے کر آئیں اور تم دنیا (کی خیانتوں اور دوسروں کے غصب شدہ حقوق) کو اپنے کندھوں پر اٹھا کر لاؤ اور پکارو : اے محمد ! اور میں ادھر ادھر اعراض کرتے ہوئے کہوں : ”نہیں ۔“ پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی دونوں جانب اعراض کیا ۔ سلسلہ احادیث صحیحہ ۸۵۷
     
  4. ‏اپریل 13، 2017 #64
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۲۱۹۶ سیدنا انس رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ”جب اللہ تعالیٰ اپنے بندے کے ساتھ خیر و بھلائی کا ارادہ فرماتا ہے تو اس کو (اس کے گناہوں کی سزا) جلد ہی دنیا میں دے دیتا ہے (یعنی تکلیفوں اور آزمائشوں کے ذریعے سے اس کے گناہوں کی معافی کے اسباب پیدا کر دیتا ہے) اور جب کسی بندے کے ساتھ برائی کا ارادہ کرتا ہے تو اس سے اس کے گناہوں کی سزا (دنیا میں) روک لیتا ہے ، یہاں تک کہ قیامت والے دن اس کو پوری سزا دے گا ۔“ سلسلہ احادیث صحیحہ ۱۲۲۰
     
  5. ‏اپریل 15، 2017 #65
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۱۶۰۴ سیدنا انس رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ” جب تم میں سے کسی کا خون بھڑکنے لگ جائے ( یعنی بلڈ پریشر بلند ہو جائے ) تو وہ سینگی لگوائے ، کیونکہ خون کے جوش مارنے سے آدمی کی موت واقع ہو سکتی ہے ۔ “ سلسلہ احادیث صحیحہ ۲۷۴۷
     
  6. ‏اپریل 15، 2017 #66
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۱۶۰۹ سیدنا عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہما نے کہا : نافع ! میرے خون میں حدت پیدا ہو گئی ہے ، کوئی پچھنے لگانے والا آدمی تلاش کر کے لاؤ ، کوشش کرنا کہ وہ نرمی والا ہو اور بوڑھا ہو نہ کہ بچہ ۔ میں نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا : ” نہار منہ سینگی لگوانا افضل ہے ، اس میں شفا اور برکت ہوتی ہے اور عقل اور ضبط میں اضافہ ہوتا ہے ۔ اللہ کا نام لے کر جمعرات والے دن سینگی لگواؤ ۔ بدھ ، جمعہ ، ہفتہ اور اتوار کو سینگی لگوانے سے گریز کرو ، سوموار اور منگل کو پچھنے لگوایا کرو ، کیونکہ اللہ تعالی نے اس دن میں ایوب علیہ السلام کو بیماری سے شفا دی تھی اور بدھ والے دن ان میں آزمائش میں مبتلا کیا تھا ۔ کوڑھ پن اور پھلبہری بھی بدھ والے دن یا رات کو ہی ظاہر ہوتی ہے ۔ “ سلسلہ احادیث صحیحہ ۷۶۶
     
  7. ‏اپریل 15، 2017 #67
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۱۶۰۹ م ؛ سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ” جس نے ( چاند کی ) سترہ ، انیس اور اکیس تاریخ کو سینگی لگوائی تو یہ ہر بیماری سے شفا ہو گی ۔ “ سلسلہ احادیث صحیحہ ۶۲۲
     
  8. ‏اپریل 15، 2017 #68
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۱۶۲۱ سیدنا عبداللہ بن عمرو رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ” جس نے ( ڈاکٹری کے کامل علم کے بغیر ) علاج کیا اور اس کی طب معروف نہیں تھی تو وہ ( نقصان ہونے کی صورت میں ) خود ذمہ دار ہو گا ۔ “ سلسلہ احادیث صحیحہ ۶۳۵
     
  9. ‏اپریل 15، 2017 #69
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۱۶۷۹ سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ کہتے ہیں : ام عبداللہ بنت ابو ذباب کو تکلیف تھی ، میں تیمارداری کرنے کے لیے ان کے پاس گیا ۔ انہوں نے کہا : اے ابوہریرہ ! ایک دفعہ میں سیدہ ام سلمہ رضی اللہ عنہا ، جو کہ بیمار تھیں ، کی تیمارداری کرنے کے لیے ان کے پاس گئی ۔ انہوں نے میرے ہاتھ پر نکلا ہوا پھوڑا دیکھا تو کہا کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے سنا : ” جب اللہ تعالیٰ بندے کو آزماتا ہے اور وہ اپنی حالت و کیفیت کی بنا پر اسے ناپسند کرتا ہے تو اللہ تعالیٰ اس تکلیف کو اس کے گناہوں کا کفارہ اور اسے پاک کرنے کا سبب بنا دیتا ہے ، جب تک وہ لاحق ہونے والی بیماری ( سے شفا حاصل کرنے کے لیے ) اس کو غیر اللہ کے در پر پیش نہیں کرتا یا اسے دور کرنے کے لیے غیر اللہ کو نہیں پکارتا ۔ “ سلسلہ احادیث صحیحہ ۲۵۰۰
     
  10. ‏اپریل 15، 2017 #70
    ابوطلحہ بابر

    ابوطلحہ بابر مشہور رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 03، 2013
    پیغامات:
    661
    موصول شکریہ جات:
    835
    تمغے کے پوائنٹ:
    195

    ۱۶۸۷ سیدنا عقبہ بن عامر جہنی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ” نہیں ہے کسی دن کا کوئی عمل ، مگر عمل کرنے والے کا اسی پر خاتمہ ہوتا ہے ، ( اس کی تفصیل یہ ہے کہ ) جب مومن بیمار ہو جاتا ہے تو فرشتے اللہ تعالیٰ کو کہتے ہیں : اے ہمارے رب ! تو نے فلاں بندے کو ( عمل کرنے سے ) روک لیا ہے ( اب اس کے نیک اعمال کے بارے میں کیا کیا جائے ؟ ) اللہ تعالیٰ جواباً فرماتے ہیں : اس بندے کے شفایاب ہونے تک یا فوت ہونے تک اسی عمل کا اعتبار کرو جس پر یہ بندہ ( بیمار ہونے سے پہلے قائم ) تھا ۔ “ سلسلہ احادیث صحیحہ ۲۱۹۳
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں