1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

قضاء نمازوں یا قضاء عمری کی کیا اصل ہے؟ اسلاف کی آراء چاہییں مجھے

'احکام ومسائل' میں موضوعات آغاز کردہ از zubairandnasir, ‏نومبر 29، 2016۔

  1. ‏نومبر 30، 2016 #11
    zubairandnasir

    zubairandnasir مبتدی
    شمولیت:
    ‏نومبر 29، 2016
    پیغامات:
    13
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    6

    جزاکم اللہ... عمر بھائی اس بارے اسلاف کی آراء بھی مل جائیں تو نوازش ہوگی

    Sent from my XT1058 using Tapatalk
     
  2. ‏دسمبر 01، 2016 #12
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,351
    موصول شکریہ جات:
    1,078
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    وایاکم
    اس لنک میں ایک کتاب ہے پڑھ لیں. بس دو تین صفحات
     
  3. ‏دسمبر 01، 2016 #13
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,357
    موصول شکریہ جات:
    714
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    جزاک اللہ خیرا عمر بهائی
     
  4. ‏دسمبر 03، 2016 #14
    ابن عثمان

    ابن عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 27، 2014
    پیغامات:
    221
    موصول شکریہ جات:
    59
    تمغے کے پوائنٹ:
    49

    محترم بھائی ۔ اگر کوئی کسی چیز میں اختلاف ہو تو اس میں یہ ضرور دیکھ لینا چاہیے کہ کسی قول کا قائل کون ہے ۔
    ۔یہ طریقہ نکالنے والے پوری عمر نماز جان بوجھ کر چھوڑنے کے لئے ترغیب نہیں دے رہے ۔۔۔
    بلکہ جس نے چھوڑ دی ہیں ۔اس کو پڑھنے کا کہتے ہیں۔
    اور آپ چاہے اس کے قائل نہ ہوں لیکن الفاظ سوچ سمجھ کر ہی استعمال کرنے چاہییں ۔۔کیونکہ یہ کوئی پاک و ہند میں ہی موجودمخصوص مسئلہ نہیں بلکہ اس بات کے قائلین جمہور علماء ہیں۔اس بات کا اعتراف اس بارے میں انفرادی رائے رکھنے والے حافظ ابن تیمیہؒ کو بھی ہے ۔
    ومن عليه فائتة فعليه أن يبادر إلى قضائها على الفور سواء فاتته عمدا أو سهوا عند جمهور العلماء كمالك وأحمد وأبي حنيفة وغيرهم وكذلك الراجح في مذهب الشافعي
    فتاوی ۲۳۔۲۵۹
     
  5. ‏دسمبر 03، 2016 #15
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,351
    موصول شکریہ جات:
    1,078
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    پیارے بھائی!
    آپ براہ کرم میرے مراسلے پر غور فرما لیں میں نے لکھا:
    یہاں میرا مخاطب ہر وہ شخص ہے جو ایسا رویہ اپناتا ہے. یعنی جان بوجھ کر نماز ترک کرتا ہے اور پھر قضاۓ عمری پڑھ کر اسکی بھر پائی کرتا ہے. اور ایسے شخص کے لۓ یہ الفاظ بالکل درست ہیں. کیا یہی بات بے نمازی کے لۓ قابل افسوس نہیں کہ لوگ اسکے سلسلے میں کافر کہنے نہ کہنے میں مختلف ہیں؟
    اس لۓ بات کو ذرا سمجھیں
     
  6. ‏دسمبر 03، 2016 #16
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,351
    موصول شکریہ جات:
    1,078
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    ایک بار درس میں اپنے ایک شیخ سے سوال کیا تھا کہ قضائے عمری کی حقیقت بتلائیں. انھوں نے کہا تھا کہ یہ کیا چیز ہوتی ہے؟؟؟
     
  7. ‏دسمبر 03، 2016 #17
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,351
    موصول شکریہ جات:
    1,078
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    رہی بات علامہ ابن تیمیہ رحمہ اللہ کی تو اس میں بھی قضاۓ عمری کا کوئی ثبوت نہیں ہے. باقی انکے قول کو مجموع فتاوی میں دیکھنا پڑے گا. لیکن جتنا یہاں لکھا ہے مجھے تو اس سے قضائے عمری کا کوئی ثبوت نہیں معلوم ہو رہا.
     
  8. ‏دسمبر 03، 2016 #18
    ابن عثمان

    ابن عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 27، 2014
    پیغامات:
    221
    موصول شکریہ جات:
    59
    تمغے کے پوائنٹ:
    49

    عمر بھائی ۔ اس سے بڑھ کر ہمارے معاشرے میں یہ رویہ موجود ہے کہ ۔اللہ رحیم و کریم ہے اور بوڑھے ہو کر سب کچھ معاف کر والیں گے۔
    لیکن یہاں پر تو مسئلہ پوچھا گیا ہے علمی ۔ اس کے ضمن میں رویہ کا ذکر عجیب محسوس ہوتا ہے ۔
    اور یہ جمہور کا قول ہے ۔کا ذکر تو آپ کے اپنے لنک میں بھی ہے ۔
    ہاں وہاں ساتھ یہ ضرور لکھا ہے کہ جمہور کے پاس دلیل نہیں ۔
    اور یہ بات میرے حساب سے قابل جواب ہی نہیں ۔
     
  9. ‏دسمبر 03، 2016 #19
    ابن عثمان

    ابن عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 27، 2014
    پیغامات:
    221
    موصول شکریہ جات:
    59
    تمغے کے پوائنٹ:
    49

    باقی قضائے عمری لفظ پاک و ہند میں ۔۔۔ایک نماز قضائے عمری ایک خاص جمعہ کو پڑھی جاتی ہے ۔ اس کے لئے زیادہ بولا جاتا ہے ۔
    جو ظاہر ہے بالکل ہی جاہلوں میں رواج پزیر ہے ۔
     
  10. ‏دسمبر 03، 2016 #20
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,351
    موصول شکریہ جات:
    1,078
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    پیارے بھائی!
    تو اسمیں غلط کیا ہے؟؟؟ اس پر تو دلیل موجود ہے.
    پیارے بھائی!
    لکھتے وقت میرا ذہن صرف ان لوگوں کی طرف تھا جو ایسا رویہ رکھتے ہیں.
    ایسا کیوں؟؟؟ کوئی وجہ؟؟؟

    آپ مجھے ایسی دلیل دیں کہ جان بوجھ کر نماز ترک کرنے پر کیا حکم ہے؟؟؟
    جبکہ صریح روایت موجود ہے:
    من ترك الصلاة متعمدا فقد كفر...... (او كما قال النبي صلى الله عليه)
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں