1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مولانا طارق جمیل صاحب کے خواب :

'متفرقات' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏دسمبر 26، 2016۔

  1. ‏دسمبر 26، 2016 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    میں نے خواب میں دیکھا کہ میں جنت کے دروازے پر کھڑا ہوں اور دربانوں نے مجھے نیزہ حائل کرکے روک لیا ہے تو اندر سے کیا آواز آئی جس پر مجھے اندر جانے دیا گیا؟

    پیر‬‮ 26 دسمبر‬‮ 2016 | 13:18


    اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) معروف مذہبی سکالر مولانا طارق جمیل نے اپنے ایک خصوصی بیان میں کہا ہے کہ ایک بار اجتماع کا موقع تھا، میں نے خواب دیکھا۔ یہ بہت پرانی بات ہے۔ لوگ جنت میں جا رہے ہیں۔ جنت کا بڑا خوبصورت دروازہ ہے اور اس پر دربان کھڑے ہوئے ہیں۔ کوئی دروازے کی طرف آتا ہے تو ان کے ہاتھ میں نیزے ہیں، جب کوئی آتا ہے تو وہ نیزے ہٹا دیتے ہیں اور وہ اندر چلا جاتا ہے۔

    بعد میں دروازے کے آگے پھر نیزے حائل کر دیتے ہیں۔ جب میری باری آئی تو جنت کے دروازوں کے باہر معمور دربانوں نے آگے نیزے حائل کر دیئے۔ اتنے میں پیچھے سے آواز آئی کہ اپنا آدمی ہے، دروازے کھول دو۔جس پر دربانوں نے دروازے کھول دیئے ۔ میں جب اندر گیا تو دیکھا کہ اجتماع کا عمومی میدان سجا ہوا ہے۔ وہ اجتماع سردیوں کا اجتماع تھا، سردی بہت پڑ رہی تھی۔

    لوگ سکڑ سکڑ کر بستروں کے ساتھ بیٹھے ہوئے ہیں۔ میں نے اس وقت اپنے جی میں کہا کہ یہ کون سی جنت ہے؟ تو مجھے غیب سے آواز آئی کہ یہی تو جنت ہے۔ مولانا طارق جمیل نے کہا کہ خواب تو خیر خواب ہی ہوتا ہے، اس کی کوئی حیثیت نہیں ہوتی، یہ صرف تسلی کیلئے ہوتا ہے لیکن آپ سب جنت کے باغوں میں بیٹھے ہوئے ہواور اللہ کی رحمت آپ پر موسلا دھار بارش کی طرح برس رہی ہے۔

    آپ کوٹھوکر لگتی ہے تو اجر لکھا جاتا ہے، آپ لائن میں لگتے ہیں تو اجر لکھا جاتا ہے۔ رات کو ٹھنڈ سے نیند نہ آئے تو اجر لکھا جاتا ہے۔

    http://javedch.com/islam/2016/12/26/220785
     
    Last edited: ‏دسمبر 27، 2016
    • شکریہ شکریہ x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • لسٹ
  2. ‏دسمبر 26، 2016 #2
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,398
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

     
  3. ‏دسمبر 27، 2016 #3
    یوسف ثانی

    یوسف ثانی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏ستمبر 26، 2011
    پیغامات:
    2,760
    موصول شکریہ جات:
    5,268
    تمغے کے پوائنٹ:
    562

    جنید جمشید مرحوم کی نماز جنازہ سے قبل اپنے بیان میں بھی مولانا صاحب نے ایک ایسا ہی فقرہ کہا تھا کہ ۔۔۔ میں نے کہیں پڑھا تو نہیں لیکن ایسے موقع پر اللہ تعالیٰ فرماتے ہوں گے ۔ ۔ ۔ ۔ ابتسامہ
     
  4. ‏دسمبر 27، 2016 #4
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    ہر وقت اپنے خواب سنانے سے بہتر ہے کہ نبی کریم ﷺ کی سچی احادیث اور اس پر نازل شدہ سچی کتاب قرآن مجید کی باتیں سنائی جائیں۔
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 2
    • لسٹ
  5. ‏دسمبر 27، 2016 #5
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,313
    موصول شکریہ جات:
    2,650
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    آپ لوگوں کو حدثني قلبي عن ربي.کی حدیث سے کوئی دشمنی ہے کیا؟ آپ لوگوں حضرت مولانا برکات عالیہ جناب محترم طارق جمیل مدظلہ کو نبوت کا چالیسواں حصہ ملنا پسند نہیں!
     
    • زبردست زبردست x 3
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
  6. ‏دسمبر 27، 2016 #6
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,398
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    گویا آپ کہنا چاہتے ہیں ، عــــــــــــ
    اب یہاں خواب بھی زنجیر کئے جاتے ہیں
     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  7. ‏دسمبر 27، 2016 #7
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

  8. ‏دسمبر 27، 2016 #8
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

  9. ‏دسمبر 27، 2016 #9
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,562
    موصول شکریہ جات:
    412
    تمغے کے پوائنٹ:
    197

    یہ تبلیغی جماعت کے منظور وسان ہیں
     
  10. ‏دسمبر 27، 2016 #10
    T.K.H

    T.K.H مشہور رکن
    جگہ:
    یہی دنیا اور بھلا کہاں سے ؟
    شمولیت:
    ‏مارچ 05، 2013
    پیغامات:
    1,097
    موصول شکریہ جات:
    318
    تمغے کے پوائنٹ:
    156

    اس میں کوئی عجیب بات نہیں کیونکہ ہماری اہلِ حدیث کی ایک مسجد میں بھی جمعہ کے خطبے میں اکثر اوقات مجاہدین کی شہادت کے وقت جنت سے حور کا آنا اور شہید کو ساتھ لے جانا بڑے وثوق سے بیان کیا جاتا ہے ۔
    یہ تو اچھا ہوا کہ مولانا طارق جمیل صاحب نے اپنے خواب کو خواب تک ہی محدودرکھا مگر ہمارے اہلِ حدیث حضرات جو اپنےشہدا کے مشاہدوں کو عوام کےسامنے عین الیقین بنا کر پیش کرتے ہیں، اس کا کیا کیا جائے؟ اگر ہمارے پاس مولانا طارق جمیل صاحب کے خواب کو رد کرنے کی کوئی دلیل نہیں تو ہم اہلِ حدیث حضرات کے مجاہدین کی شہادت کے وقت کے مشاہدات کی تصدیق کیوں کریں؟
    جب ان تبلیغی حضرات میں بھی وہی مرض ہے جس میں آپ بھی مبتلاہیں تو اس پر اتنا سیخ پا ہونے کی کیا ضرورت ہے ؟
     
    • پسند پسند x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں