1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سیاہ کار عورت اور اس کی سزا

'تفسیر قرآن' میں موضوعات آغاز کردہ از Aamir, ‏جون 13، 2012۔

  1. ‏مارچ 20، 2013 #181
    الیاسی

    الیاسی رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏فروری 28، 2012
    پیغامات:
    425
    موصول شکریہ جات:
    736
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    جناب ابو محمد صاحب میں تو آپ کا سوال سن کر پریشان ھوگیا تھا لیکن اگر آپ کی پاس تطبیق ہے تو بتادیجیے وتکتمون الحق وانتم تعلمون اوررسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے مفہوم حدیث ہے کہ حق چپھانا گناہ ہے
    چونکہ محدث فورم ایک مذھبی فورم ہے تو لازما آپ نے سچ کہاھوگا کہ تطبیق ہے اب اگر آپ نے غلطی سے کہا تھا کہ آپ کی پاس تطبیق ہے تو مہربانی کرکے کہہ دیجیے کہ آپ کی پاس تطبیق نھیں ہے اس لیے اگر تطبیق ہے تو بتادیجیے اگر نھیں تو صاف اعلان کریں کہ میں نے غلطی سے کہا تھا
     
  2. ‏مارچ 20، 2013 #182
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    الیاسی صاحب میں آپ سے معذرت کرتا ہوں کہ میں نے آپ جیسے اھل علم سے ٹکر لی ۔لیکن میں قارئین کو کہتا چلوں کہ آپ الیاسی صاحب سے التماس کریں کے کم از کم اپنے بنائے ہوئے دستی اصول تو یاد رکھا کریں جو آپ احادیث کو رد کرنے کے لئے استعمال کرتے ہیں ۔واقعی آپ کو اب احا دیث کو قرآن کے خلاف ثابت کر کر کے دو چھوٹی سی آیات کی بھی سمجھ نہیں آتی اور آپ چلے ہیں ذخیرہ احادیث کا رد کرنے ۔میں فورم کے ارکان سے التماس کرتا ہوں کہ وہ الیاسی صاحب سے ذیادہ بحث نہ کیا کریں کیونکہ یہ اپنی معتبر عقل کو استعمال کرتے ہوئے کہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  3. ‏مارچ 21، 2013 #183
    محمد علی جواد

    محمد علی جواد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 18، 2012
    پیغامات:
    1,987
    موصول شکریہ جات:
    1,495
    تمغے کے پوائنٹ:
    304

    اسلام و علیکم -

    پہلے تو اس تھریڈ میں مداخلت پر معذرت -لیکن میں الیاسی صاحب سے کچھ کہنا چاہتا ہوں -

    پہلی بات تو یہ ہے کہ قرآن کا یہ اصول ہے کہ وہ احکامات کو ضمنی طور پربیان کرتا ہے اور حدیث رسول اس کی تشریح کرتی ہے لہذا دین اسلام کا انحصار صرف قرآن پر ہی نہیں بلکہ حدیث پر بھی اتنا ہی ہے- یہی وجہ ہے کہ الله نے قرآن میں جگہ جگہ اپنی اطاعت کو رسول کریم صل الله علیہ وسلم کی اطاعت سے مشروط قرار دیا ہے-

    دوسسری بات یہ ہے کہ الله کا قانون عدل پر مبنی ہے -یہ کیسے ممکن ہے کہ ایک شادی شدہ مرد یا عورت کو زنا کی وہی سزا دی جائے جو غیر شادی شدہ افراد کے لئے ہے -دونوں کے ازدواجی اور جنسی ا سٹیٹس میں بہت فرق ہے-اور اس فرق کی بنا پر ان کی سزا میں بھی فرق رکھا گیا ہے

    رہی بات یہ کہ کسی حکم کو صرف اس بنا پر رد کر دینا کہ قرآن میں اس کی وضاحت موجود نہیں ایک غلط اور گمراہ کن عقیدہ ہے -قرآن میں تو مرد اور مرد کے درمیان اور عورت اور عورت کے درمیان جنسی تعلق کے بارے میں سزا کا کوئی حکم موجود نہیں تو کیا ان کو اس جرم کی بنا پر ایسے ہی بغیر سزا کے چھوڑ دیا جائے گا ؟؟ ظاہر ہے کہ ایسا نہیں ہے تو پھر آخر رجم کی سزا کا انکار کیوں کیا جاتا ہے .
     
  4. ‏مارچ 21، 2013 #184
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    مجھے لگتا ہے الیاسی صاحب ناراض ہو گئے ہیں
     
  5. ‏مارچ 23، 2013 #185
    الیاسی

    الیاسی رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏فروری 28، 2012
    پیغامات:
    425
    موصول شکریہ جات:
    736
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    جناب ابو محمد صاحب آپ سے تطبیق مانگا
    آپ کی شاگرد ہونے کا خواہش ظاہر کیا لیکن آپ نے تطبیق نہیں بتائی
    اب اگر میں اپنے استاد محترم فاتح قادیانیت مجاھد اسلام جناب علامہ الیاس ستار صاحب حفظہ اللہ سے پوچھو ں
    اور تطبیق پیش کرو ں تو پھر آپ بولینگے کہ یہ تو مجھے پہلے سے پتہ تھا اس لیے اگر آپ کی پاس تطبیق ہے تو فورا بتادیجیے تاکہ میں اپنے استاد محترم فاتح قادیانیت مجاھد اسلام جناب علامہ الیاس ستار صاحب حفظہ اللہ تعالی سے تصدیق کرلوں
    اور یہ بہت اہم تطبیق ہوگی کیونکہ رجم کی نکتے کا فیصلہ پھر اسی پر ہوگا [/COLOR]
    آج تو عمران خان نے بھی مینار پاکستان پر بحیثیت سیاستدان وعدہ کیا ہے کہ سچ بولونگا
    آپ تو دینی فورم کے رکن ہیں آپ کا فرض ہے کہ وعدے کی بغیر بھی سچ بولیں اگر تطبیق ہے تو فورا بتادے کوٹ کا وکالت نا کریں
     
  6. ‏مارچ 24، 2013 #186
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    الیاسی صاحب آپ ویسے بہت ہی گئے گزرے ہیں جب آپ نے ایک اصول بنایا اور اس اصول کی روشنی میں نے آپ سے سوال کیا تو جواب آپ نے دینا ہے یا میں نے پتا نہیں لوگوں کو سیدھی سی بات سمجھ کیوں نہیں آتی ۔جواب آپ نے دینا ہے میں نے نہیں ۔اگر جواب ہو تو ٹھیک ورنہ خاموش رہیں یا اپنے استا د سے ہی پتا کر دیں اور مجھے بھی بتا دیں اور جو جواب آپ لائیں گے میں اس جواب پر آپ کے اس موضوع کا اختتام کر دوں گا۔
     
  7. ‏اپریل 05، 2013 #187
    الیاسی

    الیاسی رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏فروری 28، 2012
    پیغامات:
    425
    موصول شکریہ جات:
    736
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    جناب ابومحمد صاحب آپ نے د عوہ کیا تھا کہ آپ کی پاس تطبیق ہے اتنی دن سےہم انتظار کرتے رھیں اور آپ نے تطبیق پیش نھیں کیا بلکہ الٹا
    بھا گنے کی چکر میں ہو خالی گول گول بات کررہے ہو ہم نے اتنا عاجزانہ التجاء کیا کہ مہربانی کرکے بتادو ہمارے علم میں اضافہ ہوگا لیکن لگتا ہے آپ نے جھوٹ بولا تھا اسلیے نھیں بتاسکے
    آپ نے قرآن شریف کی اوپر تضاد کا اتنا بڑا الزام لگادیا جس کی نتیجے میں آپ کی خاموشی نے آپ کو ایک جھوٹا انسان ثابت کردیا
    استاد محترم کی جانب سے فورم کی خدمت میں جواب پیش کرتا ہو
    آپ نے کہا تھا کہ
    جناب اب آپ سے صحیح آیت کا مطالبہ ہے قرآن میں ہے جنتیوں کے کنگن سونے کے ہوں گے الدھر ٢١
    اور دوسری آیت میں ہے جنتیوں کے کنگن چاندی کے ہوں گے الکہف ٣١ آپ سے یہ مطالبہ ہے کہ بتا ئیں کہ کون سی آیت صحیح ہے کون سی غلط ہے اپنے اصول کے مطابق ۔ بھاگنا نہیں ۔


    [FONT=Jameel Noori Nastaleeq, Alvi Lahori Nastaleeq, Alvi Nastaleeq, Urdu Naskh Asiatype, Nafees Pakistani Naskh, Nafees Web Naskh, Nafees Pakistani Web Naskh, Tahoma, Arial Unicode MS, Times New Roman, Arial, Times, serif, Lucida Grande, sans-serif]میری استاد محترم کاجواب
    جناب ابومحمد صاحب آپ کی سوال میں آپ کو غلط فہمی ہوئی ہے کہ سورہ دھر کی آیت نمبر 21 میں جنتیوں کو چاندی کا گنگن ملیگا اب آپ جواب پڑھے اور استغفار کرتے ہوے اللہ تعالی کی طرف رجوع کرلیں
    [/FONT]

    [FONT=Jameel Noori Nastaleeq, Alvi Lahori Nastaleeq, Alvi Nastaleeq, Urdu Naskh Asiatype, Nafees Pakistani Naskh, Nafees Web Naskh, Nafees Pakistani Web Naskh, Tahoma, Arial Unicode MS, Times New Roman, Arial, Times, serif, Lucida Grande, sans-serif]جواب :::::::
    یہ جو چاندی کے کنگھن ہے آیت نمبر 21 میں یہ جنتیوں کیلیے نھیں بلکہ ولدان (کم سن بچے ) ولدان کیلیے ہیں اس لیے کہ یہاں پر آیت نمبر 19 /20 /22 میں جنتیوں کو مخا طب کے صیغے سے مخاطب کیا ہے
    اذا رایتہم
    واذا رءیت ثم ریئت
    اور ولدان کیلیے ہم یعنی غایب کا لفظ استعمال کیا گیا ہے عالیہم ثیاب / اذا رئیتہم / کے الفاظ استعمال کی گیے ہیں تو اس سے پتہ چلا کہ کنگھن چاندی والا خادموں کیلیے ہیں لہذا سورہ کہف اور دہر کی آیات میں کوئی تضاد نھیں
    اسلام زندہ باد قرآن پر تضاد کا جھوٹا الزام لگانےوالا مردہ باد[/FONT]


     
  8. ‏اپریل 06، 2013 #188
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    جناب شکر ہے آپ کو سمجھ آ گئی ہے ۔ اسی طرح حدیث بھی بظاہر تو متعارض لگتی ہے لیکن ہوتی نہیں صرف دماغ کو صحیح استعمال کرنے سے سمجھ آ جاتی ہے ۔
     
  9. ‏اپریل 06، 2013 #189
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    الیاسی صاحب اور محترم الیاس ستار صاحب
    اصل میں میں آپ اور آپ کے استاد کا علم دیکھنا چاہتا تھا ۔ لیکن مجھے بہت مایوسی ہوئی ۔ایک سوال کے جواب میں قریبا پندرہ دن ۔۔۔۔۔۔۔
    بہت سنتے تھے پہلو میں شور دل کا
    جناب آپ کا اصول قرآن کو بھی غلط ثابت کر دیتا ہے ۔جناب اگر میں نے قرآن سے غلط مطلب نکالاہو تو میں اللہ سے معافی طلب کرتا ہوں لیکن اھل علم پر عیاں ہے کہ میں نے جو بات پوچھی تھی وہ آپ کے خود ساختہ اصول کے رد میں تھی اور میرا یہ موقف قطعا نہیں کہ یہ آیتیں متعارض ہیں لیکن آپ جیسے مستشرقین سے متاثرہ لوگ قرآن پر بھی ہاتھ صاف کرتے ہیں ۔
    76.21. عٰلِيَهُمْ ثِيَابُ سُـنْدُسٍ خُضْرٌ وَّاِسْتَبْرَقٌ ۡ وَّحُلُّوْٓا اَسَاوِرَ مِنْ فِضَّةٍ ۚ وَسَقٰىهُمْ رَبُّهُمْ شَرَابًا طَهُوْرًا 21؀
    76.21. ان کے جسموں پر سبز باریک اور موٹے ریشمی کپڑے ہوں گے اور انہیں چاندی کے کنگن کا زیور پہنایا جائے گا (١) اور انہیں ان کا رب پاک صاف شراب پلائے گا ۔
    یہ بتایا جائے کہ اس میں کس کو کنگن پہنائے جائیں گے جھوٹ بولا آپ نے اور آپ کےاستاد محترم نے یہاں کنگن جنتیوں کو پہنانے کا ذکر ہے۔
    جناب آپ کو اور آپ کے استاد کو اتنی سی تطبیق بھی نہیں آتی کہ سیدھے سی بات ہے اللہ تعالیٰ جسے چاہے گا سونے کے پہنائے گا اور جسے چاہے گا چاندی کے اور جسے چاہے گا دونوں پہنا دے گا ۔اگر یہ تطبیق کسی بھائی کو غلط لگے تو بتا دیں ۔لیکن الیاسی صاحب میں آپ اور آپ کے استاد کے علم کا مقابلہ نہین کر سکتا ۔
     
  10. ‏اپریل 06، 2013 #190
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    متن میں لکھ دیتا ہوں جو سمجھنا چاہے گا سمجھ لے گا۔
    76.15. وَيُطَافُ عَلَيْهِمْ بِاٰنِيَةٍ مِّنْ فِضَّةٍ وَّاَكْوَابٍ كَانَتْ قَوَا۩رِيْرَا۟ 15۝ۙ
    76.15. اور ان پر چاندی کے برتنوں اور ان جاموں کا دور کرایا جائے گا (١) جو شیشے کے ہونگے۔

    76.16. قَوَا۩رِيْرَا۟ مِنْ فِضَّةٍ قَدَّرُوْهَا تَقْدِيْرًا 16؀
    76.16. شیشے بھی چاندی کے (١) جن کو (ساقی نے) اندازے سے ناپ رکھا ہوگا (٢)

    76.17. وَيُسْقَوْنَ فِيْهَا كَاْسًا كَانَ مِزَاجُهَا زَنْجَبِيْلًا 17۝ۚ
    76.17. اور انہیں وہاں وہ جام پلائے جائیں گے جن کی آمیزش زنجبیل کی ہوگی (١)

    76.18. عَيْنًا فِيْهَا تُسَمّٰى سَلْسَبِيْلًا 18؀
    76.18. جنت کی ایک نہر جس کا نام سلسلبیل ہے (١)

    76.19. وَيَطُوْفُ عَلَيْهِمْ وِلْدَانٌ مُّخَلَّدُوْنَ ۚ اِذَا رَاَيْتَهُمْ حَسِبْتَهُمْ لُؤْلُؤًا مَّنْثُوْرًا 19؀
    76.19. اور جن کے ارد گرد گھو متے پھرتے ہونگے وہ کم سن بچے جو ہمیشہ رہنے والے ہیں (١) جب تو انہیں دیکھے تو سمجھے کہ وہ بکھرے ہوئے موتی ہیں (٢)

    76.20. وَاِذَا رَاَيْتَ ثَمَّ رَاَيْتَ نَعِيْمًا وَّمُلْكًا كَبِيْرًا 20؀
    76.20. تو وہاں جہاں کہیں بھی نظر ڈالے گا سراسر نعمتیں اور عظیم الشان سلطنت ہی دیکھے گا۔

    76.21. عٰلِيَهُمْ ثِيَابُ سُـنْدُسٍ خُضْرٌ وَّاِسْتَبْرَقٌ ۡ وَّحُلُّوْٓا اَسَاوِرَ مِنْ فِضَّةٍ ۚ وَسَقٰىهُمْ رَبُّهُمْ شَرَابًا طَهُوْرًا 21؀
    76.21. ان کے جسموں پر سبز باریک اور موٹے ریشمی کپڑے ہوں گے اور انہیں چاندی کے کنگن کا زیور پہنایا جائے گا (١) اور انہیں ان کا رب پاک صاف شراب پلائے گا

    76.22. اِنَّ هٰذَا كَانَ لَكُمْ جَزَاۗءً وَّكَانَ سَعْيُكُمْ مَّشْكُوْرًا 22۝ۧ
    76.22. ۔ (کہا جائے گا) کہ یہ ہے تمہارے اعمال کا بدلہ اور تمہاری کوشش کی قدر کی گئی۔
    محترم الیاسی صاحب مفسرین اگر آپ اور آپ کے استاد جیسے ذہیں ہوتے تو ایک آیت کو سمجھنے میں پندرہ دن لگاتے تو انہوں نے تفسیر لکھ لی تھی ۔میں مقلد ہوں یا آپ یہ قارئین فیصلہ کریں گے
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں