1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

كفار سے دوستى لگانے كا معنى كيا ہے ؟ اور كفار سے ميل جول كا حكم

'الولا والبرا' میں موضوعات آغاز کردہ از محمدسمیرخان, ‏مارچ 31، 2013۔

  1. ‏مارچ 31، 2013 #1
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    كفار سے دوستى لگانے كا معنى كيا ہے ؟ اور كفار سے ميل جول كا حكم

    سوال:
    جواب:
     
    • شکریہ شکریہ x 5
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  2. ‏مارچ 31، 2013 #2
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,798
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

  3. ‏مارچ 31، 2013 #3
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    دوستی کسے کہتے ہیں اس پر بھی نوٹ لکھ دیں۔

    والسلام
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  4. ‏اپریل 01، 2013 #4
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    کافروں سے دوستی کرنے والے کا شرعی حکم

    کافروں سے دوستی کرنے والے کا شرعی حکم:

    سورۃ المائدۃ کی آیت51 کے ضمن میں جان لیتے ہیں کہ مسلمانوں کے خلاف جنگ میں یہود نصاریٰ کی مدد ونصرت کرنے والے ،ان کے لئے جاسوسی کرنے والے اور مسلمانوں کو پکڑ پکڑ کر یہود ونصاریٰ کے حوالے کرنے والے کو مفسرین نے اس آیت کی روشنی ایسے شخص کا کیاحکم بیان فرمایا ہے۔

    امام ابن جریر طبری رحمہ اللہ مذکورہ آیت کی تفسیر بیان کرتے ہوئے ارشاد فرماتے ہیں :
    مشہور مفسر قرآن امام قرطبی رحمہ اللہ سورۃ المائدۃ کی آیت :۵۱ کی تفسیر کرتے ہوئے فرماتے ہیں :
    علامہ قرطبی رحمہ اللہ سورۃ التوبۃ کی آ یت۲۳ کی تفسیر بیان کرتے ہوئے ارشاد فرماتے ہیں :
    "قرآن مجید کی مذکورہ آیت کے آخری حصہ{وَ مَنْ یَّتَوَلَّہُمْ مِّنْکُمْ فَاُولٰٓئِکَ ھُمُ الظّٰلِمُوْنَ}کے بارے میں مفسر قرآن سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہمافرماتے ہیں کہ :
    ِأَنَّ مَنْ رَضِیَ بِالشِّرْکِ فَھُوَ مُشْرِکٌ))
    "جوکسی کافر ومشرک سے دوستی کرے گا وہ ان کی طرح کا ہی مشرک ہوگا ،اس لیے کہ جو شرک کو پسند کرتا ہے وہ بھی مشرک ہوتا ہے۔"(تفسیر القرطبی:۸/۹۳-۹۴، تفسیر فتح القدیر للشوکانی:۱/۵۲۹ ، تفسیر أبی سعود:۲/۲۴۶)

    امام ابن حزم رحمہ اللہ فرماتے ہیں:
    "مَنْ لَحِقَ بَدَارِ الْکُفْرِ وَالْحَرْبِ مُخْتَارًا مُحَارِبًا لِّمَنْ یَّلَیْہِ مِنَ الْمُسْلِمِیْنَ فَھُوَ بِھَذَا الْفِعْلِ مُرْتَدٌّ۔ لَہُ أَحْکَامُ الْمُرْتَدِّیْنَ مِنْ وُجُوْبِ الْقتْلِ عَلَیْہِ مَتٰی قُدِرَ عَلَیْہِ وَّ مِنْ اِبَاحَةِ مَالِہٖ وَ انْفِسَاحِ نِکَاحِہِ" (المحلٰی لابن حزم:۱۱/۲۰)
    "جو شخص کسی ایسے علاقے میں چلاجائے جہاں کافروں کی حکومت اورکنٹرول ہے اور وہ لوگ مسلمانوں کے ساتھ حالتِ جنگ میں ہیں علاوہ ازیں وہ شخص وہاں جبر واکراہ سے نہیں بلکہ اپنے ارادہ واختیار کے ساتھ جاتا ہے اور وہاں جاکر قریب ترین مسلمانوں کے خلاف برسرپیکارہوجاتا ہے تو ایسا شخص ایسا کردار اپنانے کی بناپر مرتد ہوجاتا ہے۔اس پر وہ تمام احکام لاگو ہوں گے جو دین اسلام میں"مرتدین"کے بارے میں بیان فرمائے ہیں:مثلاً
    ۱……جب بھی بس چلے اورممکن ہو اس کو قتل کرنا واجب ہے۔
    ۲……اس کا مال اپنے قبضہ اور استعمال میں لانا جائز ہے۔
    ۳……مسلمان عورت سے اس کا نکاح کالعدم اورختم ہوجائے گا۔"

    کافروں سے دوستی کرنے والے اورمسلمانوں کے خلاف جنگ کرنے والوں کے بارے میں شیخ الاسلام امام ابن تیمیہ رحمہ اللہ رقمطراز ہیں :
    شیخ الاسلام امام ابن تیمیہ رحمہ اللہ"الاِخْتِیَارَاتُ الفِقھِیَّة " میں مزید فرماتے ہیں::
    شیخ سلیمان بن عبداللہ رحمہ اللہ فرماتے ہیں :
    یہ ہے رائے قدیم مفسرین اور فقہاء کی اس شخص کے بارے میں جو مسلمانوں کے خلاف جنگ میں یہود ونصاریٰ کا ہر ممکن طریقے سے ساتھ دیتے ہیں۔چناچہ کسی بھی مفسر نے یہودو نصاریٰ کے ساتھ دوستی کرنے والے کو "منافق"قرار نہیں دیابلکہ سب نے ایسے شخص کو بالاجماع "کافر و مرتد"قرار دیا ہے۔
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  5. ‏اپریل 01، 2013 #5
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    فضیلۃ الشیخ عبدالعزیز بن باز رحمہ اللہ فرماتے ہیں:
    شیخ جمال الدین قاسمی رحمہ اللہ اپنی تفسیر میں فرماتے ہیں :
    فضیلۃ الشیخ صالح الفوزان فرماتے ہیں :
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  6. ‏اپریل 01، 2013 #6
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    شیخ الاسلام امام محمد بن عبد الوہاب رحمہ اللہ کفار سے دوستی کرنے والوں کے کفر میں شک کرنے والو ں کو مخاطب کرکے فرماتے ہیں:
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  7. ‏اپریل 01، 2013 #7
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    محترم جب دوستی کا مطلب بیان نہیں کر سکتے تو پوری بخاری شریف یہاں پر پیسٹ کر دو وہ آپکو بھی فائدہ نہیں دے گی۔

    والسلام
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  8. ‏اپریل 01، 2013 #8
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    فضیلۃ الشیخ صالح الفوزان فرماتے ہیں :
    "مِنْ مَظَاھِرِ مُوَالَاة الْکُفَّارِ اِعَانَتُھُمْ وَ مَنَاصَرَتُھُمْ عَلَی الْمُسْلِمِیْنَ وَ مَدْحُھُمْ وَالذَّبُّ عَنْھُمْ وَ ھٰذا مِنْ نَوَاقِضِ الْاِسْلَامِ وَ اَسْبَابِ الرِّدَّة "(الولاء والبراء فی الاسلام لصالح الفوزان:۹)
    "کفار کی معاونت کرنا ،مسلمانوں کے خلاف کفار کو اپنی مکمل حمایت اور سپورٹ فراہم کرنا ،کفار کی مدح سرائی کرنا اور تعریفیں کرنا اور کافروں کی طرف سے مدافعت اوروکالت کرنا حقیقت میں کفار سے دوستی کے بڑے بڑے مظاہر اور علامتیں ہیں ۔دوستی کہ یہ مظاہر ایک بندۂ مسلم کے اسلام کو ختم کردینے والے اور ارتداد کے اسباب میں سے بہت بڑے اسباب ہیں "۔

    مسلمانوں سے دوستی کا معنی
    شیخ عبداللطیف بن شیخ حسن آل شیخ فرماتے ہیں!۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  9. ‏اپریل 04، 2013 #9
    ابو القاسم

    ابو القاسم رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 23، 2011
    پیغامات:
    79
    موصول شکریہ جات:
    324
    تمغے کے پوائنٹ:
    65

    سمیر خان صاحب اہل کتاب خواتین کو بیویاں بنانا کیسا ہے؟
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  10. ‏اپریل 04، 2013 #10
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    محترم محدث فتویٰ سے رجوع کریں ۔ جزاک اللہ
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں