1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

شریعت ،طریقت،معرفت کی حقیقت

'عملی تصوف' میں موضوعات آغاز کردہ از عابدالرحمٰن, ‏جنوری 05، 2013۔

  1. ‏مارچ 16، 2013 #131
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    عابد الرحمن بھائی
    یہ بات تو کلیر ہے کہ اللہ تعالیٰ نے حضرت خضر علیہ السلام کو علم لدنی عطا فرمایا تھا
    میں نے کب کہا علم لدنی عطا فرمایا تھا ۔
     
  2. ‏مارچ 16، 2013 #132
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    عابد بھائی
    اور بھائی جہاں تک آپ کی دیگر باتوں کا سوال ہے تو بھائی آج اسلام اس شکل میں نہیں ہے جس شکل میں اللہ کے رسول ﷺ اور صحابہ کرامؓ نے چھوڑا تھا اب اس کا مطلب یہ ہرگز نہیں ہوسکتا کہ اسلام ہی غلط ہوگیا اگر اس دور میں صحابہ کرامؓ آجائیں تو یقینا آج کے مسلمانوں کومرتد کہیں گے۔ اس کی مثال یہ بھی ہو سکتی ہے کہ اگر کچھ جھولا چھاپ افراد ڈاکٹر ی کے پیشہ کو اپنا لیں تو اس کا مطلب یہ نہیں ہوا کہ فن ڈاکٹری ہی غلط ہوگئی
    اللہ آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے

    بھائی جان بات تو اصل یہ ہے کہ آپ کے نزدیک یہ علم لدنی اب بھی ہے ۔جب کہ ہم کہتے ہیں اس کی دلیل دیں
     
  3. ‏مارچ 17، 2013 #133
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    معذرت کے ساتھ
    خضر کیونکر بتائیں،کیا بتائے اگر ماہی کہے دریا کہا ہے
     
  4. ‏مارچ 17، 2013 #134
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    معذرت کے ساتھ
    جناب خضر کے ذمے یہ کام آج کل کس نے لگایا ہوا ہے کہیں انہی اکابرین نے تو نہیں جن کے بقول حضرت خضر نے امام صاحب کی قبر سے فیض حاصل کیا تھا۔
     
  5. ‏مارچ 17، 2013 #135
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    السلام علیکم
    تکلیف کے ساتھ
    میری سمجھ میں اب تک یہ بات نہیں آئی کہ آخر آپ حضرات حضرت امام اعظم ابوحنفیہ رحمہ اللہ سے اتنے متنفر کیوں ہیں کوئی بھی موضوع ہو یا کسی طرح کی بھی بات ہو نزلہ امام صاحب رحمہ اللہ پر ضرور گرنا ہے۔اور انداز گفتگو دیکھئے
    خضر علیہ السلام کو ایسے لکھا ہے جیسے کوئی محلہ گلی کا لڑکا ہو چلو امام صاحب رحمہ اللہ کو ہم مان لیتے ہیں کہ بھائی بوجہ نفرت کوئی اہمیت نہ دیتے ہوں لیکن خضر علیہ السلام کا کیا کہیں گے؟ اور کیا آپ یہ ثابت کرسکتے ہیں کہ امام صاحب رحمہ اللہ اکتساب فیض عن القبور کے قائل تھے
    دیگر میں باربار دریافت کررہا ہوں کہ حضرت خضر علیہ السلام کے پاس کون سا علم تھا اس کا کوئی تسلی بخش جواب نہیں بس ادھر کی ادھر اور ادھر کی ادھر
    اور عجائبات سے متعلق میں نے دریافت کیا اس کوئی جواب نہیں بھائی ٹو دی پائنٹ بات کیجئے نہیں تو کوئی دوسرا موضوع شروع کیجئے
     
  6. ‏مارچ 17، 2013 #136
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    یہ میرے غلطی ہے میں اللہ تعالیٰ سے معافی مانگتا ہوں کہ میں نے حضرت خضر علیہ السلام کے نام کو ایسے ہی لکھ دیا اللہ مجھے معاف کرے ۔
     
  7. ‏مارچ 17، 2013 #137
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    عابد بھائی نے فرمایا ہے
    عجائبات سے متعلق میں نے دریافت کیا اس کوئی جواب نہیں بھائی ٹو دی پائنٹ بات کیجئے نہیں تو کوئی دوسرا موضوع شروع کیجئ
    بھائی آپ پتا نہیں کہاں لے جاتے ہیں بحث کو۔ اصل مقصد آپ کا بھی یہی کے آپ کے اکابر کا تصوف ٹھیک ثابت ہے میں بھی ان کے حوالہ جات دیتا ہوں آپ اس تصوف کو نہیں مانتے ۔اور ان دلائل کا جواب آپ نے ابھی تک نہیں بتایا میں نے آپ کے سارے دلائل کا جواب دیا ہے اب آپ میری پرانی پوسٹیں پڑھیں اور جواب دیں آپ کی مہربانی ہو گی
     
  8. ‏مارچ 18، 2013 #138
    عمران اسلم

    عمران اسلم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    318
    موصول شکریہ جات:
    1,604
    تمغے کے پوائنٹ:
    150

    موسیٰ﷤حضرت خضر﷤کے پاس کون سا علم سیکھنے گئے تھے اس سلسلے میں آپ کے پاس اگر کوئی واضح نص موجود ہے یا اس ضمن میں آپ کو کوئی الہام ہوا ہے تو ہمیں آگاہ کیجئے ہم اس پر ضرور غور کریں گے۔
    اس بحث کی وضاحت سے قبل یہ ضروری ہے کہ حضرت﷤ کی شخصیت کا تعین کر لیا جائے اس لیے آپ مختصراً یہ بتا دیجئے کہ حضرت خضر نبی تھے ولی یا فرشتہ؟
     
  9. ‏مارچ 18، 2013 #139
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    السلام علیکم
    تیر ونشتر لگانے کی تو ضرورت ہے نہیں آپ کا جواب اللہ تعالیٰ کے اس الہام میں ہے :
    قَالَ لَہٗ مُوْسٰي ہَلْ اَتَّبِعُكَ عَلٰٓي اَنْ تُعَلِّمَنِ مِمَّا عُلِّمْتَ رُشْدًا۝۶۶
    موسیٰ نے ان سے (جن کا نام خضر تھا) کہا کہ جو علم (خدا کی طرف سے) آپ کو سکھایا گیا ہے اگر آپ اس میں سے مجھے کچھ بھلائی (کی باتیں) سکھائیں تو میں آپ کے ساتھ رہوں
    اور
    اس کا جواب یہ ہے:
    فَوَجَدَا عَبْدًا مِّنْ عِبَادِنَآ اٰتَيْنٰہُ رَحْمَۃً مِّنْ عِنْدِنَا وَعَلَّمْنٰہُ مِنْ لَّدُنَّا عِلْمًا۝۶۵ [١٨:٦٥]
    (وہاں) انہوں نے ہمارے بندوں میں سے ایک بندہ دیکھا جس کو ہم نے اپنے ہاں سے رحمت (یعنی نبوت یا نعمت ولایت) دی تھی اور اپنے پاس سے علم بخشا تھا
    نبی یا ولی یا فرشتہ:
    فرشتہ تو آپ کی ایجاد ہیں
    البتہ بات کو دوسرا رخ نہ دیں
    کیوں کہ میں اپنا موقف رکھ چکا ہوں آپ معترض اور مصلح الکل فی الکل ہیں تو یہ آپ کو بتانا ہوگا کہ حضرت خضر علیہ السلام کے پاس کون سا علم تھا بس یہ واضح فرمادیں؟؟
    اور دوسرا اعتراض آپ نے یہ قائم کیا تھا
    دنیا کے عجائبات کی اور سیر ہوجاتی اس میں کون سی بات قابل اعتراض ہے ؟؟؟؟؟؟؟؟
     
  10. ‏مارچ 19، 2013 #140
    عمران اسلم

    عمران اسلم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    318
    موصول شکریہ جات:
    1,604
    تمغے کے پوائنٹ:
    150

    مفتی صاحب آپ کی پیش کردہ اس نص میں میرے سوال کا جو جواب ہے وہ ہائی لائٹ کر دیجئے اور اس علم کا نام بھی لکھ دیجئے۔

    میں نے کہا تھا کہ حضرت خضرؑ کی شخصیت کا تعین ہو جائے تو یہ مسئلہ واضح ہو سکتا ہے۔ لیکن آپ نے اس میں بھی دو رائے دے دی ہیں نبی یا ولی۔
    آپ کے نزدیک نبی اور ولی میں کوئی فرق نہیں ہے؟
    اگر نبی اور ولی میں فرق ہے تو پھر کھلے الفاظ میں بتلا دیجئے کہ آپ کے نزدیک حضرت خضرؑ نبی ہیں یا ولی؟
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں