1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

نماز میں ہاتھ باندھنے کا طریقہ

'نماز' میں موضوعات آغاز کردہ از عمر اثری, ‏مارچ 10، 2017۔

موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
  1. ‏مارچ 31، 2017 #51
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,549
    موصول شکریہ جات:
    3,498
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    متن کی تفہیم تب ممکن ہے جب متن رسول اللہ ﷺ سے ثابت ہو۔ اور متن کے ثبوت کے لئے روات کا معتبر ہونا لازمی ہے۔ ورنہ اگر سند کو دیکھا نہ جائے تو آپ جیسا کوئی بھی ایڑا غیڑا دین میں کچھ بھی اضافہ کرتا جائے۔ عبد اللہ بن المبارک رحمہ اللہ فرماتے ہیں: "الإسناد من الدين فلو لا الإسناد لقال من شاء ما شاء"
    امام ابن سیرین فرماتے ہیں: "إن هذا العلم دين فانظروا عمن تأخذوا دينكم" یہ علم دین ہے پس دیکھو کہ تم کس سے اپنا دین لے رہے ہو (صحیح مسلم)۔
    امام یحیی بن سعید القطان فرماتے ہیں: "لا تنظروا إلي الحديث، ولكن انظرا إلي الإسناد، فإن صح الإسناد وإلا فلا تغتروا بالحديث إذا لم يصح الإسناد" حدیث کی طرف مت دیکھو بلکہ اسناد کی طرف دیکھو، پس اگر اسناد صحیح ثابت ہو جائے (تو متن کی تفہیم کی طرف آؤ) ورنہ محض حدیث کے متن سے دھوکا مت کھاؤ اگر اسناد صحیح نہیں ہے۔ (سیر اعلام النبلاء)
    آپ جیسے لوگ ہیں جو نبی اکرم ﷺ کی طرف جھوٹی باتیں منسوب کر کے دین کی شکل بگاڑتے ہیں جنہیں اس سے کوئی سروکار نہیں کہ حدیث کے الفاظ اللہ کے رسول سے ثابت بھی ہیں یا نہیں، بس اپنے امام معصوم جسے آپ نبی تسلیم کر چکے ہیں اس کی بات سے اختلاف نہیں ہونا چاہیے۔
     
    • زبردست زبردست x 2
    • علمی علمی x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  2. ‏مارچ 31، 2017 #52
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,549
    موصول شکریہ جات:
    3,498
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    برائے کرم میرے پرانے سوالوں کے جواب بھی دے دیں۔ جاہل کا لفظ بس آپ نے رٹ لیا ہے، اس کے آگے آپ کو کچھ نہیں آتا اور ہمارے نبی ﷺ کی احادیث کو پرکھنے چلیں ہیں۔ سبحان اللہ
     
    • متفق متفق x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  3. ‏مارچ 31، 2017 #53
    سلفی حنفی حنیف

    سلفی حنفی حنیف رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2017
    پیغامات:
    290
    موصول شکریہ جات:
    10
    تمغے کے پوائنٹ:
    33

    یہ کیا جناب کے نبی ہین کہ ان کا فرمایا ہؤا غلط ہو ہی نہیں سکتا۔
    نمبر دو اپنے اسول کے مطابق اس کی سند دو کہ یہ اسی نے کہا ہے جناب نے ان پر افترا نہین کیا۔
    آخری بات میں تم جیسوں سے بحث پسند نہین کرتا لہٰذا ۔۔۔۔۔۔ اگر تھوڑی سی بھی عقل ہے تو سمجھ گئے ہوگے۔
    ہان توبہ تائب ہونے کا اعلان کرو تب۔
     
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 4
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏مارچ 31، 2017 #54
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,549
    موصول شکریہ جات:
    3,498
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    اگر آپ سے کہا جائے کہ علی رضی اللہ عنہ نے خود تو دراصل ہاتھ ناف سے اوپر رکھے ہیں جیسا کہ سنن ابی داود کی روایت ہے:
    حدثنا محمد بن قدامة يعني ابن أعين، عن أبي بدر، عن أبي طالوت عبد السلام، عن ابن جرير الضبي، عن أبيه، قال: «رأيت عليا، رضي الله عنه يمسك شماله بيمينه على الرسغ فوق السرة»
    تو کیا ہم بھی کو یہی کہیں کہ بھائی سند میں کیا رکھا ہے تم متن کو دیکھو۔ علی نے ہاتھ ناف کے اوپر رکھے ہیں۔ آپ کو متن سے سروکار ہونا چاہیے، سند سے کوئی سروکار نہیں ہونا چاہیے۔
    ایسی جہالت اور ہٹ دھرمی اللہ کسی کو نہ دے۔
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  5. ‏مارچ 31، 2017 #55
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,549
    موصول شکریہ جات:
    3,498
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    یہ تو حال ہے جناب کا ما شاء اللہ۔
    نیم حکیم خطرہ جان
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏مارچ 31، 2017 #56
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,549
    موصول شکریہ جات:
    3,498
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    پس ثابت ہوا حنفی عورتیں اور ان کو سینے پر ہاتھ باندھنے کی تلقین کرنے والے مرد، سب کفر کے مرتکب ہیں کیونکہ وہ جان بوجھ کر سنت کی خلاف ورزی کر رہے ہیں!
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  7. ‏مارچ 31، 2017 #57
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    1,871
    موصول شکریہ جات:
    599
    تمغے کے پوائنٹ:
    180

    !!!!
    تو خاموش کیوں نہیں رہتے ۔ اپنی کم علمیوں اور گستاخیوں کو حب رسول صلی اللہ علیہ وسلم کس طرح کہتے اور سمجهتے هو !؟
    صرف گستاخ اور جاهل هو ۔
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  8. ‏مارچ 31، 2017 #58
    ابن داود

    ابن داود سینئر رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    2,540
    موصول شکریہ جات:
    2,412
    تمغے کے پوائنٹ:
    489

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    اسی لئے میں کہتا ہوں، کہ حنفی مقلدین کے علماء نہ صرف ''جاہل'' ہوتے ہیں، بلکہ جاہل گر'' ہوتے ہیں!
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  9. ‏مارچ 31، 2017 #59
    سلفی حنفی حنیف

    سلفی حنفی حنیف رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2017
    پیغامات:
    290
    موصول شکریہ جات:
    10
    تمغے کے پوائنٹ:
    33

    جاہل ہونا ایسا عیب ہے جو علم حاصل ہونے سے ختم ہوجاتا ہے۔ سفاہت ایسا عیب ہے جسے ختم کرنا ممکن نہین۔ اس کا صرف ایک ہی علاج ہے کہ شریفوں کے ساتھ اٹھے بیٹھے اور خاموش رہے۔ آپ کی ہر تحریر نہ صرف جہالت، تعصب اور فرقہ واریت کی خبر دیتی ہے بلکہ آپ کی سفاہت بھی بتاتی ہے۔ یہ جاہل گر کیا ہوتا ہے؟ کیا کسی سے علم چھینا جاسکتا ہے؟ کچھ تو عقل کے ناخن لو۔ للہ سچ مچ ناخن تراش لے کر عقل کے ناخن تراشنے نہ بیٹھ جانا وگرنہ جو تھوڑی بہت ہے اس سے بھی ہاتھ دھو بیٹھو گے۔
    یہ تھریڈ نماز میں ہاتھ باندھنے کے مسائل سے متعلق ہے براہِ کرم اس میں مذکرہ عنوان پر ہی نحث کریں۔ لوگوں کا وقت برباد نہ کریں۔
    مذکورہ احادیث کے متن پر آپ نے کوئی اعتراض نہیں کیا۔ اس کے روات میں سے ایک راوی کو ضعیف کہا۔
    پوچھنا یہ ہے کہ آیا حدیث ضعیف ہے یا اس کا راوی؟
     
  10. ‏مارچ 31، 2017 #60
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,549
    موصول شکریہ جات:
    3,498
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    آپ سے گذارش ہے کہ پہلے اس علم کی الف بے سیکھ لیں۔ کہیں اور سے نہیں تو اپنے ہی علماء سے سیکھ لیں۔ یقینا آپ کی جہالت دیکھ کر انہیں بھی شرم آ جائے گی۔ آپ یہاں کچھ سیکھنے کی نیت سے تو ہرگز نہیں آئے ہیں، بلکہ صرف مناظرہ بازی کرنے آئے ہیں، اسی لئے تو ابھی تک کسی ایک بھی بات کا جواب نہیں دے پائے ہیں۔
    ایسی میلی نیت اور اس کے اوپر انتہی کی جہالت کے ساتھ آپ کبھی کامیاب نہیں ہو سکتے، نہ دنیا میں اور نہ ہی آخرت میں۔ اللہ کا خوف کھاؤ اور علم حاصل کرو۔ ایسے غیر مخلص جاہل مناظروں کا یہاں کوئی کام نہیں ہے۔
     
    • متفق متفق x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...
موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔

اس صفحے کو مشتہر کریں