1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مولانا طارق جمیل کے بیان میں من گھڑت روایات، ان سے محتاط رہیں

'حدیث وعلومہ' میں موضوعات آغاز کردہ از ابن داود, ‏دسمبر 01، 2017۔

  1. ‏دسمبر 01، 2017 #11
    محمد نعیم یونس

    محمد نعیم یونس خاص رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 27، 2013
    پیغامات:
    25,732
    موصول شکریہ جات:
    6,543
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,157

    موصوف کے بعض ہم مسلک علماء اپنی کوشش کر چکے ہیں، ملاحظہ کریں!
    چند غلط تاویلات و تجاوزات اور اُن کا علمی و شرعی محاسبہ
    اللہ تعالی ہدایت دے۔آمین!
     
  2. ‏دسمبر 01، 2017 #12
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,255
    موصول شکریہ جات:
    691
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    سلسلۃ الاحلام المبارکۃ
    من السماء الی القلب مباشرتا بدون ای وسیط
    بلا دلیل و بلا سند

    ما رایکم ! ،،، ملاحظۃ ھامۃ : میں کسی کے خلاف نہیں لکھ رہا بلکہ جو بلیغ کلام سنا اس پر عنوان تبدیل کرنے کی سعی کر رہا ہوں ، ایسے کلام کو سن کر کیا عنوان بہتر ہو سکتا ہے کم از کم دو عنوان تو پیش کیئے جائیں جو صحیح ترجمانی کر پائیں یا آئیندہ کے کلام کی صحیح تصویر پیش کرسکیں -
     
  3. ‏دسمبر 01، 2017 #13
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    5,439
    موصول شکریہ جات:
    2,201
    تمغے کے پوائنٹ:
    701

    مذہبی دعوت کے حوالہ سے
    ہمارے موجودہ معاشرے میں تین طبقات ہیں ؛
    (1) واقعی باخبر حضرات (بلا تفریق مسلک )
    (2) خادم رضوی ، اور مولوی طارق جمیل اور طاہر القادری جیسے ، جو علم کے بغیر ( سب کچھ بولتے ہیں )
    (3 ) عوام کی اکثریت ، جو اس دوسرے طبقہ کو علم کا اصل مخزن و منبع سمجھ کر انہی کے گن گاتی ہے ،انہی کی بدگمانیوں کو اصل دین اور صحیح عقیدہ مانتی ہے
    اور ان پر تنقید کرنا بہت بڑا گناہ اور گمراہی تصور کرتی ہے ،
    ــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 2
    • لسٹ
  4. ‏دسمبر 01، 2017 #14
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,061
    موصول شکریہ جات:
    8,172
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    و علیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    و لا تسبوا الذین یدعون من دون اللہ فیسبوا اللہ عدوا بغیر علم ۔
    پر عمل کرتے ہوئے ، ایک دوسرے کی معزز شخصیات کے متعلق تبصرہ ہلکا کرنا چاہیے۔
    باقی علمی نگران کو یا فورم انتظامیہ کو دھمکی دینے کی ضرورت نہیں ، اگر طرفین سے قابل قدر اراکین ایک دوسرے پر کیچڑ اچھالنے کے لیے مستعد ہیں ، تو ہم جس طرح پہلے برداشت کرتے آئے ہیں ، اب بھی کریں گے ۔
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  5. ‏دسمبر 02، 2017 #15
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,042
    موصول شکریہ جات:
    2,571
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    میں ایک بار پھر تمام صارفین فورم سے التماس کرتا ہوں کہ وہ اس تھریڈ کے لئے کوئی دوسرا عنوان مناسب سمجھتے ہوں، تو مجھے لکھ دیں!
    میں خود عنوان تبدیل کردوں گا!
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
  6. ‏دسمبر 02، 2017 #16
    نسیم احمد

    نسیم احمد رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 27، 2016
    پیغامات:
    574
    موصول شکریہ جات:
    103
    تمغے کے پوائنٹ:
    71

    جس نے نبی کریم ﷺ کے نام پر جھوٹ بولا۔اپنے لئے جہنم کا دروازہ کھولا
     
  7. ‏دسمبر 02، 2017 #17
    ابو شحمہ

    ابو شحمہ مبتدی
    شمولیت:
    ‏نومبر 18، 2017
    پیغامات:
    42
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    11

    نبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وعلی آلہ وسلّم پے جھوٹ بولنے والے سے خبردار کرنا واجب ہے۔ اس مولوی کے فرقے والے بھی کہا کرتے ہیں۔
     
  8. ‏دسمبر 02، 2017 #18
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,255
    موصول شکریہ جات:
    691
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    دونوں ویڈیوز میں جو "بیان" (کلام یا خطاب) ہے اس پر گفتگو کیوں نہیں؟ اس پر اعتراض کیوں نہیں؟
    کیا اعتراض کے قابل صرف "عنوان" ہے ؟ اور بقیہ تمام بیان (کلام یا خطاب) قابل نظر اندازی ہے؟
    شخصیت سے "عقیدت" اپنی جگہ ،کیا اس شخصیت کا کلام اس قابل ہے کہ اس سے اتفاق کیا جاسکے؟ اگر ہاں تو ہر ہر قول پر اسناد و دلائل پیش کیئے جائیں اگر نہیں تو پھر احتجاج کیوں نہیں؟
    آپکی خاموشی آپکا اعتراف ہوگی کہ آپ "شخصیت" سے حرف بحرف اتفاق رکھتے ہیں -
     
  9. ‏دسمبر 02، 2017 #19
    اشماریہ

    اشماریہ سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 15، 2013
    پیغامات:
    2,683
    موصول شکریہ جات:
    732
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    نہ آپ کو دھمکی دے رہا ہوں اور نہ کسی اور انتظامیہ کے فرد کو۔ اگر آپ کو یاد ہو تو میں پہلے کئی بار ابن داود صاحب کے اس قسم کے الفاظ کو رپورٹ کر چکا ہوں۔ پھر کوئی عمل نہ ہونے پر میں نے "کچھ" سخت رویہ اپنایا تھا۔
    مجھے خود مولانا کے بلا تحقیق ہر رطب و یابس کو بیان کرنے پر اعتراض ہے اور اسی لیے میں عموماً ان کا دفاع نہیں کرتا لیکن کھلے فورم پر علماء کے بارے میں اس طرح کے الفاظ بھی کون سا دین اور عبادت ہے؟ انسان کی برداشت کی ایک حد ہوتی ہے۔
    اگر ایک قانون جی مرشد جی، بھٹی صاحب اور دوسروں پر اپلائی ہوتا ہے تو پھر ہر جگہ ہونا چاہیے۔ ویسے بھی علماء جیسے بھی ہوں میں انہیں علم اور نبی کریم ﷺ کی نسبت سے قابل قدر سمجھتا ہوں۔

    @ابن داود بھائی! آپ اس کا عنوان "مولانا طارق جمیل کی بیان میں من گھڑت روایات، ان سے محتاط رہیں" رکھ سکتے ہیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  10. ‏دسمبر 02، 2017 #20
    اشماریہ

    اشماریہ سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 15، 2013
    پیغامات:
    2,683
    موصول شکریہ جات:
    732
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    میں ان کا دفاع نہیں کرتا اور یہ ہر رطب و یابس کو نقل کر دیتے ہیں۔ البتہ میرا اب تک کا تجربہ یہ ہے کہ یہ وہی نقل کرتے ہیں جو ان سے پہلے کتابوں میں نقل ہو چکا ہو۔ یہ اپنی طرف سے باتیں نہیں گھڑتے۔ جہاں اپنی جانب سے بات کر رہے ہوں وہاں وضاحت کر دیتے ہیں۔
    شاید یہ روایات کے درمیان فرق نہ کر سکتے ہوں۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں