1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

محدث لائبریری میں جماعت اسلامی، الاخوان المفلسون اور خوارج کا منہج رکھنے والوں کی کتب

'خوارج' میں موضوعات آغاز کردہ از عبدالمنان, ‏نومبر 28، 2017۔

  1. ‏نومبر 28، 2017 #1
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    604
    موصول شکریہ جات:
    125
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    السلام علیکم و رحمة الله و بركاته

    محدث لائبریری میں یوسف قرضاوی کی کتب بھی اپلوڈ کی جا رہی ہیں،،، برائے مہربانی ایسے لوگوں یا فرقوں کی کتب اپلوڈ نہ کریں جن سے سلفی علماء نے روکا اور آگاہ کیا ہے اور ان کا سخت رد کیا ہے.
     
  2. ‏نومبر 29، 2017 #2
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,220
    موصول شکریہ جات:
    8,204
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    و علیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    جن لوگوں ، علماء ، اسکالرز کے منہج سے ہمیں کلی اتفاق نہیں ، ان کی ایسی کتابیں ہی اپلوڈ کی جاتی ہیں ، جو ہمارے منہج کے مطابق ہیں ، یا بعض کتابوں میں اگر جزوی طور پر کچھ قابل اعتراض باتیں بھی ہوں ، تو ان کے مجموعی فائدے کو دیکھتے ہوئے اپلوڈ کیا جاتا ہے ۔
    اہل علم کا یہی منہج ہے ، کہ اختلاف کے باوجود ایک دوسرے سے فائدہ اٹھاتے ہیں ۔
    مثال کے طور پر یوسف قرضاوی صاحب کی حلال و حرام کے متعلق کتاب ہوگی ، یہ وہ کتاب ہے ، جس کی شیخ البانی رحمہ اللہ نے تخریج کی ہے ۔
    بہت سارے بنیادی مصادر و مراجع ہیں ، جن سے ہم سب بلا استثناء استفادہ کرتے ہیں ، حالانکہ ان کے مولفین کے منہج سے ہمیں کلی اتفاق نہیں ۔
     
    • مفید مفید x 3
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 2
    • لسٹ
  3. ‏نومبر 29، 2017 #3
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    604
    موصول شکریہ جات:
    125
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    http://kitabosunnat.com/kutub-library/maasir-islami-fikar-islam-aur-secularism

    شیخ محترم! آپ سے میرے چند سوالات ہیں ان کا جواب دے کر شکریہ کا موقع دیں ( یہ سوالات آپ کا موقف جاننے اور میرا موقف ثابت کرنے اور اگر میرے موقف میں کوئی غلطی ہو تو اسے درست کرنے کے لئے ہیں)

    1) اوپر کی لینک میں یوسف قرضاوی کی ان کتب کی فہرست ہے جو محدث لائبریری میں اب تک اپلوڈ کی گئی ہیں، شیخ ذرا دیکھ کر بتائیں کہ ان میں کون کونسی کتابیں آپ کے منہج کے مطابق ہیں اور کن کتابوں میں جزوی طور پر کچھ قابل اعتراض باتیں ہیں تاکہ مجھ جیسے کم علم لوگوں پر بات واضح ہو جائے،،،، کیونکہ جو لوگ محدث لائبریری سے کتابیں ڈاؤن لوڈ کرکے پڑھتے ہیں سب تو عالم نہیں ہوتے کہ انہیں یہ معلوم ہو جائے کہ فلاں بات منہج سلف اہل حدیث کے مطابق ہے اور فلاں بات ہمارے منہج کے خلاف ہے.

    2) سلف صالحین کا اہل بدعت کے ساتھ کیا موقف رہا ہے، کیا سلف صالحین عام لوگوں کو اہل بدعت کی کتابیں پڑھنے کو کہتے تھے، اگر ممکن ہو تو سلف کے اقوال بھی نقل کریں.

    3) کیا ناصر السنہ شیخ البانی رحمہ اللہ کا یوسف قرضاوی کی کتاب *الحلال و الحرام * کی "احادیث" کی کی تخریج کرنا قرضاوی کی توثیق ہے یا اس کی کتاب کی افادیت بتاتی ہے، شیخ البانی رحمہ اللہ اور دوسرے کبار علماء کے اقوال قرضاوی کے متعلق کیا ہیں؟

    4) کیا صحیح منہج کے تمام علماء ختم ہو گئے ہیں جو ہم عام لوگوں کو قرضاوی کی کتب سے فائدہ اٹھانا ہو گا،،، نبی کریم صلی اللہ علیہ و سلم کی وہ حدیث کن لوگوں کے متعلق ہے کہ علماء ختم ہو جائے گے تو لوگ جاہلوں سے سوال کریں گے وہ جاہل خود بھی گمراہ ہوں گے اور لوگوں کو بھی گمراہ کریں گے؟ قرضاوی کی کتب میں ایسی کونسی انوکھی اور فائدہ مند باتیں ہیں جو ہمیں کسی صحیح منہج والے سلفی عالم سے ہرگز نہیں مل سکتی؟

    5) اگر ممکن ہو تو سلف سے مثالیں دیں کہ کن علماء نے اختلاف کے باوجود منہجی غلطی کرنے والوں سے فائدہ اُٹھایا ہے؟ حال میں کبار علماء میں سے کس نے قرضاوی جیسے لوگوں سے فائدہ اٹھانے کی بات کی ہے؟

    6) اگر اختلاف کے باوجود فائدہ اُٹھایا جا سکتا ہے تو پھر دیوبندی،بریلوی، طاہر القادری وغیرہم کی کتابوں کو محدث لائبریری پر اپلوڈ کیوں نہیں کیا جاتا؟؟ یا اختلاف میں بھی قسمیں ہیں؟ بعض سے فائدہ اُٹھایا جاسکتا ہے اور بعض سے نہیں؟

    7) شیخ کیا آپ عام اہل حدیث نوجوان کو حنفیوں ( دیوبندی،بریلوی وغیرہ) کی عقیدے اور فقہ کی کتابوں کے مطالعہ کا مشورہ دیں گے؟

    8) کیا ماضی میں ایسی کوئی مثالیں ہیں جن سے معلوم ہوتا ہو کہ مسلمانوں میں بگاڑ پیدا ہونے کی وجوہات میں سے ایک وجہ "گمراہ لوگوں کی کتب کا مطالعہ بھی ہے" ؟

    9) کیا مسلمانوں کے عقیدے میں بگاڑ یونانی اور ہندی فلسفہ اور سائنس کی کتابوں کو پڑھنے سے داخل ہوا ہے؟ (جن کتابوں کو مسلمانوں نے صرف فائدہ اٹھانے کی غرض سے پڑھا تھا)

    اگر سوالات میں کچھ غلطیاں ہیں تو معاف کریں۔جزاک اللّٰہ خیرا
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏نومبر 30، 2017 #4
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,220
    موصول شکریہ جات:
    8,204
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    لائبریری میں اپلوڈ کی جانے والی کتابیں پہلے سے ہی علماء کی نظر سے گزر کر آتی ہیں ، لہذا مجھے مزید نظرثانی کی ضرورت نہیں ، ہاں البتہ یہ ضرور ہے ، اگر کسی کتاب کے متعلق ہمیں معتبر معلومات دے دی جائیں کہ اس میں واقعتا ایسی چیزیں کہ اس کا لائبریری میں ہونا نقصان دہ ہے ، تو ہم اسے ختم کردیتے ہیں ۔
    اتنی تفصیل میں جانے کا وقت نہیں ہے ، بس اتنا عرض کرتا ہوں ، ہمارے ایک سلفی استاد محترم نے ہمیں علامہ قرضاوی کی فقہ الزکاۃ پڑھنے کی نصیحت کی تھی ، اسی طرح اس موضوع پر لکھی جانے والی سلفی کتابوں یا فتاوی میں آپ کو حوالے بھی مل جائیں گے ۔
    قرضاوی صاحب کی ویب سائٹ پر موجود کوئی بھی کتاب بتائیں ، جس کے مقابلے میں کسی خالص سلفی عالم دین کی کتاب کفایت کرتی ہو ، تو میں آپ کی حمایت کروں گا کہ اس کتاب کو ختم کرکے ، دوسری کو لگایا جائے ۔
    صرف کتابوں پر اعتماد بذات خود گمراہی کا سبب بن سکتا ہے ، اس میں سلفی غیر سلفی کی تقسیم کا تکلف کرنے کی ضرورت نہیں ۔ کسی بھی کتاب میں قابل اعتراض بات ہو تو اہل علم سے رہنمائی لینی چاہیے ، بلکہ کتابوں کا انتخاب کرتے ہوئے بھی معتبر اہل علم سے مشورہ کرلینا چاہیے ، اس کے باوجود گمراہی آجاتی ہے ، تو لایکلف اللہ نفسا إلا وسعہا ۔
    معذرت کے ساتھ ، وقت کی قلت کے باعث آپ کی سب باتوں کا جواب نہیں دے پایا ۔
     
  5. ‏نومبر 30، 2017 #5
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    604
    موصول شکریہ جات:
    125
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    اللّٰہ تعالٰی آپ کے وقت میں برکت دے، کوئی جلدی نہیں ہے شیخ ، آپ کے پاس جب بھی خالی وقت ہو تفصیل سے جواب دیں۔ جزاک اللّٰہ خیرا
     
  6. ‏نومبر 30، 2017 #6
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    604
    موصول شکریہ جات:
    125
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
    شیخ ہو سکتا ہے کہ آپ نے قرضاوی کے متعلق سلفی علماء کے اقوال پڑھیں ہوں، اگر نہیں پڑھے ہیں تو آپ سے گزارش ہے کہ ایک مرتبہ درج ذیل سائیٹس پر علماء کے اقوال پڑھیں یا پھر اس کے رد میں علماء نے جو کتابیں لکھی ہیں انہیں پڑھیں۔
    آپ نے جو میرے سوالات کا جواب دیا ہے اس پر بھی میرے کچھ سوالات ہیں، ان شاء اللہ آپ کے تفصیلی جواب کے بعد اگر ضرورت محسوس ہوئی تو وہ بھی آپ کی خدمت میں پیش کروں گا۔
    آپ سے ایک گزارش ہے کہ مجہول بات نہ کریں کہ "ہمارے ایک سلفی استاد محترم نے ہمیں علامہ قرضاوی کی فقہ الزکاۃ پڑھنے کی نصیحت کی تھی" اپنے استادِ محترم کا نام بھی بتائیں تاکہ ہم بھی ان سے مستفید ہو سکیں۔
    (یہ بات صرف قرضاوی کی کتب تک ہی محدود نہیں ہے بلکہ ان تمام کی کتب کے متعلق ہے جن کی کتب سے،تقریروں وغیرہ سے سلفی اہل حدیث علماء نے روکا ہے چاہے وہ علماء دنیا کے کسی بھی حصے میں رہنے والے ہوں).


    الحاوي لأقوال علماء الأمّة في الإخواني يوسف القرضاوي - المنبر الإسلامي - شبكة سحاب السلفية
    https://www.sahab.net/forums/index.php?app=forums&module=forums&controller=topic&id=84734

    الإعلام بنقد كتاب الحلال والحرام للشيخ صالح بن فوزان الفوزان
    https://d1.islamhouse.com/data/ar/ih_books/single3/ar_e3lam_Fawzaan.pdf

    تحريم آلات الطرب للشيخ الألباني رحمه الله
    http://www.archive.org/download/waq44377/44377.pdf

    إسكات الكلب العاوي يوسف بن عبدالله القرضاوي للعلامة المحدث مقبل بن هادي الوادعي رحمه الله
    https://sites.google.com/site/busaed11/إسكات الكلب العاوي.pdf?attredirects=0&d=1
     
  7. ‏نومبر 30، 2017 #7
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    604
    موصول شکریہ جات:
    125
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    رفع اللثام عن مخالفة القرضاوي لشريعة الاسلام

    [https://sites.google.com/site/busaed11/رفع اللثام عن مخالفة القرضاوي لشريعة الاسلام.pdf?attredirects=0&d=1]

    ان میں سے کوئی بھی کتاب میں نے نہیں پڑھی ہے، البتہ اوپر کی سائٹ سے علماء کے اقوال پڑھیں ہیں۔ اگر آپ کو وقت میسر ہو تو ضرور پڑھیں،ان شاء اللہ میں بھی پڑھنے کی کوشش کروں گا۔
     
    Last edited: ‏نومبر 30، 2017
  8. ‏دسمبر 02، 2017 #8
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,269
    موصول شکریہ جات:
    1,067
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    رہا یہ خیال کہ ’’بدعتی مولویوں کے وعظ کے اندر جو باتیں خلاف قرآن و حدیث ہوں ان کو سامعین خیال میں نہ لاویں اور باقی باتوں کو لا میں لاویں، صحیح نہیں کیونکہ ہر شخص کو اس کی تمیز نہیں کہ کون سی بات قرآن و حدیث کے خلاف ہے اور کون موافق اور جس کو اس کی تمیز ہو اسے خلاف اور ناحق اور منکر باتوں کو سن کر انکار کرنا چاہیے ہاتھ سے یا زبان سے یا دل سے ہاتھ اور زبان سے انکار کی یہی صورت ہے کہ اس بدعتی واعظ کو بدعتی وعظ سے روکے اور دل سے انکار کی یہ صورت ہے کہ اس کی مجلس وعظ میں شریک نہ ہو الحاصل بدعتی مولویوں کا بدعی وعظ سننا نہیں چاہیے۔ واللہ اعلم بالصواب۔ (سید محمد نذیر حسین)
    حوالہ
     
  9. ‏دسمبر 03، 2017 #9
    عبدالمنان

    عبدالمنان مشہور رکن
    جگہ:
    گلبرگہ، ہندوستان
    شمولیت:
    ‏اپریل 04، 2015
    پیغامات:
    604
    موصول شکریہ جات:
    125
    تمغے کے پوائنٹ:
    109

    جزاک اللّٰہ خیرا
    نذیر حسین دہلوی رحمہ اللّٰہ کی یہ عمومی بات ہے کہ بدعتی مقررین کی تقریریں نہ سنیں اور نہ عوام کو سننے دیں، ظاہر ہے اس میں تقریر اور کتابیں دونوں شامل ہیں۔
    اب یہ بات بھی اہم ہے کہ بدعتی کون ہے اس بات کا تعین کون کرے گا ؟ کیا کوئی بھی شخص جس کو چاہے بدعتی یا مشرک و کافر کہتا پھرے یا یہ کسی خاص گروہ کا کام ہے؟ تو اس کا جواب یہ ہے کہ یہ صرف علماء کا کام ہے کہ وہ کسی کو بدعتی،مشرک یا کافر قرار دیں (جیسا کہ بہت سارے علماء کے اقوال سے یہ بات ثابت ہے)۔ تو ہمیں چاہیے کہ ہم اس معاملے میں بھی علماء سے رجوع کریں۔

    آج کل ہم بدعتی سے مراد صرف دیوبندی یا بریلوی مقررین لیتے ہیں یا ان کی کتابیں مراد لیتے ہیں، خوارج کی سونچ رکھنے والوں کے متعلق اکثر اہل حدیث محتاط نہیں ہیں، اور بہت سارے اہل حدیث لوگ جماعت اسلامی، اخوان المسلمین کے خوبصورت ناروں سے دھوکا کھا جاتے ہیں، ان کو بدعتی سمجھنا تو دور ان کے کاموں میں شریک ہوتے ہیں اور جماعت اسلامی کے ارکان وغیرہ بھی بن جاتے ہیں (میں ہندوستان کی بات کر رہا ہوں).

    اب اگر خاص قرضاوی کی بات کریں تو سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا کبار علماء نے قرضاوی کو بدعتی کہا ہے؟ یا اس کی کتابوں اور تقاریر سے ہمیں روکا ہے؟ اس کا جواب اثبات میں ہے کہ جی ہاں عرب، یمن، مصر وغیرہ کے کبار علماء نے قرضاوی سے سختی کے ساتھ روکا ہے اور اس کے خلاف بڑے سخت الفاظ استعمال کئے ہیں۔ اس کے رد میں کتابیں بھی لکھی ہیں۔

    اگر کوئی بھائی قرضاوی کے متعلق علماء کے اقوال مختصراً یہاں پیش کر دے تو ان شاءاللہ عام لوگوں کو بھی فائدہ ہوگا۔
    اللّٰہ ہمیں صحیح سمجھ دے۔آمین
     
  10. ‏دسمبر 04، 2017 #10
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,269
    موصول شکریہ جات:
    1,067
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    محترم بھائی!
    سید نذیر حسین محدث دہلوی رحمۃ اللہ علیہ کے قول کو پیش کرنے کا مقصود یہ تھا:
    یعنی اکثر لوگوں کا یہ کہنا کہ ”جو ثابت ہو اس کو لے لو اور جو ثابت نہ ہو اسکو چھوڑ دو“ غلط ہے. لہذا چاہے بدعتی ہو یا کسی غلط فکر کا حامل سب پر یہی قاعدہ لاگو ہوگا.
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں