1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

موجودہ حکام اور انکے باطل نظام ایک خارجی کی عجیب وغریب بوکھلاہٹ

'خوارج' میں موضوعات آغاز کردہ از عمر سعد, ‏جنوری 28، 2017۔

  1. ‏جولائی 20، 2017 #11
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    برادر عزیز؛ کچھ تحریر پڑھنے کا شکریہ اور مزید آپ کی مہربانی ہو گی کہ آپ اس مختصر مطالعہ میں کے نتیجہ میں نظر آنی والی گمراہی کو بھی واضح فرما دیں۔

    دوسری بات میں نے تو حدیث "لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کرے" مراد کیا تھا مگر آپ نے میرے بارے میں قطعی طور پر صحیح اندازہ لگایا کیونکہ اس پوسٹ کو زندہ رکھنا کم از کم مجھے اسی بات کا حقدار بناتا ہے؛

    تیسری بات کہ کیا آپ کو صرف ایک ہی سوال کا اور اس کا ایک طرز کا جواب آتا ہے جس کی وجہ سے بار بار صرف اسی سوال کے جواب پر ہی اصرار فرما رہے ہیں؛ ورنہ اس سوال کا جواب تو میری تحریر میں پہلے سے ہی موجود ہے صرف دیکھنے اور سمجھنے والی نظر چاہیے۔
     
  2. ‏جولائی 20، 2017 #12
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

     
  3. ‏جولائی 20، 2017 #13
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    برادر عزیز میں نے بھی ایک آسان سوال کیا تھا کہ میری تحریروں میں موجود گمراہی مجھ پر واضح فرما دیں یا فرما دیں کہ آپ اس میں دلچسپی نہیں رکھتے۔
     
  4. ‏جولائی 20، 2017 #14
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,289
    موصول شکریہ جات:
    2,644
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    آپ یہاں یونیکوڈ میں تحریر فرمائیں، آپ کو ملون کر کے واضح کیا جائے گا! ان شاء اللہ!
    اور مجھے کیا آتا اور کیا نہیں آتا، اس پر میرے مراسلے شاہد ہیں!
    آپ اس جواب کو یہاں نقل کردیں!
    آپ کو کہا تو ہے، تحریر یہاں یونیکوڈ میں پیش کیجئے!
    ہم وہ گمراہی دلیل کے ساتھ بتلائیں گے، ان شاء اللہ!

    اب آپ ادھر ادھر کی مزید بات نہ کریں سوال کا جواب تحریر فرما دیں!
     
  5. ‏جولائی 21، 2017 #15
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    برادر عزیز میں نے فقط اپنا مشاہدہ سوئے ظن کے طور پر مع جوازاتِ مشاہدہ پیش کیا تھا ۔ مگر آپ نے تو دو قدم آگے بڑھتے ہوئے اس مشاہدہ کو فقط الزام نہیں بلکہ تہمت قرار دے دیا؛ جبکہ تہمت اور الزام میں وہی فرق ہے جو غیبت اور بہتان میں ہے۔ الفاظ کے درست استعمال کا احساس آپ کو تو خاص طور پر ہونا چاہیے کیونکہ اس فورم میں آپ کی تحریر ہی آپ کے کردار کی تر جمانی کرتی ہے جو کہ ابھی تک میرے مشاہدہ کے حساب سے خاصی سطحی ، کسی استاد اور وسیع مطالعہ کی متقاضی ہے۔
     
  6. ‏جولائی 21، 2017 #16
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    دلائل کی دو قسمیں ہوتی ہیں ایک نقلی اور ایک عقلی۔ عقلی دلیل جس کو رائے بھی کہا جاتا ہے اس کی دو مثالیں اسی پوسٹ میں سے پیش خدمت ہیں؛
    اور یہ خلافت و اقامت دین کا نعرہ لگانے والے اکثر شریعت کے قواعد و ضوابط سے اس قدر لا علم ہوتے ہیں کہ معلوم ہوتا ہے کہ وہ کوئی خانہ ساز شریعت کے لئے متحرک ہیں!

    اب آپ دیکھیں! ہمارے نبیﷺ کی شان میں غلو کرنے والے بھی اسی ''غیرت'' کے تحت ہی دوسرے مسلمانوں پر گستاخی کا فتویٰ صادر کرتے ہیں! اور درحقیقت انہیں خود اسلامی عقائد کا درست علم نہیں ہوتا!
     
  7. ‏جولائی 21، 2017 #17
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    کیونکہ آپ اپنےنا مناسب الفاظ کے استعمال اور نا زیبا موقف پر سختی سے قائم ہیں کہ امام أبو حنیفہ﷬ کا موقف کمزور یا شاذ دلائل یا مفاسد و مصالح کی صحیح ترجیح پر مبنی نہیں بلکہ فقط "باطل" اور "مردود" تھا؛ تو اب آپ پر اپنے قارئین کی تسلی اور اپنے غیر مقلد ہونے اور علما٫ کے دلائل کے تقابلی جائزہ میں مہارت کے دعوی کو برقرار رکھنے کے لیے لازم ہے کہ آپ حضرت حسین﷜ ؛ امام ابو حنیفہ﷬ اور زید بن علی﷮ کے موقف کے نقلی یا عقلی دلائل بیان کرنے کے بعدان نقلی یاعقلی دلائل کو بیان فرمائیں جن کی بنا پر ان تینوں کا موقف "باطل" اور "مردود" قرار پاتا ہے۔

    اور اگر اوپر والی درخواست پوری کرنے کی ہمت نہ ہو تو کم از کم مہربانی فرما کہ وہ حوالہ جات عنایت فرما دیں کہ کس سلف کے عالم نے کس کتاب میں حضرت حسین﷜ ؛ امام ابو حنیفہ﷬ اور زید بن علی﷮ کے موقف کو اصطلاحاً یا لفظاً "باطل" یا "مردود" قرار دیا ہے۔

    یا مزید آسانی کے لیے چونکہ امام ابو حنیفہ﷬ عملی خروج کے مرتکب نہیں ہوئے ان کو اس فہرست سے نکالتے ہوئے باقی دونوں آئمہ کے عملی خروج کو کس سلف کے عالم نے کس کتاب میں اصطلاحاً یا لفظاً "باطل" یا "مردود" قرار دیا ہے۔
     
  8. ‏جولائی 21، 2017 #18
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    حضرت حسین﷜ ؛ امام ابو حنیفہ﷬ اور زید بن علی﷮ کا باہم ربط تو اس موضوع کے حوالے سے یقیناً آپ پر بھی واضح ہو گا مگر جہم بن صفوان اور واصل بن عطاء کا ربط ان تینوں کے ساتھ ذرا واضح فرما دیں۔ اگر صرف ہم عصر ہونا ہی کوئی ربط ہے تو پھر میرا کہنا کہ حضرت ابو بکر﷜ حضور ﷺ کے ہم عصر ہیں تو آپ یقیناً فرمائیں گے أبو جہل بھی تو ہے چاہے اس ربط کا کوئی معنی ہو یا نہ ہو۔
     
  9. ‏جولائی 21، 2017 #19
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    اگر آپ کا غیر مقلد ہونے کا یہی دعوی ہے تو میرے لیے نہیں اگر کوئی قارئین اس پوسٹ سے لطف اندوز ہو رہا ہے تو اس کے لیے فرما دیں کہ آپ نے مندرجہ ذیل صورتوں میں سے کس صورت کے اجتہادکو بغیر تقلید کے اختیار فرمایا ہے ؛
    وتر کی کتنی رکعتیں ہے؛
    ایک سلام کے ساتھ ہیں یا دو سلام کے ساتھ؛
    قنوت رکوع سے پہلے ہے کہ بعد میں؛
    قنوت فجر میں ہے یا مغرب میں یا عشا٫ میں یا تمام نمازوں میں؛
    یہ تو صرف ایک مسئلہ بیان کیا ہے اس طرح کے لا تعداد فروعی معاملات ہیں جہاں ہم کسی ایک عالم کی متعدد دوسرے نقلی دلائل ہونے کے باجود شرعی اور غلو سے پاک تقلید کرنے پر مجبور ہیں۔
    اسی طرح جب بھی آپ اہل سنت کے علما٫ کے عقلی دلائل اپنے دلائل میں استعمال فرماتے ہیں تو یقیناً آپ ان کی تقلید فرما رہے ہوتے ہیں۔ اتباع تو ہم صرف رسول اللہﷺ ہی کی کرتے ہیں مگر جب بھی آپ کسی عالم کے نقلی دلائل کو دوسرے عالم کے نقلی دلائل پر ترجیح دیں گے تو وہ اس عالم کی تقلید کرتے ہوئے رسول اللہﷺ کی اتباع کہلائے گی۔
     
  10. ‏جولائی 21، 2017 #20
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    کیا جرح؛ تنقید اور طعن میں فرق آپ کو معلوم ہے۔ جرح اور تنقید میں غیر راجع؛ غیر مقبول؛ اہل رائے؛ غریب؛ کمزور؛ شاذ وغیرہ جیسے الفاظ استعمال ہوتے ہیں جبکہ طعن میں چھترول، باطل، مردود جیسے الفاظ۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں