1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

مولوی الیاس گھمن صاحب کے "رفع یدین نہ کرنے" کا جواب

'نماز کا طریقہ کار' میں موضوعات آغاز کردہ از مظفر اختر, ‏اپریل 14، 2019۔

  1. ‏مئی 06، 2019 #21
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    یہی اصول صحیحین کے تمام مدلسین پر بھی لاگو کردو!!!؟؟؟
     
  2. ‏مئی 06، 2019 #22
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    1: آپ کے ذمہ تھا کہ مذکورہ تمام روایات (نا کہ چند ایک) کا ضعف ’’دلیل‘‘ سے ثابت کرتے۔
    2: رفع الیدین کی اتنی انواع کی ’’ضعیف‘‘ روایات بیان کرنے والوں کا مقصد کیا ہوسکتا ہے؟
     
  3. ‏مئی 06، 2019 #23
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    آپ نے شائد غور نہیں کیا ۔۔۔ یہی آپ لوگوں کا المیہ ہے ۔۔۔ یہ تمام روایات ابن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ ہی سے مروی ہیں ۔۔۔ جن میں ہر تکبیر سے لے کر ۔۔۔ صرف تکبیر تحریمہ کی رفع الیدین تک محدود ۔۔۔ رفع الیدین بیان ہیں۔

    احناف ہوں یا مالکی شافعی حنبلی، یہ تمام اہلسنت ہیں اور اختلافی احادیث میں تطبیق یا ترجیح اصولوں کی بنیاد پر دیتے ہیں۔
    ان میں سے جب کوئی حدیث لکھ کر آپ لوگوں سے اس کی بابت پوچھے تو آپ لوگوں کا حق نہیں بنتا کہ ان سے یہ کہیں کہ خود اس پر عمل کیوں نہیں کرتے۔ان سے یہ مطالبہ کرنا حماقت یا دجل ہے۔
    جس کا دعوی اہلحدیث ہونے کا ہے اس پر لازم ہے کہ وہ بتائے کہ ان احادیث پر کیوں عمل نہیں کرتا جبکہ انہی کے بڑے اس کو صحیح بھی کہتے ہوں۔
     
  4. ‏مئی 06، 2019 #24
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    اختلاف رکھنا دلائل کے ساتھ جائز اور ہر کسی کا حق ہوسکتا ہے مگر عصبیت بری چیز ہے۔
     
  5. ‏مئی 06، 2019 #25
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,763
    موصول شکریہ جات:
    8,333
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    بعض سوالات واشکالات ان کی علمی میدان میں کوئی حیثیت نہیں ہوتی، اچھی طرح معلوم ہے کہ اس قسم کے بحث و مباحثہ میں صبر کرنا مشکل ہوجاتا ہے، لیکن یہ سوچ کر جواب دے دینا چاہیے کہ اس قسم کے لاعلمی اور جہل اور پتہ نہیں کتنے لوگوں کے ذہن میں پنپ رہا ہوگا۔
    تدلیس کا مطلب ہوتا ہے کہ راوی اپنے ایسے شیخ سے جس سے اس نے احادیث سنی ہوئی ہوں، ایسی احادیث بھی بیان کردے جو اس نے نہیں سنی ہوئی۔ لہذا جن راویوں کے بارے میں یہ الزام ہے، ان کا اپنے شیخ سے ہر ہر حدیث میں سماعت کی تصریح کا ہونا ضروری ہے۔
    البتہ صحیحین کو اس قاعدے سے استثنا دیا گیا ہے، اس وجہ سے کہ بخاری ومسلم اس قسم کی روایات میں سے وہی رواتیں اپنی کتاب میں لیتے تھے، جن کی تصریح بالسماع ان کے علم میں ہوتی تھی، گو وہ ہمیں معلوم نہ ہوسکی۔
    دیگر کتابوں کا یہ معاملہ نہیں ہے۔
    اور یہ باتیں ایسی ہیں کہ اصول حدیث کا علم رکھنے والے تمام لوگوں کو ہی معلوم ہیں، چاہے وہ کسی مسلک و مذہب سے تعلق رکھتے ہوں۔
    تدلیس والی جس حدیث کو آپ صحیح کہنا چاہتے ہیں، وہ صحیحین سے ثابت کردیں تو پھر تو تدلیس والی بات ختم ہوجائے گی۔
    لیکن اگر وہ روایت صحیحین میں نہ ہو، صرف کسی اور روایت کی سند دیکھ کر اس قسم کی جاہلانہ باتیں اور پھر ان پر اصرار مناسب نہیں۔
     
  6. ‏مئی 06، 2019 #26
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,763
    موصول شکریہ جات:
    8,333
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    بہت دکھ اور تکلیف ہوتا ہے، صرف اپنی مسلکی رائے کی برتری کے لیے جاہل قسم کے لوگ علمی مسائل میں رائے زنی سے گریز نہیں کرتے۔
    مجھے ایسا کوئی بندہ ملے، وہ اہل حدیث بھی ہو، تو اسے برداشت کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔
    ایسے لوگوں کی اوقات یہ ہے کہ اپنے اپنے پسندیدہ علما کے پاس جاکر بیٹھیں، جو دین اور حق بات سمجھ آتی ہے، اس پر عمل کریں۔ یہ قطعا درست نہیں کہ ساتھ ’مفتی اعظم‘ اور ’محدث جلیل‘ کی طرح دوسروں سے بحث و مباحثہ بھی شروع کردیں۔
    اہل حدیث ، دیوبندی بریلوی کسی بھی مسلک سے تعلق رکھنے والے ان تمام لوگوں کو شرم کرنی چاہیے جو خود سے عربی عبارت نہیں سمجھ سکتے، اصول حدیث کی بنیادی تعریفات سے لاعلم ہیں، اور پھر ’علمی و تحقیقی‘ مسائل میں پنگا کرنا شروع کردیتے ہیں۔
    ولا تقف ما ليس لك به علم
    إن السمع والبصر والفؤاد
    كل أؤلئك كان عنه مسؤلا
     
  7. ‏مئی 06، 2019 #27
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    145
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    اسی کو کہتے ہیں الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے
    اپنے ان اصول کی دلائل بھی بتلا دو میرے بھولے بھیا؟ کس محدث نے یہ بات کہی ہے؟ اور محدثین کے یہاں اس کی حیثیت کیا ہے؟ محض آپ کے عقلی گھوڑے دوڑانا قابل قبول نہیں_ اور ہاں اس حدیث کے سماع کی صراحت بھی دکھادیں.
     
  8. ‏مئی 06، 2019 #28
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    145
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    اصول لاگو کرنا یہ تو محدثین کا کام ہے ہم جیسے مبتدیوں کا کام ان کو فالو کرنا ہے، میں نے جو بات کہی ہے آپ اس کو اصول محدثین کے خلاف ثابت کردیں میں اپنی بات سے رجوع کر لوں گا.
     
  9. ‏مئی 06، 2019 #29
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    145
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    (1) بھائی سب ہمارے ہی ذمہ ہے کچھ آپ کے بھی ذمہ ہے یا نہیں؟ آپ اسی فورم پر اپنی بیان کردہ احادیث تلاش کر لیتے اگر ان میں ضعف ہوا تو اس کی وضاحت ضرور مل جائے گی، إن شاء الله گویا آپ کو یہ معلوم ہے آپ کی بیان کردہ احادیث میں کچھ ضعیف ہیں اس کے بعد بھی ان کو بیان کرکے استدلال کرنا دھاندلی نہیں؟
    (2) ضعیف آحادیث بیان کرنے والوں کے مختلف مقاصد ہوتے ہیں وہ بھی اصول حدیث کی کتابوں میں آپ کو مل جائے گا، اگر تلاش کروگے تو اسی فورم پر مل سکتا ہے.
     
  10. ‏مئی 06، 2019 #30
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    145
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    غور کیا اور خوب غور کیا، یہ ہمارا نہیں بلکہ آپ کا المیہ ہے، کیا آپ نے ان احادیث پر غور کیا؟ اگر غور کیا ہوتا تو صحیح کے ساتھ ضعیف کو گڈمڈ کرکے اپنا الو سیدھا نا کرتے؟ جس کا آپ کو بھی اعتراف ہے، ضعيف روایت جس کی نسبت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہما کی طرف مشکوک ہے اس کو حتمی طور پر ابن عمر کے سر لگا دینا یہ آپ ہی کا کرشمہ ہے.
    وہ بات الگ ہے کہ یہ سب آپس میں ایک دوسرے کو مشرک کافر کہتے رہیں، وہ بات الگ ہے ایک حنفی نے دوسرے حنفی کو شہر کے قبرستانوں میں دفن نہیں ہونے دیا باوجود اس کہ مردے کے اولیاء مردے کو لیکر شہر کے ہر قبرستان میں گھومتے رہے، اس کے باوجود آپ کی معصومیت کہ سب کو اہل سنت بتارہے ہیں؟ اور اس کے بعد بھی آپ انہیں کے اصولوں کو ٹھینگا دکھا رہے ہیں؟
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں