1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

معرفة الثقات للعِجْلي کا مختصر تعارف

'ثقہ رواۃ' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عبد الرحمن الكاشفي, ‏جون 24، 2019۔

  1. ‏جون 24، 2019 #1
    محمد عبد الرحمن الكاشفي

    محمد عبد الرحمن الكاشفي مبتدی
    شمولیت:
    ‏جون 21، 2019
    پیغامات:
    32
    موصول شکریہ جات:
    2
    تمغے کے پوائنٹ:
    10

    محمد عبد الرحمن کاشفی اڑیشوی

    ⬅كتاب کا عنوان-معرفة الثفات من رجال أهل العلم و الحديث و من الضعفاء وذكر مذاهبهم وأخبارهم

    ⬅اسم المصنف-ابو الحسن أحمد بن عبد الله بن صالح العِجلي الكوفي(۱۸۲-۲۶۱ھ)

    ⬅مرتب-الإمام الهيثمي و الإمام السبكي

    مصنف علیہ الرحمہ نے حروف ہجاء کے اعتبار سے ترتیب نہیں دیا تھا پس یہ دو اماموں نے کتاب کو عمدہ ترتیب دے کر کتاب کی خدمت کی.

    لیکن موجودہ تحقیق جو شیخ عبد العلیم عبد العظیم بستوی رحمہ اللہ کی مقبول ترین تحقیق ہے اس میں شیخ نے اصل کتاب میں ہیثمی رحمہ اللہ کی ترتیب پر اعتماد کیا ہے وجہ یہ ہے کہ علامہ هیثمی رحمہ اللہ نے معرفة الثقات کی ترتیب دینے میں بڑی دقت نظری،رعایت صحت اور تراجم رؤات کا استعاب کرنے میں بڑی محنت کی ہے. اس کے بعد شیخ بستوی نے ہیثمی رحمہ اللہ کی ترتیب کا مقارنہ علامہ سبکی رحمہ اللہ کی ترتیب سے کرتے ہوئے مزید فوائد بھی قلم بند کیا ہے.

    زیادات از تہذیب التہذیب- کئی ایسی معلومات اور فوائد جو سابق الذکر امامون کی اپنی ترتیبوں میں شامل نہیں تھیں اور حافظ ابن حجر رحمہ اللہ نے انہیں اپنی کتاب تہذیب التہذیب میں عجلی رحمہ اللہ کے حوالے سے نقل کیا تھا، اسے بھی مکوففتین【】 میں محقق نے اشارہ کر دیا ہے.

    ✳ملاحظہ
    ـــــــ ــــــ ــــــ
    علامہ عجلی ابن حبان رحمہما اللہ کی طرح متساہل ہیں
    ۱- مجاہیل کی توثیق کرتے ہیں.
    ۲- توثیق میں ابن حبان رحمہ اللہ کے برابر یا ان سے کچھ زیادہ
    وسعت رکھتے ہیں
    ۳- بر خلاف بن حبان رحمہ اللہ علامہ عجلی رحمہ اللہ ضعفاء کے ساتھ بھی تسامح کا معاملہ برتتے ہیں .
    ۴-راویوں کو انکے استحقاق سے اعلی مرتبہ دے دیتے ہیں .


    لیکن اکثر و بیشتر وہ دیگر ائمہ نقاد سے اتفاق بھی رکھتے ہیں.
    رؤات پر بصیرت،تجربہ اور اطلاعات کی بنیاد پر حکم لگاتے ہیں.
    کتاب (معرفة الثقات) کا اصل فائدہ تبھی محسوس ہوتا ہے جب علامہ عجلی رحمہ اللہ اپنی توثیق یا کسی اور حکم میں منفرد ہوں اور باقی ائمۂ جرح و تعدیل کی آراء ان سے مختلف ہوں.اور یہ بات علم حدیث سے شغف رکھنے والوں پر مخفی نہیں ہے.
     
    • پسند پسند x 2
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں