1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سینہ پر هاتھ باندهنے کے دلائل ! محدث زبیر علی زئی رحمہ الله

'نماز کا طریقہ کار' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏ستمبر 29، 2015۔

  1. ‏مارچ 24، 2016 #21
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,357
    موصول شکریہ جات:
    1,079
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ.
    دوسروں کو نصیحت کرتے ھیں اور اپنے آپ کو بھلا بیٹھے ھیں؟
    تعصب، بغض وعناد آپ کی تحاریر سے عیاں ھے.
    محترم @عبدالرحمن بھٹی صاحب
     
    • متفق متفق x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  2. ‏مارچ 24، 2016 #22
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    287
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    محترم! معذرت کے ساتھ۔۔۔۔۔ میری تحریر کو آپ لوگ بغور کیوں نہیں پڑھتے؟ میں نے پہلے ہی تریڈ میں دکھائی گئی زبیر عی زئی کی وڈیو کا ”سنیپ“ لگایا تھا اور کہا تھا کہ انہوں نے کسی بھی حدیث کے مطابق ہاتھ نہیں باندھے ہوئے۔
     
  3. ‏مارچ 25، 2016 #23
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    287
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    اہلحدیثوں کےشیخ محدث زبیر علی زئی رحمۃ اللہ کا ہاتھ باندھنے کا طریقہ جو کہ کسی بھی حدیث کے مطابق نہیں بلکہ حدیثِ نفس کے مطابق ہے ملاحظہ فرمائیں؛
    زبیر علی زٗیی.png
     
  4. ‏مارچ 25، 2016 #24
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    287
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    دلچسپ بات یہ کہ اس طرح ہاتھ باندھنے سے سینہ پر نہیں رہتے۔ نارمل جسامت کے حامل حضرات عملاً کر کے دیکھ سکتے ہیں۔ یہ ”ضعیف“ نہیں ”ثقہ“ دلیل ہے۔
     
  5. ‏جولائی 24، 2016 #25
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    287
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    ہاتھ باندھنے کا مسنون طریقہ

    محترم قارئین کرام!
    ہاتھ باندھنے کا مسنون طریقہ یوں ہے؛
    سیدھے ہاتھ کی ہتھیلی الٹے ہاتھ کی پشت پر گٹ کے قریب رکھیں اور سیدھے ہاتھ سے الٹے ہاتھ کو پکڑیں اور سیدھے ہاتھ کی کچھ انگلیاں الٹے ہاتھ پر بچھا دیں۔
    ہاتھ باندھنے کا یہ طریقہ کسی بھی حدیث کے خلاف نہیں بلکہ تمام احادیث کے مطابق ہے۔ اس طریقہ سے ہاتھ ناف کے نیچے باندھنا بھی سنت ہے جیسا کہ علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا فرمان ہے۔ مسنون طریقہ سے صف بندی بھی اسی طرح ہاتھ باندھ کر ممکن ہے کسی اور طریقہ سے ممکن نہیں۔
    اہم بات
    مسنون طریقہ سے ہاتھ باندھ کر اگر انہیں ناف سے اوپر کی طرف بتدریج لاتے جائیں تو آپ دیکھ سکتے ہیں کہ جیسے جیسے ہاتھ ناف سے اوپر کی طرف آتے جاتے ہیں کہنیاں کندھوں سے باہر کی طرف نکلنا شروع ہو جاتی ہیں۔ صاف ظاہر ہے کہ جب کہنیاں کندھے سے باہر ہوں تو صف میں ایسے دو آدمی کندھے سے کندھا نہیں ملا سکتے (آزمائش شرط ہے بشرطیکہ یہ دونوں حضرات متناسب جسامت رکھتے ہو ”ابنارمل“ نہ ہوں)۔
    جب ہاتھ کہنی کے محاذات میں آجائیں گے اس وقت کہنیاں (سب حالتوں سے زیادہ) کندھوں سےباہر ہوں گی۔
    تنبیہ: جب ہاتھ مزید اس سے اوپر کی طرف لے جائیں تو کہنیاں دوبارہ اندر کی طرف آنا شروع ہوجائیں گی مگر مسنون طریقہ سے ہاتھ باندھ کر ایسا کرنا نہایت ہی مشکل ہے۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں