1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

شریعت ،طریقت،معرفت کی حقیقت

'عملی تصوف' میں موضوعات آغاز کردہ از عابدالرحمٰن, ‏جنوری 05، 2013۔

  1. ‏مارچ 07، 2013 #111
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    السلام علیکم
    کیا مولاناعمران اسلم صاحب اس کو سمجھا سکتے ہیں
    -1-اپنے
    جس طرح اہل رائے نے لمبا زمانہ لگاکر رائے و قیاس میں مہارت پیدا کرلی ہے
    2
    علماء کا وحی کی سمجھ میں الگ الگ ہونا جسموں کے الگ ومختلف ہونے سے کہیں بڑھ کر ہوتا ہے
    جس طرح وحی کی سمجھ میں فہم علماء جدا جدا ہوتا ہے اسی طرح تصوف کو سمجھنے کا پیمانہ جدا گانہ ہے
     
  2. ‏مارچ 08، 2013 #112
    عمران اسلم

    عمران اسلم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    318
    موصول شکریہ جات:
    1,604
    تمغے کے پوائنٹ:
    150

    علما کے مابین اجتہادی اختلافات کا ہونا ایک فطری امر ہے۔ لیکن ان اختلافات کا حل اللہ تعالیٰ نے یوں بیان فرمایا ہے:
    يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا أَطِيعُوا اللَّهَ وَأَطِيعُوا الرَّسُولَ وَأُوْلِي الأَمْرِ مِنْكُمْ فَإِنْ تَنَازَعْتُمْ فِي شَيْءٍ فَرُدُّوهُ إِلَى اللَّهِ وَالرَّسُولِ إِنْ كُنتُمْ تُؤْمِنُونَ بِاللَّهِ وَالْيَوْمِ الآخِرِ ذَلِكَ خَيْرٌ وَأَحْسَنُ تَأْوِيلًا
    جہاں تک تصوف کی بات ہے تو تصوف کو سمجھنے کا پیمانہ الگ کیوں ہے؟ جبکہ آپ اس سے قبل یہ الفاظ لکھ چکے ہیں:
    تصوف کے مختلف نام ہیں جیسے کہ سلوک زہد احسان تقویٰ جو بھی عمل شریعت کے دائرہ کار میں ہوگا وہ محمود ہے اور جو اس سے تجاوز کرے وہ مردود ہے۔
    اگر تصوف کے صرف وہی اعمال محمود ہیں جو شریعت کے دائٰرہ کار میں آتے ہیں تو تصوف کو سمجھنے کا پیمانہ جداگانہ کیسے ہو گیا؟
     
  3. ‏مارچ 14، 2013 #113
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    مولانا عمران اسلم صاحب
    دنیا کے عجائبات کی اور سیر ہوجاتی اس میں کون سی بات قابل اعتراض ہے ؟؟؟؟؟؟؟؟
    اور
    ۔
    موسیٰ علیہ السلام کون سا علم سیکھنے گئے تھے( اللہ تعالی نے ان کو حضر علیہ السلام کے پاس کیوں بھیجا تھا) کیا شریعت کا علم سیکھنے گئے تھے پہلے اس کی وضاحت فرمادیں
    میں آپ کے جواب کا منتظر ہوں
     
  4. ‏مارچ 14، 2013 #114
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    عابد صاحب تصوف بذات خود کوئی بری چیز نہیں ہے ۔لیکن اگر میں آپ کو آپ کے بزرگو ں والا تصوف بتاوں تو آپ مان جائیں گے کہ جو تصوف ہمارے بزرگ مانتے ہیں غلط ہے
     
  5. ‏مارچ 14، 2013 #115
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    یہ تصوف ٹھیک ہے
     
  6. ‏مارچ 14، 2013 #116
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    [​IMG] آپ کے بزرگوں کے مطابق تو قبروں سے بھی فیض حاصل ہوتا کیا یہ بھی ٹھیک ہے۔ کلیات امدادیہ اور المہند علی المفند
     
  7. ‏مارچ 14، 2013 #117
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    السلام علیکم
    ابو محمد صاحب
    تصوف اچھا ہے یا برا مجھے اس سے کوئی غرض نہیں اور نہ ہی اس کا تعلق ایمان سے کہ اس کو مانیں گے تو ایمان کامل ہوگا نہیں تو ناقص میں یہ کہہ کر چل رہا ہوں جو بھی عمل شریعت کے دائرہ کار میں ہوگا وہ محمود ہے نہیں تو مردود ہے
    اب رہا یہ معاملہ میرے اکابر قبروں سے فیض حاصل کرتے تھے میرے علم میں نہیں ہے جہاں تک اکابر کی اغلاط کا تعلق ہے تو کوئی بھی محفوظ نہیں ہے ۔ابن تیمیہ ؒ کے بارے میں ایک کتاب ہے ’’اخطاء ابن تیمیہ‘‘ اس کا ڈاؤن لوڈ لنک بھی دے سکتا ہوں۔خود ابن تیمیہ ؒ تصوف کے قائل ہیں اور ابن قیمؒ بھی لیکن جو غلط ہے وہ غلط ہے اور جو صحیح ہے وہ صحیح ہے۔لیکن سرے سے کسی چیز کو غلط کہدینا یہ غلط ہے ۔
    مجھے شکایت صرف یہ ہے کہ مولانا عمران اسلم صاحب نے نہایت بھونڈے اور تعصبی نظریہ کے ساتھ مجھ سے برتاؤ کیا اور کچھ دیگر افراد نے بھی ایسا رخ اپنایا اگر علمی گفتگو کرنی تھی تو مجھے اس سے فرار نہیں تھا میں جانتا ہوں کہ جدید اہل حدیث کے یہاں تصوف ایک باطل علم ہے یہ اس کو تسلیم نہیں کریں گے تو وقت خراب کرنا بیکار ہے اس لیے ابو محمد صاحب آپ سے معذرت خواہ ہوں میں صرف چند باتیں مولانا سے معلوم کرنا چاہتا ہوں کیوں کہ انہوں نے میرا مورل ڈاؤن کردیا ہے جس کی وجہ سے میں فورم پر بھی کم ہی آرہا ہوں ۔اس سے پہلے میرے کئی کئی گھنٹے فورم خرچ ہوتے تھے خیر اللہ حافظ
     
  8. ‏مارچ 14، 2013 #118
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    عابد بھائی فورم کی بحث کو آپ انا کا مسئلہ بنائیں گے تو مورال ڈائون ہو گا ۔ آپ کا موقف کچھ حد تک ٹھیک ہے ۔ تصوف بذات خود غلط نہیں ہے لیکن اس کو علما دیوبند نے غلط طریقے سے پیش کیا ہے ۔ جہاں تک قبروں سے فیض کا تعلق ہے تو وہ میں نے المہند علی المفند مولانا خلیل سھارنپوری کی کتاب ہے عقائد علما دیوبند پر ۔آپ کی نسبت بھی مظاھری ہے اور مظاھرالعلوم بھی ادھر ہی ہے اس کا جواب کم از کم دینا چاہئے ۔ میں حیران ہوں کہ آپ جیسے صاحب علم کی نظر سے یہ کتاب اوجھل کیسے رہ گئی۔ جہاں تک امام ابن تیمیہ رح کا تصوف ہے اس اور اس مین زمین اور آسمان کا فرق ہے ۔آپ سے التماس ہے فورم کو مت چھوڑئے ۔
     
  9. ‏مارچ 15، 2013 #119
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    قبروں سے فیض سے آپ کیا مراد لے رہے ہیں؟اور آپکی نظر میں جو صیح تصوف ہے وہ پیش کریں۔
     
  10. ‏مارچ 15، 2013 #120
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    یہ تو آپ ہی بتا سکتے ہیں کے قبروں سے فیض حاصل کرنا اور باطنی فیوض کا پہنچنا کس طرح ہے اور اس کی شریعت میں کیا حیثیت ہے میں نے حوالہ دے دیا ہے ۔جواب آپ کا کام ہے
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں