1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

قیاس حجت نہیں بلکہ گمراہی (یعنی بدعت ) ہے !

'معاصر بدعی اور شرکیہ عقائد' میں موضوعات آغاز کردہ از راشد محمود, ‏نومبر 05، 2016۔

  1. ‏جنوری 13، 2017 #11
    راشد محمود

    راشد محمود مبتدی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 24، 2016
    پیغامات:
    180
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    27

    بسم الله الرحمن الرحیم​
    اعتراض :

    ازالہ :

    جناب اگر آپ کو تقلید کی وجہ سے صرف قرآن اور حدیث نبوی سے جواب نظر نہیں آتا !؟ تو آپ پوچھ لیا کریں ، ان شاء الله آپ کو جواب دیا جائے گا !
    سیدھے ہاتھ میں ایک چْلّو پانی لے کر دونوں ہاتھوں کو تر کریں ، پھر دونوں ہاتھوں سے پورے سر کا مسح کریں ، دونوں ہاتھوں کو پیشانی پر رکھ کر گدی تک لے جائیں اور پھر اسی ہاتھوں کو واپس پیشانی تک لے آئیں ۔
    دلیل ملاحظہ کیجیے :

    حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَمْرِو بْنِ يَحْيَى الْمَازِنِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ رَجُلًا قَالَ لِعَبْدِ اللَّهِ بْنِ زَيْدٍ وَهُوَ جَدُّ عَمْرِو بْنِ يَحْيَى:‏‏‏‏ أَتَسْتَطِيعُ أَنْ تُرِيَنِي كَيْفَ كَانَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَتَوَضَّأُ؟ فَقَالَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ زَيْدٍ:‏‏‏‏ نَعَمْ، ‏‏‏‏‏‏"فَدَعَا بِمَاءٍ، ‏‏‏‏‏‏فَأَفْرَغَ عَلَى يَدَهُ فَغَسَلَ مَرَّتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ مَضْمَضَ وَاسْتَنْثَرَ ثَلَاثًا، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ غَسَلَ وَجْهَهُ ثَلَاثًا، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ غَسَلَ يَدَيْهِ مَرَّتَيْنِ مَرَّتَيْنِ إِلَى الْمِرْفَقَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ مَسَحَ رَأْسَهُ بِيَدَيْهِ فَأَقْبَلَ بِهِمَا وَأَدْبَرَ بَدَأَ بِمُقَدَّمِ رَأْسِهِ حَتَّى ذَهَبَ بِهِمَا إِلَى قَفَاهُ ثُمَّ رَدَّهُمَا إِلَى الْمَكَانِ الَّذِي بَدَأَ مِنْهُ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ غَسَلَ رِجْلَيْهِ".
    ہم سے عبداللہ بن یوسف نے بیان کیا، انہوں نے کہا ہم کو امام مالک نے عمرو بن یحییٰ المازنی سے خبر دی، وہ اپنے باپ سے نقل کرتے ہیں کہ ایک آدمی نے عبداللہ بن زید رضی اللہ عنہ جو عمرو بن یحییٰ کے دادا ہیں، سے پوچھا کہ کیا آپ مجھے دکھا سکتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کس طرح وضو کیا ہے؟ عبداللہ بن زید رضی اللہ عنہ نے کہا کہ ہاں! پھر انہوں نے پانی کا برتن منگوایا پہلے پانی اپنے ہاتھوں پر ڈالا اور دو مرتبہ ہاتھ دھوئے۔ پھر تین مرتبہ کلی کی، تین بار ناک صاف کی، پھر تین دفعہ اپنا چہرہ دھویا۔ پھر کہنیوں تک اپنے دونوں ہاتھ دو دو مرتبہ دھوئے۔ پھر اپنے دونوں ہاتھوں سے اپنے سر کا مسح کیا۔ اس طور پر اپنے ہاتھ (پہلے) آگے لائے پھر پیچھے لے گئے۔ (مسح) سر کے ابتدائی حصے سے شروع کیا۔ پھر دونوں ہاتھ گدی تک لے جا کر وہیں واپس لائے جہاں سے (مسح) شروع کیا تھا، پھر اپنے پیر دھوئے۔
    (
    صحیح بخاری كتاب الوضوء
    بَابُ مَسْحِ الرَّأْسِ كُلِّهِ: حدیث نمبر: 185)
    (نوٹ : اس مضمون کی ،اس کے علاوہ بھی کئی احادیث ہیں مثلا صحیح مسلم عن عبدا للہ بن زید ، صحیح بخاری عن ا بن عباس وغیرہ )
    لیجیے قیاس کے بغیر ہی آپ کو جواب مل گیا ۔
    والحمد للہ رب العالمین
     
  2. ‏جنوری 13، 2017 #12
    راشد محمود

    راشد محمود مبتدی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 24، 2016
    پیغامات:
    180
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    27

    غلط فہمی : ۔

    ازالہ : ۔

    جناب اجتہاد تو خلیفہ کرتا ہے اور اب تو کوئی خلیفہ ہے نہیں ۔۔
    اور دوسری بات ، اجتہاد میں قیاس کیا جاتا ہے ؟ یہ آپ سے کس نے کہا ؟ یا آپ نے قرآن اور احادیث نبوی میں کہاں پڑھا ؟
    پیش کیجیے وہ آیت یا حدیث ، جس میں یہ لکھا ہو کہ
    "اجتہاد قیاس کے بغیر ممکن نہیں" ؟
     
  3. ‏جنوری 13، 2017 #13
    ابن داود

    ابن داود سینئر رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    2,528
    موصول شکریہ جات:
    2,411
    تمغے کے پوائنٹ:
    489

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    یہ تھریڈ تو میں نے ابھی دیکھا ہے!
    @راشد محمود صاحب آپ اپنا کچھ تعارف کروانا پسند کریں گے! ذاتی نہیں، بلکہ علمی و مسلکی تعارف!
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏جنوری 13، 2017 #14
    اشماریہ

    اشماریہ سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 15، 2013
    پیغامات:
    2,350
    موصول شکریہ جات:
    679
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    ویسے اہل حدیث حضرات کا کون سا مسلک ہے دونوں میں سے؟ یعنی قیاس حجت ہے یا نہیں؟
     
  5. ‏جنوری 13، 2017 #15
    راشد محمود

    راشد محمود مبتدی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 24، 2016
    پیغامات:
    180
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    27

    بسم الله الرحمن الرحیم ​
    و علیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    اچھی بات ہے کہ آپ نے دیکھ لیا ہے ۔
    سوال : ۔


    جواب :۔

    آپ تعارف کو چھوڑیں ۔ آپ اصل مقصد کی بات کیجیے ۔ اگر آپ نے زیر مشاہدہ موضوع میں کچھ وضاحت کرنی ہے !؟ تو کیجیے ۔
    میرا مسلک نہیں ہے بلکہ دین ہے اور وہ دین اسلام ہے ۔اور دین اسلام صرف قرآن اور احادیث نبوی ہے ۔
    (نوٹ : ۔ ضعیف احادیث چونکہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم سے ثابت نہیں ہیں لہذا ان کا دین اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔)
     
  6. ‏جنوری 13، 2017 #16
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    4,450
    موصول شکریہ جات:
    1,953
    تمغے کے پوائنٹ:
    639

    آپ کی بات تب سمجھ آئے گی جب آپ قیاس کا تعارف کروائیں گے کہ قیاس کیا چیز ہے ، لہذا پہلے واضح کریں کہ قیاس کسے کہتے ہیں ؟
    اسی طرح بدعت کی تعریف بھی تمام فرقے مختلف کرتے ہیں آپ بدعت کے متعلق اپنا موقف بیان کردیں کہ بدعت سے آپکی مراد کیا ہے ؟
     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  7. ‏جنوری 14، 2017 #17
    ابن داود

    ابن داود سینئر رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    2,528
    موصول شکریہ جات:
    2,411
    تمغے کے پوائنٹ:
    489

    السلام علیکم ورحمۃاللہ وبرکاتہ!
    یعنی کہ آپ ''مجہول المسلك'' ہیں!
    اس نوٹ کو آپ نہیں بھولیئے گا!
     
  8. ‏جنوری 14، 2017 #18
    ابن داود

    ابن داود سینئر رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    2,528
    موصول شکریہ جات:
    2,411
    تمغے کے پوائنٹ:
    489

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    اہل الحدیث کا مسلک یہ ہے کہ قیاس شرعی قرآن و سنت کے تابع اور بوقت ضرورت حجت ہے، یعنی کہ جب تک کہ اس قیاس کا باطل ہونا یا اس کےعلاوہ کوئی حکم قرآن و حدیث سے استدلاً یا استنباطا ً ثابت نہ ہو!
    اس کے علاوہ کا اہل الحدیث علماء میں شذوذ کا ہونا بعید نہیں!
     
    • مفید مفید x 3
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  9. ‏جنوری 14، 2017 #19
    راشد محمود

    راشد محمود مبتدی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 24، 2016
    پیغامات:
    180
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    27

    غلط فہمی : ۔
    ازالہ : ۔ مسلک کی تعریف نقل کیجیے ۔
    غلط فہمی :۔
    ازالہ :۔ اگر بھولا ہوتا تو کیا یہاں لکھتا ؟
    کیا آپ کے لئے ضعیف حدیث حجت ہے ؟
     
  10. ‏جنوری 14، 2017 #20
    راشد محمود

    راشد محمود مبتدی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 24، 2016
    پیغامات:
    180
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    27

    اعتراف :۔
    تبصرہ :۔ قارئین کرام ! یہ بات اچھی طرح ذہن نشین کر لیجیے کہ اہل حدیث حضرات کے لئے صرف قرآن اور حدیث نبوی حجت نہیں ہے ، بلکہ قیاس بھی حجت ہے !
    ابن داود صاحب کی گواہی نوٹ کر لیجیے اس متعلق ۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں