1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مجلس کے ساتھ مالی تعاون

'اعلانات' میں موضوعات آغاز کردہ از رانا ابوبکر, ‏جنوری 21، 2018۔

موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
  1. ‏اگست 09، 2018 #11
    دعا سحر

    دعا سحر مبتدی
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2018
    پیغامات:
    1
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    2

    السلام علیکم
    محترم آپ کو کس طرح کی مدد کی ضرورت ہے بھی کچھ کام کر سکتی ہوں؟؟
     
  2. ‏فروری 17، 2019 #12
    MD Faiyaz Alam

    MD Faiyaz Alam مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 17، 2019
    پیغامات:
    2
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    2

    عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ ، قَالَ : قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ : كُلُّ سُلَامَى مِنَ النَّاسِ عَلَيْهِ صَدَقَةٌ ، كُلَّ يَوْمٍ تَطْلُعُ فِيهِ الشَّمْسُ يَعْدِلُ بَيْنَ الِاثْنَيْنِ صَدَقَةٌ ، وَيُعِينُ الرَّجُلَ عَلَى دَابَّتِهِ فَيَحْمِلُ عَلَيْهَا أَوْ يَرْفَعُ عَلَيْهَا مَتَاعَهُ صَدَقَةٌ ، وَالْكَلِمَةُ الطَّيِّبَةُ صَدَقَةٌ ، وَكُلُّ خُطْوَةٍ يَخْطُوهَا إِلَى الصَّلَاةِ صَدَقَةٌ ، وَيُمِيطُ الْأَذَى عَنِ الطَّرِيقِ صَدَقَةٌ .
    (Sahih Bukhari 2989)

    رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ”انسان کے ہر ایک جوڑ پر صدقہ لازم ہوتا ہے۔ ہر دن جس میں سورج طلوع ہوتا ہے۔ پھر اگر وہ انسانوں کے درمیان انصاف کرے تو یہ بھی ایک صدقہ ہے اور کسی کو سواری کے معاملے میں اگر مدد پہنچائے، اس طرح پر کہ اسے اس پر سوار کرائے یا اس کا سامان اٹھا کر رکھ دے تو یہ بھی ایک صدقہ ہے اور اچھی بات منہ سے نکالنا بھی ایک صدقہ ہے اور ہر قدم جو نماز کے لیے اٹھتا ہے وہ بھی صدقہ ہے اور اگر کوئی راستے سے کسی تکلیف دینے والی چیز کو ہٹا دے تو وہ بھی ایک صدقہ ہے۔“
    اس حدیث میں یہ بتائی گئی ہے کہ انسان کو چاہئے کہ لوگوں کے ساتھ انصاف کرے اگر کوئی بے انصافی کر رہا ہے تو اس کے درمیان آپ انصاف کروا دیجئے
    تو یہ آپ کے لئے صدقہ ہو جائے گا
    اور اس کے اندر دوسری بات یہ بتائی گئی ہے کہ اگر کوئی انسان کسی دوسرے انسان کو یا جان پہچان کو اپنی سواری میں یعنی گاڑی وغیرہ میں اسے بیٹھا لے اور اس کی جگہ پر چھوڑ دیں تو یہ بھی ان کے لئے صدقہ ہے

    اور تیسری بات یہ بتائی گئی ہے کہ اگر کسی شخص کے سامان بھاری ہے وہ تکلیف میں ہے اپنے سامان کو اٹھا نہیں پا رہا ہے تو ایسے انسان کی اگر آپ مدد کر رہے ہیں تو یہ آپ کے لیے صدقہ ہے

    اور چوتھی بات اس حدیث کے اندر یہ بتائی گئی ہے کہ انسان کوئی اچھی بات کہتا ہے یعنی قرآن اور احادیث کی بات کہتا ہے تو ان کیلئے بھی یہ صدقہ ہے

    ا سی طرح کوئی جب گھر سے نماز پڑھنے کے لئے نکلتا ہے اور اس کے قدم جو چلتے ہیں تو نماز کے لئے اپنے قدم کو چلانا بھی ایک صدقہ ہے


    اسی طریقے سے اس حدیث میں سب سے آخر میں یہ بتائی گئی ہے کہ انسان کے راستے سے تکلیف دہ چیزیں بھی اگر کوئی اٹھا کے پھینک دیتا ہے تکلیف دہ چیزوں کو ہٹا دیتا ہے تو یہ ان کے لئے صدقہ ہے

    طالب دعا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فیاض عالم
     
لوڈ کرتے ہوئے...
موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔

اس صفحے کو مشتہر کریں