1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

قاتل حسين يزيد نہيں بلکہ کوفي شيعہ ہيں , يزيد بريء ہے

'اہل تشیع' میں موضوعات آغاز کردہ از رفیق طاھر, ‏اپریل 02، 2012۔

  1. ‏جون 20، 2013 #121
    نوید عثمان

    نوید عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 24، 2012
    پیغامات:
    181
    موصول شکریہ جات:
    119
    تمغے کے پوائنٹ:
    53

    ظلم کی لغوی تعریف کیا ہے؟
     
  2. ‏جون 20، 2013 #122
    نوید عثمان

    نوید عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 24، 2012
    پیغامات:
    181
    موصول شکریہ جات:
    119
    تمغے کے پوائنٹ:
    53

    اس میں توہین والی کونسی بات ہے۔؟
     
  3. ‏جون 20، 2013 #123
    نوید عثمان

    نوید عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 24، 2012
    پیغامات:
    181
    موصول شکریہ جات:
    119
    تمغے کے پوائنٹ:
    53

    کیا صرف حضرت معاویہ پر اعتراض توہین کے ذمرے میں آتا ہے ؟ حضرت علی رض کے بارے میں جس کے منہ میں جو آئے کہ دے ؟
     
  4. ‏جون 21، 2013 #124
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    ہم نے ایسی ناخلق زبان کب استعمال کی محترم جو آپ اپنا نزلہ ہم پر گرا رہے ہیں۔۔۔
    لعن طعن کے مستحق لوگوں کی نشاندہی!۔۔۔ اُمید ہے آپ بھی ہمارے ساتھ ہونگے۔۔۔ ملاحظہ کیجئے۔۔۔
    شیعہ رافضی کا عقیدہ ہے کہ علی بن ابی طالب رضی اللہ عنہ نے فرمایا!۔
    اللہ تعالٰی نے کسی بھی نبی کو مبعوث نہیں فرمایا مگر میں ہی اس کا قرضہ ادا کرتا ہوں اور میں ان کے وعدوں کو پورا کرتا ہوں، بلاشبہ میرے رب نے مجھے ہی علم اور کامیابی کے لئے چُنا ہوا ہے، بلاشبہ میں اپنے رب کے پاس بارہ مرتبہ حاضر خدمت ہوا ہوں تو اس نے مجھے اپنے نفس کی معرفت کروائی ہے اور مجھے غیب کی چابیاں بھی عطاء فرمائی ہیں (تفسیر فرات، صفحہ٦٨)۔۔۔
    اور یہ بھی گمان ہے کہ ابوعبداللہ نے فرمایا!۔
    بلاشبہ میں جانتا ہوں جو کچھ آسمانوں میں ہے اور جو کچھ زمین میں ہے اور میں جانتا ہوں جو کچھ جنت میں ہے اور میں جانتا ہوں جو کچھ ہوچکا ہے اور جو کچھ ہونے والا ہے (بحار الانوار جلد ٢٦÷١١١)۔۔۔
    اب جنگ صفین، جنگ جمل، شہادت حسن رضی اللہ عنہ، شہادت حسین رضی اللہ عنہ، حضرت حسن کا حضرت معاویہ رضی اللہ عنہ کے حق میں خلافت سے دستبردار ہونا یہ سب کیا مولا علی کو نہیں پتہ تھا؟؟؟۔۔۔
    شیعہ رافضی کی بونگیاں اگر مزید کہیں تو پیش کی جاسکتی ہیں۔۔۔ اب بتائیں کے ہم نے کبھی حضرت علی رضی اللہ عنہ کے حق میں ایسی کوئی گستاخی کی؟؟؟۔۔۔ یا کبھی ہم نے یہ جانتے ہوئے ملاحظہ کیجئے!۔۔۔
    وَعِندَهُ مَفَاتِحُ الْغَيْبِ لَا يَعْلَمُهَا إِلَّا هُوَ ۚ وَيَعْلَمُ مَا فِي الْبَرِّ وَالْبَحْرِ ۚ وَمَا تَسْقُطُ مِن وَرَقَةٍ إِلَّا يَعْلَمُهَا وَلَا حَبَّةٍ فِي ظُلُمَاتِ الْأَرْضِ وَلَا رَطْبٍ وَلَا يَابِسٍ إِلَّا فِي كِتَابٍ مُّبِينٍ ﴿٥٩﴾
    اور اللہ تعالیٰ ہی کے پاس ہیں غیب کی کنجیاں، (خزانے) ان کو کوئی نہیں جانتا بجز اللہ کے۔ اور وہ تمام چیزوں کو جانتا ہے جو کچھ خشکی میں ہیں اور جو کچھ دریاؤں میں ہیں اور کوئی پتا نہیں گرتا مگر وہ اس کو بھی جانتا ہے اور کوئی دانہ زمین کے تاریک حصوں میں نہیں پڑتا اور نہ کوئی تر اور نہ کوئی خشک چیز گرتی ہے مگر یہ سب کتاب مبین میں ہیں (ربط)

    جھوٹوں پر اللہ کی لعنت۔۔۔
     
  5. ‏جون 21، 2013 #125
    محمد علی جواد

    محمد علی جواد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 18، 2012
    پیغامات:
    1,988
    موصول شکریہ جات:
    1,495
    تمغے کے پوائنٹ:
    304

    امام بخاری فرماتے ہیں-

    ما أبالي صليت خلف الجهمي والرافض أم صليت خلف اليهود والنصارى ولا يسلم عليهم ولا يعادون ولا يناكحون ولا يشهدون ولا تؤكل ذبائحهم
    میں کسی جہمی یا رافضی یا عیسائ یا یہودی کے پیچھے نماز پڑھنے میں کوئ فرق نہیں پاتا۔ ان کو نہ ہی سلام کرنا چاہئیے ، نہ ہی ان سے ملنا چاہئیے ، نہ ہی ان سے نکاح کرنا چاہئیے ، نہ ان کی شہادت قابل قبول ہے اور نہ ہی ان کا زبیحہ کھایا جائے۔
    من شتم أحداً من أصحاب محمد أبا بكر أو عمر أو عثمان أو معاوية أو عمرو ابن العاص، فإن قال كانوا على ضلال وكفر قتلخلق افعال العباد ، ص 13
    حضرت امام مالک نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے صحابہ میں سے کسی کو بھی مثلا حضرت ابوبکر کو یا حضرت عمر کو اوریا حضرت عثمان یا حضرت معاویہ یا حضرت عمرو بن عاص کو برا کہنے والے کے بارہ میں حکم بیان کرتے ہوئے یوں فرمایا ہے کہ اگروہ شخص یہ کہے کہ وہ (صحابہ )گمراہ تھے یا کافر تھے تو اس شخص کو قتل کیا جائے-

    نیز امام احمد سے منقول ہے کہ انہوں نے فرمایا کہ جس شخص نے نبی کریم ﴿ص﴾ کے صحابی کو گالی دی ﴿﴿قد مَرَقَ عن الدِّين﴾﴾ تو وہ دین سے نکل گیا۔
    السنہ للخلال ج 3ص 493
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • متفق متفق x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  6. ‏جون 21، 2013 #126
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    صفی الرحمن المباركپوری اپنی کتاب الرحیق المختوم بارہ ایسے صحابہ کو جو غزوہ تبوک میں آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ہمرا ہ تھے منافق کہا ہے آپ لکھتے ہیں
    یہ یاد رہے کہ منافقین پہلے ہی بہانہ بنا کر اس جنگ میں جانے سے گریز کرچکے تھے اور کچھ راستے سے واپس آگئے تھے

    کیا امام بخاری امام احمد اور امام مالک کے یہ فتوے صفی الرحمن المباركپوری پر کارگر ہونگے جو کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ غزوہ تبوک میں شریک ان بارہ صحابہ کو منافق بتا رہیں ہیں ؟؟؟؟
     
  7. ‏جون 21، 2013 #127
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    کیا آپ عین وردۃ کا معرکہ جیسے جنگ توابین بھی کہا جاتا ہے بھول گئے جس میں صحابی رسول حضرت سلیمان بن صرد رضی اللہ عنہ نے قصاص امام حسین علیہ السلام کے لئے جنگ کی
    حوالہ کے لیئے ملاحظہ کریں تاریخ ابن کثیرترجمہ البدایہ والنہایہ ۔جلد8 صفحہ 319۔ ناشر نفیس اکیڈمی کراچی
    http://www.kitabosunnat.com/kutub-l...bne-kaseer-tarjuma-albadaya-w-alnihaya-8.html
     
  8. ‏جون 21، 2013 #128
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    آپ کے اس صرف نے مجھ لکھنے پر مجبور کردیا کہ آپ تو حدیث سکشن کے ناظم ہیں پھر بھی اس طرح کی باتیں کرتے ہیں کیا آپ کو نہیں معلوم کہ یزید لعنتی نے اہل مدینہ کے ساتھ کیا سلوک کیا اور اس عمل بد کے بارے میں رسول اللہ کا ارشاد کیا ہے
    حرمت مکہ کے بارے میں اللہ اور اس کے رسول کا کیا حکم ہے اب جس لعنتی کی افواج مکہ مکرمہ پر حملہ کرے اور خانہ کعبہ میں آگ لگادے وہ پھر بھی لعنت کا مستحق نہیں بلکہ آپ اس لعنتی کو دعائیہ کلمات سے یاد کریں اور پھر قرآن و حدیث پر عمل کا دعویٰ بھی کریں
     
  9. ‏جون 22، 2013 #129
    محمد علی جواد

    محمد علی جواد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 18، 2012
    پیغامات:
    1,988
    موصول شکریہ جات:
    1,495
    تمغے کے پوائنٹ:
    304

    تمام محدثین و آئمہ کے نزدیک صحابی رسول اس انسان کو کہا جاتا ہے- جو الله اور اس کے رسول صل اللہ علیہ وسلم پر ایمان لاے آپ کی صحبت اختیار کی اور ایمان کی حالت میں اس دار فانی سے کوچ کر گئے - اس میں شک نہیں کہ وہ انسان تھے اور ان سے خطا ء ممکن تھی لیکن وہ اپنی خطا ء پر قائم و دائم نہیں رہتے تھے - یہی وجہ ہے کہ قرآن نے ان پاک ہستیوں کا ذکر اس انداز میں کیا ہے -



    وَإِذَا قِيلَ لَهُمْ آمِنُوا كَمَا آمَنَ النَّاسُ قَالُوا أَنُؤْمِنُ كَمَا آمَنَ السُّفَهَاءُ ۗ أَلَا إِنَّهُمْ هُمُ السُّفَهَاءُ وَلَٰكِنْ لَا يَعْلَمُونَ سوره البقرہ ١٣
    اور جب انہیں (منافقین) کو کہا جاتا ہے کہ ایمان لاؤ جس طرح لوگ ایمان لائے ہیں (یعنی صحابہ کرام ) تو کہتے ہیں کیا ہم ایمان لائیں جس طرح بے وقوف ایمان لائے ہیں خبردار وہی بے وقوف ہیں لیکن نہیں جانتے -
    یَا أَیُّہَا الَّذِینَ آمَنُوا اتَّقُوا اللّہَ وَ کُونُوا مَعَ الصَّادِقِینَ سوره التوبه ١١٩
    اے اِیمان لانے والو اللہ (کے ذاب اور ناراضگی) سے بچو اور سچے (عقیدے اور عمل والے ) لوگوں (صحابہ کرام ) کے ساتھ رہو-
    وَالسَّابِقُونَ الأَوَّلُونَ مِنَ المُہَاجِرِینَ وَالأَنصَارِ وَالَّذِینَ اتَّبَعُوہُم بِإِحسَانٍ رَّضِیَ اللّہُ عَنہُم وَرَضُوا عَنہُ وَأَعَدَّ لَہُم جَنَّاتٍ تَجرِی تَحتَہَا الأَنہَارُ خَالِدِینَ فِیہَا أَبَداً ذَلِکَ الفَوزُالعَظِیم سوره التوبہ ١٠٠
    اور مہاجرین اور انصار میں سے سب سے پہلے ایمان قبول کرنے والوں اور احسان کے ساتھ اُن (صحابہ ) کے نقش قدم پر چلنے والوں پر اللہ راضی ہے اور اُن سب کے لیے اللہ نے ایسے باغات تیار کر رکھے ہیں جِن کے نیچے سے نہریں بہتی ہیں اور وہ سب اُن باغات میں ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے یہ عظیم کامیابی ہے-
    وَمَن یُشَاقِقِ الرَّسُولَ مِن بَعدِ مَا تَبَیَّنَ لَہُ الہُدَی وَیَتَّبِع غَیرَ سَبِیلِ المُؤمِنِینَ نُوَلِّہِ مَا تَوَلَّی وَنُصلِہِ جَہَنَّمَ وَسَاء ت مَصِیراً سوره النسا ء ١١٥
    اور جو کوئی ہدایت واضح ہو جانے کے بعد رسول (صلی اللہ علیہ و علی آلہ وسلم ) کو الگ کرے گا اور المومنین (صحابہ رضی اللہ عنہم اجمعین) کے راستے کے علاوہ کسی اور راہ پر چلے گا تو ہم یقینا اسے اُسی طرف چلائیں گے جس طرف وہ چلا ہے اور یقینا اُسے جہنم میں داخل کریں گے اور (ایسا کرنے والے کا یہ)راستہ بہت ہی بُرا ہے
    إِنَّمَا کَانَ قَولَ المُؤمِنِینَ إِذَا دُعُوا إِلَی اللَّہِ وَرَسُولِہِ لِیَحکُمَ بَینَہُم أَن یَقُولُواسَمِعنَا وَأَطَعنَا وَأُولَئِکَ ہُمُ المُفلِحُونَ
    اِیمان والوں کو جب اللہ اور اُس کے رسول (صلی اللہ علیہ وعلی آلہ وسلم)کی طرف بلایا جاتا ہے کہ وہ رسول (صلی اللہ علیہ وعلی آلہ وسلم) اُن لوگوں کے درمیان فیصلہ فرمائیں تو یہ اِیمان والے (صحابہ رضی اللہ عنہم اجمعین) کہتے ہیں ہم نے سُنا اور تابع فرمانی کی اور یہ (ہی) لوگ کامیابی پانے والے ہیںo
    مُحَمَّدٌ رَسُولُ اللَّهِ ۚ وَالَّذِينَ مَعَهُ أَشِدَّاءُ عَلَى الْكُفَّارِ رُحَمَاءُ بَيْنَهُمْ ۖ تَرَاهُمْ رُكَّعًا سُجَّدًا يَبْتَغُونَ فَضْلًا مِنَ اللَّهِ وَرِضْوَانًا ۖ سِيمَاهُمْ فِي وُجُوهِهِمْ مِنْ أَثَرِ السُّجُودِ ۚ ذَٰلِكَ مَثَلُهُمْ فِي التَّوْرَاةِ ۚ وَمَثَلُهُمْ فِي الْإِنْجِيلِ كَزَرْعٍ أَخْرَجَ شَطْأَهُ فَآزَرَهُ فَاسْتَغْلَظَ فَاسْتَوَىٰ عَلَىٰ سُوقِهِ يُعْجِبُ الزُّرَّاعَ لِيَغِيظَ بِهِمُ الْكُفَّارَ ۗ وَعَدَ اللَّهُ الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ مِنْهُمْ مَغْفِرَةً وَأَجْرًا عَظِيمًا سوره الفتح
    محمد الله کے رسول ہیں اور جو لوگ آپ کے ساتھ ہیں کفار پر سخت ہیں آپس میں رحم دل ہیں تو انہیں دیکھے گا کہ رکوع و سجود کر رہے ہیں الله کا فضل اوراس کی خوشنودی تلاش کرتے ہیں ان کی شناخت ان کے چہرو ں میں سجدہ کا نشان ہے یہی وصف ان کا تو رات میں ہے اور انجیل میں ان کا وصف ہے مثل اس کھیتی کے جس نے اپنی سوئی نکالی پھر اسے قوی کر دیا پھر موٹی ہوگئی پھر اپنے تنہ پر کھڑی ہوگئی کسانوں کو خوش کرنے لگی تاکہ الله ان کی وجہ سے کفار کو غصہ دلائے الله ان میں سے ایمان داروں اورنیک کام کرنے والوں کے لیے بخشش اور اجر عظیم کا وعدہ کیا ہے -



    اب آپ مجھے بتائیں کہ کیا صحابہ کرام رضوان الله اجمین کیا چند نفوس پر ہی مشتمل تھے -جنہیں آپ کے نزدیک شیعا ن علی کہا جاتا ہے ؟؟؟؟؟
    کیا صرف چند صحابہ ہی ایسے تھے جنھوں نے آپ صل الله علیہ وسلم کے ساتھ مل کر جہاد کیا ؟؟؟؟
    کیا یہ تمام آیات قرانی صرف حضرت علی رضی الله عنہ اور ان کے اہل بیت سے ہی متعلق ہیں ؟؟؟

    اگر ایسا ہی ہے تو پھر آپ نبی کریم صل الله علیہ وسلم پر بہت بڑا بہتان لگا نے کی جرّت کر رہے ہیں - یعنی آپ صل الله علیہ وسلم کی شب و روز محنت سے صرف چند لوگ ہی (یعنی شیعا ن علی) ہی اس قابل ہو سکے جو ایمان کے معیار پر پورے اترتے تھے باقی سب مرتد ہو گئے (نعوز باللہ میں ذالک ) اور نعوز باللہ نبی کریم صل الله علیہ وسلم اپنے اس مشن میں بری طرح ناکام ہو گئے -؟؟؟
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  10. ‏جون 22، 2013 #130
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    صحابہ کی تعریف آپ کے الفاظ میں
    کچھ اور بھی آیات قرآنی ہیں جو صحابہ کے بارے میں نازل ہوئیں

    اے ایمان والو اگر کوئی فاسق تمہارے پاس کوئی خبر لائے تو تحقیق کر لو کہ کہیں کسی قوم کو بے جانے ایذا نہ دے بیٹھو پھر اپنے کئے پر پچتاتے رہ جاؤ
    الحجرات : 6
    مفسیرین کرام فرماتے ہیں کہ یہ آیت صحابی رسول ولید بن عقبہ کے بارے میں نازل ہوئی یعنی اس آیت میں ایک صحابی رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو اللہ تعالٰی فاسق کہہ رہا ہے
    اعراب بولے ہم ایمان لائے تم فرماؤ تم ایمان تو نہ لائے ہاں یوں کہوں کہ ہم مطیع ہوئے اور ابھی ایمان تمہارے دلوں میں کہاں داخل ہوا اور اگر تم اللہ اور اس کے رسول کی فرمانبرداری کرو گے تو تمہارے کسی عمل کا تمہیں نقصان نہ دے گا بیشک اللہ بخشنے والا مہربان ہے
    الحجرات :14
    اے محبوب وہ تم پر احسان جَتاتے ہیں کہ مسلمان ہو گئے تم فرماؤ اپنے اسلام کا احسان مجھ پر نہ رکھو بلکہ اللہ تم پر احسان رکھتا ہے کہ اس نے تمہیں اسلام کی ہدایت کی اگر تم سچے ہو
    الحجرات :16

    یہ آیات بھی آپ کی تعریف کے مطابق صحابہ کے بارے میں ہی نازل ہوئی ہیں
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں