1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

میں اس فورم پر نام و نمود کے لئے نہیں آیا

'تعارف اراکین' میں موضوعات آغاز کردہ از عبدالرحمن بھٹی, ‏مارچ 14، 2016۔

  1. ‏مارچ 14، 2016 #1
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    281
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    اس فورم پر آنے کا مقصد اپنے Concepts clearکر نا تھا نہ کہ نام و نمود۔ اس فورم میں کوئی بھی (میرے خیال میں) مجھے نہیں جانتا۔ میں ایک گمنام شخص ہوں اور گمنام ہی رہنا پسند کرتا ہوں۔ نہ مجھے کسی کے واہ واہ کی ضرورت اور نہ اپنا شملہ اونچا رکھنے کی خواہش۔ اللہ تعالیٰ میری آخرت اچھی بنا دے آمین۔
     
  2. ‏مارچ 14، 2016 #2
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,291
    موصول شکریہ جات:
    699
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    محترم
    ذرا اس گاڑہی انگریزی کا اردو ترجمہ بتا دیں ، سمجہنا چاہتا ہوں ۔
     
  3. ‏مارچ 15، 2016 #3
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,291
    موصول شکریہ جات:
    699
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    آپ کی پہچان آپکی تحریریں ہیں جو اس فورم پر محفوظ ہیں ۔ آپکا اسلوب اور اخلاق ہے اور یہی آپکی پہچان ہے ۔
     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏مارچ 15، 2016 #4
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    281
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    محترم! اس کے مفہوم کو واضح کرنے کے لئے مجھے اردو میں مناسب الفاظ نہیں مل رہے تھے اس لئے مجبوراً انگریزی میں لکھا۔ کوئی صاحب اس کا مناسب مفہوم اردو میں لکھ دے تو مشکور ہوں گا۔
     
  5. ‏مارچ 15، 2016 #5
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    281
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    يَعْلَمُ خَائِنَةَ الْأَعْيُنِ وَمَا تُخْفِي الصُّدُورُ
     
  6. ‏مارچ 15، 2016 #6
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,291
    موصول شکریہ جات:
    699
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    محترم اس عربی کلام کا ترجمہ کردیں
     
  7. ‏مارچ 15، 2016 #7
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    281
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    محترم! جو چیز محنت سے حاصل کی جاتی ہے اس کی افادیت زیادہ ہوتی ہے۔ یہ قرآنِ پاک کی آیت ہے کسی بھی ترجمہ والے قرآنِ پاک سے دیکھ لیں۔
     
  8. ‏مارچ 15، 2016 #8
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,291
    موصول شکریہ جات:
    699
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    جزاك الله خيرا
    کیا خوب کہی ، دل پر اثر ہوا ۔ معیاری ، علمی اور معلوماتی
     
  9. ‏مارچ 15، 2016 #9
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    281
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    مجھ سے بعض دفعہ میرے ہم مسلک بھی ناراض ہو جاتے ہیں کہ میں جسے غلط سمجھتا ہوں نصوص کی روشنی میں (جتنی کا علم ہے) اس کو غلط کہہ دیتا ہوں۔ بعض اوقات کسی بڑی شخصیت پر تنقید کردی تو اس کے معتقد شدید ناراضگی کا اظہار کرتے ہیں۔
    ایک دفعہ میں نے ایک بہت مشہور شخصیت کی اس بات پر کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا وصال 12 ربیع الاول کو ہؤا ہے پر اعتراض کردیا کہ یہ غلط ہے۔ وہ تو میرے سر کو آگیا۔ کہنے لگا کہ وہ عالم ہے تم عالم ہو؟ میں نے کہا اس میں علم یا نہ عالم ہونے کی بات نہیں بلکہ اس کا تعلق حساب کتاب سے ہے جو حساب کتاب جانتا ہے وہ حساب لگا کر دیکھ لے۔ میں نے چونکہ ایک عالم کی کتاب میں پڑھا تھا کہ اس طرح حساب کیا جاسکتا ہے اور ثابت ہوتا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا وصال 12 ربیع الاول کو نہیں بنتا۔ میں نے خود حساب لگا کر دیکھا تو یہ بات صحیح نکلی۔
     
  10. ‏مارچ 15، 2016 #10
    عبدالرحمن بھٹی

    عبدالرحمن بھٹی مشہور رکن
    جگہ:
    فی الارض
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2015
    پیغامات:
    2,435
    موصول شکریہ جات:
    281
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    مجھے ایسے علماء پسند ہیں ۔۔۔ جو دھوکہ نہیں دیتے ۔۔۔ جھوٹ نہیں بولتے ۔۔۔ اپنا طرہ اونچا رکنے کی کوشش میں نہیں رہتے ۔۔۔ اپنی غلطی کو تسلیم کرنے میں کوئی پس و پیش نہیں کرتے ۔۔۔ کسی بات کا علم نہ ہو تو اس کو تسلیم کر لیتے ہیں ۔۔۔
     
    • پسند پسند x 2
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں