1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مصری ایئرلائن کا مسافر طیارہ ہائی جیک، اغوا کار نے سیاسی پناہ کا مطالبہ کردیا

'تازہ مضامین' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏مارچ 29، 2016۔

  1. ‏مارچ 29، 2016 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,960
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    مصری ایئرلائن کا مسافر طیارہ ہائی جیک، اغوا کار نے سیاسی پناہ کا مطالبہ کردیا

    ویب ڈیسک 3 گھنٹے پہلے
    [​IMG]



    مسافروں میں 10 امریکی اور 8 برطانوی شہری بھی شامل ہیں ۔ فوٹو: فائل

    قاہرہ: مصری ایئرلائن کا مسافر طیارہ اغوا کرنے والے ہائی جیکر نے قبرص کی حکومت سے سیاسی پناہ کا مطالبہ کردیا ہے.
    مصری سول ایوی ایشن کا کہنا ہے کہ سرکاری ہوائی کمپنی کا طیارہ عملے سمیت 81 مسافروں کو لے کر اسکنریہ سے دارالحکومت قاہرہ آرہا تھا کہ اس میں موجود ابراہیم سماہا نامی ایک شخص نے کپتان کو دھماکا خیز مواد سے بھری بیلٹ کو اڑانے کی دھمکی دے کر اس کا رخ موڑنے کا حکم دیا۔ جس کے بعد ہائی جیکر نے طیارہ قبرص کے شہر لارناکا کے ہوائی اڈے پر اتروادیا۔
    قبرص کےسرکاری ٹی وی کا کہنا ہے کہ ایئر پورٹ پر لینڈ کرنے کے بعد ہائی جیکر نے عملے اور 4 غیر ملکیوں کے علاوہ تمام مسافروں کو چھوڑ دیا ۔ لارناکا ایئرپورٹ پر تعینات عملے نے فضائی آمدورفت معطل کردی ہے جب کہ طیارے کے ارد گرد بڑی تعداد میں ایمبولینسوں اور آگ بجھانے کی گاڑیاں موجود ہیں، مصری حکام کے ہائی جیکر کے ساتھ مذاکرات جاری ہیں ، جس میں اس نے قبرص میں سیاسی پناہ اور وہاں اپنی سابق اہلیہ کو خط پہنچانے کا مطالبہ کیا ہے۔
     
  2. ‏مارچ 29، 2016 #2
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,754
    موصول شکریہ جات:
    8,330
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    کمال ہے !! خط تو ڈاک کے ذریعے بھی جاسکتا تھا ۔ ابتسامہ
     
  3. ‏مارچ 30، 2016 #3
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,960
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    مصری ایئرلائن کے مسافر طیارے کی ہائی جیکنگ کا ڈراپ سین، اغوا کار نے گرفتاری دے دی

    ویب ڈیسک منگل 29 مارچ 2016
    [​IMG]
    مسافروں میں 10 امریکی اور 8 برطانوی شہری بھی شامل ہیں ۔ فوٹو: فائل

    قاہرہ: مصری ایئرلائن کا مسافر طیارہ اغوا کرکے قبرص لانے والے ہائی جیکر نے گرفتاری دے دی.
    مصر کے ہوا بازی کے محکمے کی جانب سے جاری بیان کے مطابق مصری ایئرلائن کا طیارہ اسکندریہ سے دارالحکومت قاہرہ جاتے ہوئے اس وقت اغوا ہوا جب اس میں سوار ایک شخص نے دعویٰ کیا کہ اس نے اپنے جسم سے دھماکا خیز مواد باندھ رکھا ہے۔ ہائی جیکر طیارے کو استنبول لے جانا چاہتا تھا مگر طیارے کے کیپٹن نے اسے بتایا کہ اس کے پاس اتنے طویل سفر کے لیے ایندھن موجود نہیں جس کے بعد اسے قبرص کے شہر لارناکا کے ایئرپورٹ پر اتار لیا گیا۔ پرواز سے قبل طیارے میں عملے کے 7 ارکان سمیت 30 مصری، 8 امریکی، 4 برطانوی، 2 بیلجیئن، ایک اطالوی اور ہالینڈ کے 4 شہری موجود تھے۔
    قبرص کےسرکاری ٹی وی کا کہنا ہے کہ ایئر پورٹ پر لینڈ کرنے کے بعد ہائی جیکر نے عملے کے 3 ارکان اور 4 غیر ملکیوں کے علاوہ تمام مسافروں کو چھوڑ دیا ۔ مصری حکام کے ہائی جیکر کے ساتھ مذاکرات اب بھی جاری ہیں، جس میں اس نے قبرص میں سیاسی پناہ اور وہاں اپنی سابق اہلیہ سے ملاقات کا مطالبہ کیا ہے۔ جس کے تحت اس کی سابق بیوی کو ایئر پورٹ بلا لیا گیا.
    مصری حکام کا کہنا ہے کہ ہائی جینگ کے 6 گھنٹے سے زائد دورانیے کے بعد ہائی جیکر نے خود ہی اپنے آپ کو ہوائی اڈے میں موجود سیکیورٹی حکام کے حوالے کردیا۔
    لارناکا ایئرپورٹ پر تعینات عملے نے فضائی آمدورفت معطل کردی تھی جب کہ طیارے کے ارد گرد بڑی تعداد میں ایمبولینسوں اور آگ بجھانے کی گاڑیاں موجود تھی، اس سلسلے میں قبرص کے صدر نے کہا کہ مصری طیارے کی ہائی جیکنگ کا واقعہ دہشت گردی نہیں، قبرص کی حکومت نے وہ تمام اقدامات اٹھائے جس سے بے گناہ مسافروں کی زندگیوں کا تحفظ یقینی بنایا جاسکے۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں