1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

شرک اکبر دائرہ اسلام سے خارج کرنے کا باعث (عبدالعزیز بن باز رحمہ اللہ)

'توحید وشرک' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد ارسلان, ‏نومبر 07، 2015۔

  1. ‏نومبر 07، 2015 #1
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,798
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    الشیخ عبدالعزیز بن باز رحمۃ اللہ لکھتے ہیں کہ:
    ’’اﷲ تعالیٰ کے ساتھ شرک کرنے سے آدمی مرتد (مسلمان ہونے کے بعد کافر)ہوجاتا ہے۔‘‘
    (فتاویٰ دارلافتا ٔ ص14 ج2)
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 1
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  2. ‏نومبر 07، 2015 #2
    محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جون 01، 2011
    پیغامات:
    1,955
    موصول شکریہ جات:
    5,774
    تمغے کے پوائنٹ:
    354

    جزاک اللہ خیرا
    کیونکہ۔إِنَّ الشِّرْكَ لَظُلْمٌ عَظِيمٌ
     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  3. ‏نومبر 07، 2015 #3
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    مشرک کبھی بھی اللہ کی جنت میں داخل نہیں ہو گا !
    مواحد کبھی بھی ہمیشہ کی جہنم میں باقی نہیں رہے گا !

    اللہ سبحان و تعالیٰ ھم سب کا خاتمہ عقیدہ توحید پر کریں اور ھم سب کو اپنی رحمت سے معاف فرما کے جنت الفردوس عطا فرمائے - آمین
     
    Last edited: ‏نومبر 07، 2015
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏نومبر 07، 2015 #4
    محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جون 01، 2011
    پیغامات:
    1,955
    موصول شکریہ جات:
    5,774
    تمغے کے پوائنٹ:
    354

    آمین
     
  5. ‏نومبر 07، 2015 #5
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,798
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    آمین یا اللہ ذوالجلال والاکرام
     
  6. ‏نومبر 09، 2015 #6
    عبداللہ ابو یاسر

    عبداللہ ابو یاسر مبتدی
    جگہ:
    نوشہرہ، خیبر پختونخوا
    شمولیت:
    ‏نومبر 07، 2015
    پیغامات:
    4
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    2

    اس میں ایک بات بہت اہم کیا جانتے بوجھتے شرک اور غلطی سے ہونے والے شرک میں کوئی فرق رکھا جائے گا کہ نہیں ، ایک بندہ توحید کا اقراری ہے لیکن غلطی سے شرک میں مبتلاہوگیا ، کیا اس کا اور جانتے بوجھتے شرک کرنے والا کا معاملہ یکساں ہوگا ، میرے نزدیک اس میں بہت باتیں اہم ہے اگر ہم دیکھے تو اللہ نے قرآن میں ایک جان کی قتل کو پوری انسانیت کی قتل قرار دیا ہے لیکن اس کے باوجود جب خطا سے قتل ہوجائے تو اس صورت میں دیت ادا کرکے انسان کی جان نہیں لی جاسکتی، اب ہم کو معلوم ہے کہ جو بندہ ، بندہ کا حق ادا نہ کریں وہ بندہ جب تک نہ بخشائے اس وقت تک اللہ نہیں بخشائے گا لیکن یہاں پر جب قتل خطا ہوجاتی ہے تو پھر اللہ تعالیٰ خود فیصلہ فرما کر انسان کو بخشتا ہے جب خطا کی وجہ سے اللہ کا حکم بھی ٹوٹ گیا یعنی اللہ نے فرمایا تھا کہ کسی بے گناہ کی جان نہ لو لیکن خطا سےلی گئی ، مزید یہ کہ مقتول پر بھی قتل کرنے والے کی طرف سے ظلم ہے لیکن جب یہ خطا کی وجہ سے ہے تو انسان معاف ہے تو پھر شرک کا معاملہ ایسا کیوں نہیں ہوسکتا۔
    اس طرح نبی ﷺ نے جو دعا ہم کو سکھائی کہ کہے کہ اس شرک سے ہم کو بچا کے رکھنا جو ہم جانتے ہوئے کریں اور اس شرک کو معاف کرنا جو ہم نہیں جانتے لیکن ہم سے ہورہا ہو تو اس سے کیا واضح نہیں ہے کہ غلطی سے شرک اللہ معاف کرسکتا ہے ۔ اس وجہ سے تو نبی ﷺ نے ہم کو دعا سکھائی ۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں