1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مسجد میں وقت مقررہ پر جماعت ہو جائے تو بعد میں آنے والے جماعت ثانیہ کر سکتے ہیں یا نہیں

'محدث فتویٰ' میں موضوعات آغاز کردہ از رانا ابوبکر, ‏مئی 06، 2013۔

  1. ‏مئی 06، 2013 #1
    رانا ابوبکر

    رانا ابوبکر ناظم خاص رکن انتظامیہ
    جگہ:
    بورے والہ
    شمولیت:
    ‏مارچ 24، 2011
    پیغامات:
    2,055
    موصول شکریہ جات:
    3,033
    تمغے کے پوائنٹ:
    432

    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
     
  2. ‏مئی 06، 2013 #2
    رانا ابوبکر

    رانا ابوبکر ناظم خاص رکن انتظامیہ
    جگہ:
    بورے والہ
    شمولیت:
    ‏مارچ 24، 2011
    پیغامات:
    2,055
    موصول شکریہ جات:
    3,033
    تمغے کے پوائنٹ:
    432

  3. ‏مئی 06، 2013 #3
    ideal_man

    ideal_man رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 29، 2013
    پیغامات:
    258
    موصول شکریہ جات:
    482
    تمغے کے پوائنٹ:
    79

    قطعی نظر اس مسئلہ میں علماء حضرات کے درمیان اخلاف ہے کہ نہیں لیکن چند وجوہ سے دوسری جماعت مناسب نہیں۔
    مسافروں کے لئے جائز ہے اگر وہ جماعت کے بعد مسجد میں پہنچتے ہیں لیکن مقامی لوگوں کے لئے مناسب نہیں۔
    ہمارے ہاں بہت زیادہ تفرقہ بازی ہے مسلک کے نام پر مساجد ہیں ایسے میں ایک مسلک کی اقتداء میں نماز پرھنے کے بجائے دوسری جماعت کرلی جائے، جیسا کہ بعض جگہوں پر ایسے معاملات ماضی میں ہوئے ہیں اور انتشار و افتراق پھیلا، سینے میں تعصب کو مزید بھڑکایا، مساجد جو خالص اللہ کے ذکر و عبادت کے لئے ہیں وہاں ایسی صورت یقینا مسلمانوں میں تفریق کا باعث بنتی ہیں اور مساجد کا احترام ختم ہو جاتا ہے۔
    دوسرا سبب مقامی لوگوں میں جماعت کے ساتھ نماز پڑھنے کا اہتمام ختم ہوجاتا ہے ، جب چاہا اپنی مرضی سے آئے اور چند لوگوں کو جمع کیا اور اپنی جماعت کرالی، اس طرح لوگوں میں کاہلی سستی کا آجانا یقینی ہے وہاں جماعت کی اہمیت اور اس کا ڈسپلن ختم ہوجاتا ہے ،
    ایسی بہت سے وجوہ ہوسکتی ہیں دوسری جماعت کرانا مناسب نہیں ہے۔واللہ اعلم
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں