1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

شیخ الکذابین کا جھوٹ ۔ میں نے 32 سال مغرب کے وضو سے فجر پڑھی !!!

'بریلوی' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏نومبر 25، 2014۔

  1. ‏نومبر 25، 2014 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,955
    موصول شکریہ جات:
    6,503
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    شیخ الکذاب کا جھوٹ ۔ میں نے 32 سال مغرب کے وضو سے فجر پڑھی !!!


    اس کذاب (طاہر القادری) کا جھوٹ سنئے کہ یہ 32 سال سے رات کو نہیں سویا ۔


    لنک

     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  2. ‏نومبر 25، 2014 #2
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,955
    موصول شکریہ جات:
    6,503
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    یہ کذاب 32 سال رات کو نہیں سویا تو وہ عالم رویا میں جو 15 سال ابو حنفیہ سے پڑھا وہ کیا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ؟ اور جو جھوٹے خواب سناتا رہا وہ کب دیکھے ؟
     
    • پسند پسند x 3
    • زبردست زبردست x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  3. ‏نومبر 25، 2014 #3
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,189
    موصول شکریہ جات:
    2,367
    تمغے کے پوائنٹ:
    777

    دروغ گو را حافظہ نہ باشد
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏نومبر 25، 2014 #4
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,189
    موصول شکریہ جات:
    2,367
    تمغے کے پوائنٹ:
    777

    کیا امام ابوحنیفہ نے چالیس سال عشاء کے وضوء سے صبح کی نمازپڑھی
    قال الشيخ الألباني رحمه الله في كتابه صفة صلاة النبي صلى الله عليه و سلم، الطبعة الرابعة عشر (١٤٠٨-١٩٨٧)، الصفحة ۱۲۰:
    و (ما كان صلى الله عليه و سلم يصلي الليل كله) (١) إلا نادراً، ...
    (١) مسلم و أبو داود. قلت (أي الشيخ الألباني): و لهذا الحديث و غيره يكره إحياء الليل كله دائماً أو غالباً، لأنه خلاف سنته صلى الله عليه و سلم، و لو كان إحياء كل الليل أفضل لما فاته صلى الله عليه و سلم. و خير الهدي هدي محمد - و لا تغتر بما روي عن أبي حنيفة رحمه الله أنه مكث أربعين سنة يصلي الصبح بوضوء العشاء ! فإنه مما لا أصل له عنه، بل قال العلامة الفيروز أبادي في (الرد على المعترض) (١/٤٤):
    (هذا من جملة الأكاذيب الواضحة التي لا يليق نسبتها إلى الإمام، فما في هذا فضيلة تذكر، و كان الأولى بمثل هذا الإمام أن يأتي بالأفضل، و لا شك أن تجديد الطهارة لكل صلاة أفضل و أتم و أكمل: هذا إن صح أنه سهر طوال الليل أربعين سنة متوالية ! و هذا أمر بالمحال أشبه، و هو من خرافات بعض المتعصبين الجهال، قالوه في أبي حنيفة و غيره، و كل ذلك مكذوب).


    ......................................
    علامہ الالبانی رحمہ اللہ اپنی کتاب صفۃ صلاۃ النبی میں فرماتے ہیں :
    نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے کبھی بھی ساری رات جاگ کر نماز میں نہیں گزاری،، (سوائے ایک آدھ موقع کے )مسلم وابوداود
    علامہ الالبانی فرماتے ہیں :اس حدیث اور دیگر دلائل کے پیش نظر ،ہمیشہ یا اکثرساری رات جاگ کر عبادت کرنا مکروہ ہے
    کیونکہ یہ سنت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے خلاف ہے
    اور اگر ساری رات بیدار رہ کر عبادت کوئی فضیلت و اہمیت کا کام ہوتا تو پیارے نبی ﷺ کیوں چھوڑتے،
    جبکہ ان کا ہر طریقہ ہی بہترین و اعلی ہے ،،
    اور اس روایت سے کسی کو دھوکہ نہیں کھانا چاہیئے،جو امام ابوحنیفہ کے متعلق ہے کہ انہوں نے چالیس سال عشاء کے وضوء سے صبح کی نماز ادا کی ،
    کیونکہ یہ روایت امام صاحب سے سرے سے ثابت ہی نہیں ،
    علامہ فیروز آبادی فرماتے ہیں :
    ’‘یہ ان واضح جھوٹوں میں سے ایک جھوٹ ہے جنکی نسبت بھی امام صاحب سے کرنا ان کی شان کے لائق نہیں ،
    مسلسل چالیس سال ساری رات جاگ کر عبادت ایک محال کام ہے ،
    ایسی جھوٹی باتیں جاہل و متعصب لوگوں نے امام ابوحنیفہ کی نسبت پھیلائی ہوئی ہیں،’‘
    صفه صلاه النبى من التكبير الى التسليم1.jpg
     
    Last edited: ‏نومبر 25، 2014
    • پسند پسند x 4
    • زبردست زبردست x 2
    • لسٹ
  5. ‏نومبر 25، 2014 #5
    محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل سینئر رکن
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏اپریل 29، 2013
    پیغامات:
    2,677
    موصول شکریہ جات:
    3,881
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    اُلامہ ظاہر الپادری
    زوال شروع ہو چکا ہے
    امید ہے کہ اس کا انجام دیکھ کر دلی خوشی ہو گی
     
  6. ‏نومبر 26، 2014 #6
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,189
    موصول شکریہ جات:
    2,367
    تمغے کے پوائنٹ:
    777

    جس نے میری سنت سے رو گردانی کی

    انس بن مالك رضي الله عنه يقول:‏‏‏‏ جاء ثلاثة رهط إلى بيوت ازواج النبي صلى الله عليه وسلم يسالون عن عبادة النبي صلى الله عليه وسلم فلما اخبروا كانهم تقالوها فقالوا:‏‏‏‏ واين نحن من النبي صلى الله عليه وسلم قد غفر له ما تقدم من ذنبه وما تاخر؟ قال احدهم:‏‏‏‏ اما انا فإني اصلي الليل ابدا وقال آخر:‏‏‏‏ انا اصوم الدهر ولا افطر وقال آخر:‏‏‏‏ انا اعتزل النساء فلا اتزوج ابدا فجاء رسول الله صلى الله عليه وسلم إليهم فقال:‏‏‏‏"انتم الذين قلتم كذا وكذا اما والله إني لاخشاكم لله واتقاكم له لكني اصوم وافطر واصلي وارقد واتزوج النساء فمن رغب عن سنتي فليس مني".

    صحیح بخاری ،كتاب النكاح حدیث ۵۰۶۳
    (( انس بن مالک سے سنا، انہوں نے بیان کیا کہ تین حضرات (علی بن ابی طالب، عبداللہ بن عمرو بن العاص اور عثمان بن مظعون رضی اللہ عنہم) نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی ازواج مطہرات کے گھروں کی طرف آپ کی عبادت کے متعلق پوچھنے آئے، جب انہیں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا عمل بتایا گیا تو جیسے انہوں نے اسے کم سمجھا اور کہا کہ ہمارا نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے کیا مقابلہ! آپ کی تو تمام اگلی پچھلی لغزشیں معاف کر دی گئی ہیں۔ ان میں سے ایک نے کہا کہ آج سے میں
    ہمیشہ رات بھر نماز پڑھا کروں گا۔
    دوسرے نے کہا کہ میں ہمیشہ روزے سے رہوں گا اور کبھی ناغہ نہیں ہونے دوں گا۔ تیسرے نے کہا کہ میں عورتوں سے جدائی اختیار کر لوں گا اور کبھی نکاح نہیں کروں گا۔ پھر نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم تشریف لائے اور ان سے پوچھا کیا تم نے ہی یہ باتیں کہی ہیں؟ سن لو! اللہ تعالیٰ کی قسم! اللہ رب العالمین سے میں تم سب سے زیادہ ڈرنے والا ہوں۔ میں تم میں سب سے زیادہ پرہیزگار ہوں لیکن میں اگر روزے رکھتا ہوں تو افطار بھی کرتا ہوں۔ نماز پڑھتا ہوں (رات میں) اور سوتا بھی ہوں اور میں عورتوں سے نکاح کرتا ہوں۔ «فمن رغب عن سنتي فليس مني» میرے طریقے سے جس نے بے رغبتی کی وہ مجھ میں سے نہیں ہے۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    علامہ محمد بن صالح العثیمین ؒ سے سوال کیا گیا کہ :
    کیا ساری رات بیدار رہ کر نمازمیں گزارنا سنت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے خلاف ہے ؟
    جواب دیا کہ :
    اگر ساری رات کا قیام مداومت (ہمیشگی ) کے ساتھ ہو ،تویہ خلاف سنت ہے ،کیونکہ صحیحین (بخاری و مسلم ) میں حدیث ثابت ہے کہ ،تین صحابہ کرام جو رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی نفلی عبادت کے متعلق آپ کے گھر والوں سے پوچھنے آئے تھے ،اور جب انہیں پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی انفرادی عبادت کے معلق بتایا گیا تو انہوں نے اسے (اپنے لئے )کم سمجھا ۔
    ان تینوں میں سے ایک نے کہا کہ آج سے میں ہمیشہ رات بھر نماز پڑھا کروں گا۔اورنیند نہیں کروں ،تو معلوم ہونے پر نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اس عمل کو غلط قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ میں رات کو نماز بھی پڑھتا ہوں اور سوتا بھی ہوں ،اور جس نےمیرے طریقے سے جس نے بے رغبتی کی وہ مجھ میں سے نہیں ہے۔
    آپ ﷺ کا یہ فرمانا اس بات کی دلیل ہے کہ ہمیشہ ساری رات جاگ کر عبادت کرنا سنت کے خلاف ہے ۔
    اسی طرح عبد اللہ بن عمرو نے بھی ہمیشہ شب بیداری کا عزم کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نےانہیں بھی منع فرمادیا ،،

    قيام الليل كله4.jpg
     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  7. ‏نومبر 26، 2014 #7
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,189
    موصول شکریہ جات:
    2,367
    تمغے کے پوائنٹ:
    777

    سنت اور حدیث کی روشنی تو آپ ملاحظہ فرماچکے اب باکمال لوگوں کی سیرت کے نمونے بھی دیکھ لیجیئے !
    الدر المختار شرح تنوير الأبصار وجامع البحار​
    وقد صلى الفجر بوضوء العشاء أربعين سنة، وحج خمسا وخمسين حجة، ورأى ربه في المنام مائة مرة ، ولها قصة مشهورة.
    وفي حجته الاخيرة استأذن حجبة الكعبة بالدخول ليلا، فقام بين العمودين على رجله اليمنى ووضع اليسرى على ظهرها حتى ختم نصف القرآن، ثم ركع وسجد، ثم قام على رجله اليسرى ووضع اليمنى على ظهرها حتى ختم القرآن، فلما سلم بكى وناجى ربه وقال: إلهي ما عبدك هذا العبد الضعيف حق عبادتك، لكن عرفك حق معرفتك فهب نقصان خدمته لكمال معرفته، فهتف هاتف من جانب البيت: يا أبا حنيفة قد عرفتنا حق المعرفة وخدمتنا فأحسنت الخدمة، قد غفرنا لك ولمن اتبعك ممن كان على مذهبك الى يوم القيامة

    اور امام ابو حنیفہ نے چالیس سال عشاء کے وضوء سے صبح کی نماز ادا کی ،اور پچپن حج کئے ،اور اپنے رب کا سو دفعہ خواب میں دیدار کیا
    اپنے آخری حج میں کعبہ کے دربان سے رات کعبہ کے اندر گزارنے کی اجازت لی ،
    اور اندر اس طرح کھڑے ہوگئے کہ ایک دائیں ٹانگ پر کھڑے ہوئے اور بائیں ٹانگ اٹھا کر اپنی پشت پر رکھ لی ،اسی حالت میں کھڑے کھڑے نصف قرآن ختم کرلیا ،پھر رکوع اور سجدہ کے بعد
    بائیں ٹانگ پر کھڑے ہوگئے اوربقیہ نصف قرآن اس ایک ٹانگ پر کھڑے ختم کردیا ،
    پھر سلام پھیرا،اور رونے لگے اور رب تعالی سے عرض گزار ہوئے :الہی تیرے اس بندے نے تیری عبادت کا حق ادا نہیں کیا،
    لیکن تیری معرفت میں کوتاہی بھی نہیں کی ،
    تو غیب سے ندا آئی :
    تو نے ہماری معرفت کا حق ادا کیااور خدمت کا حق بھی خوب ادا کیا،
    جا ہم نے تجھے بخش دیا،اور قیامت تک جو بھی تیری پیروی کرے گا اسے بھی ہم بخش دیں گے


    حق معرفتك2.jpg
     
    Last edited: ‏نومبر 26، 2014
    • پسند پسند x 4
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  8. ‏نومبر 26، 2014 #8
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,955
    موصول شکریہ جات:
    6,503
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    10806413_720167271384878_1978824689567624573_n.jpg
     
  9. ‏نومبر 26، 2014 #9
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,955
    موصول شکریہ جات:
    6,503
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    بدلتا ہے رنگ آسماں کیسے کیسے


    شیخ الکذاب
    خوابوں کا شہزادہ طاہر القادری ان دنوں ہر روز شریف برادران پر گرج برس رہے ہیں، لیکن ماضی میں اُن کی زبان شریف خاندان کی محبت، عقیدت، خلوص اور خدمت کا دم بھرتے نہیں تھکتی تھی۔ ماضی میں انہوں نے اعتراف کیا کہ شریف فیملی نے کبھی اُن سے کوئی سیاسی مفاد نہیں لیا، لیکن آج وہ اپنی اس بات سے پھر گئے ہیں۔ اور نئے نئے دعوے کرتے نظر آتے ہیں۔ بدلتے وقت کے ساتھ طاہر القادری کے بدلتے رنگ اور بیانات کی کہانی۔ دنیا نیوز کی زبانی

    لنک


     
  10. ‏جون 11، 2015 #10
    ابو فاران نعیم بن شہزاد

    ابو فاران نعیم بن شہزاد رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏جون 07، 2015
    پیغامات:
    142
    موصول شکریہ جات:
    24
    تمغے کے پوائنٹ:
    67

    اللہ تعالیٰ موت سے پہلے پہلے اسے توبہ کی توفیق عطا فرمائے اور میرے تو مسلمان مرے ،کاش اس کے مرید بھی ہوش کریں اور دجال کے پیرو کار نہ بنیں
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں