1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مسلمانوں سے وصول کئے جانے والے ٹیکس کی شرعی حیثیت

'ٹیکس' میں موضوعات آغاز کردہ از محمدسمیرخان, ‏مارچ 25، 2013۔

  1. ‏مارچ 26، 2013 #21
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,377
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    ٹیکس پر پاکستان میں جو طریقہ کار ھے وہ کسی بھی طرح درست نہیں۔ برطانیہ میں ٹیکس پر جو طریقہ کار ھے وہ سب سے بہتر ھے۔

    پاکستان میں جو ٹیکس دیتا ھے اس کی اگر جاب چلی جائے یا کاروبار تباہ ہو جائے اس کے بعد وہ بے کار ھے۔
    برطانیہ میں جو ٹیکس دیتا ھے اس پر اس کی تنخواہ یا آمدنی پر ایک لمٹ مقرر ھے کہ یہاں سے نیچے اگر ارننگ ھے تو پھر اس سے ٹیکس نہیں لیا جاتا، اس کے بعد ایک اور لمٹ ھے اس لمٹ میں وہ حکومت کو ٹیکس دے گا مگر حکومت اسے اس کے بدلے اسے دوسرے نام سے مدد کے طور پر اسے فنڈز دے گی جس سے وہ اپنی فیملی کی بہتر طریقہ سے کفالت کر سکے، مگر ٹیکس اس سے وصول ہو گا۔ اس کے اوپر ایک رینج ھے اس پر بات نہیں کرتے ابھی۔ ان تینوں صورتوں میں اگر کسی کی جاب چلی جاتی ھے یا کاروبار ختم ہو جاتا ھے تو اگلی جاب ملنے تک یا کاروبار شروع کرنے تک کسی جگہ نہیں جانا صرف ایک فون کال کر کے حکومت کے اس ادارہ کو اطلاع کرنی ھے اس کے بعد کچھ کاغذی کاروائی کے تنخواہ سے زیادہ اخراجات ملنے شروع ہو جاتے ہیں۔ گھر اگر کرایہ پر ھے تو اس کا کرایہ بھی حکومت دے گی، اگر قرض لیا ہوا ھے یا قسطوں پر کچھ لیا ہوا ھے تو اس کی ادائیگی بھی حکومت کرے گی۔ ٹیکس کا فائدہ یہ ھے یہاں، کل کی فکر نہیں کسی کو۔ اگر حکومت ٹیکس لیتی ھے تو پھر اس کا فائدہ بھی عوام کو پہنچاتی ھے۔

    والسلام
     
  2. ‏مارچ 26، 2013 #22
    محمدسمیرخان

    محمدسمیرخان مبتدی
    شمولیت:
    ‏فروری 07، 2013
    پیغامات:
    453
    موصول شکریہ جات:
    915
    تمغے کے پوائنٹ:
    26

    جب اسلامی حکومت ہوگی اور وہ مسلمانوں پر ٹیکس لگائے گی تو اللہ اس سے یقینا سوال کرے گا۔آپ تو فی الحال اس فتوے کے بوجھ کے نیچے نہ آئیں ۔
     
  3. ‏جولائی 30، 2013 #23
    عبدالرحمن لاہوری

    عبدالرحمن لاہوری رکن
    جگہ:
    لاهور
    شمولیت:
    ‏جولائی 06، 2011
    پیغامات:
    126
    موصول شکریہ جات:
    456
    تمغے کے پوائنٹ:
    81

    حضرت آپ ٹیکس کی حرمت کے قائل نہیں؟ اگر ہیں تو پھر حرام چیزوں میں سے کسی ایک کا دوسرے سے بہتر ہونا کیا معنی رکھتا ہے؟ حرام تو حرام ہے!!!
     
  4. ‏اکتوبر 24، 2013 #24
    شادان

    شادان رکن
    شمولیت:
    ‏دسمبر 01، 2012
    پیغامات:
    119
    موصول شکریہ جات:
    132
    تمغے کے پوائنٹ:
    56

    bhai ye book pdf me download krna hai link share kijye
     
  5. ‏اکتوبر 25، 2013 #25
    ابوزینب

    ابوزینب رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 25، 2013
    پیغامات:
    445
    موصول شکریہ جات:
    282
    تمغے کے پوائنٹ:
    65

    ''حضرت عقبہ بن عامررضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ وہ فرماتے ہیں کہ میں نے رسول اللہﷺکو فرماتے ہوئے سنا کہ صاحب مکس (یعنی ٹیکس وصول کرنے والا)جنت میں داخل نہیں ہوگا یعنی دسواں حصہ لینے والا''۔
    (سنن الترمذی، ج 3،ص:30,رقم:574۔مسنداحمد،ج:35،ص:166،رقم:16656)
    مسلمانوں سے وصول کئے جانے والےٹیکس کی شرعی حیثیت
    جمع وترتیب :شیخ ابویاسر السندی حفظہ اللہ
    پی ڈی ایف فارمیٹ میں:
    http://www.box.com/s/3ift6qvfzy2wcdcetdnq

    آن لائن ریڈنگ
    http://www.scribd.com/doc/131962100/Musalmano-Say-Liyai-Janay-Walay-Tex-Ki-Sharai-Haisiyat
     
  6. ‏اگست 31، 2016 #26
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    17,032
    موصول شکریہ جات:
    6,520
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    ظالمانہ ٹیکس وصول کرنے والے :



    14183896_733048720166725_1800354621818179657_n.jpg
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں