1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

معیار

'نکاح' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد اجمل خان, ‏اپریل 20، 2017۔

  1. ‏اپریل 20، 2017 #1
    محمد اجمل خان

    محمد اجمل خان رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 25، 2014
    پیغامات:
    129
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    56

    .
    معیار

    بڑے بڑوں کو دیکھا ہے۔

    سارے اسلام ایک طرف رکھ دیئے جاتے ہیں۔

    جب بات آتی ہے اپنے بچوں پراور خاص کر شادی بیاہ کے موقعوں پر ...

    وہاں اسلام نہیں رہتا۔۔۔۔

    ہر وقت سنت و بدعت کی باتیں کرنے والے بھی ...

    وہاں نہ سنت کو دیکھتے ہیں اور نہ ہی بدعت کو ...

    وہاں فرمانِ نبی ﷺ یاد نہیں آتا ...

    اور خاص کر بیٹے کی شادی کرتے وقت ...

    آج جبکہ میڈیا نے ہر بے غیرت کو مس ورلڈ بنا کر پیش کیا ہے۔

    لوگوں کو اپنی بیٹے کیلئے بس مس ورلڈ ہی چاہئے ...

    چاہے شرافت کا جنازہ ہی کیوں نہ نکلے ...

    وہاں رسول اللہ ﷺ کی یہ حدیث یاد نہیں آتی ...

    " عورت سے نکاح چار چیزوں کی بنیاد پر کیا جاتا ہے اس کے مال کی وجہ سے اور اس کے خاندانی شرف کی وجہ سے اور اس کی خوبصورتی کی وجہ سے اور اس کے دین کی وجہ سے اور تو دیندار عورت سے نکاح کر کے کامیابی حاصل کر، اگر ایسا نہ کرے تو تیرے ہاتھوں کومٹی لگے گی ( یعنی اخیر میں تجھ کو ندامت ہو گی ) ۔ "

    اور اس سنت پر عمل نہیں کرنے کی وجہ کر لوگوں کے ہاتھوں کومٹی لگ رہی ہے لیکن انہیں اس کا شعور بھی نہیں۔

    ۔۔۔ نوجوان جوڑوں میں برداشت نہیں رہا۔

    ۔۔۔ گھر گھر میں نفرت کی آگ لگی ہوئی ہے۔

    ۔۔۔ گھر جہنم بنتا جا رہا ہے۔

    ۔۔۔ طلاقوں کی شرح بھیانک طور پر بڑھ رہی ہے۔

    ۔۔۔ خاندان ٹوٹ رہے ہیں۔

    لیکن پھر بھی لوگ اپنے بیٹوں کیلئے دلہن تلاش کرتے ہیں تو صرف خوبصورتی کو ہی معیار بناتے ہیں چاہے وہ بازاروں میں بے حیائی کا نمونہ بنی پھرتی ہو مگر خوبصورت ہو‘ ڈراموں اور فلموں کی ماڈل کی طرح ....

    تحریر : محمد اجمل خان​
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں