1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مولانا طارق جمیل کے بیان میں من گھڑت روایات، ان سے محتاط رہیں

'حدیث وعلومہ' میں موضوعات آغاز کردہ از ابن داود, ‏دسمبر 01، 2017۔

  1. ‏دسمبر 02، 2017 #21
    محمد نعیم یونس

    محمد نعیم یونس خاص رکن
    شمولیت:
    ‏اپریل 27، 2013
    پیغامات:
    25,723
    موصول شکریہ جات:
    6,542
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,157

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    کم از کم میرے نزدیک عنوان بالکل درست اور مناسب ترین ہے!
     
  2. ‏دسمبر 02، 2017 #22
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    5,321
    موصول شکریہ جات:
    2,179
    تمغے کے پوائنٹ:
    701

    میں معترض تو نہیں ،لیکن محبت ایک بار
    ۔۔۔۔۔۔۔ لہو کوشراب کیسے کیا ؟
     
  3. ‏دسمبر 02، 2017 #23
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,243
    موصول شکریہ جات:
    686
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    تب تو ہم سب کو مل جل کر اجتماعی طور پر ، پوری شدت اور پوری قوت سے ان کتب کا صفایہ کرنا فورا سے پیشتر شروع کردینا چاہیئے ، یہ ایک ایسا کام ہے جس پر کام ہی نہیں کیا گیا اور جو چاھتے ہیں ان کعوکرنے بھی نہیں دیا جاتا جبکہ یہاں مزید نرمی مزید فتنے و مزید فتنہ گر وجود میں لاتی رہیگی ، ان میں سے بعض سے ہو سکتا ھے آج آپ اور آئندہ آینوالی نسلیں عقیدتیں کرتی رہینگی ۔ میرے خیال سے امت کا "اتحاد" یہاں ضروری ہے۔ لیکن چند وضاحتیں بھی تو ہوں ساتھ ساتھ، پڑھتے آپ لوگ ہو، سناتے بھی آپ لوگ ھو ، کبھی سوچا کہ پڑھتے کیا ہو؟ جیسا پڑھا ویسا سکھاتے چلے گئے اب اگر ہم اعتراض کریں تو کسی شخصیت سے "عقیدت" کی آڑ آپ لیں ، جن کتب کا پڑھنا بھی غلط ہو ان ہی کتب کو بطور دلائل آپ شخصیت کے دفاع میں خود استعمال کریں ؟ کیا کہینگے اشماریہ بھائی آپ اپنی وضاحت میں ؟ میرا تصور آپ اور ابن عثمان بھائی کے لیئے واقعتا اعلی علم رکھنے والوں میں سے ہے، کیا ان کتب کو بطور دلائل پیش کیا جا سکتا ہے؟ آپ صاحبان کے قلم یہاں اور ایسے ہی اہم موضوعات پر کیوں نہیں اٹھ پاتے۔ جبکہ برخلاف اس کے آپ کا قلم شخصیت کے دفاع میں اٹھ جاتا ہے ۔
    ان سارے قصص کو دریا برد کر دیں کیونکہ خود آپ کہتے ہیں کہ ان کتب کی "روایات میں فرق نہیں کر پاتے ہیں " ۔۔۔ اتنی نرمی آپ کے قلم میں !
    یہ دفاع نہیں تو پھر کیا ہے؟
    جبکہ آپ کو علم ھے کہ سنی سنائی باتوں کو ۔۔۔۔۔ الخ۔ پھر آپ کو عقیدت بھی ہو ایسوں سے۔ عنوان چاہے جو رکھ دیا جائے ، کیا فرق پڑ جانا ہے اصل گفتگو ان قصص پر ہو ۔ اگر قصص سے آپ متفق ھوں تو بات دیگر ۔
     
  4. ‏دسمبر 02، 2017 #24
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,243
    موصول شکریہ جات:
    686
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    کچھ ان "قوانین" کا بھی بتلا دیں جن پر مذکورہ محترمین و مکرمین کے اسماء مبارک گنوائے گئے ہیں ان پر اطلاق ہوا؟؟
     
  5. ‏دسمبر 02، 2017 #25
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,243
    موصول شکریہ جات:
    686
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    اشماریہ بھائی یہ تو وہی محترمین و مکرمین ہیں جن سے انکی علمیت کی بابت آپ خود سوالات اٹھا چکے ہیں ! آپ ہی علمی اسناد طلب کرچکے ہیں ؟

    یہ فورم کیا ہے ؟ کیسا ہے ؟ اگر ہم جانتے ہیں تو آپ حضرات سے بھی پوشیدہ نہیں یہ حقیقتیں۔ ویسے ہے اہل حدیث فورم

    ایک تھریڈ "اتحاد" پر تو خود میں نے اللہ کا شکر ادا کیا تھا کہ جوابات بذات خود آپ دیتے جا رہے تھے اور ابن داود بھائی نے کوئی جواب نہیں دیا ۔ کسی کے کلام پر کلام کیا جاتا ھے ، شخصی عناد ہے نا شخصی عقیدت ھے ، بشرطیکہ سنجیدہ اعتراف ھو تو ان شاء تعالی میری معمولی غیر علمی باتیں مان لی جائینگی ۔
     
    Last edited: ‏دسمبر 02، 2017
  6. ‏دسمبر 02، 2017 #26
    اشماریہ

    اشماریہ سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 15، 2013
    پیغامات:
    2,674
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    دفاع اور اس بات میں فرق یہ ہے کہ روایات کے درمیان فرق نہ کر سکنے کی بنیاد پر روایت کو نقل کر دینا شاید ہی کوئی جائز سمجھتا ہو بلکہ اہل علم سے پوچھنا فرض ہوتا ہے۔ باقی یہ ان کے بارے میں میرا حسن ظن ہے اور ہر عالم کے بارے میں رہتا ہے۔

    کیا آپ نے میرے قلم میں کسی عالم کی ذات کے بارے میں شدت پہلے کبھی دیکھی ہے؟
    رہ گئی بات ان کتب میں موجود روایات کی تو یہ کتب (جن میں کتب تاریخ اور سیرۃ سر فہرست ہیں) کس دور میں مدون ہوئی ہیں آپ جانتے ہیں۔ اور ان کی تدوین کے بعد ذہبی، زیلعی، ابن حجر، مغلطائی، ابن ملقن اور بے شمار جبال علم گزرے ہیں جنہوں نے ان کا صفایا نہیں کیا۔
    کیوں؟ سوال اہم ہے۔

    نہیں سمجھا۔

    ہمیں بھی معلوم ہے کہ یہ اہل حدیث فورم ہے۔ اور میں یہ بھی جانتا ہوں کہ اپنے کافی حد تک متعصب ماحول کے باوجود یہ فورم کئی دوسرے فورموں سے اچھا ہے۔ یہاں بہت سے وہ لوگ ہیں جن سے بہت کچھ سیکھا جا سکتا ہے۔ اگر ایسا نہ ہوتا تو میں اتنے سالوں سے یہاں نہ ہوتا۔ مجھے جاننے والے یہ بھی جانتے ہیں کہ میں صرف اشماریہ کا نام ہی استعمال کرتا ہوں اور صرف دو ہی فورمز پر آتا ہوں۔ صرف اہل حدیث کا رد کرنا مقصود ہوتا تو ان کے اور فورمز بھی معلوم ہیں۔
    میں بھی یہی عرض کر رہا ہوں کہ ان کے کلام پر کلام کیا جائے۔ ان کی روایات بسا اوقات ایسی ہوتی ہیں جنہیں صرف عقل سے پرکھا جائے تو بھی موضوع معلوم ہوتی ہیں مثلاً اللہ پاک کے نبی کریم ﷺ کا جنازہ ادا کرنے والی روایت۔
    لیکن پھر وہی کہوں گا کہ "کلام" پر "کلام" کریں۔ اس کا رد کریں۔ لوگوں کو کلام کی حقیقت بتائیں۔
    لیکن کسی عالم کی ذات اور شخصیت کے بارے میں الفاظ کا استعمال کرتے وقت ذرا محتاط ہو کر کریں کہ وہ عالم کسی بھی حوالے سے فریق ثانی کے یہاں محترم ہو سکتا ہے۔ پھر جب شدت آتی ہے تو دونوں جانب سے آتی ہے۔ پھر اعتراضات کے لیے فریقین کو بہت سی چیزیں مل جاتی ہیں۔
    ان کے کلام کا رد کریں۔ جہاں میں سمجھوں گا کہ ان کا کلام صحیح ہے وہاں میں عرض کر دوں گا۔ جہاں مجھے علم ہی نہیں ہوگا یا کلام غلط سمجھوں گا وہاں کچھ اعتراض نہیں کروں گا۔
     
  7. ‏دسمبر 02، 2017 #27
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,243
    موصول شکریہ جات:
    686
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    یہ اصول آپکے ہیں ، مرضی آپکی ۔ اسی طرح دوسروں کے اصول بھی ہیں انکی بھی مرضیاں ہیں ۔
    آپ نے کہہ دیا وضاحت سے کہ آپ "اعتراض" اس وقت بھی نہیں کرینگے جب آپ غلط سمجھیں گے -
    عجیب بات ہوئی یہ تو۔
    ہم غلط سمجھینگے تو کلام پر تو اعتراض کریں گے ہی لیکن ناقل کو کس طرح بری الذمہ گردانیں!
    یہ اس بات کا اعتراف بھی ھو گیا :
    ؟
    لگتا ھے یہ ایک اصل "اختلاف" زیر گفتگو آہی گیا جس پر "اتحاد" ممکن ہی نہیں۔
     
  8. ‏دسمبر 02، 2017 #28
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,243
    موصول شکریہ جات:
    686
    تمغے کے پوائنٹ:
    213

    جو آپ نہیں سمجھے :

    ابن داود سے اختلافات اپنی جگہ لیکن فورم کے قوانین یا تادیبی کاروائیوں پر اعتراض کیوں؟
     
  9. ‏دسمبر 02، 2017 #29
    اشماریہ

    اشماریہ سینئر رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏دسمبر 15، 2013
    پیغامات:
    2,674
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    یار میرا مطلب ہے یہاں رد کرنے والے پر کوئی اعتراض نہیں کروں گا چاہے میں مولانا طارق جمیل صاحب کی بات کو غلط سمجھ رہا ہوں یا چاہے مجھے اس موضوع پر علم ہی نہ ہو. غلط سمجھنے کی صورت میں تو رد کرنے والا ایک اچھا اور علمی کام کر رہا ہوگا. اس پر کیوں اعتراض کروں؟
    بجائے غلط مطلب نکالنے کے مجھ سے مطلب پوچھ لیا کریں بھائی.


    ان قوانین پر اعتراض نہیں ہے بلکہ ان کا اطلاق ہر جگہ چاہتا ہوں.
    یہ تو وہی معاملہ ہو گیا جو زاہد حامد کے ساتھ ہوا ہے (ابتسامہ).
     
  10. ‏دسمبر 03، 2017 #30
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    7,990
    موصول شکریہ جات:
    8,157
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    مجھے آپ کی باتوں سے تقریبا اتفاق ہے ۔
    اس بات سے بے فکر رہنا چاہیے کہ یہاں قوانین کی تطبیق میں دھاندلی کی جاتی ہے ، میں اس بات کا خیال رکھنے کی کوشش کرتا ہوں ، کہ جہاں ایک طرف سے زیادتی ہو ، وہاں فریق ثانی کے منہ پر انتظامی پابندی کا قفل نہ چڑھاؤں ۔
    مثال کے طور کسی جگہ پر آپ کے ساتھ زیادتی ہوئی ہو ، اور آپ نے وہاں اس کا ’ رد عمل ‘ دینے کی کوشش کی ہو ، کبھی ایسا نہ ہوا ہوگا کہ آپ کو کسی انتظامیہ پابندی کے ذریعے خاموش کروایا گیا ہو ۔
     
    • مفید مفید x 3
    • پسند پسند x 2
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں